محمّد احسن سمیع :راحل:

  1. ارشد چوہدری

    میں دیکھتا ہوں آج تجھ کو باہوں میں رقیب کی-----برائے اصلاح

    الف عین ظہیراحمدظہیر سید عاطف علی محمّد احسن سمیع :راحل: ------------ میں دیکھتا ہوں آج تجھ کو باہوں میں رقیب کی گلہ کروں تو کیا کروں یہ بات ہے نصیب کی ------- وہ روٹھ کر چلا گیا خفا تھا اس غریب سے نصیب میں رہی نہیں ہے شکل اب حبیب کی ------------- دعا ہے...
  2. ارشد چوہدری

    ہم کو محفل میں اپنی بلاؤ کبھی-----برائے اصلاح

    الف عین محمّد احسن سمیع :راحل: محمد خلیل الرحمٰن ظہیراحمدظہیر صابرہ امین ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ہم کو محفل میں اپنی بلاؤ کبھی بات دل کی ہمیں بھی بتاؤ کبھی ---------- گر تمہارے بھی دل میں ہے چاہت مری کر کے اظہار اس کا دکھاؤ کبھی --------------- چُھپ کے ملنا...
  3. ریحان احمد ریحانؔ

    جہل اب جلوہ فگن ہے آئینہ خانوں کے بیچ

    شیخ جی بیٹھے ہوئے ہیں ایسے فرزانوں کے بیچ جیسا دیوانہ کوئی بیٹھا ہو دیوانوں کے بیچ مے کہاں کی، جام کس کا، کون ہے ساغر بکف محتسب بیٹھے ہوئے ہیں اب تو میخانوں کے بیچ تو کہ گل پیکر تھا تیرا جسم تھا عینِ بہار تو بھلا کیوں رہتا ہم سے سوختہ جانوں کے بیچ کوئی تو بولے کہ یہ دستِ ستم زنجیر ہو...
  4. ریحان احمد ریحانؔ

    کچھ تو ہی کھول یہ کیا رازِ نہاں ہے سائیں

    تو ہی کچھ کھول یہ کیا رازِ نہاں ہے سائیں ہر نفس زیست کا کیوں شعلہ بجاں ہے سائیں ہم نے ہر درد کو سمجھا ہے عنایت تیری تجھ کو اس بات کا احساس کہاں ہے سائیں تیرے معیار کے قابل تو نہیں ہے پھر بھی یہ رہا جسم، یہ دل اور یہ جاں ہے سائیں شہر در شہر یوں آوارہ نہ جانے کب سے میں تجھے ڈھونڈ...
  5. ریحان احمد ریحانؔ

    ہونٹوں پہ تبسم ہے آنکھوں میں نمی ہے

    ہونٹوں پہ تبسم ہے آنکھوں میں نمی ہے ہم پر دمِ رخصت یہ عنایت بھی بڑی ہے تم چاہو تو الفت سے گرا سکتے ہو اسکو یہ ترکِ تعلق کی جو دیوار کھڑی ہے کیا پوچھتے ہو شہرِ ستم گار کے حالات؟ ہر شے میں تفاوت ہے ہر دل میں کجی ہے وہ پھول بھی ہو جائیں گے کیا نذر خزاں کی! جن پھولوں پہ شبنم تری زلفوں کی پڑی ہے...
  6. ریحان احمد ریحانؔ

    برائے اصلاح : توڑ کر حلقۂ زنجیرِ گماں بولیں گے

    توڑ کر حلقۂ زنجیرِ گماں بولیں گے اب یہ دیوانے سرِ بزمِ بتاں بولیں گے تم سخن فہم ہو سمجھو گے ہمارے دکھ کو ہم یہاں بھی نہیں بولے تو کہاں بولیں گے! پیشِ جابر نہ ہو سر خم نہ زباں ہو خاموش مانند قافلۂ تشنہ لباں بولیں گے اے ستم گر تری بیداد گری کا قصہ ہم اگر چپ بھی رہیں اشکِ رواں بولیں گے ہے یہی...
  7. ریحان احمد ریحانؔ

    برائے اصلاح : سرِ مصلّۂ مسجد پسِ سجود و قیام

    سرِ مصلّۂ مسجد پسِ سجود و قیام یہ آرزو ہے دلوں میں مچلتی رہتی ہے جو اب تلک نہیں بدلا وہ ہے ہمارا حال وگرنہ روز یہ دنیا بدلتی رہتی ہے
  8. ریحان احمد ریحانؔ

