مت پوچھ دل کی باتیں وہ دل کہاں ہے ہم میں - بیدل دہلوی

کاشفی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 8, 2016

  1. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,371
    غزل
    (ابو المعانی مرزا عبدالقادر بیدل دہلوی مرحوم و مغفور رحمتہ اللہ علیہ)
    مت پوچھ دل کی باتیں وہ دل کہاں ہے ہم میں
    اُس تخم بے نشاں کا حاصل کہاں ہے ہم میں

    موجوں کی زد میں آئی جب کشتیِ تعیّن
    بحرِ فنا پکارا ساحل کہاں ہے ہم میں

    خارج نے کی ہے پیدا تمثال آئینے میں
    جو ہم سے ہے نمایاں داخل کہاں ہے ہم میں

    سوزِ نہاں میں کب کا وہ خاک ہو چکا ہے
    اب دل کو ڈھونڈتے ہو وہ دل کہاں ہے ہم میں

    جب دل کے آستاں پر عشق آن کر پکارا
    پردے سے یار بولا بیدلؔ کہاں ہے ہم میں
     
    • زبردست زبردست × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  2. سید عاطف علی

    سید عاطف علی محفلین

    مراسلے:
    7,364
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    بہت زبر دست کاشفی بھائی ۔ بیدل کا کچھ اور اردو کلام بھی کہیں میسر ہے کیا ؟؟
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • متفق متفق × 1
  3. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,618
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    بہت خوب شیئرنگ کاشفی صاحب

    جب دل کے آستاں پر عشق آن کر پکارا
    پردے سے یار بولا بیدلؔ کہاں ہے ہم میں


    سوزِ نہاں میں کب کا وہ خاک ہو چکا ہے
    اب دل کو ڈھونڈتے ہو، وہ دل کہاں ہے ہم میں


    کیا کہنے

    :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • متفق متفق × 1
  4. مدیحہ گیلانی

    مدیحہ گیلانی محفلین

    مراسلے:
    2,282
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bored
    سوزِ نہاں میں کب کا وہ خاک ہو چکا ہے
    اب دل کو ڈھونڈتے ہو وہ دل کہاں ہے ہم میں
    واہ واہ لاجواب انتخاب ہے !
    لطف آ گیا پڑھ کر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر