احمد ندیم قاسمی ''خدا کرے کہ میری ارض پاک پر اترے''

سارا نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 8, 2008

  1. سارا

    سارا محفلین

    مراسلے:
    3,641
    خدا کرے میری ارض پاک پر اترے
    وہ فصلِ گل جسے اندیشہء زوال نہ ہو

    یہاں جو پھول کھلے وہ کِھلا رہے برسوں
    یہاں خزاں کو گزرنے کی بھی مجال نہ ہو

    یہاں جو سبزہ اُگے وہ ہمیشہ سبز رہے
    اور ایسا سبز کہ جس کی کوئی مثال نہ ہو

    گھنی گھٹائیں یہاں ایسی بارشیں برسائیں
    کہ پتھروں کو بھی روئیدگی محال نہ ہو

    خدا کرے نہ کبھی خم سرِ وقارِ وطن
    اور اس کے حسن کو تشویش ماہ و سال نہ ہو

    ہر ایک خود ہو تہذیب و فن کا اوجِ کمال
    کوئی ملول نہ ہو کوئی خستہ حال نہ ہو

    خدا کرے کہ میرے اک بھی ہم وطن کے لیے
    حیات جرم نہ ہو زندگی وبال نہ ہو

    (احمد ندیم قاسمی )
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 23
    • زبردست زبردست × 4
  2. حسن علوی

    حسن علوی محفلین

    مراسلے:
    5,533
    موڈ:
    Amused
    بہت ہی خوبصورت کلام احمد ندیم قاسمی کا۔ اور خاص طور پر یہ شعر کہ:
    خدا کرے نہ کبھی خم سرِ وقارِ وطن
    اور اس کے حسن کو تشویش ماہ و سال نہ ہو

    اس میں میرا نام جو آتا ھے;)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. خاور بلال

    خاور بلال محفلین

    مراسلے:
    517
    خدا کرے کہ میرے اک بھی ہم وطن کے لیے
    حیات جرم نہ ہو زندگی وبال نہ ہو

    آہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  4. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,515
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    بہت اچھی نظم ہے - بہت شکریہ سارا صاحبہ!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. سارا

    سارا محفلین

    مراسلے:
    3,641
    :rolleyes::roll:
     
  6. جیا راؤ

    جیا راؤ محفلین

    مراسلے:
    1,888
    بہت خوبصورت کلام !
    سکریہ سارا جی۔
    آنکھیں نم ہو گئیں۔


    "خدا پاکستان کی حفاظت کرے۔"
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. زونی

    زونی محفلین

    مراسلے:
    4,187
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused

    ہر ایک خود ہو تہذیب و فن کا اوجِ کمال
    کوئی ملول نہ ہو کوئی خستہ حال نہ ہو

    خدا کرے کہ میرے اک بھی ہم وطن کے لیے
    حیات جرم نہ ہو زندگی وبال نہ ہو





    واہ! بہت اچھی دعا ھے سارا ، خوبصورت شئیرنگ ، بہت شکریہ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,707
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    یومِ آزادی کے حوالے سے آج یہ نظم یاد آ رہی تھی لیکن جب محفل پر ارسال کرنے لگا تو جانا کہ یہ تو گذشتہ برس سارا صاحبہ ارسال کر چکی ہیں۔ لیکن اس ایک برس پرانے دھاگے کو تازہ کرنا بھی ایک سعادت ہے۔

    اوپر کے مراسلے میں چند املا کی غلطیاں تھیں جنہیں دور کر کے نیچے یہی نظم مکرر عرض کیے دیتا ہوں:

    خدا کرے کہ مری ارض پاک پر اترے
    وہ فصلِ گل جسے اندیشۂ زوال نہ ہو

    یہاں جو پھول کھلے وہ کِھلا رہے برسوں
    یہاں خزاں کو گزرنے کی بھی مجال نہ ہو

    یہاں جو سبزہ اُگے وہ ہمیشہ سبز رہے
    اور ایسا سبز کہ جس کی کوئی مثال نہ ہو

    گھنی گھٹائیں یہاں ایسی بارشیں برسائیں
    کہ پتھروں کو بھی روئیدگی محال نہ ہو

    خدا کرے نہ کبھی خم سرِ وقارِ وطن
    اور اس کے حسن کو تشویشِ ماہ و سال نہ ہو

    ہر ایک فرد ہو تہذیب و فن کا اوجِ کمال
    کوئی ملول نہ ہو کوئی خستہ حال نہ ہو

    خدا کرے کہ مرے اک بھی ہم وطن کے لیے
    حیات جرم نہ ہو زندگی وبال نہ ہو

    احمد ندیم قاسمی​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 12
    • زبردست زبردست × 1
  9. مطیع الرحمٰن