    عشق میں یوں تو کیا نہیں ہوتا

    عشق میں یوں تو کیا نہیں ہوتا نالۂ دل رسا نہیں ہوتا کوئی انساں بھی زندگانی میں بندِ غم سے رہا نہیں ہوتا تم سمجھتے ہو تو سمجھتے رہو ورنہ پتھر خدا نہیں ہوتا ہو نہ گر نظرِ آتشِ الفت نخل دل کا ہرا نہیں ہوتا ہر مرض کی دوا نہیں ممکن ہر مرض لا دوا نہیں ہوتا اس کا جینا بھی کوئی جینا ہے جو کسی پر فدا...
  9. ریحان احمد ریحانؔ

    عظمتِ بندۂ خاکی کا میں منکر تو نہیں

    کیوں نہ ہو رنج مجھے کیوں نہ کروں میں شکوہ میرے پہلو میں بھی دل ہے کوئی پتھر تو نہیں ناصحا تجھ سے کروں شکوۂ بیدادِ بتاں جتنا تو سمجھا مجھے اتنا میں کمتر تو نہیں میں تو بس ظلم کو ظالم کو برا کہتا ہوں عظمتِ بندۂ خاکی کا میں منکر تو نہیں جس کی امید نے اب تک مجھے زندہ رکھا اس...
  10. ریحان احمد ریحانؔ

    نظم برائے اصلاح "المسلم جسد واحد"

    ہم مسلمان ہیں جسمِ واحد کی مانند سب ایک ہیں سب کے سب ایک ہیں رنگ کوئی بھی ہو نسل کوئی بھی ہو گر مسلمان ہیں پھر اسی جسمِ واحد کے سب عضو ہیں جب کسی عضو کو کوئی تکلیف ہو سارے اعضا بہم درد اس کا سہیں اس پہ گریہ کریں اس پہ آہیں بھریں پھر نجانے یہ اب کیسے ممکن ہوا جب اسی جسم واحد پہ خنجر چلا...
  11. ریحان احمد ریحانؔ

    کیا روگ لگا بیٹھے دل کو اک پل بھی چین قرار نہیں

    کیا روگ لگا بیٹھے دل کو اک پل بھی چین قرار نہیں جینے کی تو چھوڑو خاک جیے مرنے کی بھی رہ ہموار نہیں پیوستِ جگر ہے تیرِ جفا یہ روگ ہے ایسا جس کی دوا ہر عیسی نفس کے بس میں نہیں ہر عیسی نفس کا کار نہیں کب دست ستم دل والوں کے دامن سے جدا دیکھا تم نے کب اہلِ وفا کی قسمت میں زندان نہیں ہے دار...
  12. ریحان احمد ریحانؔ

    برائے اصلاح " ہر شام کی قسمت میں سویرا نہیں ہوتا "

    استادِ محترم جناب الف عین محمّد احسن سمیع :راحل: سید عاطف علی و دیگر احباب سے اصلاح کی گزارش ہے کیا غم جو غمِ دل کا مداوا نہیں ہوتا یہ روگ ہی ایسا ہے کہ ایسا نہیں ہوتا ہو جائے تو ہو جائے الگ بات وگرنہ دنیا میں کوئی شخص بھی اپنا نہیں ہوتا اب تجھ...
  13. مقبول

    برائے اصلاح: چاہتوں کے عذاب کیوں اترے

    محترم الف عین صاحب محترم محمّد احسن سمیع :راحل: صاحب اصلاح کی درخواست ہے چاہتوں کے عذاب کیوں اترے میرے دل میں جناب کیوں اترے کانٹے کیوں آئے میری قسمت میں اس کی خاطر گلاب کیوں اترے یہ تو بستی ہے ہجر والوں کی اس نگر میں چناب کیوں اترے عشق کے صحرا کا جو باسی ہو کیوں وُہ پوچھے سراب کیوں...
  14. زبیر صدیقی

