ظہیر احمد ظہیر

  1. سید اسد معروف

    اشعار برائے اصلاح

    پیچھے جانے کتنے دکھ، کتنے افسانے چھوڑ آیا ہوں کل میں اپنے خواب پرانے، ترے سرہانے چھوڑ آیا ہوں خود خوابوں کا پیچھا کرتے، میں پردیس میں آ پہنچا ہوں چبھتی ہوئی کچھ یادیں گھر میں، تجھے ستانے چھوڑ آیا ہوں آنکھ کھلی تو تمہیں مری تنہائی کا احساس رہے گا آدھی رات کو میزوں پہ خالی پیمانے چھوڑ آیا ہوں جان...
  2. ظہیراحمدظہیر

    اس قدر ڈر گئے کچھ شورشِ ایام سے لوگ

    احبابِ کرام ، ایک سال اور قصۂ پارینہ ہوا ۔ کتابِ ماضی کی ضخامت کچھ اور سوا ہوئی ۔ آگے دیکھنے والے آگے کی طرف نئے سال کو دیکھ رہے ہیں۔ لیکن میں سمجھتا ہوں کہ ماضی پر نظر ڈالے بغیر مستقبل کا راستہ نہیں کھلتا۔ آگے کی طرف رہنمائی نہیں ہوتی۔ یہ ایک پرانی غزل ماضی میں جھانکنے کی ایک کوشش ہے۔ یہ...
  3. ظہیراحمدظہیر

    تہمتِ زر سے تہی کیسہ و کاسہ نکلے

    احبابِ کرام !ایک غزل آپ صاحبانِ ذوق کی خدمت میں پیش ہے ۔ اس غزل کے کچھ اشعار تقریباً دو ڈھائی سال پہلے ہوئے لیکن اس کی تکمیل رواں سال میں ہوئی ۔ امید ہے کہ ایک دو اشعار ضرور ڈھنگ کے ہوں گے اور آپ کو پسند آئیں گے ۔ آپ کے ذوقِ مطالعہ کی نذر! ٭٭٭ تہمتِ زر سے تہی کیسہ و کاسہ نکلے میرے...
  4. ظہیراحمدظہیر

    جانا ہے ایک روز حقیقت یہی تو ہے

    احبابِ اردو محفل کی خدمت میں ایک نئی غزل پیش کرتا ہوں ۔ امید ہے کچھ اشعار قبولیت پائیں گے ۔ آپ تمام دوستوں کا پیشگی شکریہ! ٭٭٭ جانا ہے ایک روز حقیقت یہی تو ہے ماتھے پر آدمی کے عبارت یہی تو ہے سادہ رکھی ہے کاتبِ تقدیر نے کتاب لکھیں گے اپنے ہاتھ سے قسمت یہی تو ہے نکلے ہیں رنگ خاک سے جتنے...
  5. ظہیراحمدظہیر

    جانے عقب سے تیر تھا کس کی کمان کا

    احبابِ کرام! دو سال پرانی ایک غزل پیشِ خدمت ہے ۔ شاید ایک دو اشعار کسی کام کے ہوں ۔ آپ کے ذوقِ نظر کی نذر کرتا ہوں! ٭٭٭ جانے عقب سے تیر تھا کس کی کمان کا لیتے ہیں لوگ نام کسی مہربان کا آشوبِ تشنگی میں یہ تسکیں بھی کم نہیں احساں نہیں ہے سر پہ کسی سائبان کا دل مصلحت پسند تھا ، شوق انتہا پرست...
  6. ظہیراحمدظہیر

    ہم جسے اَن کہی سمجھتے تھے

    ایک نسبتاً تازہ غزل احبابِ کرام کے پیش خدمت ہے ۔ امید ہے کچھ اشعار آپ کے ذوقِ عالی تک باریاب ہوں گے۔ گر قبول افتد زہے عز و شرف! *** ہم جسے اَن کہی سمجھتے تھے بات وہ تو سبھی سمجھتے تھے جیت کر ہم اُنہیں زمانے سے جنگ جیتی ہوئی سمجھتے تھے کتنے سادہ تھے ہم بچھڑتے وقت ہجر کو عارضی سمجھتے تھے...
  7. ظہیراحمدظہیر

