محمداحمد

لائبریرین
غزل

پہلے اپنے آپ کو مِسمار کر
پھر نیا اک آدمی تیار کر

یہ غُرور و فخر ہے کِس بات کا
عاجزی کو طُرہٴ دستار کر

سہل انگاری کہاں تک، اُٹھ ذرا
زندگی کو اور مت دشوار کر

خوش امیدی کو بنا بانگِ جرس
آرزو کو قافلہ سالار کر

روشنی کے رنگ کا پرچم بنا
عزم کو اس کا علم بردار کر

اب تلک جو ہو چکا، سو ہو چکا
سیکھ جینا زیست کو ہموار کر

کچھ فریبی اژدہوں کا خوف ہے
تو ذرا مجھ کو عصا بردار کر

دیکھ صورت کو مِری، آنکھوں میں جھانک
کچھ تو دل داری مرے دل دار کر

ہوں سبک سر میں، سبک رفتار زیست
کچھ توقف اے کہانی کار کر

کیوں ہے احمد تو پریشاں، بات سن
بیٹھ اک گوشے میں، استغفار کر

محمد احمدؔ
 

محمد عبدالرؤوف

لائبریرین
واہ واہ واہ۔۔۔۔ کیا ہی خوب غزل ہے۔۔
سب ہی شعر خوب ہیں لیکن
سہل انگاری کہاں تک، اُٹھ ذرا
زندگی کو اور مت دشوار کر

اب تلک جو ہو چکا، سو ہو چکا
سیکھ جینا زیست کو ہموار کر
ان دو اشعار کی کیا ہی بات ہے۔
بہت سی داد حاضر ہے احمد بھائی
 

زوجہ اظہر

محفلین
غزل

پہلے اپنے آپ کو مِسمار کر
پھر نیا اک آدمی تیار کر

یہ غُرور و فخر ہے کِس بات کا
عاجزی کو طُرہٴ دستار کر

سہل انگاری کہاں تک، اُٹھ ذرا
زندگی کو اور مت دشوار کر

خوش امیدی کو بنا بانگِ جرس
آرزو کو قافلہ سالار کر

روشنی کے رنگ کا پرچم بنا
عزم کو اس کا علم بردار کر

اب تلک جو ہو چکا، سو ہو چکا
سیکھ جینا زیست کو ہموار کر

کچھ فریبی اژدہوں کا خوف ہے
تو ذرا مجھ کو عصا بردار کر

دیکھ صورت کو مِری، آنکھوں میں جھانک
کچھ تو دل داری مرے دل دار کر

ہوں سبک سر میں، سبک رفتار زیست
کچھ توقف اے کہانی کار کر

کیوں ہے احمد تو پریشاں، بات سن
بیٹھ اک گوشے میں، استغفار کر

محمد احمدؔ
خوب بہت خوب، جناب
 

صابرہ امین

لائبریرین
پہلے اپنے آپ کو مِسمار کر
پھر نیا اک آدمی تیار کر

مطلع سے مقطع تک خوبصورت اشعار سے سجی ایک پر لطف غزل ۔ ۔
 

محمداحمد

لائبریرین
خوبصورت خیالات سے مزین اشعار ہیں سب۔ ماشاءاللہ۔
داد قبول کیجیے @محمداحمد بھائی۔
بہت شکریہ ساگر بھیا!

حوصلہ افزائی کے لئے ممنون ہوں۔
جزاک اللہ !

شاد آباد رہیے۔ :)
 

سیما علی

لائبریرین
کچھ فریبی اژدہوں کا خوف ہے
تو ذرا مجھ کو عصا بردار کر
بہت خوب بہت خوب 🌟🌟🌟🌟🌟
یہ غُرور و فخر ہے کِس بات کا
عاجزی کو طُرہٴ دستار کر
بہترین بہترین
کیا کہنے 🌷🌷🌷🌷🌷
کیوں ہے احمد تو پریشاں، بات سن
بیٹھ اک گوشے میں، استغفار کر
ماشاء اللہ
بہت اعلیٰ
 

Khursheed

محفلین
ساری غزل بہت خُوب ہے!

کچھ فریبی اژدہوں کا خوف ہے
تو ذرا مجھ کو عصا بردار کر

کیا کہنے!
ایک تجویز ہے سر
کچھ فریبی اژدہوں کا خوف ہے
اے خُدا مجھ کو عصا بردار کر​
 

محمداحمد

لائبریرین
ساری غزل بہت خُوب ہے!

کچھ فریبی اژدہوں کا خوف ہے
تو ذرا مجھ کو عصا بردار کر

کیا کہنے!
بہت شکریہ !
ایک تجویز ہے سر
کچھ فریبی اژدہوں کا خوف ہے
اے خُدا مجھ کو عصا بردار کر​
آپ کی تجویز اچھی ہے۔

خوش رہیے!
 
غزل

پہلے اپنے آپ کو مِسمار کر
پھر نیا اک آدمی تیار کر

یہ غُرور و فخر ہے کِس بات کا
عاجزی کو طُرہٴ دستار کر

سہل انگاری کہاں تک، اُٹھ ذرا
زندگی کو اور مت دشوار کر

خوش امیدی کو بنا بانگِ جرس
آرزو کو قافلہ سالار کر

روشنی کے رنگ کا پرچم بنا
عزم کو اس کا علم بردار کر

اب تلک جو ہو چکا، سو ہو چکا
سیکھ جینا زیست کو ہموار کر

کچھ فریبی اژدہوں کا خوف ہے
تو ذرا مجھ کو عصا بردار کر

دیکھ صورت کو مِری، آنکھوں میں جھانک
کچھ تو دل داری مرے دل دار کر

ہوں سبک سر میں، سبک رفتار زیست
کچھ توقف اے کہانی کار کر

کیوں ہے احمد تو پریشاں، بات سن
بیٹھ اک گوشے میں، استغفار کر

محمد احمدؔ
اَحْمَد صاحب ، عمدہ غزل ہے . داد قبول فرمائیے .
 
Top