چند ادبی لطیفے

جیہ نے 'علمی و ادبی لطیفے' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 12, 2009

  1. ظفری

    ظفری لائبریرین

    مراسلے:
    11,807
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Question
    آپ کی اطلاع کے لیئے عرض ہے کہ میرا تعلق بھی سوات سے ہے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. ظفری

    ظفری لائبریرین

    مراسلے:
    11,807
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Question
    جویریہ کہیں سچ مچ ناراض تو نہیں ہوگئی ۔ :praying:
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  3. مغزل

    مغزل محفلین

    مراسلے:
    17,597
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    ظفری بھائی ، معاف کرنا یہ کوئی خوشی کی بات نہیں ، بڑی بوڑھیاں عموماً بچوں سے جھوٹ بول کر بہلاتی ہیں ، ہاہا ا :rollingonthefloor: :rollingonthefloor:
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  4. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    204,935
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    یہ ادبی لطیفے سنائے جا رہے ہیں یا ادب کی گت بنائی جا رہی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  5. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    یہ سچ مچ ناراض اس وقت تک رہتی ہیں جب تک ان کے ہاتھ میں دوسرے کا کان نہ ہو :nailbiting:
    'گُت" (پنجابی) یا درگت (اردو) :confused:
    وسلام
     
  6. dxbgraphics

    dxbgraphics محفلین

    مراسلے:
    5,194
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    زہ مڑا آپ کہاں تھے اب تک
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    روز یہیں ، ہم نے کہاں جانا ہے ۔
    وسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. مغزل

    مغزل محفلین

    مراسلے:
    17,597
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    جیہ ابھی تک نہیں آئی کیا ؟
     
  9. ساجد

    ساجد محفلین

    مراسلے:
    7,113
    موڈ:
    Question
    جویریہ ، اتنے "باادب" لطائف ارسال فرمانے کا شکریہ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  10. جیہ

    جیہ لائبریرین

    مراسلے:
    15,072
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Blah
    شکریہ ۔ دو ستاروں والے ساجد۔ تو کیا بے ادب لطیفے بھی ہوتے ہیں :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  11. ساجد

    ساجد محفلین

    مراسلے:
    7,113
    موڈ:
    Question
    ہا ں بھئی! کیوں نہیں ہوتے بے ادب لطیفے؟ یہ سانتا بانتا (سردار جی) کے لطیفے کیا ہیں بھلا؟ اور پھر اب کچھ لطیفے تو سرکاری طور پہ "بے ادب" ٹھہرا دئیے گئے ہیں۔ اب تو موبائل کا ان باکس خالی ہی پڑا رہتا ہے۔ بس ٹی وی اور اخباروں پہ انہی مسخروں کے لطیفوں پہ گزارا ہے جو گزشتہ 62 برس سے عوام کا "منورنجن" کر رہے ہیں۔:)۔
    ایسے وقت میں آپ کے ارسال کردہ لطائف نے شگفتگی کا احساس دلا دیا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  12. جیہ

    جیہ لائبریرین

    مراسلے:
    15,072
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Blah
    یہ جو سب آپ گنوا رہے ہیں وہ لطیفے نہیں "کثیفے" ہوتے ہیں:)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  13. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,186
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ایک مشاعرے کی نظامت کنور مہندر سنگھ بیدی سحر کر رہے تھے۔ جب فنا نظامی کی باری آئی تو مہندر سنگھ نے کہا کہ حضرات اب میں ملک کے چوٹی کے شاعر حضرت فنا نظامی کو زحمت کلام دے رہا یہوں۔ فنا صاحب مائک پر آئے سحر کی پگڑی کی طرف مسکرا کر دیکھا اور اپنی داڑھی پر ہاتھ پھیرتے ہوئے کہنے لگے: حضور چوٹی کے شاعر تو آپ ہیں میں تو داڑھی کا شاعر ہوں۔
    تشکر: علی گڑھ اردو کلب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 11
  14. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,186
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    بے خود دہلوی کافی بد مزاج تھے لیکن چونکہ حضرت داغ کے جا نشین تھے اس لئے سب ہی بہت احترام کرتے تھے۔ ایک بار کسی مجلس میں پہنچے تو ایک نوجوان اپنی غزل سنا رہا تھا ، بے خود کی آمد پر احتراما” سب کھڑے ہو گئے اور انہیں صدر میں نشست دی۔ انہوں نے پوچھا بھئی کیا ہو رہا تھا ، لوگوں نے نوجوان کی طرف اشارہ کیا اور کہا کہ یہ سائل صاحب کے فر زند ہیں، غزل سنا رہے تھے۔ بے خود بولے بھئ وہ تو میرا خواجہ تاش ہے اس اعتبار سے تم میرے بھتیجے ہوئے اس لئے ہم بھی تمہاری غزل سنہیں گے، ہاں میاں سناؤ۔ ۔ ۔ ۔
    سائل کے بیٹے نے انتہائی ادب کے ساتھ غزل سنانی شروع کی جو بے خود نے غور سے سنی۔ مقطع سن کے پوچھا میاں کس سے اصلاح لیتے ہو۔ لڑکے نے کہا : اپنے بابا جان سے۔ بے خود بولے : مجھ سے اصلاح لیا کرو اور اچھا کہنے لگو گے۔ سائل کے بیٹے خاموش رہے۔ محفل بر خاست ہو گئی۔ گھر جا کر بیٹے نے باپ کو یہ واقعہ سنایا تو سائل خاموش رہے۔ اگلے دن سائل نے بیٹے سے کہا تیار ہو جاؤ اور میرے ساتھ چلو، راستے سے سیر بھر مٹھائی خریدی اور بے خود کے گھر پہنچے۔ اطلاع کروائی کہ سائل آیا ہے۔ کچھ دیر میں بے خود بیٹھک میں آئے اور سائل کے ساتھ ان کے بیٹے کو دیکھ کر گویا ہوئے۔ بھئی سائل تمہارا بیٹا اچھاکہتا ہے۔ سائل نے کہا : اسی لئے تو لایا ہوں کہ اور اچھا کہنے لگے۔ اور بیٹے کا ہاتھ پکڑ کر بے خود کے ہاتھ میں دے دیا اور سامنے مٹھائی رکھتے ہوئے بولے : منہ میٹھا کر لو۔


    تشکر: علی گڑھ اردو کلب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  15. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,186
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    بےخود دہلوی اور سائل دہلوی دونوں داغ کے ارشد تلامذہ میں تھے. دونوں میں باہمی معاصرانہ چشمک بھی تھی. سائل کو شاگردی کے علاوہ داغ کی دامادی کا شرف اور اس کا احساس بھی تھا.تو اپنی زبان کے اور خود اپنے مستند سے بھی کچھ بلند ہونے کے بارے میں فرمایا کہ وہ "جناب داغ کے داماد ہیں اور دلّی والے ہیں". اس کے بعد اور کس سند کی ضرورت رہی.

    بے خود اور سائل کسی مشاعرہ میں یکجا نہیں ہوتے تھے، کیونکہ مسئلہ یہ ہوتا کہ سب سے آخر میں کون پڑھے. دونوں ہی استاد تھے اور ایک سے مرتبہ کے تھے. اس لئے منتظمین مشاعرہ کو پریشانی سے دور رکھنے کے لئے دونوں میں سے کوئی ایک ہی مشاعرہ میں آتا تھا. ایک بار کچھ لوگوں کو شرارت سوجھی، اور دونوں کو بتائے بغیر ایک ساتھ مشاعرہ میں بلا لیا. دونوں نے بزم میں ایک دوسرے کو دیکھا ، مگر پلٹ کر کوئی نہ گیا. خاموشی سے آکر مسند پر بیٹھ گئے.دوران مشاعرہ باہم کلام بھی نہ کیا. تمام شاعر پڑھ چکے تو ناظم مشاعرہ بھی خاموش ہو بیٹھے. مجمع منتظر کہ دیکھیں کیا گل کھلتا ہے. چند لمحہ سناٹے کے بعد بے خود نے شیروانی کی جیب سے ایک پرزہ نکالا جس پر ان کی تازہ غزل تھی.

    یہ دیکھ کر کہ بے خود ان سے پہلے پڑھنے پر آمادہ ہیں، سائل نے کہا

    ہائیں، ہائیں، یہ کیا بد تمیزی ہے؟

    بے خود نے یہ سن کہ پرزہ جیب میں واپس رکھتے ہوئے سائل کو جواب دیا:

    تو یہ بد تمیزی تم کر لو!

    اور یوں مشاعرہ بیخود کی غزل پر تمام ہوا.

    تشکر: علی گڑھ اردو کلب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 9
  16. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,186
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ایک بار کسی سبب سے ایک نوجوان شاعر کو فراق گورکھپوری کے پڑھنے کے بعد کلام پڑھنے کے لئے بلایا گیا۔ نوجوان پس و پیش میں تھا اور بار بار فراق صاحب کی طرف دیکھ رہا تھا کہ فراق جیسے سینئر شاعر کے بعد کیسے پڑھے۔ فراق صاحب نے نوجواں کی طرف مسکرا کر دیکھا اور بولے: میاں جب تم میرے بعد پیدا ہو سکتے ہو تو میرے بعد کلام کیوں نہیں سنا سکتے۔۔۔

    تشکر: علی گڑھ اردو کلب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 10
  17. جیہ

    جیہ لائبریرین

    مراسلے:
    15,072
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Blah
    بہت خوب بابا جانی

    سائل و بیخؤد کے واقعے سے پتہ چلتا ہے کہ اگلے زمانے میں لوگ کتنے وضعدار تھے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  18. جہانزیب

    جہانزیب محفلین

    مراسلے:
    2,442
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Brooding
    راجندر سنگھ بیدی اور پری شان خٹک والے لطائف بڑے اعلی ہیں‌ ۔
     
  19. جہانزیب

    جہانزیب محفلین

    مراسلے:
    2,442
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Brooding
    سَرجن کی بجائے سُرجَن
    اس سُرجَن کی کوئی اور پنجابی بولنے والا وضاحت کرے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  20. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,186
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    بے خود اور سائل پر ہی ایک اور بات، لطیفہ نہیں، ہاد آ گئی۔
    کسی کلاسیکی شاعر سے کہا گیا کہ ایسا مصرع یا شعر کہا جائے جس میں ان دونوں بزرگوں کے نام شامل ہوں اور لگے کہ محض نام نہیں ہیں، الفاظ ہیں۔ ان صاحب نے جو مکمل شعر کہا وہ تو یاد نہیں، ایک مصرع یاد رہ گیا
    کوئی سمجھا کہ بے خود ہے، کوئی سمجھا کہ سائل ہے
    (پہلا مصرع میں ایسا کچھ تھا کہ پڑا ہوں اس طرح میں یار کے کوچے/در پہ۔۔۔۔)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5

اس صفحے کی تشہیر