محمّد احسن سمیع :راحل:

  1. ارشد چوہدری

    ہوئی جب سے امّت ہے یوں پارا پارا---برائے اصلاح

    الف عین محمّد احسن سمیع :راحل: محمد خلیل الرحمٰن ----------- فعولن فعولن فعولن فعولن ہوئی جب سے امّت ہے یوں پارا پارا اُٹھا رعب دنیا سے سارا ہمارا -------- ہوئے دور رب سے خطا کم نہیں ہے جو یہ ساتھ چھوٹا ہوئے بے سہارا ----------- کبھی راج اپنا تھا آدھے جہاں پر...
  2. ارشد چوہدری

    مجھے تم نہ سمجھو غریب الوطن ہوں----برائے اصلاح

    الف عین محمّد احسن سمیع :راحل: محمد خلیل الرحمٰن ------- فعولن فعولن فعولن فعولن ------ مجھے تم نہ سمجھو غریب الوطن ہوں جہاں بیٹھ جاؤں وہیں پر چمن ہوں --------- مجھے دوسروں کی ضرورت نہیں ہے میں ہستی میں اپنی ہی رہتا مگن ہوں ------- لگاتا نہیں ہوں کہیں دل میں اپنا...
  3. A

    غزل برائے اصلاح: جانے میں اعتماد کے کس مرحلے میں تھا

    مفعول فاعلاتُ مفاعیل فاعلن جانے میں اعتماد کے کس مرحلے میں تھا میں دشمنوں کے درمیاں بھی حوصلے میں تھا ایسا نہیں کہ بس وہی مسمار ہو گیا میرا تمام جسم بھی تو زلزلے میں تھا ہم دوریوں کے بعد بھی تنہا نہیں ہوئے اک قربتوں کا ذائقہ سا فاصلے میں تھا جس پر سبھی یقیں کریں کہ رہنما ہے وہ ایسا کوئی بھی...
  4. A

    برائے اصلاح: تِرے فراق میں بڑھتا ہوا ملال ختم

    مفاعلن فَعِلاتن مفاعلن فَعِلن ---------------------- تِرے فراق میں بڑھتا ہوا ملال ختم تجھے اُداس جو دیکھا تو ہر سوال ختم تِرے وجود میں دیکھا کبھی جو تاج محل مِری نگاہ میں وہ تیرے خدوخال ختم محبتوں کی فُسوں کاریاں بے کار گئیں یہاں پہ عشق فنا ہے وہاں جمال ختم بڑے سنبھال کے رکھے تِرے خطوط مگر...
  5. ارشد چوہدری

    پیامِ الفت جو دے رہی ہیں جھکی حیا سے تری نگاہیں---------برائے اصلاح

    الف عین @محمّد احسن سمیع :راحل: محمد خلیل الرحمٰن (جمیل مثمن سالم میں ایک ٹوٹی پھوٹی کوشش) ------------- مَفاعلاتن مَفاعلاتن مَفاعلاتن مَفاعلاتن --------- پیامِ الفت جو دے رہی ہیں جھکی حیا سے تری نگاہیں انہیں بھلا دوں بھلا میں کیسے نکل رہیں ہیں جو دل سے آہیں...
  6. ارشد چوہدری

    تہذیبِ نو سے چھن گیا کردار ہے انسان کا----برائے اصلاح

    الف عین @محمّد احسن سمیع :راحل: محمد خلیل الرحمٰن --------- مستفعلن مستفعلن مستفعلن مستفعلن ----------- تہذیبِ نو سے چھن گیا کردار ہے انسان کا اس دور میں پورا ہوا جو تھا مشن شیطان کا -------- پیچھے لگایا ہے جہاں کو اس طرح ابلیس نے سب چھوڑ بیٹھے راستہ ہیں دیکھئے رحمٰن کا --------- جو رہبروں...
Top