نعت

  1. محمد تابش صدیقی

    نعیم صدیقی نعت: تو گُل بھی، نسیم بھی، سحَر بھی ٭ نعیم صدیقیؒ

    تو گُل بھی، نسیم بھی، سحَر بھی تو حُسن بھی، جلوہ بھی، نظر بھی تو دردِ نہاں بھی، چارہ گر بھی مرہم بھی، جراحتِ جگر بھی ساحل سے جو دیکھیں کیسے سمجھیں تو بحر بھی، موج بھی، گہر بھی گلہائے تبسّمِ ضیا پاش پھر شبنمِ دیده ہائے تر بھی انسانوں سے رشتۂ مساوات انسانوں سے ہے بلند تر بھی پھولی ہوئی سانس،...
  2. محمد تابش صدیقی

    نعیم صدیقی نعت: ہے چہرہ چاند، ساری شخصیت ہے چاندنی، آ ہا ٭ نعیم صدیقیؒ

    ہے چہرہ چاند، ساری شخصیت ہے چاندنی، آ ہا گواہی دی نگاہوں نے، تمھی یٰسیں ، تمھی طاہا بہ صد پیرایہ ہر سُو انعکاسِ حسنِ گل دیکھا تکلّم ہا، تبسّم ہا، تجلّی ہا، تماشا ہا! یہ صبر و حِلم و وَقر و نظم کے داعی کا مکتب ہے صدا اونچی نہ یاں اٹھے! خدا کے واسطے! ”ہاہا“ بچارے آدمی کی آزمائش کتنی مشکل ہے...
  3. محمد تابش صدیقی

    نعیم صدیقی نعت: اونچی انؐ کی ذات ٭ نعیم صدیقیؒ

    اونچی انؐ کی ذات اجلی انؐ کی بات ایک مبارک رات کٹ گئی انؐ کے سات اب تو ریگِ نجد لگتی ہے بانات اب تو جو بھی ہو بازی دل کے ہات باتیں بھی پیغام نظریں بھی آیات نظریں ہیں محدود جلووں کی بہتات اسود، احمر ایک کوئی ذات نہ پات صدق و عدل و صبر دیں کے عنوانات تیرے فقر کی شہ بادشہوں کے مات یاروںؓ...
  4. محمد تابش صدیقی

    نعیم صدیقی نعت: اے نعت نگار ہنرمندو! کوئی ایسی زندہ نعت کہو! ٭ نعیم صدیقیؒ

    اے نعت نگار ہنرمندو! کوئی ایسی زندہ نعت کہو، روحوں کے اندھیرے چھٹ جائیں کوئی ایسی زندہ نعت کہو! پھر روحِ صداقت جاگ اٹھے! رنگین منافق لفظوں کے رشتے ہونٹوں سے کٹ جائیں کوئی ایسی زندہ نعت کہو! افشا ہوں محمدؐ کے جلوے، اور گرد کے جو طوفاں اٹھے ہیں چار طرف، وہ چھٹ جائیں کوئی ایسی زندہ نعت کہو...
  5. محمد تابش صدیقی

    نعیم صدیقی نعت: صاحبِ رایت، صبحِ ہدایت ، رٲفت ہی رٲفت، رحمت ہی رحمت ٭ نعیم صدیقیؒ

    صاحبِ رایت، صبحِ ہدایت ، رٲفت ہی رٲفت، رحمت ہی رحمت آیت بہ آیت، سنت بہ سنت، حکمت ہی حکمت، رحمت ہی رحمت نورِ صداقت، روحِ امانت، جان شجاعت، بحرِ سخاوت تو ہے سراپا نعمت ہی نعمت، شفقت ہی شفقت، رحمت ہی رحمت اسرار تیرے، افکار تیرے، گفتار تیری، رفتار تیری اخلاق تیرا، کردار تیرا، عظمت ہی عظمت، رحمت ہی...
  6. محمد تابش صدیقی

    نعیم صدیقی نعت: میں ایک نعت کہوں سوچتا ہوں کیسے کہوں ٭ نعیم صدیقیؒ

    ہے مضطرب سی تمنا کہ ایک نعت کہوں میں اپنے زخموں کے گلشن سے تازہ پھول چنوں پھر ان پہ شبنمِ اشکِ سحر گہی چھڑکوں پھر ان سے شعر کی لڑیاں پرو کے نذر کروں میں ایک نعت کہوں سوچتا ہوں کیسے کہوں کھڑا ہوں صدیوں کی دوری پہ خستہ و حیراں یہ میرا ٹوٹا ہوا دل یہ دیدۂ گریاں یہ مُنفعِل سے ارادے یہ مضمحل ایماں...
  7. محمد خلیل الرحمٰن

    گھڑی گھڑی جی بھر آتا ہے

    گھڑی گھڑی جی بھر آتا ہے حفیظ تائب رحمۃ اللہ علیہ کی پنجابی نعت کا ترجمہ از محمد خلیل الرحمٰن گھڑی گھڑی جی بھر آتاہے یاد وہ نور نگر آتاہے اُٹھتے بیٹھتے چلتے پھرتے روضہِ پاک نظر آتاہے آنکھ اُٹھانا ناممکن ہے سامنے جب وہ در آتاہے حرف لبوں تک آتے آتے آنکھ میں پانی بھر آتاہے اُس کے درد بنا کب...
  8. محمد تابش صدیقی

    نظر لکھنوی نعت: اے ختمِ رسل خاصۂ خاصانِ الٰہی

    اے ختمِ رسل خاصۂ خاصانِ الٰہی اے باعثِ میثاقِ رسولانِ الٰہی محبوبِ خدا مہبطِ قرآنِ الٰہی آئینۂ حق منبعِ فیضانِ الٰہی ہیں آپؐ ہی سر رشتۂ ایمانِ الٰہی بندوں کو ہوا آپؐ سے عرفانِ الٰہی انساں کی زباں آپؐ کی توصیف سے قاصر ذات آپؐ کی ہے مظہرِ صد شانِ الٰہی اے معرکہ آرائے مصافِ حق و باطل اے مردِ...
  9. فقیر شبّیر احمد چشتی

    نعت رسول مقبولؐ - دیارِ خوشبو کے ذرے ذرے کا کر رہی ہے طواف خوشبو - اشفاقؔ احمد غوری

    دیارِ خوشبو کے ذرے ذرے کا کر رہی ہے طواف خوشبو ہمیشہ یونہی کرے گی اس کے عروج کا اعتراف خوشبو میں جب بھی یادوں میں ان کے چہرے کے خال و خد کو پکارتا ہوں تو معبدِ قلب و جاں میں کرتی ہے دیر تک اعتکاف خوشبو یہ کس کی فرقت نے ڈال دی ہے سیاہ پوشی کی تجھ کو عادت حرم میں کعبہ سے پوچھتی تھی پکڑ کے اس کا...
  10. فقیر شبّیر احمد چشتی

    سیدہ زینبؔ سروری

    نعت رسول مقبول ﷺ اسمِ اطہر کا تصور مری بینائی ہے قلب نےذکرِمحمدﷺ سے جلا پائی ہے بزمِ کونین سجی آپ ﷺ کی آمد کےطفیل بالیقیں گلشنِ ہستی میں بہار آئی ہے دلکشی زیبِ چمن، نورِ مہ و مہر و نجوم یہ ترے ﷺ حُسنِ جہاں تاب کی رعنائی ہے عاصیوں کو بھلا وحشت سرِمحشر کیوں ہو اُن ﷺ کی رحمت نےشفاعت کی قسم...
  11. محمد تابش صدیقی

    نظر لکھنوی نعت: ہے بے مثال شہاؐ ذاتِ عبقری تیری

    ہے بے مثال شہاؐ ذاتِ عبقری تیری ہے کس کا منہ جو کرے کوئی ہمسری تیری محیطِ ہر دوجہاں جلوہ گستری تیری خوشا نصیب! دو عالم کی سروری تیری کسے نصیب ہو شانِ تونگری تیری شہنشہی میں بھی چمکی قلندری تیری سیاہ گیسو ہیں آنکھیں ہیں مدھ بھری تیری دلوں کو سب کے لبھائے سمن بری تیری نگاہِ شوق...
  12. سردار محمد نعیم

    نصیر الدین نصیر گلزار مدینہ صلِّ علیٰ رحمت کی گھٹا سبحان اللّٰہ

    گلزارِ مدینہ صلِّ علیٰ،رحمت کی گھٹا سبحان اللّٰٰہ پُر نُور فضا ماشااللّٰہ،پُر کیف ہَوا سبحان اللّٰہ اُس زلفِ معنبر کو چھو کر مہکاتی ہُوئ ،اتراتی ہُوئ لائ ھے پیامِ تازہ کوئ،آئی ھے صبا سبحان اللّٰہ والشمس جمالِ ہوش ربا زلفیں وَالیلِ اِذا یَغشٰی القابِ سیادت قرآں میں،یٰسیں ،طٰحہٰ سبحان اللّٰہ...
  13. محمد تابش صدیقی

    ماہر القادری نعت: کچھ کفر نے فتنے پھیلائے، کچھ ظلم نے شعلے بھڑکائے

    کچھ کفر نے فتنے پھیلائے، کچھ ظلم نے شعلے بھڑکائے سینوں میں عداوت جاگ اٹھی، انسان سے انساں ٹکرائے پامال کیا، برباد کیا، کمزور کو طاقت والوں نے جب ظلم و ستم حد سے گزرے، تشریف محمدﷺ لے آئے رحمت کی گھٹائیں لہرائیں، دنیا کی امیدیں بر آئیں اکرام و عطا کی بارش کی، اخلاق کے موتی برسائے تہذیب کی...
  14. سردار محمد نعیم

    اے کاش وہ دن کب آئیں گے جب ہم بھی مدینہ جائیں گے

    اے کاش وہ دن کب آئیں گے جب ہم بھی مدینہ جائیں گے دامن میں مرادیں لائیں گے جب ہم بھی مدینہ جائیں گے بیتابی الفت کی دھن میں ہم دیدہ ودل کے بربط پر توحید کے نغمے گائیں گے جب ہم مدینہ جائیں گے تھامیں گے سنہری جالی کو چومیں گے معطر پردوں کو قسمت کو ذرا سلجھائیں گے جب ہم بھی مدینہ جائیں‌گے زم زم...
  15. سردار محمد نعیم

    یہ کہتی ہیں فضائیں ، زندگی دو چار دن کی ہے

    یہ کہتی ہیں فضائیں، زندگی دو چار دن کی ہے مدینہ دیکھ آئیں، زندگی دو چار دن کی ہے سنہری جالیوں کو چُوم کر کچھ عرض کرنا ہے مچلتی ہیں دُعائیں، زندگی دو چار دن کی ہے غمِ انساں کی اِک صُورت عبادت خیز ہوتی ہے کِسی کے کام آئیں، زندگی دوچار دن کی ہے وہ راہیں ثبت ہیں جن پر نشاں پائے محمد صلی...
  16. عباس رضا

    رضا خوفناک ماحول کی منظر نگاری

    مشہور کلام ”سُونا جنگل رات اندھیری چھائی بدلی کالی ہے“ کے چند شعر ملاحظہ کیجئے اور دیکھئے کیسے خوفناک وپُر خطر ماحول، تنہائی اور بے کسی کی بے ساختہ قسم کی منظر نگاری ہے، امام لکھتے ہیں: سُونا جنگل، رات اندھیری، چھائی بدلی کالی ہے سونے والو! جاگتے رہیو، چوروں کی رکھوالی ہے جگنو چمکے، پتا کھڑکے،...
  17. عباس رضا

    رضا ایک شعر کی دو شکلیں

    امام احمد رضا خان رحمۃ اللہ علیہ کا مشہور شعر ہے: پھر اٹھا ولولۂ یاد مغیلان عرب پھر کھنچا دامنِ دِل سوئے بیابانِ عرب (حدائق بخشش، ص60، مطبوعہ مکتبۃ المدینہ کراچی) امام نے یہی شعر ”فتاوی رضویہ“ میں کچھ تبدیلی کے ساتھ رقم فرمایا ہے: پھر اٹھا ولولۂ یاد بیابان حرم پھر کھنچا دامن دل سوئے مغیلان حرم...
  18. سردار محمد نعیم

    اصغر گونڈوی ہر موج ہوا زلف پریشانِ محمدؐ ہے نور سحر صورت خندان محمدؐ

    ہر موج ہوا زلف پریشانِ محمدؐ ہے نُور سحر صورتِ خندانِ محمدؐ کچھ صبحِ ازل کی خبر نا شامِ ابد کی بیخود ہوں تہِ سایہِ دامانِ محمدؐ تو سینہ صدیقؓ میں اک رازِ نہاں ہے اللّٰہ رے اے صورتِ جانانِ محمدؐ چُھٹ جائے اگر دامنِ کونین تو کیا غم لیکن نہ چُھٹے ہاتھ سے دامانِ محمدؐ دے عرصہ کونین میں یا رب...
  19. محمد تابش صدیقی

    نظر لکھنوی نعت: مرے رب نے مجھے بخشا سلیقہ نعت گوئی کا

    مرے رب نے مجھے بخشا سلیقہ نعت گوئی کا نہیں ہے ورنہ کچھ آساں ثنائے مصطفیٰؐ لکھنا وہ جب خورشیدِ عالم تاب نکلا نور برساتا لپیٹا بوریہ بستر ضلالت نے، بشر جاگا نرالی شان ہے اس کی، نہیں اس سا کوئی پیدا وہ محبوبِ خدا، شمعِ ہدیٰ، وہ صاحبِ اسرا ہے سیرت اس کی پاکیزہ، نہایت ارفع و اعلیٰ کہا ہے عینِ قرآں...
  20. محمد تابش صدیقی

    نظر لکھنوی نعت: مری زباں پر ہے فضلِ رب سے ثنائے پاکِ حضورِ انورؐ

    مری زباں پر ہے فضلِ رب سے ثنائے پاکِ حضورِ انورؐ تمام دنیا کی رہبری کا سجا کے آئے جو تاج سر پر نہ لکھ سکا کوئی تا بہ ایں دم، نہ لکھ سکے گا کوئی سخن ور محاسن اس کے بیاں ہوں کیونکر، ہیں جبکہ حدِّ بیاں سے باہر سریر و تاجِ نبوّت اس کا خوشا کہ ہے تا قیامِ محشر اذاں اسی کی ہے چار سو اب، اسی کی مسجد،...
Top