عبیر ابوذری مسلسل۔۔(عبیر ابوذری)

نبیل نے 'مزاحیہ شاعری' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 17, 2005

  1. نبیل

    نبیل محفلین

    مراسلے:
    16,624
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Depressed
    رویا ہوں تری یاد میں دن رات مسلسل
    ایسے کبھی نہیں ہوتی برسات مسلسل

    کانٹے کی طرح ہوں رقیبوں کی نظر میں
    رہتے ہیں مری گھات میں چھ سات مسلسل

    چہرے کو نئے ڈھب سے سجاتے ہیں وہ ہر روز
    بنتے ہیں مری موت کے آلات مسلسل

    اجلاس کا عنوان ہے اخلاص و مروت
    بد خوئی میں مصروف ہیں حضرات مسلسل

    ہم نے تو کوئی چیز بھی ایجاد نہیں کی
    آتے ہیں نظر ان کے کمالات مسلسل

    کرتے ہیں مساوات کی تبلیغ وہ جوں جوں
    بڑھتے ہی چلے جاتے ہیں طبقات مسلسل

    ہر روز کسی شہر میں ہوتے ہیں دھماکے
    رہتی ہے مرے دیس میں شب برات مسلسل

    ہر روز وہ ملتے ہیں نئے روپ میں مجھ کو
    پڑتے ہیں مری صحت پر اثرات مسلسل
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  2. شعیب صفدر

    شعیب صفدر محفلین

    مراسلے:
    978
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    خوب :lol:
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. اجنبی

    اجنبی محفلین

    مراسلے:
    826
    عبیر کی ہی ایک اور غزل ہے جس کا ایک شعر ہے

    وہ کھڑکی نہیں کھولتے تو نہ کھولیں
    نظر میں ہماری ، باریاں اور بھی ہیں

    :oops:
     
  4. غازی عثمان

    غازی عثمان محفلین

    مراسلے:
    570
    جھنڈا:
    Sweden
    رویا ہوں تیری یاد میں ۔ عبیر ابوزری

    رویا ہوں تیری یاد میں دن رات مسلسل
    ایسے کبھی ہوتی نہیں برسات مسلسل

    کانٹے کی طرح ہون میں رقیبوں کی نظر میں
    رہتے ہیں میری گھات میں چھ سات مسلسل

    چہرے کو نئے ڈھب سے سجاتے ہیں ہر روز
    بنتے ہیں میری موت کے آلات مسلسل

    اجلاس کا عنوان ہے اخلاص و مروت
    بد خوئی میں مصروف ہیں حضرات مسلسل

    ہم نے تو کوئی چیز بھی ایجاد نہیں کی
    آتے ہیں نظر ان کے کمالات مسلسل

    کرتے ہیں مساوات کی تبلیغ وہ جوں جوں
    بڑھتے ہی چلے جاتے ہیں طبقات مسلسل

    ہر روز کسی شہر میں ہوتے ہیں دھماکے
    رہتی ہے میرے دیس میں شب رات مسلسل

    ملاؤں نے اسلام کے ٹکرات کئے ہیں
    مسئلات پھیلاتے ہیں نفرات مسلسل

    ہر روز وہ ملتے ہیں نئے روپ میں مجھ کو
    پڑتے ہیں میری صحت پہ اثرات مسلسل

    پیتے نہیں، بنتی ہے تو پھر جاتی کہاں ہے؟
    یہ ذہن میں اٹھتے ہیں سوالات مسلسل

    امراء کے موافق ہے فضاء دیس میرے کی
    کٹتے ہیں جہاں عیش میں لمحات مسلسل

    عبیر ابوزری۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
  5. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    200,069
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    بہت دیر گزری کہ انہوں نے یہ شعر کہا تھا

    ہر روز کسی شہر میں ہوتے ہیں دھماکے
    رہتی ہے میرے دیس میں شب رات مسلسل

    اور یہ شب رات ابھی بھی جاری و ساری ہے۔
     
  6. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,554
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    واہ واہ واہ، کیا لا جواب کلام ہے، شکریہ جناب شیئر کرنے کیلیے۔
     
  7. خرم شہزاد خرم

    خرم شہزاد خرم لائبریرین

    مراسلے:
    10,823
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    بہت شکریہ جناب بہت خوب
     
  8. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,666
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    بہت شکریہ غازی صاحب!‌ یہ غزل میں کب سے پوسٹ کرنا چاہ رہا تھا لیکن آپ نے میرا کام آسان کر دیا - :)
     
  9. نبیل

    نبیل محفلین

    مراسلے:
    16,624
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Depressed
  10. نوید صادق

    نوید صادق محفلین

    مراسلے:
    2,278
    رويا ہوں تيري ياد ميں دن رات مسلسل- عبیر ابو زری

    رويا ہوں تيري ياد ميں دن رات مسلسل
    ايسے کبھي ہوتی نہيں برسات مسلسل

    کانٹے کي طرح ہوں ميں رقيبوں کي نظر ميں
    رہتے ہيں مري گھات ميں چھ سات مسلسل

    چہرے کو نئے ڈھب سے سجاتے ہيں وہ ہر روز
    بنتے ہيں مری موت کے آلات مسلسل

    اجلاس کا عنوان ہے اخلاص و مروت
    بدخوئی ميں مصروف ہيں حضرات مسلسل

    ہم نے تو کوئی چيز بھي ايجاد نہيں کي
    آتے ہيں نظر ان کے کمالات مسلسل

    کرتے ہيں مساوات کي تبليغ وہ جوں جوں
    بڑھتے ہي چلے جاتے ہيں طبقات مسلسل

    ہر روز کسي شہر ميں ہوتے ہيں دھماکے
    رہتی ہے مرے ديس ميں شبرات مسلسل

    ملاؤں نے اسلام کے ٹکڑات کئے ہيں
    مسئلات سے پھيلاتے ہيں نفرات مسلسل

    پيتے نہيں، بنتی ہے تو پھر جاتي کہاں ہے؟
    يہ ذہن ميں اٹھتے ہيں سوالات مسلسل

    امراء کے موافق ہے فضا ديس مرے کی
    کٹتے ہيں جہاں عيش ميں لمحات مسلسل

    (بابا عبیر ابو ذری)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  11. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,554
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    شکریہ نوید صاحب خوبصورت کلام شیئر کرنے کیلیئے!

    دراصل یہ کلام پہلے بھی محفل پر پوسٹ ہو چکا ہے، لہذا پالیسی کے مطابق ان کو یکجا کر دیا ہے۔

    والسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. آبی ٹوکول

    آبی ٹوکول محفلین

    مراسلے:
    3,502
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Drunk
    آتے ہیں وہ میرے سامنے نئے روپ بدل کر
    پڑھتے ہیں میری صحت پہ اثرات مسلسل
     
  13. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    200,069
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    وہی میں بھی سوچ رہا تھا کہ نبیل بھائی نے یہ کلام تین سال پہلے پوسٹ کیا، پھر غازی عثمان صاحب نے بھی یہی غزل پوسٹ کی اور اب نوید بھائی بھی وہی غزل کیوں پوسٹ کر رہے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  14. آبی ٹوکول

    آبی ٹوکول محفلین

    مراسلے:
    3,502
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Drunk
    عبیر ابوزری سے معذرت کے ساتھ کچھ ہماری طرف سے بھی ۔ ۔۔
    رُخ تیرا ہے جیسے چمکتا ہوا تارہ
    پھرتے ہیں تیرے گرد حشرات مسلسل
    گویا جو ہوئے تو محسوس ہوا یوں
    ماریں ہوں کسی نے چولات مسلسل
    جو آج ملا ہے تو یوں روز ملا کر
    پہلے نہ تھی ایسی گل بات مسلسل
    رکھتے نہیں ہم یوں اُدھار کسی کا
    مل جائیں گے سب کو جوابات مسلسل
    باتوں پہ تیری اب میرا یقیں ہے
    دینا نہ مجھےاب تُو چکرات مسلسل
    مت ڈال تو زور اتنا کُند ذہنی پہ تیری
    رہتی ہے مجھے تیری فکرات مسلسل
    ہاتھ آئے تیرے جو کبھی دولت یقیں کی
    دکھ جائیں گے تجھکو بھی جلوات مسلسل
    جو آج ملا ہے تو یوں روز ملا کر
    پہلے نہ تھی ایسی گل بات مسلسل
    دیکھا جو انھے تو ہوئی حالت دگرگوں
    لگتی ہیں میرے دل پہ ضربات مسلسل
    دیکھا جو انھے تو نہ خود پہ رہا زور
    کرتا ہوں میرے دل پہ جبرات مسلسل
    دل اپنا دُکھا ہے تو کوئی تجھ سے یہ پوچھے
    پُٹھتے ہیں تیرے دل میں کیوں نغمات مسلسل
    اپنی پہ جو آئیں تو دوڑا بھی دیں ہم گھوڑے
    بحر ہو کوئی جتنا وسیع ظلمات مسلسل
    آبی جو ہوا گویا تو کچھ بات بنی ہے
    سننے کو ملے ہیں یہ فقرات مسلسل
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر