غزل برائے اصلاح - قدم

زبیر صدیقی نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 26, 2020

  1. زبیر صدیقی

    زبیر صدیقی محفلین

    مراسلے:
    84
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    السلام علیکم استذہ اور صاحبان۔

    پہلے ایک مثبت خبر۔ جنوری میں، میں ٹخنے کی سرجری سے گزرا تھا۔ چلنے سے منع کیا ہوا تھا۔ اللہ کے فضل سے دو روز قبل دونوں پاؤں سے چلنا شروع کیا ہے۔ آپ لوگوں سے دعا کی درخواست ہے۔ ذہن میں ایک خیال تھا کہ اللّہ نے کیوں چلنے کی قدرت دوبارہ عطا کی؟ اسی سوچ میں یہ غزل کہی۔ آپ صاحبان اور اساتذہ کی رائے و رہنمائی کا منتظر ہوں۔

    ہے سفر درپیش کوئی؟ جو ہوا حاصل قدم
    جستجو کوئی تو ہے جو رہ پہ ہے مائل قدم

    نامکمل ہی رہے یا کہ رہے کامل قدم
    اب یہی کوشش رہے کہ نہ رہے غافل قدم

    تجھ کو ڈھونڈوں خود کو پاؤں، دل کا ہے یہ مشورہ
    دیکھنا ہے اب کہ کب اٹھتا ہے یہ مشکل قدم

    تیز رفتاری رہے یا کہ رہے آہستگی
    سب گوارا ہے فقط ہو جانب منزل قدم

    دل جمے گر راستے پہ، رخ پہ، رہبر پہ - چلوں
    بددلی سے کیوں اٹھاؤں کیوں رکھوں بیدل قدم

    قبل از ثابت قدم یہ جان لوں پہچان لوں
    ہے یقیں حامل قدم یا ہے گماں حائل قدم

    ساتھ ہے مہر و وفا ہر اِک دعا ہر اِک عطا
    اب مرے ہر اِک قدم میں ہیں کئی شامل قدم

    آخری شعر پر ایک اور بات کہتا چلوں کہ سرجری میں ڈاکٹر نے ایک اور ہڈی کی پیوندکاری کی - جو کہ کسی اور نے کبھی اسپتال کو عطیہ کیا ہو گا۔ آخری شعر میں سب کے ساتھ اُس اجنبی شخص کا بھی شکریہ کیا ہے۔

    و السلام۔
    نوٹ : آج اس ونڈو میں کسی وجہ سے ٹیگ نہیں ہو پا رہے - اگر کسی کو وجہ پتا ہو تو برائے مہربانی رہنمائی کریں
     
    آخری تدوین: ‏فروری 26, 2020
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  2. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    34,533
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    مبارک ہو آپریشن کی کامیابی، اللہ سے دعا ہے کہ جلد از جلد محض قدم اٹھانے کے ہی نہیں، اسے مکمل استعمال کرنے کے قابل ہو جائیں۔ آمین
    غزل میں کئی جگہ کہ اور نہ کو دو حرفی فع باندھا گیا ہے جو پسندیدہ نہیں۔ کوشش کریں کہ ان کو یک حرفی ہی باندھا جائے یا لفظ بدل دیں۔ جیسے 'یا کہ' کی جگہ 'یا پھر' استعمال کریں۔
    بیدل قدم؟ قافیہ زبردستی کا محسوس ہوتا ہے
    راہ پر قدم مائل نہیں یو سکتے، رہ نوردی پر مائل ہو سکتے ہیں
    قبم از ثابت قدم.. بھی عجیب لگ رہا ہے یہاں ثابت قدمی ہونا چاہیے تھا
    اسے خود مکمل روائز کر کے دیکھیں، ان شاء اللہ اچھی غزل ہو جائے گی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. زبیر صدیقی

    زبیر صدیقی محفلین

    مراسلے:
    84
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    محترم استاد، آپ کی دعاؤں کا اور نشاندہی کا شکریہ۔ میں ان شاللہ پھر حاضر ہوتا ہوں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. زبیر صدیقی

    زبیر صدیقی محفلین

    مراسلے:
    84
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    محترم استاد صاحب؛ کچھ تبدیلیوں کے ساتھ دوبارہ بھیج رہا ہوں۔ برائے مہربانی ایک دفعہ اور دیکھئے، کیا کسی قابل ہوئی؟ تبدیلیاں نیلے رنگ میں ہیں۔

    ہے سفر درپیش کوئی، جو ہُوا حاصل قدم
    رہ نوردی پر ہوا کیوں خود بخود مائل قدم

    نا مکمّل ہی رہے یا پھر رہے کامل قدم
    بس یہی کوشِش رہے اب نہ رہے غافل قدم

    تجھ کو ڈھونڈوں، خود کو پاؤں، دل کا ہے یہ مشورہ
    دیکھنا ہے اب کہ کب اُٹھتا ہے یہ مشکل قدم

    تیز رفتاری ہو اس میں یا کہ ہو آہستگی
    سب گوارا ہے، فقط ہو جانبِ منزل قدم

    قادر و قائم قدم جب ہو گیا ہے ہمسفر
    ہے تمنا ہو بھی جائے اب کسی قابل قدم


    قبل کہ ثابِت قدم ہوں ، یہ مجھے ادراک ہو
    ہے یقیں حامِل قدم یا ہے گُماں حائل قدم

    ساتھ ہے مہر و وفا، ہر اِک دعا، ہر اِک عطا
    اب مرے ہر اِک قدم میں ہیں کئی شامل قدم

    والسلام
     
  5. زبیر صدیقی

    زبیر صدیقی محفلین

    مراسلے:
    84
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    ماشااللہ سے آپ لوگوں کے نکات اتنے اچھے ہوتے ہیں اور اتنا سوچنے پر مجبور کر دیتے ہیں کہ غزل کو صحیح کرنے کا لطف یوں ہو جاتا ہے کہ "جو کبوتر پر جھپٹنے میں مزہ ہے اے پسر -- وہ مزہ شاید کبوتر کے لہو میں بھی نہیں"
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  6. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    34,533
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    اب بھی کہ اور نہ دو حرفی رہ گئے ہیں یا نئی غلطی ہو گئی ہے
    بس یہی کوشِش رہے اب نہ رہے غافل قدم
    قبل کہ ثابت قدم....
    اس کے علاوہ اس میں کاف کے تواتر کی وجہ سے تنافر در آیا ہے
    دیکھنا ہے اب کہ کب اُٹھتا ہے یہ مشکل قدم
    بیدل قدم کی بجائے دوسرا شعر شامل کر دیا گیا ہے لیکن وہ بھی بہت مبہم ہے۔
     
  7. زبیر صدیقی

    زبیر صدیقی محفلین

    مراسلے:
    84
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    جی شکریہ- بہت اچھا۔ میں کوشش کرتا ہوں - غلطیوں کی معافی چاہتا ہوں۔
     
  8. زبیر صدیقی

    زبیر صدیقی محفلین

    مراسلے:
    84
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    محترمی الف عین صاحب۔ اب ملاحظہ کیجیے- بتائے ہوئے اشعار تبدیل کردیے ہیں۔ شکریہ۔

    ہے سفر درپیش کوئی، جو ہُوا حاصل قدم
    رہ نوردی پر ہوا کیوں خود بخود مائل قدم

    نا مکمّل ہی رہے یا پھر رہے کامل قدم
    بس رہے کوشش یہ اپنی اب نہ ہو غافل قدم

    تجھ کو ڈھونڈوں، خود کو پاؤں، دل کا ہے یہ مشورہ
    دیکھنا ہے اب کہ اٹھتا کب ہے یہ مشکل قدم

    تیز رفتاری ہو اس میں یا کہ ہو آہستگی
    سب گوارا ہے، فقط ہو جانبِ منزل قدم

    میں اگر ثابت قدم ہوں، مجھ کو یہ ادراک ہو
    ہے یقیں حامِل قدم یا ہے گُماں حائل قدم

    کم سے کم اتنا تو ہو اہل وفا میں ہو شمار ۔۔۔۔۔۔۔۔(مجھے شمار کا ر گرتا ہوا لگ رہا ہے)
    کم سے کم دشت محبت میں تو ہو داخل قدم

    بھاگتی دنیا کے پیچھے بھاگنا ہو کیوں مجھے
    اس سفر میں تو ہوئے اکثر قدم زائل قدم


    ساتھ ہے مہر و وفا، ہر اِک دعا، ہر اِک عطا
    اب مرے ہر اِک قدم میں ہیں کئی شامل قدم

    والسلام
     
    آخری تدوین: ‏فروری 29, 2020
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    34,533
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    باقی اشعار درست ہو گئے ہیں
    کم سے کم اتنا تو ہو اہل وفا میں ہو شمار ۔۔۔۔۔۔۔۔(مجھے شمار کا ر گرتا ہوا لگ رہا ہے)
    کم سے کم دشت محبت میں تو ہو داخل قدم
    ... یہ بھی درست ہے، شمار کے ر کی اجازت ہے، فاعلن کو آخری رکن کے طور پر فاعلان/فاعلات کیا جا سکتا ہے

    بھاگتی دنیا کے پیچھے بھاگنا ہو کیوں مجھے
    اس سفر میں تو ہوئے اکثر قدم زائل قدم
    اس میں ایک جگہ، زائل سے پہلے والا، ' قدم' زائد ہے، اسے بدل دیں ، جیسے اکثر قدم کی جگہ 'میرے بہت'
     
  10. زبیر صدیقی

    زبیر صدیقی محفلین

    مراسلے:
    84
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    محترم و مکرمی - آپ کا انتہائی انتہائی شکریہ - آپ کی رہنمائی میرے لئے اعزاز ہے۔ آپ کو ایک دفعہ اور تکلیف دینا چاہوں گا۔ مطلع میں "خود بخود" میرے مدعے کو بگاڑ رہا تھا۔ سو میں نے اس کو یوں کر دیا ہے۔ امید ہے قابل قبول ہو گا۔

    ہے سفر درپیش کوئی، جو ہوا حاصل قدم
    کچھ تو ہے جو رہ نوردی پر ہوا مائل قدم

    دوئم جو آپ کی آخری اصلاح زائل والے شعر میں۔ کیا میں اس کو ایسے لکھ سکتا ہوں؟

    بھاگتی دنیا کے پیچھے بھاگنا ہے کیوں مجھے
    اس سفر میں بیشتر تو ہو گئے زائل قدم

    والسلام
     
    آخری تدوین: ‏مارچ 1, 2020
  11. محمّد احسن سمیع :راحل:

    محمّد احسن سمیع :راحل: محفلین

    مراسلے:
    554
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    اللہ پاک آپ کو جلد از جلد صحت یاب فرمائے، آمین۔
    ماشاءاللہ اچھی غزل ہے۔
     
  12. سید عاطف علی

    سید عاطف علی محفلین

    مراسلے:
    9,039
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    غزل کی اصلاح تو یہاں ہو جائےگی ۔ البتہ قدم کی اصلاح کے لیے اللہ تعالی سے دعاگو ہیں ۔
    زبیر صدیقی صاحب
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  13. زبیر صدیقی

    زبیر صدیقی محفلین

    مراسلے:
    84
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    آمین۔ آپ کی پسندیدگی کا شکریہ۔ سب اساتذہ کی عطا ہے۔ اچھی تو ان کی وجہ سے ہی ہوئی ہے۔
     
  14. زبیر صدیقی

    زبیر صدیقی محفلین

    مراسلے:
    84
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    بالکل درست فرمایا۔ اللّہ آپ کی دعا قبول کرے اور اہدنا الصراط المستقیم کی توفیق دے۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  15. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    34,533
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    مطلع بھی درست ہے اور زائل والا شعر بھی، لیکن میرا مشورہ مانو تو اسے مقطع بنا دو، مثلاً
    بھاگتی دنیا کے پیچھے بھاگتے تھے کیوں زبیر
     
  16. زبیر صدیقی

    زبیر صدیقی محفلین

    مراسلے:
    84
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    ارے باپ رے باپ- :bashful: آپ تو مجھے شاعر بنا کر ہی چھوڑیں گے۔ ابھی تخلص جتنا قد تو نہیں ہے۔

    آپ کا مشورہ سر آنکھوں پر۔ آپ کی تمام اصلاح کا شکریہ۔ ان شااللہ جلد ہی نئی غزل کے ساتھ حاضر ہوں گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر