ہنسا ہنسا کر لوٹ پوٹ کردینے والا لطیفہ

محمد اسامہ سَرسَری نے 'کھیل ہی کھیل میں' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 9, 2013

  1. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,371
    واہ بہت خوب۔۔بہت پہنچے ہوئے قلندرِ زمانہ تھے۔۔کان سے سوچ کر جواب دیتے تھے۔۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  2. x boy

    x boy محفلین

    مراسلے:
    6,208
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    موڈ:
    Breezy
    [​IMG]
     
    • پر مزاح پر مزاح × 4
    • متفق متفق × 1
  3. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    داڑھی والے انکل کی طرف سے ایک اور جہادی "لطیفہ" پیش کرنے پر مبارک باد۔ پچھلے لطیفے میں انگلیاں اور زبان کاٹنے کا ذکر تھا جبکہ اسمیں سیدھا دھماکے سے پرخچے ہی اڑا دئے۔ :D
     
    • متفق متفق × 1
  4. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    آدمی: "ڈاکٹر صاحب میرے بیٹے نے چابی نگل لی ہے۔"
    ڈاکٹر: "کب....؟"
    آدمی: "جی تین مہینے پہلے۔"
    ڈاکڑ: (غصے اور حیرانی سے) "پاگل انسان تو اب تک کیا کرتے رہے ہو؟!"
    آدمی: "وہ جی ہم ڈپلیکیٹ چابی کا استعمال کرتے رہے ہیں۔"
     
    • پر مزاح پر مزاح × 4
    • زبردست زبردست × 1
  5. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    ریسٹورینٹ کے اندر ایک ٹرک ڈرائیور اکیلا بیٹھا صبح کے ناشتے میں سری پائے، چھولے نان ، حلوہ پوری اور میٹھی لسی سے لطف اندوز ہورہا تھا کہ تین موٹر سائیکل سوار شہری بابو اندر آگئے۔ اور آکر اس سے اٹھکیلیاں کرنے لگ گئے۔ ایک نے سری پائے کا پیالہ اٹھایا اور منہ سے لگا لیا، دوسرے نے لسی پی کر الٹے ہاتھ سے خیالی مونچھ صاف کی۔ تیسرے نے حلوے کو ایک پوری کے اوپر ڈالا اور اس کو لپیٹ کر کھالیا۔۔ ٹرک ڈرائیور یہ سب کچھ دیکھتا رہا لیکن کچھ نہ بولا. اس نے آرام سے اٹھ کر کاؤنٹر پہ جا کے پیسے ادا کیے اور باہر چلا گیا۔
    کچھ دیر بعد ویٹر ان تین لڑکوں کیلیے چائے کے مگ دینے میز پر گیا تو انہوں نے ویٹر سے کہا: "دیکھنے میں تو وہ بہت جی دار لگ رہا تھا لیکن آگے سے کچھ بولا ہی نہیں۔ بس ایویں سا کوئی مرد ہے، مزہ نہیں آیا۔"
    ویٹر بولا: "ڈرائیور بھی وہ بس ایویں سا ہے۔ ابھی اس نے اپنا ٹرک ریورس کیا اور سیدھا تین موٹر سائیکلوں کے اوپر جا چڑھا اور انھیں چورا چورا کرکے چلا گیا۔"
     
    • پر مزاح پر مزاح × 7
  6. فاروق سرور خان

    فاروق سرور خان محفلین

    مراسلے:
    2,940
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Breezy
    کیا بات ہے ۔ اب مسلمان مجاہدین عورتوں اور بچوں اور مسافروں پر حملہ آور ہونے لگے ہیں۔ کراچی اور پشاور ایرپورٹ پر حملے اس لطیفے کی اعلی ترین مثالیں ہیں۔ لاہور کی بچوں کی مارکیٹ میں ہونے والے دھماکے کے نتیجے میں عورتوں اور بچوں کی خون میں لتھڑی ہوئی چپلیں اور جوتیاں آج تک آنکھوں میں ہیں ، کراچی میں ہونے والے دھماکے سے اڑ کر دیواروں پر چپکے ہوئے گوشت کے لوتھڑے کوئی کیسے بھول سکتا ہے۔ معصوم لوگوں کا قتل مسلمان مجاہدین کے ہاتھوں اور اس پر ہنسنا ان صاحب کو ہی زیب دیتا ہے۔ وہ بھی کیا دن تھے کہ ملا دار العلوم سے نکلتا تھا اور قاضی، گورنر ، مفتی لگ جاتا تھا۔ ملا یہ آج تک نہیں بھولا ۔ اب بھی کبھی مجاہد کے نام پر تو کبھی جہاد کے نام پر اور کبھی شریعت کے نام پر ملا کی شرارت آج تک جاری ہے کہ کسی طرح ملا کو نشاۃ ثانیہ مل جائے، پھر حکومت ملاء کے ہاتھ میں ہو اور پھر وہی پانچوں گھی میں اور سر کڑاہی میں جاہے اس میں معصوم بچوں اور عورتوں کی جان ہی کیوں نا جائے۔
     
    • متفق متفق × 2
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  7. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    یہ لطیفوں کی لڑی ہے۔
     
    • متفق متفق × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  8. Muhammad Qader Ali

    Muhammad Qader Ali محفلین

    مراسلے:
    1,014
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    [​IMG]
     
    • پر مزاح پر مزاح × 5
  9. Muhammad Qader Ali

    Muhammad Qader Ali محفلین

    مراسلے:
    1,014
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    [​IMG]
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  10. طارق راحیل

    طارق راحیل محفلین

    مراسلے:
    440
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    یہاں پر لطیفے ختم ہو گئے کیا؟
     
  11. ع عائشہ

    ع عائشہ محفلین

    مراسلے:
    158
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Persnickety
    ڈاکٹرپاگل سے:
    "تم پاگل کیسےہوئے"

    پاگل:
    میں نے ایک بیوہ سے شادی کی
    اس کی ایک بیٹی تھی جس سے میرے باپ نے شادی کرلی
    اس طرح میرا باپ میرا داماد بن گیا اور میری سوتیلی بیٹی میری ماں بن گئی
    میرے ایک بیٹا پیدا ہوا تو میری سوتیلی بیٹی اس کی بہن بھی لگی لیکن میری ماں ہونے کی وجہ سے میرے بیٹے کی دادی بھی لگی
    میرا باپ میرے بیٹے کا دادا بھی بن گیا اور بہنوئی بھی
    میرے باپ کے گھر میری سوتیلی بیٹی سے ایک بیٹا پیدا ہوا تو وہ میرا بھائی ہوا لیکن میں اسکی نانی کا شوہر تھا اس لیے وہ میرا پوتا بھی لگا
    اسی طرح میرا بیٹا اپنی دادی کا بھائی بھی بنا اور میں اپنے بیٹے کا بھانجا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔

    ڈاکٹر:
    اُٹھ کسے پاگل دیا پترا، مینوں وی پاگل کرنا ای ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  12. ع عائشہ

    ع عائشہ محفلین

    مراسلے:
    158
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Persnickety
    Once upon a time 1
    ہاتھی جنگل سے شہر کی طرف بھاگا جارہا تھا
    ایک چیتے نے پوچھا تو ہاتھی بولا:
    جنگل کے بادشاہ شیر نے فیصلہ کیا ہے کہ جنگل کے سارے زرافے مار دو
    چیتا:
    تو تم تو ہاتھی ہو
    ہاتھی:
    ہاں مجھے بھی پتا ہے، لیکن شیر نے گدھے کی ڈیوٹی لگائی ہے زرافے مارنے کی
    "لیکن گدھا تو گدھا ہوتا ہے ناں"
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1

اس صفحے کی تشہیر