داغ حالِ دل تجھ سے، دل آزار، کہوں یا نہ کہوں - داغ دہلوی

کاشفی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 28, 2010

  1. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,371
    غزل
    (داغ دہلوی رحمتہ اللہ علیہ)

    حالِ دل تجھ سے، دل آزار، کہوں یا نہ کہوں
    خوف ہے، مانعِ اظہار کہوں یا نہ کہوں؟

    آخر انسان ہوں میں صبرو تحمل کب تک
    سینکڑوں سُن کے بھی، دو چار کہوں یا نہ کہوں؟

    آپ کا حال جو غیروں نے کہا ہے مجھ سے
    ہیں مرے کان گناہ گار، کہوں یا نہ کہوں؟

    نہیں‌چھپتی نہیں چھپتی نہیں چھپتی الفت
    سب کہے دیتے ہیں‌آثار کہوں یا نہ کہوں

    داغ ہے نام مرا ، برق طبیعت میری
    گرم اس طرح کے اشعار کہوں یا نہ کہوں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,666
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    واہ واہ! بہت خوبصورت غزل ہے۔ شکریہ کاشفی صاحب!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,371
    شکریہ سخنور صاحب۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر