تبسم صُوفی غلام مصطفٰی تبسّم :::::: امیر خُسرو کی فارسی غزل 2 کا ترجمہ :::::Sufi Ghulam Mustafa Tabassum

طارق شاہ نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 1, 2016

  1. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,665
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm

    [​IMG]
    امیر خُسرو کی فارسی غزل کا منظُوم ترجمہ

    یہ رنگینئِ نو بہار اللہ اللہ
    یہ جامِ مَئے خوشگوار اللہ اللہ


    اُدھر ہیں نظر میں نظارے چَمن کے
    اِدھر رُو بَرُو رُوئے یار اللہ اللہ

    اُدھر جلوۂ مُضطرب، توبہ توبہ
    اِدھر یہ دِلِ بے قرار اللہ اللہ

    وہ لب ہیں، کہ ہے وجد میں موجِ کوثر
    وہ زُلفیں ہیں یا خُلدِ زار اللہ اللہ

    مَیں اِس حالتِ ہوش میں مست و بیخود
    وہ مستی میں بھی ہوشیار اللہ اللہ

    مُترجم: صُوفی غلام مصطفٰی تبسّم
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 2
  2. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,393
    واہ سبحان اللہ۔ زبردست مزا آگیا۔۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر