فارسی شاعری خوبصورت فارسی اشعار مع اردو ترجمہ

محمد وارث نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 7, 2008

  1. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,445
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    در شُست و شوئے دامنِ تر، چشمِ تر بس است
    گر صد ہزار عیب بوَد یک ہنر بس است


    محسن فانی کاشمیری

    گناہوں سے آلودہ دامن کی صفائی کے لیے چشمِ تر ہی کافی ہے، اگر لاکھوں عیب بھی ہوں تو پھر بھی یہی ایک ہنر ہی کافی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
  2. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    عبادتی به جهان بِه ز خاک‌ساری نیست
    بِه از وُضویِ عزیزان بُوَد تیمُّمِ ما
    (غنی کشمیری)


    جہان میں خاک‌ساری سے بہتر کوئی عِبادت نہیں ہے۔۔۔ عزیزوں (یعنی بُزُرگواروں اور مُحترَموں) کے وُضو سے بہتر ہم [خاک‌ساروں] کا تیمُّم ہے۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  3. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    به یک صُحبت ز قیدِ عقل پیرِ خُم خلاصم کرد
    فلاطون طِفلِ جاهل بود شب جایی که من بودم
    (والِه داغستانی)


    پِیرِ خُم نے [اپنی] اِک صُحبت و ہم‌نشینی سے مجھ کو عقل کی اسیری سے خَلاص کر دیا۔۔۔ شب کو جسِ جگہ مَیں تھا وہاں «افلاطون» ایک طِفلِ جاہِل تھا۔
    (خُمِ شراب کو ایک شَیخ و مُرشِد کے طور پر تصوُّر کیا گیا ہے۔)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  4. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    خوبان به نیم عِشوه گرفتند دل ز من
    دُرِّ یتیمِ خویش چه ارزان فُروختم
    (والِه داغستانی)


    خُوبوں نے [ایک] نِیم عِشوہ و ناز کے عِوض میں مجھ سے [میرا] دل لے لیا۔۔۔۔ میں نے اپنا دُرِّ یگانہ و بے‌نظیر کس قدر سستا فُروخت کر دیا!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  5. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    عِراق کے ایک کُرد‌الاصل عرَبی شاعر «جمیل صِدقی زهاوی» (وفات: ۱۹۳۶ء) کی ایک فارسی غزل کا مقطع:

    جاهلان را هر که هم‌صُحبت شود جاهل شود
    می‌شوی بر اهلِ دُنیا «صِدقیا» مایل چرا؟
    (جمیل صِدقی زهاوی)


    جو بھی شخص جاہلوں کا ہم‌صُحبت ہو جائے، [وہ خود بھی] جاہل ہو جاتا ہے۔۔۔ [پس] اے «صِدقی»! تم اہلِ دُنیا پر مائل کس لیے ہوتے ہو؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  6. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    کئی کلاسیکی شُعَراء نے اپنے دیوانِ اشعار میں غزلیات کا آغاز خُدا کے نام سے یا اُس کی حمد سے کیا ہے۔۔۔ «مُلکِ محبوسِ کشمیر» کے ایک «کشمیری» شاعر «مُلّا محمد تَوفیق کشمیری» نے بھی اِس روایت کی پَیرَوی کی ہے، اور اُن کے دیوان میں بھی غزلیات کا آغاز ایک حمدیہ بَیت سے ہوا ہے۔ لیکن دیکھیے کہ اُنہوں نے اُس بَیت کو اِس طرح کہا ہے کہ اُس میں خُدا کی حمد بھی ہو گئی، اور ساتھ میں اُن کے محبوبِ زمینی کے حُسن و جمال کی سِتائش بھی:

    آفرین باد بر آن صانعِ بی‌چون و چرا
    که سراپایِ تُرا ساخت به این ناز و ادا
    (توفیق کشمیری)


    اُس صانِعِ بے‌چون و چرا پر آفرین ہو! کہ جِس نے، [اے یار،] تمہارے سراپا کو اِس ناز و ادا کے ساتھ بنایا!

    × صانِعِ بے‌چون و چرا = یعنی وہ آفرینِش‌گر و خالِق کہ جس کی تَوصیف نہیں کی جا سکتی اور جو غیر قابلِ اعتراض ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  7. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    «مُلکِ چِترال» کے ایک شاعر کی ایک فارسی بَیت:

    ز شُربِ مَی دلِ غم‌گینِ ما بی‌غم نمی‌گردد
    گُلِ پژمُرده از آب و هوا خُرّم نمی‌گردد
    (میرزا محمد سِیَر)


    شراب پینے سے ہمارا غم‌گین دِل بے‌غم نہیں ہوتا۔۔۔ جو گُل پژمُردہ ہو وہ آب و ہوا سے شاداب و سرسبز نہیں ہوتا۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  8. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    هر آن جان کز غمش بر وَی رقَم نیست
    ندیمش در دو عالَم جُز نَدَم نیست

    (میر سیِّد علی همَدانی)

    جِس بھی جان میں اُس [یار] کا غم مرقوم نہیں ہے، ندامت کے بجُز دو عالَم میں اُس کا کوئی ندیم نہیں ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  9. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    رُخ نمودی و ز طعنِ منِ بی‌دل شُده‌اند
    واعظ و مُحتَسِب و شیخ پشیمان هر سِه
    (شیخ یعقوب صَرفی کشمیری)


    تم نے چہرہ دِکھا دیا اور [نتیجتاً] واعِظ و مُحتَسِب و شَیخ تینوں مُجھ شخصِ بےدل کی ملامت کرنے سے پشیمان ہو گئے ہیں۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  10. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    دندانِ تو سین آمد و زُلفینِ تو لام است
    در کِشوَرِ خوبی ز خُدا بر تو سلام است
    (شیخ یعقوب صَرفی کشمیری)


    تمہارے دانت «سِین» [کی مانند] اور تمہاری زُلف «لام» [کی مانند] ہے۔۔۔ مُلکِ خُوبی و زیبائی میں تم پر خُدا کی جانب سے سلام ہے!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  11. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    «کمال خُجَندی» کی ایک غزل:

    یا رب این دردِ دل و فُرقتِ جانان تا کَی؟
    در دِلم بارِ فراق و غمِ خُوبان تا کَی؟


    یا رب! یہ دردِ دل اور فُرقتِ جاناں کب تک؟۔۔۔ میرے دِل میں فِراق کا بار اور غمِ خُوباں کب تک؟ (بار = بوجھ)

    ============

    هر نفَس جان به لب آمد ز غمِ هجر مرا
    بر من این غُصّهٔ چرخ و غمِ هجران تا کَی؟


    غمِ ہجر کے باعث ہر دم میری جان لب پر آ گئی [ہے]۔۔۔۔ مُجه پر یہ اندوہِ فلک اور غمِ ہجراں کب تک؟

    ============

    خود نگردد دِلم از دَورِ فلک روزی شاد
    زندگانی به منِ خسته بدین سان تا کَی؟


    خود میرا دل تو گردشِ فلک سے کِسی [بھی] روز شاد نہیں ہوتا۔۔۔ مجھ خستہ [و درماندہ و دردمند] شخص کے لیے اِس طرح کی زِندگانی کب تک؟

    ============

    هر کسی در پَیِ کاری و سر و سامانی‌ست
    منِ سرگشته چُنین بی‌سر و سامان تا کَی؟


    ہر ایک شخص کسی کِام کے پیچھے اور کسی نہ کسی نظم و ترتیب [اور اسباب و لوازمِ زندگی] کے تعاقُب میں ہے۔۔۔۔ [پس پھر] مَیں شخصِ سرگشتہ اِس طرح بےترتیب و پریشان‌حال کب تک؟

    ============

    آخر ای بخت مرا راه به منزل بِنَما
    که به جان آمدم این رنجِ بِیابان تا کَی؟


    اے بخت! آخِر مجھ کو منزل کی جانب راہ دِکھاؤ!۔۔۔ کیونکہ میں تنگ و بیزار آ گیا [ہوں]۔۔۔ یہ رنجِ بِیابان کب تک؟

    ============

    ای طبیبِ دلِ عُشّاق دوا ساز مرا
    جانم آید به لب از حسرتِ جانان تا کَی؟


    اے دِلِ عُشّاق کے طبیب! میری دوا کرو!۔۔۔ حسرتِ جاناں کے باعث میری جان کب تک لب پر آتی رہے؟

    ============

    دِل‌برا کارِ دلِ خستهٔ غم‌گینِ کمال
    همچو حالِ سرِ زُلفِ تو پریشان تا کَی؟


    اے دِل‌بر! «کمال» کے خستہ و غم‌گین دِل کا کار [و حال] تمہارے سرِ زُلف کے حال کی مانند کب تک پریشان [و آشُفتہ] رہے؟

    (کمال خُجَندی)
    مُتَرجِم: حسّان خان
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  12. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    (مصرع)
    دهنت نُقطهٔ بِسم‌اللهِ دیوانِ گُل است
    (میرزا داراب بیگ جُویا کشمیری)


    [اے یار!] تمہارا دہن دیوانِ گُل کی بِسم‌اللہ کا نُقطہ ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  13. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    «کِشوَرِ کشمیر» کے ایک شیعی شاعر «میرزا داراب بیگ جُویا کشمیری» نے کسی «علی رِضا» نامی کشمیری بچّے کے تولُّد پر دُعائیہ قطعۂ تاریخ لکھا تھا۔ وہ قطعہ مُلاحظہ کیجیے:

    علی رِضا که گُلی از بهارِ کشمیر است
    مُدام شاهِ خُراسان نگاه‌بان بادش
    ز سرد و گرمِ حوادث به حُرمتِ این نام
    رسد ز فیضِ دو معصوم دایم اِمدادش
    چو در دِلش هوَسِ درس و بحث جا گیرد
    سزد که باشد عقلِ نخُست اُستادش
    رسد به فضلِ خُدا چون به سِنِّ رُشد و تمیز
    کُناد صاحبِ علمِ لدُنّی اِرشادش
    شُد از قضا چو به اسمِ علی رِضا موسوم
    «علی رِضا» شُده تاریخِ سالِ میلادش

    (میرزا داراب بیگ جویا کشمیری)

    «علی رِضا» کہ جو بہارِ کشمیر کا ایک گُل ہے، [خُدا کرے کہ] شاہِ خُراسان (حضرتِ علی رِضا) ہمیشہ اُس کے نِگہبان رہیں!۔۔۔۔ اِس نام کی حُرمت کے باعث سرد و گرمِ حوادث میں دائماً اُس کو دو معصوموں سے اِمداد پہنچے!۔۔۔۔ [اور] جب اُس کے دل میں درس و بحث [و تحقیق] کی آرزو بیٹھے تو زیب دے کہ «عقلِ اوّل» اُس کی اُستاد ہو!۔۔۔۔ [اور] جب خُدا کے فضل سے وہ سِنِّ رُشد و تمیز میں پہنچ جائے‌ (یعنی جب وہ نَشو و نما و بُلوغ کی عُمر اور نیک و بد میں فرق کر پانے کے سِن تک پہنچ جائے) تو صاحبِ عِلمِ لدُّنی اُس کی ہِدایت و رہبری کریں!۔۔۔۔ اِتّفاقاً جب وہ «علی رِضا» کے نام سے مَوسوم ہوا تو «علی رِضا» [ہی] اُس کے سالِ میلاد کی تاریخ ہو گئی ہے۔۔۔۔

    × ابجد کے رُو سے «علی رِضا» کے اعداد ۱۱۱۱ ہیں، جو ہجری تقویم کے مُطابق اُس کشمیری بچّے کا سالِ ولادت تھا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  14. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    شاعروں میں ایسی فُروتَنی (خاکساری) کم ہی دیکھنے کو مِلتی ہے:

    به روزگار ز خود کم‌تری گُمان نبَرَم
    چرا که هیچم و از هیچ نیست کم‌تر هیچ
    (طالب آمُلی)


    میں گُمان نہیں رکھتا کہ زمانے میں مجھ سے کم‌تر کوئی ہے۔۔۔۔ کیونکہ میں ہِیچ ہوں، اور ہِیچ سے کم‌تر کوئی بھی [چیز] نہیں ہے۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  15. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    در راهِ عشق مرحلهٔ قُرب و بُعد نیست
    می‌بینمَت عیان و دُعا می‌فِرِستَمَت
    (حافظ شیرازی)


    راہِ عشق میں نزدیکی و دُوری کی منزِلیں نہیں ہیں۔۔۔ [لہٰذا اگرچہ تم جِسماً و بظاہِر دُور ہو لیکن] مَیں تم کو آشکارا دیکھتا ہوں اور تمہاری جانب دُعا بھیجتا ہوں۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  16. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    ز فیضِ فقر فُضولی همین سعادتِ من بس
    که اختلاط به ابنایِ روزگار ندارم
    (محمد فضولی بغدادی)


    اے «فُضولی»! فقر و ناداری کے فَیض کے باعث [میرے لیے] میری یہی سعادت کافی ہے کہ میں اَبنائے زمانہ کے ساتھ اِختِلاط نہیں رکھتا۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  17. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    تیموری پادشاہ ‌«نورالدین محمد جهان‌گیر» کی زَوجہ «نور محل بیگم» کی مدح میں ایک بیت:

    هست جهان گُلشِن سبا و تو بِلقیس
    شاه سُلیمان و کاینات صفِ مور

    (طالب آمُلی)

    جہان [گویا] گُلشنِ «سبا» ہے اور تم «بِلقیس» ہو۔۔۔ شاہ [گویا] «سُلیمان» ہے، اور کائنات چیونٹیوں کی صف۔

    × سبا = «یمن» کے ایک شہر کا نام، جہاں ملِکۂ «بِلقِیس» حُکم‌رانی کرتی تھی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  18. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    دل به اُمّیدِ صدایی که مگر در تو رسد
    ناله‌ها کرد در این کوه که فرهاد نکرد
    (حافظ شیرازی)


    دل نے، اِس اُمید میں کہ شاید کوئی صدا تم تک پہنچ جائے، اِس کوہ میں وہ نالے کیے جو «فرہاد» نے [بھی «شیریں» کے فِراق میں] نہ کیے تھے!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  19. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    (مصرع)
    بیمار کرد فکرِ علاجم طبیب را
    (رایج سیالکوتی)

    میرے عِلاج کی فِکر نے طبیب کو بیمار کر دیا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  20. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,610
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    (مصرع)
    صُبحِ نوروز شد از فیضِ وصالت شبِ ما
    (میرزا داراب بیگ جویا کشمیری)

    تمہارے وِصال کے فیض سے ہماری شب صُبحِ نَوروز ہو گئی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2

اس صفحے کی تشہیر