برقیائی گئی پانچ اسلامی و تاریخی کتب ۔

طالوت نے 'ای بکس کی تیاری' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 30, 2010

  1. زین

    زین لائبریرین

    مراسلے:
    12,400
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    ظہیر بھائی ۔میں یہ کتابیں پڑھنا چاہتا ہوں ۔ آپ مجھے دونوں ای میل ایڈریسز پر بھیج دیجئے۔ شکریہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,828
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    سویدا صاحب میں یہ باتیں پہلے بھی پڑھ چکا ہوں اور میں نے تاریخِ حدیث کتاب ڈھونڈنے کی بھی کوشش کی ہے۔ شیخ غلام علی اینڈ سنز، لاہور نے ڈاکٹر غلام جیلانی برق کی کتابیں چھاپی ہیں لیکن ان کے پاس یہ کتاب موجود نہیں۔ اگر آپ کوئی حوالہ دے سکیں تو پھر ہی یہ بات تسلیم کی جا سکتی ہے ورنہ ہوا میں اڑتی باتوں کی کوئی وقعت نہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    خواہش کا احترام کر دیا گیا ہے ۔
     
  4. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    یہ زمرہ بحث کا نہیں اور برق صاحب کے رجوع والےمعاملے پر میں بہت پہلے ایک محفل میں بحث کر چکا ۔ کسی ممبر نے ایک بوسیدہ سا کاغذ بھی چسپاں کیا تھا جس سے نہ تو تحریر سمجھ میں آتی تھی اور نہ کوئی ایسی مضبوط شہادت میسر تھی کہ جس کی بنیاد پر اسے سچ قرار دیا جا سکے ۔ رہی مصنفین و مولفین کے متنازعہ ہونے کی بات تو میں کئی بار کہہ چکا کہ کوئی ایسا شخص بتائیں جو متنازعہ نہ ہو ؟ عرض ہے کہ تمام بڑے فرقوں کی سائٹس کا دورہ کر لیں آپ کو لگ پتا جائے گا کہ کون کون متنازعہ ہے ۔ میرا ارادہ تھا کہ ان تمام سائٹس سے مواد یہاں پیش کروں تاکہ حقیقت کھل کر سامنے آئے اور نام نہاد اجماع کی قلعی کھل سکے مگر احباب کی پٹڑی سے اتر جانے کی عادت کے باعث باز رہا۔ اسلئے بہتر یہ ہے کہ کتب کا مطالعہ کریں اور پھر بے شک اس پر مثبت انداز میں کسی دھاگے میں بات چیت کر لیں ۔ یوں فتوی صادر کر دینا مناسب نہیں ۔
    وسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  5. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    خواہش کا احترام کر دیا گیا ہے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    34,521
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    مجھے اس سے مطلب نہیں کہ مواد درست ہے یا نہیں۔ مجھے پروف ریڈنگ کے لئے بھیج دو طالوت۔
    حال ہی میں میں نے انجیل مقدس کی بھی پروف ریڈنگ کی ہے اور اسے اپ لوڈ کرنے والا ہوں۔ جو سرے سے اسلامی کتاب ہی نہیں ہے!!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  7. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    ویسے پہلے ہی عرض کردوں کہ اگر ایسا کوئی ثبوت مہیا کر بھی دیا جائے تو مجھے اس کی پروا نہیں جب تک کہ مبینہ طور پر برق صاحب کا رجوعی مضمون اس بات کا حق نہ ادا کر دے جس سبب انھوں نے اس کتاب کی مزید اشاعت سے منع کر دیا ۔ حالانکہ ان کی یہ کتاب ان کی دوبارہ نظر ثانی کے بعد شائع ہوئی تھی جس میں انھوں نے اس کے پہلے ایڈیشن کے بعد جوابا لکھی جانے والی کتابوں کا بھی واضح ذکر اور ان پر تبصرہ کیا ہے ۔
    وسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    آپ ہی کا تو انتظار تھا حضرت ۔ اس سے پہلے بھی ایک کتاب “مقتل الحسین المشہور بہ مقتل ابی مخنف“ آپ ہی کی مہربانی سےپروف ریڈ ہو کر انٹر نیٹ کی دنیا میں گردش میں ہے ۔ ابھی بھیجتا ہوں ۔
    وسلام
     
  9. سویدا

    سویدا محفلین

    مراسلے:
    1,842
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Question
    بھائیوں اتنا سیخ پا ہونے کی ضرورت نہیں ہے
    میں نے فقط اپنی رائے کا اظہار کیا ہے
    آپ لوگ تو طالبان کی طرح میرے پیچھے لگ گئے
    بہرحال یہ تمام کتب انکار حدیث کے مواد پر مشتمل ہیں
    بحث برائے بحث میں الجھنا اچھی بات نہیں ہے جس کو ثبوت چاہیے تو وہ انہی کتب کا بغور مطالعہ کرلے
     
  10. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    نہیں جناب یہاں کوئی بھی سیخ پا نہیں ہو رہا ۔ اور کتنی اچھی بات کی آپ نے کہ “بحث برائے بحث میں الجھنا اچھی بات نہیں ہے جس کو ثبوت چاہیے تو وہ انہی کتب کا بغور مطالعہ کرلے “ ان کتابوں کو برقیانے کا میرا ممقصد بھی یہی ہے کہ احباب خود پڑھیں اور جو مناسب سمجھیں اسے اختیار کریں۔ نہ تو ہر چیز کی کلی طور پر مخالفت کی جا سکتی ہے اور نہ تائید ۔
    وسلام
     
  11. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    200,069
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    ماشاء اللہ، ظہیر بھائی آپ نے یہ کتابیں برقیا کر بہت بڑا کارنامہ انجام دیا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    بے جا کم علمی کی بحث سے کتاب کا پڑھ کر کچھ جاننا زیادہ مفید ہے ۔ آپ کی محبت کہ آپ اسے کارنامہ کہہ رہے ہیں ، یہ تو میں نے اپنے سکون کے لئے کرتا ہوں ۔
    وسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  13. سویدا

    سویدا محفلین

    مراسلے:
    1,842
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Question
    فروغ کتب کے سلسلے میں کارنامہ تو واقعی آپ نے بہت بڑا انجام دیا ہے پانچ کتابوں پر اتنی محنت اور وقت صرف کیا

    میں نے پہلی پوسٹ میں بھی آپ کے اس کارنامے کی تحسین کی تھی

    میرا مقصد صرف اتنا تھا کہ ان کتب کا قاری مطالعے کے دوران یہ ذہن میں رکھے کہ یہ کتب انکار حدیث کے مواد پر مشتمل ہیں

    اسی طرح جو لکھنے والے ہیں وہ بھی اپنے اپنے زمانے میں نظریہ انکار حدیث کے حامل رہے ہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  14. سویدا

    سویدا محفلین

    مراسلے:
    1,842
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Question
    جن تمام ویب سائٹ میں تفرقہ بازی پر مشتمل مواد ہے اس کی تائید تو میں نے ہرگز نہیں کی اور میں ان سب کو بھی غلط سمجھتا ہوں چاہے ان کا تعلق کسی بھی فرقے یا جماعت سے ہو

    اگر کچھ لوگ تفرقہ پھیلا رہے ہیں تو ان کا غلط کام میرے غلط کام کے لیے دلیل یا بنیاد نہیں بن سکتا

    یہ پانچ کتابیں بھی در حقیقت تفرقہ بازی ہی کی صنف سے تعلق رکھتی ہیں

    میرا ناقص مشورہ ہے کہ آئندہ کسی مثبت کتاب کا انتخاب کیجیے گا
     
  15. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    :)
    بات ختم ہونے کا نام ہی نہیں لیتی ۔
    ویسے اسلامی و تاریخی معاملات پر تفرقہ بازی پیدا نہ کرنے والی تو کتاب نہیں ملتی ۔ اس کا بڑا سبب یہ ہے کہ اس قسم کا مواد آپ جب بھی پڑھیں گے تو اگر تو وہ آپ کے مزاج و عقائد کی تائید کرتی ہو تو درست نہ کرتی ہو تو تفرقہ بازی ۔ یہ تو بڑی سادی سی بات ہے ، اسے سمجھا جائے تو تفرقہ بازی اور تفرقہ پیدا نہ کرنے والی کتابوں میں فیصلہ کرنا آسان ہو جاتا ہے (اور یقینا ایسا کوئی مواد حاصل کرنا آسان نہیں)۔ اور اگر اس اصول کو مد نظر رکھا جائے تو ان کتابوں کو تفرقے کا باعث نہیں کہا جا سکتا ، کیونکہ ان میں نہ تو کسی کو اسلامی برادری سے خارج کیا گیا ہے اور نہ کوئی فتوی دیا گیا ۔ صرف ایک پہلے سے موجود چیز کی قران و عقل کی روشنی میں نئی توجیہات پیش کی گئی ہیں ۔ اگر دلیل مضبوط ہے تو درست نہیں تو غلط ۔(دو اسلام ایک ایسی کتاب ہے جس میں لب و لہجہ ضرور سخت ہے)
    آپ کا مشورہ ناقص نہیں اچھا ہے ، آپ کسی کتاب کا نام بتائیں اس پر ضرور غور کروں گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  16. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    ویسے میں نے چار پانچ اور کتابیں شروع کر رکھی ہیں جو اسی قسم کی ہیں ان کے بعد ہی اس پر عملدرآمد ممکن ہو گا۔ اب ظاہر ہے ان مصنفین و قارئین کا بھی تو حق ہے کہ ایک دوجے سے متعارف ہوں ۔
    وسلام
     
  17. شاکر

    شاکر محفلین

    مراسلے:
    106
    کچھ تلاش کرنے پر مجھے لاہور سے یہ کتاب دستیاب ہو گئی ہے۔ آج ہی کتاب و سنت ڈاٹ کام پر اپ لوڈ کی ہے۔ بحث سے مطلب نہیں لیکن بہرحال یہ تحریری ثبوت ہے اس بات کا کہ غلام جیلانی برق صاحب نے واقعی ’دو اسلام‘ کتاب لکھنے کے بعد اس سے توبہ کی اور ازالہ کے طور پر خدمت حدیث کیلئے یہ کتاب’’تاریخ حدیث‘‘ لکھی ہے۔
    ڈاؤن لوڈ لنک
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  18. سویدا

    سویدا محفلین

    مراسلے:
    1,842
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Question
    شاکر صاحب بہت بہت شکریہ
    اللہ آپ کو جزائے خیر عطا فرمائے ، آمین
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  19. باذوق

    باذوق محفلین

    مراسلے:
    1,093
    بالا اقتباس دراصل جناب غلام جیلانی برق کی کتاب "تاریخِ حدیث" کے مقدمہ (حرف اول) کی آخری سطریں ہیں۔
    اور ۔۔۔۔۔
    ماہنامہ "ترجمان القرآن" کے شمارہ ستمبر-2010ء میں ایک کتاب "دوامِ حدیث" کا تعارف کرواتے ہوئے مبصر لکھتے ہیں :
    مزید ۔۔۔۔۔
    انکارِ حدیث سے تاریخِ حدیث تک ۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  20. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    برق صاحب نے دو اسلام میں بھی ان احادیث سے فائدہ اٹھانے کی بات کی تھی جو قران سے متصادم نہ ہوں اور آگے جا کر بھی وہ اسی بات کو اپنائے ہوئے ہیں۔ تعصب کی عینک لگا کر پڑھنے والوں کو دو اسلام کا وہ چیپٹر کبھی نظر نہیں آیا ۔یہاں بھی اسی بات کا تسلسل ہے کہ وہ احادیث کے انتخاب کی بات کر رہے ہیں نا کہ کسی ایک دو یا چار چھ کو صحیح کتاب بعد از کتاب اللہ اور آیات تسلیم کر رہے ہیں۔

    بہرحال کتب موجود ہیں قاری پڑھے اور فیصلہ کرے مگر فیصلہ ان معاملات پر جن پر گرفت کی جاتی ہے مطلب کی چیز پکڑ لی جائے اور باقی کوڑے دان میں۔

    وسلام
     

اس صفحے کی تشہیر