لفظِ ”اردو“ پر مشتمل اشعار پیش کریں(کسی بھی زبان کے)

محمد اسامہ سَرسَری نے 'اشعار اور گانوں کے کھیل' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 2, 2013

  1. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    ایسے اشعار پیش کریں جن میں لفظ ”اردو“ استعمال ہوا ہو۔ خواہ وہ اشعار اردویا فارسی کے ہوں یا کسی اور زبان کے۔
    جیسے علامہ اقبال کا مشہور شعر ہے:

    گیسوئے اردو ابھی منّت پذیرِ شانہ ہے
    شمع یہ سودائیِ دل سوزئ پروانہ ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 7
    • زبردست زبردست × 3
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  2. بھلکڑ

    بھلکڑ لائبریرین

    مراسلے:
    3,621
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Blah
    اردو ہے جس کا نام ہم جانتے ہیں داغ
    سارے جہاں میں دھوم ہماری زبان کی ہے
    نہیں کھیل اے داغ یاروں سے کہہ دو
    کہ آتی ہے اردو زباں آتے آتے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  3. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    اردو کا جنازہ ہے ذرا دھوم سے نکلے
    کیوں جان حزیں خطرہ موہوم سے نکلے
    کیوں نالہ حسرت دل مغموم سے نکلے
    آنسو نہ کسی دیدہ مظلوم سے نکلے
    کہہ دو کہ نہ شکوہ لب مغموم سے نکلے
    اردو کا جنازہ ہے ذرا دھوم سے نکلے
    اردو کا غم مرگ سبک بھی ہے گراں بھی
    ہے شامل ارباب عزا شاہ جہاں بھی
    مٹنے کو ہے اسلاف کی عظمت کا نشاں بھی
    یہ میت غم دہلی مرحوم سے نکلے
    اردو کا جنازہ ہے ذرا دھوم سے نکلے
    اے تاج محل نقش بدیوار ہو غم سے
    اے قلعہ شاہی ! یہ الم پوچھ نہ ہم سے
    اے خاک اودھ !فائیدہ کیا شرح ستم سے
    تحریک یہ مصر و عرب و روم سے نکلے
    اردو کا جنازہ ہے ذرا دھوم سے نکلے
    سایہ ہو اردو کے جنازے پہ ولی کا
    ہوں میر تقی ساتھ تو ہمراہ ہوں سودا
    دفنائیں اسے مصحفی و ناسخ و انشاء
    یہ فال ہر اک دفتر منظوم سے نکلے
    اردو کا جنازہ ہے ذرا دھوم سے نکلے
    بدذوق احباب سے گو ذوق ہیں رنجور
    اردوئے معلیٰ کے نہ ماتم سے رہیں دور
    تلقین سر قبر پڑھیں مومن مغفور
    فریاد دل غالب مرحوم سے نکلے
    اردو کا جنازہ ہے ذرا دھوم سے نکلے
    ہیں مرثیہ خواں قوم ہیں اردو کے بہت کم
    کہہ دوکہ انیس اس کا لکھیں مرثیہ غم
    جنت سے دبیر آ کے پڑھیں نوحہ ماتم
    یہ چیخ اٹھے دل سے نہ حلقوم سے نکلے
    اردو کا جنازہ ہے ذرا دھوم سے نکلے
    اس لاش کو چپکے سے کوئی دفن نہ کر دے
    پہلے کوئی سر سیداعظم کو خبر دے
    وہ مرد خدا ہم میں نئی روح تو بھر دے
    وہ روح کہ موجود نہ معدوم سے نکلے
    اردو کا جنازہ ہے ذرا دھوم سے نکلے
    اردو کےجنازے کی یہ سج دھج ہو نرالی
    صف بستہ ہوں مرحومہ کے سب وارث و والی
    آزاد و نذیر و شرر و شبلی و حالی
    فریاد یہ سب کے دل مغموم سے نکلے
    اردو کا جنازہ ہے ذرا دھوم سے نکلے
    رئیس امروہی
     
    • زبردست زبردست × 7
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
  4. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    اردو کو اک رسالۂ الہام دوں ولی
    لوگوں کو دورِ ہادیٔ عالم عطا کروں
    محمد ولی رازی
    (سیرت کی مشہور غیر منقوط کتاب ”ہادیٔ عالم“ کے مصنف)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 8
  5. متلاشی

    متلاشی محفلین

    مراسلے:
    2,469
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    میرے خیال سے پہلے والا شعر یوں ہے
    اردو ہے جس کا نام ہم ہی جانتے ہیں داغ
    ہندوستاں میں دھوم ہماری زباں کی ہے
     
    • متفق متفق × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    اردو ہے جس کا نام ہمیں جانتے ہیں داغ
    ہندوستاں میں دھوم ہماری زباں کی ہے
     
    • متفق متفق × 5
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  7. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    خدا رکھے زباں ہم نے سنی ہے میر و مرزا کی
    کہیں کس منہ سے ہم اے مصحفی اردو ہماری ہے
    (غلام ہمدانی مصحفی)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 2
  8. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    تھا عرش پہ اک روز دماغِ اردو
    پامالِ خزاں آج ہے باغِ اردو
    غفلت تو ذرا قوم کی دیکھو کاظم
    وہ سوتی ہے بجھتا ہے چراغِ اردو

    کاظم بنارسی

     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  9. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    چرچا ہر ایک آن ہے اردو زبان کا
    گرویدہ کل جہان ہے اردو زبان کا

    اس لشکری زبان کی عظمت نہ پوچھیے
    عظمت تو خود نشان ہے اردو زبان کا

    گم نامیوں کی دھوپ میں جلتا نہیں کبھی
    جس سر پہ سائبان ہے اردو زبان کا

    مشرق کا گلستاں ہو کہ مغرب کا آشیاں
    ویران کب یہ مکان ہے اردو زبان کا

    سوداؔ و میرؔ و غالبؔ و اقبالؔ دیکھ لو
    ہر ایک پاسبان ہے اردو زبان کا

    اردو زبان میں ہے گھلی شہد کی مٹھاس
    لہجہ بھی مہربان ہے اردو زبان کا

    ترویج دے رہا ہے جو اردو زبان کو
    بے شک وہ باغبان ہے اردو زبان کا

    مہمان کہہ رہا ہے بڑا خوش نصیب ہے
    جو شخص میزبان ہے اردو زبان کا

    یہ ارضِ پاک صورتِ کشتی ہے دوستو!
    اور اس میں بادبان ہے اردو زبان کا

    لوگو! کہیں بھی اس میں پس و پیش کچھ نہیں
    اک معترف جہان ہے اردو زبان کا

    بولی ہے رابطے کی یہی جوڑتی ہے دل
    ہر دل میں ایسا مان ہے اردو زبان کا

    روشن ہے حرف حرف مفہوم اس کا آفریں
    شیریں سخن بیان ہے اردو زبان کا

    وسعت پذیر دامنِ اردو ہے اآج بھی
    ہر گوشہ اک جہان ہے اردو زبان کا

    کرتا ہے آبیاری لہو سے ادیب جو
    وہ دل ہے ، جسم و جان ہے اردو زبان کا

    آئیں رکاوٹیں جو ترقی میں اس کی کچھ
    سمجھو یہ امتحان ہے اردو زبان کا

    پائے گا جلد منزلِ مقصود بالیقیں
    جاری جو کاروان ہے اردو زبان کا

    عزت سخنورانِ ادب کی اسی سے ہے
    شاعرؔ بھی ترجمان ہے اردو زبان کا


    شاعر علی شاعر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  10. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    مصحفی کے اس شعر کی بابت یہ کہا جاتا ہے کہ یہ اردو کا وہ پہلا شعر ہے جس میں لفظ اردو برائے زبانِ اردو استعمال کیا گیا ورنہ اس سے قبل اردو کے لیے ریختہ وغیرہ کے الفاظ تو شعرا نے برتے تھے لیکن لفظ اردو نہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 6
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  11. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    16,481
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    اردو ہے میرا نام میں خسرو کی پہیلی
    میں میر کی ہمراز ہوں غالب کی سہیلی

    دکن کے ولی نے مجھے گودی میں کھلایا
    سودا کے قصیدوں نے میرا حسن بڑھایا
    ہے میر کی عظمت کہ مجھے چلنا سکھایا
    میں داغ کے آنگن میں کھلی بن کے چنبیلی