    عبیر و عنبر و مشکِ ختن کی بات کرو

    احبابِ کرام ! ایک سہ غزلہ آپ کے ذوقِ مطالعہ کی نذر ہے ۔ اس میں پہلی غزل تو تین چار سال پرانی ہے لیکن بقیہ دو غزلیں رواں سال کا حاصل ہیں ۔ اس سال وطنِ عزیز جن نشیب و فراز سے گزرا وہ تمام محبِ وطن حلقوں میں ہر ہر پہلو سے گفتگو کا محور رہے ہیں ۔ آخری دو غزلیں انہی فکری مباحث کا نتیجہ ہیں ۔ ان دو...
  8. ظہیراحمدظہیر

    تن زہر میں بجھے ہوئے ، دل آگ میں جلے ہوئے

    ایک طویل عرصے کے بعد بزمِ سخن میں حاضری کا موقع ملا ہے ۔ اس غیر حاضری کے دوران سات آٹھ تازہ غزلیں اور دو نظمیں پردۂ خیال سے صفحۂ قرطاس پر منتقل ہوئیں ۔ وعید ہو کہ میں ہر ہفتے عشرے ایک تازہ کلام آپ صاحبانِ ذوق کی خدمت میں پیش کرنے کا ارادہ رکھتا ہوں ۔ وارننگ دے دی ہے ۔ 😊 ایک غزل حاضر ہے ۔ امید...
  9. سید اسد معروف

    غزل اصلاح کے لئے=جذبات میں جل جائیں=

    آج ایک چھوٹی بحر کی غزل لکھنے کی کوشش کی ہے۔اصلاح کے لئے پیش کرتا ہوں۔ بحر کا تعین بھی کیجئے گا۔ شکریہ۔ جذبات میں جل جائیں حدت سے پگھل جائیں ہم تم نہ رہیں باقی اک نفس میں ڈھل جایئں اک بحر تخیل ہے جس سمت نکل جائیں ایسے نہ مجھے دیکھو ارماں نہ مچل جائیں دیکھیں تو بھلا کیسے سوچیں تو دہل جائیں وہ تو...
  10. ارشد چوہدری

    پردیس جا رہے ہیں مجھ کو بتا کے روئے

    الف عین صابرہ امین سید عاطف علی ظہیر احمد ظہیر محمّد احسن سمیع :راحل: ------------- پردیس جا رہے ہیں مجھ کو بتا کے روئے میرے رکے نہ آنسو جب پاس آ کے روئے ----------- وہ رخصتی سے پہلے آئے ہیں مجھ سے ملنے کاندھے پہ میرے سر کو پھر وہ ٹکا کے روئے --------- کرتے...
  11. عاطف سعد 2

    دستار بھی ہے سر پر

  12. ارشد چوہدری

    زمانے نے مجھ کو بہت ہے ستایا------------برائے اصلاح

    الف عین سید عاطف علی ظہیراحمدظہیر ----------- زمانے نے مجھ کو بہت ہے ستایا مگر ان کے آگے نہیں سر جھکایا ---------- ترا مجھ کو یا رب سہارا ہے کافی گدا بن کے تیرے میں در پر ہوں آیا ---------- تری میں کریمی پہ قربان جاؤں کیا فضل مجھ پر جو در پر بلایا -----------...
  13. ارشد چوہدری

    ہوئی جب سے مجھ کو محبّت نبی سے----برائے اصلاح

    الف عین ظہیراحمدظہیر سید عاطف علی صابرہ امین ہوئی جب سے مجھ کو محبّت نبی سے نہیں کچھ شکایت رہی زندگی سے ------------- خدا سے تعلّق بنایا ہے میرا یوں آقا نے جوڑا مجھے بندگی سے -------- نبی کی محبّت نے روشن کیا دل منوّر ہے سینہ اسی روشنی سے ------- مسرّت سے...
  14. ارشد چوہدری

    درسِ توحید جو دنیا کو سکھایا جاتا-------برائے اصلاح

    الف عین ظہیراحمدظہیر سید عاطف علی صابرہ امین محمّد احسن سمیع :راحل: ---------- فاعِلاتن فَعِلاتن فَعِلاتن فِعْلن ------------ درسِ توحید جو دنیا کو سکھایا جاتا رب ہے معبودِ حقیقی یہ بتایا جاتا ------- بتکدہ پھر نہ یہاں کوئی بھی بنتا ہرگز رب کے در پر جو زمانے کو جھکایا...
  15. ارشد چوہدری

    میں دیکھتا ہوں آج تجھ کو باہوں میں رقیب کی-----برائے اصلاح

    الف عین ظہیراحمدظہیر سید عاطف علی محمّد احسن سمیع :راحل: ------------ میں دیکھتا ہوں آج تجھ کو باہوں میں رقیب کی گلہ کروں تو کیا کروں یہ بات ہے نصیب کی ------- وہ روٹھ کر چلا گیا خفا تھا اس غریب سے نصیب میں رہی نہیں ہے شکل اب حبیب کی ------------- دعا ہے...
  16. ارشد چوہدری

    ہم کو محفل میں اپنی بلاؤ کبھی-----برائے اصلاح

    الف عین محمّد احسن سمیع :راحل: محمد خلیل الرحمٰن ظہیراحمدظہیر صابرہ امین ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ہم کو محفل میں اپنی بلاؤ کبھی بات دل کی ہمیں بھی بتاؤ کبھی ---------- گر تمہارے بھی دل میں ہے چاہت مری کر کے اظہار اس کا دکھاؤ کبھی --------------- چُھپ کے ملنا...
  17. ریحان احمد ریحانؔ

    جہل اب جلوہ فگن ہے آئینہ خانوں کے بیچ

    شیخ جی بیٹھے ہوئے ہیں ایسے فرزانوں کے بیچ جیسا دیوانہ کوئی بیٹھا ہو دیوانوں کے بیچ مے کہاں کی، جام کس کا، کون ہے ساغر بکف محتسب بیٹھے ہوئے ہیں اب تو میخانوں کے بیچ تو کہ گل پیکر تھا تیرا جسم تھا عینِ بہار تو بھلا کیوں رہتا ہم سے سوختہ جانوں کے بیچ کوئی تو بولے کہ یہ دستِ ستم زنجیر ہو...
  18. ارشد چوہدری

    جمال تیرا بھلا نہ پائے--------برائے اصلاح

    ظہیراحمدظہیر عظیم صابرہ امین محمد خلیل الرحمٰن @محمّداحسن سمیع:راحل؛ ---------- جمال تیرا بھلا نہ پائے کسی کو تجھ سے ملا نہ پائے ----------- چھپی تھی اپنے جو بات دل میں وہ بات تجھ کو بتا نہ پائے ------- لکھے تھے نغمے جو چاہتوں کے کبھی وہ تجھ کو سنا نہ پائے...
  19. ریحان احمد ریحانؔ

    ہونٹوں پہ تبسم ہے آنکھوں میں نمی ہے

    ہونٹوں پہ تبسم ہے آنکھوں میں نمی ہے ہم پر دمِ رخصت یہ عنایت بھی بڑی ہے تم چاہو تو الفت سے گرا سکتے ہو اسکو یہ ترکِ تعلق کی جو دیوار کھڑی ہے کیا پوچھتے ہو شہرِ ستم گار کے حالات؟ ہر شے میں تفاوت ہے ہر دل میں کجی ہے وہ پھول بھی ہو جائیں گے کیا نذر خزاں کی! جن پھولوں پہ شبنم تری زلفوں کی پڑی ہے...
  20. ارشد چوہدری

    ہرگز کسی غریب کو رسوا نہ کیجئے-----برائے اصلاح

    الف عین ظہیراحمدظہیر صابرہ امین محمد خلیل الرحمٰن محمّد احسن سمیع؛راحل؛ ------------- ہرگز کسی غریب کو رسوا نہ کیجئے دے کر خدا کے نام پہ چرچا نہ کیجئے --------- کوئی خطا سے پاک ہو ،ممکن نہیں ہے یہ لوگوں سے بات بات پہ جھگڑا نہ کیجئے --------- ایسے تو زخم آپ کا ہو...
Top