    مطیع الرحمٰن محفلین

    مراسلے:
    644
    بہہہہہہہہہہہہہہت عمدہ ہے بھئی کیا بات ہے کیا بات ہے
    خوش کردیا بہت شکریہ
     
  10. امیداورمحبت

    امیداورمحبت محفلین

    مراسلے:
    3,057
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    - بہت خوب-------------
     
  11. محب علوی

    محب علوی لائبریرین

    مراسلے:
    11,262
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    بہت اچھا کیا اور بہت عمدہ نظم ہے

    فاتح اس نظم کو تازہ کرنے کا شکریہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. شاہ حسین

    شاہ حسین محفلین

    مراسلے:
    2,902
    بہت شکریہ جناب فاتح صاحب اور محترمہ سارا صاحبہ ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  13. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,707
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    شکریہ محب صاحب اور شاہ صاحب!
     
  14. سید زبیر

    سید زبیر محفلین

    مراسلے:
    4,362
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    خدا کرے کہ میری ارض پاک پر اترے
    وہ فصل گل ، جسے اندیشہ زوال نہ ہو
    یہاں جو پھول کھلے، وہ کھلا رہے صدیوں
    یہاں خزاں کو گزرنے کی بھی مجال نہ ہو
    یہاں جو سبزہ اگے، وہ ہمیشہ سبز رہے
    اور ایسا سبز ، کہ جس کی کوئی مثال نہ ہو
    گھنی گھٹائیں یہاں ایسی بارشیں برسا ٴیں
    کہ پتھروں سے بھی روئید گی محال نہ ہو
    خدا کرے کہ نہ خم ہو سر وقار وطن
    اور اس کے حسن کو تشویش ماہ و سال نہ ہو
    ہرایک فرد ہو تہذیب و فن کا اوج کمال
    کوئی ملول نہ ہو، کوئی خستہ حال نہ ہو
    خدا کرے کہ میرے اک بھی ہم وطن کےلیے
    حیات جرم نہ ہو، زندگی وبال نہ ہو
    خدا کرے کہ میری ارض پاک پر اترے
    وہ فصل گل ، جسے اندیشہ زوال نہ ہو۔
    احمد ندیم قاسمی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 2
  15. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    200,087
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    بہت شکریہ شریک محفل کرنے کا۔

    اللہ کرئے کہ ایسا ہی ہو۔
     
    • متفق متفق × 2
  16. مزمل شیخ بسمل

    مزمل شیخ بسمل محفلین

    مراسلے:
    3,523
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
  17. محمد بلال اعظم

    محمد بلال اعظم لائبریرین

    مراسلے:
    10,219
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    واہ کیا بات ہے قاسمی صاحب کی۔
     
  18. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,602
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    آمین!
    خدا کرے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  19. عائشہ عزیز

    عائشہ عزیز لائبریرین

    مراسلے:
    33,858
    موڈ:
    Twisted
    آمین

     
    • زبردست زبردست × 2
  20. نظام الدین

    نظام الدین محفلین

    مراسلے:
    1,005
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    خدا کرے میری ارض پاک پر اترے

    وہ فصل گل جسے اندیشۂ زوال نہ ہو

    یہاں جو پھول کھلے وہ کھلا رہے برسوں

    یہاں خزاں کو گزرنے کی بھی مجال نہ ہو

    یہاں جو سبزہ اگے وہ ہمیشہ سبز رہے

    اور ایسا سبز کہ جس کی کوئی مثال نہ ہو

    گھنی گھٹائیں یہاں ایسی بارشیں برسائیں

    کہ پتھروں کو بھی روئیدگی محال نہ ہو

    خدا کرے نہ کبھی خم سرِ وقارِ وطن

    اور اس کے حسن کو تشویش ماہ و سال نہ ہو

    ہر ایک خود ہو تہذیب و فن کا اوجِ کمال

    کوئی ملول نہ ہو کوئی خستہ حال نہ ہو

    خدا کرے کہ میرے اک بھی ہم وطن کے لئے

    حیات جرم نہ ہو زندگی وبال نہ ہو

    (احمد ندیم قاسمی)​
     
    • زبردست زبردست × 3

اس صفحے کی تشہیر