    غالب نے بلندی کا سفر مجھ کو سکھایا
    حالی نے مروت کا سبق یاد دلایا
    اقبال نے آئینۂ حق مجھ کو دکھایا
    مومن نے سجائی میری خوابوں کی حویلی

    ہے ذوق کی عظمت کہ دئیے مجھ کو سہارے
    چکبست کے الفت نے میرے خواب سنوارے
    فانی نے سجائے میری پلکوں پہ ستارے
    اکبر نے رچائی مری بے رنگ ہتھیلی

    کیوں مجھ کو بناتے ہو تعصب کا نشانہ
    میں نے تو کبھی خود کو مسلماں نہیں مانا
    دیکھا تھا کبھی میں نے بھی خوشیوں کو زمانہ
    اپنے ہی وطن میں ہوں مگر آج اکیلی

    (اقبال اشعر)​
     
    • زبردست زبردست × 6
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    16,481
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    یارب رہے سلامت اردو زباں ہماری
    ہر لفظ پر ہے جس کے قربان جاں ہماری

    مصری سی تولتا ہے ، شکر سی گھولتا ہے
    جو کوئی بولتا ہے میٹھی زباں ہماری

    ہندو ہو پارسی ہو عیسائی ہو کہ مسلم
    ہر ایک کی زباں ہے اردو زباں ہماری

    دنیا کی بولیوں سے مطلب نہیں ہمیں کچھ
    اردو ہے دل ہمارا ، اردو ہے جاں ہماری

    دنیا کی کل زبانیں بوڑھی سی ہو چکی ہیں
    لیکن ابھی جواں ہے اردو زباں ہماری

    اپنی زبان سے ہے عزت جہاں میں اپنی
    گر ہو زباں نہ اپنی عزت کہاں ہماری

    اردو کی گود میں ہم پل کر بڑے ہوئے ہیں
    سو جاں سے ہم کو پیاری اردو زباں ہماری

    آزاد و میر و غالب آئیں گے یاد برسوں
    کرتی ہے ناز جن پر اردو زباں ہماری

    افریقہ ہو عرب ہو امریکہ ہو کہ یورپ
    پہنچی کہاں نہیں ہے اردو زباں ہماری

    مٹ جائیں گے مگر ہم مٹنے نہ دیں گے اس کو
    ہے جا ن و دل سے پیاری ہم کو زباں ہماری
    (اختر شیرانی)​
     
    • زبردست زبردست × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  13. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    عجیب۔۔۔۔
    یعنی شعر میں زبانِ اردو کے لیے اردو کا لفظ سب سے پہلے مصحفی نے کہا۔
    کیا نثر میں اس سے پہلے یہ لفظ اردو زبان کے لیے طے کیا جاچکا تھا یا ریختہ کو اردو کا نام دیا ہی مصحفی نے ہے؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  14. نوید رزاق بٹ

    نوید رزاق بٹ محفلین

    مراسلے:
    362
    موڈ:
    Cool
    ہر شخص کو زبانِ فرنگی کے باٹ سے
    جو شخص تولتا ہے سو ہے وہ بھی آدمی
    افسر کو آج تک یہ خبر ہی نہیں ہوئی
    اُردو جو بولتا ہے سو ہے وہ بھی آدمی
    (انور مسعود)​
     
    • زبردست زبردست × 4
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  15. خالد محمود چوہدری

    خالد محمود چوہدری محفلین

    مراسلے:
    12,986
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    بہت شاندار
     
    • دوستانہ دوستانہ × 2
    • متفق متفق × 2
  16. نظام الدین

    نظام الدین محفلین

    مراسلے:
    1,005
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    سیکڑوں اور بھی دنیا میں زبانیں ہیں مگر
    جس پہ مرتی ہے فصاحت وہ زباں ہے اردو
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    نسیم دہلوی ہم موجد باب فصاحت ہیں
    کوئی اردو کو کیا سمجھے گا جیسا ہم سمجھتے ہیں
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    اردو کو آپ تھوپ رہے ہیں جو قوم پر
    اردو نوازیوں کے زمانے گزر گئے
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    قوم کیسی کس کو اب اردو زباں کی فکر ہے
    غم غلط کرنا ہے بس اور آب و ناں کی فکر ہے
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    کہا جو میں نے کہ ان کی ادا انوکھی ہے
    کہا بتوں نے کہ اردو میاں کی چوکھی ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • زبردست زبردست × 3
  17. قربان

