حالی کل مدّعی کو آپ پہ کیا کیا گماں رہے ۔ الطاف حسین حالی

فرخ منظور نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 26, 2011

  1. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,661
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    غزل

    کل مدّعی کو آپ پہ کیا کیا گماں رہے
    بات اُس کی کاٹتے رہے اور ہم زباں رہے

    یارانِ تیز گام نے محمل کو جا لیا
    ہم محوِ نالۂ جرسِ کارواں رہے

    یا کھینچ لائے دیر سے رندوں کو اہلِ وعظ
    یا آپ بھی ملازمِ پیرِ مغاں رہے

    وصلِ مدام سے بھی ہماری بجھی نہ پیاس
    ڈوبے ہم آبِ خضر میں اور نیم جاں رہے

    کَل کی خبر غلط ہو تو جھوٹے کا رُو سیاہ
    تم مدّعی کے گھر رہے اور میہماں رہے

    دریا کو اپنی موج کی طغیانیوں سے کام
    کشتی کسی کی پار ہو یا درمیاں رہے

    حالی کے بعد کوئی نہ ہمدرد پھر ملا
    کچھ راز تھے کہ دل میں ہمارے نہاں رہے

    (الطاف حسین حالی)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  2. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    آج مشہورِ زمانہ ضرب المثل مصرع "یارانِ تیزگام نے محمل کو جا لیا" کو تلاش کرنے پر یہ دھاگا سامنے آ گیا اور یوں ہمیں یہ علم ہوا کہ یہ حالی کا مصرع ہے اور اس وساطت سے مکمل غزل بھی پڑھنے کو مل گئی۔
    شکریہ فرخ منظور صاحب۔
    دریا کو اپنی موج کی طغیانیوں سے کام
    کشتی کسی کی پار ہو یا درمیاں رہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  3. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,661
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    شکریہ فاتح صاحب۔ شاید آپ بھول گئے کہ آپ کے کہنے پر ہی میں نے اس شعر کے خالق کا نام تلاش کیا تھا اور پھر مکمل غزل بھی آپ کی خدمت میں پیش کی تھی۔ :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2

اس صفحے کی تشہیر