    غزل برائے اصلاح - اور کوئی غم نہیں

    السلام علیکم صاحبان و اساتذہ۔ ایک غزل پیشِ عرض ہے۔ کرونا کی وبا کی وجہ سے سفر کرنے سے قاصر ہوں، اور ایک مدت ہو گئی اپنے پیاروں سے ملے ہوئے، اپنے شہر (کراچی) گئے ہوئے۔ انہی جذبات کے اظہار کی کوشش کی ہے۔ برائے مہربانی اصلاح فرمائیں۔ (علم ہے کہ استاد الف عین صاحب اسکرین دیکھنے سے قاصر ہیں، مگر ان...
  15. مقبول

    برائے اصلاح: کفن بھی میرا بنے گا کسی کی اترن سے

    محترم الف عین صاحب محترم محمّد احسن سمیع :راحل: صاحب محترم محمد خلیل الرحمٰن صاحب اور دیگر اساتذہ کرام سے اصلاح کی درخواست ہے کفن بھی میرا بنے گا کسی کی اترن سے کہ میرے ہاتھ میں کاسہ ہے میرے بچپن سے امید رکھتا ہوں جلاد سے، میں سادہ لوح وہ آ کے پھندا اتارے گا میری گردن سے ادھار لے کے جو بچوں...
  16. مقبول

    برائے اصلاح: اس نے مرے دشمن سے ملنے کا اعادہ کر دیا

    محترم الف عین صاحب محترم محمّد احسن سمیع :راحل: صاحب اور دیگر اساتذہ کرام سے اصلاح کی درخواست ہے اس نے مرے دشمن سے ملنے کا اعادہ کر دیا ایسے ہی مہلک وار کر کے مجھ کو لاشہ کر دیا یہ حسن بھی بانٹا خدا نے ہے امیری کی طرح کچھ کو بنایا کم حسیں ، کچھ کو زیادہ کر دیا جس کے سبب معتوب ٹھہرا،اس...
  17. مقبول

    برائے اصلاح: مری پیاسی زمیں کو پیار سے وُہ تر نہیں کرتا

    محترم الف عین صاحب محترم محمّد احسن سمیع :راحل: صاحب اور دیگر اساتذہ کرام سے اصلاح کی درخواست کے ساتھ یہ غزل پیش کر رہا ہوں مری پیاسی زمیں کو پیار سے وُہ تر نہیں کرتا وہ گو اقرار کرتا ہے مگر اکثر نہیں کرتا اگر انساں ہے وُہ تو کیوں محبت کا نہیں قائل اگر انساں نہیں تو کیوں زمیں پر شر نہیں...
  18. مقبول

    برائے صلاح: قلم کی صورت اپنی جیب میں خنجر لگاتا ہوں

    محترم الف عین صاحب محترم محمّد احسن سمیع :راحل: صاحب اور دیگر اساتذہ کرام ایک میراتھن غزل اصلاح کے لیے پیش کر رہا ہوں ۔ غزل کی طوالت پر معذرت خواہ ہوں قلم کی صورت اپنی جیب میں خنجر لگاتا ہوں سنا ہے شاعری کے نام پر نشتر لگاتا ہوں یا کہا جاتا ہے میں لکھتا نہیں، نشتر لگاتا ہوں ابل پڑتے ہیں بن...
  19. مقبول

    برائے اصلاح: میں نے حوالے غیر کے اپنا علاقہ کر دیا

    محترم الف عین صاحب محترم محمّد احسن سمیع :راحل: صاحب اور دیگر اساتذہ کرام سے اصلاح کی درخواست کے ساتھ یہ غزل پیش کر رہا ہوں میں نے حوالے غیر کے اپنا علاقہ کر دیا شہباز کہتے تھے مجھے، خود کو ممولہ کر دیا سچ ہے کہ میرے فیصلوں نےکر دیا سب کو خفا سچ ہے مری نادانیوں نے ملک آدھا کر دیا جو قوم کو...
  20. ریحان احمد ریحانؔ

    غزل برائے اصلاح

    استادِ محترم جناب الف عین صاحب محمّد احسن سمیع :راحل: بھائی اور دیگر احباب سے اصلاح کی گزارش ہے میں تو آزاد تھا پھر پاؤں کی زنجیر ہے کیا میرے اجداد کے خوابوں کی یہ تعبیر ہے کیا اک چمن ہے کہ جو اب دشت ہوا جاتا ہے اور کیا تم کو بتاؤں میں کہ کشمیر ہے کیا رحمت حق سے گنہگار کو محروم کہے...
Top