    قربان محفلین

    مراسلے:
    77
    وقارِ اردو
    نہ بجھا ہے نہ بجھے گا یہ چراغِ اردو
    آج ہمدوشِ ثریاہے دِماغ اردو
    بُو الہوس پائیں گے کیا خاکِ سُراغ اردو
    لہلہائے اسی طرح یہ باغ اردو
    ہند کی شان ہے یہ عظمت گوتم کی طرح
    اب بھی تابندہ ہے پیشانیٔ مریم کی طرح
    بزمِ خسرو میں جلی شمع تمنا بنکر
    درس اخلاق دیا ہے کہیں گیتا بنکر
    کبھی گوپاک کی بنسی کبھی رادھا بنکر
    رام کا ساتھ دیا ہے کبھی سیتا بنکر
    مشتری بن کے قطب شاہ کے گھر تک پہونچی
    بزمِ اربابِ سخن اہل نظر تک پہونچی
    کبھی دلیّ کبھی پنجاب کو آباد کیا
    رونقِ شامِ اودھ صبح بنارس کی ضیا
    عالم وجد سرکی جو ترے سر کی ردا
    رنگ و نکہت سے معطر ہوئی پٹنے کی فضا
    شوخیاں میر نے سودا نے شرارت دیدی
    ناز مومن نے تو غالب نے جسارت دیدی
    ذوق نے ساغرِ خورشید میں ڈھالا تجھکو
    خونِ دل دے کے ظفر شاہ نے پالا تجھکو
    اور ہر گام پہ ناسخ نے سنبھالا تجھکو
    فکر آتش نے دیا ایسا اُجالا تجھکو
    ڈھل گئی نور کے سانچے میں جوانی تیری
    پاگیا میر حسن سحر بیانی تیری
    مصحفی نے ترا انداز تکلم سمجھا
    تیرے دامن سے ہے وابستہ بہارِ انشا
    بزمِ اقبال میں روشن تری حکمت کا دیا
    کوئی چکبست سے پوچھے ترا پیمانِ وفا
    تیری مستی کا اثر دیدۂ سرشار میں ہے
    تیری سطوت کا نشاں جوش کے افکار میں ہے
    پوچھئے حضرتِ حالی سے وقارِ اردو
    خیمہ زن باغ میں شبلی کے بہار اردو
    سرسے کیفی کے نہ اترے گا خمارِ اردو
    دل حسینی بھی ازل سے ہے نثار اردو
    خوشہ چیں ہیں اسی گلشن کے منیف اور سہیل
    سیکڑوں زندۂ جاوید ہیں اردو کی طفیل
    ڈاکٹر دل حسینی (مئو،یوپی)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  18. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,568
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    فارسی بیں تا بہ بینی نقش ہائے رنگ رنگ
    بگزر از مجموعۂ
    اردو کہ بے رنگِ من است


    غالب

    میری فارسی شاعری دیکھ کہ تجھے رنگ رنگ کہ نقوش نظر آئیں، میرے اردو مجموعے کو چھوڑ دے کہ وہ تو میری بے رنگی ہے۔
     
    آخری تدوین: ‏ستمبر 4, 2015
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  19. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    ارے واہ بہت خوب۔
    دوسرے مصرع میں وزن کا مسئلہ لگ رہا ہے یا میرا وہم ہے۔
    اگر "بگزر" ہو اور گ کو ساکن اور ر کو متحرک پڑھا جائے تب شاید وزن درست ہوگا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  20. راحیل فاروق

    راحیل فاروق محفلین

    مراسلے:
    1,323
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Psychedelic
    آپ جیسے وہمی افراد کی اہلِ اردو کو ضرورت ہے۔
    سرسری صاحب نے بجا فرمایا۔ وارث بھائی سے غالباً سہو ہو گئی۔ غالبؔ نے بگزر ہی لکھا تھا۔ بگزار سے تو شعر لایعنی ہو جاتا ہے۔ عروض کے منافع ملاحظہ فرمائیے کہ زبان نہ سمجھیں تب بھی شعر کی صحت پہ گرفت ہو سکتی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • متفق متفق × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1

اس صفحے کی تشہیر