حکمت اعلیٰ حضرت رحمہ اللہ: فوز المبین در رد حرکت زمین ایک سیاسی کتاب ہے نہ کہ مذہبی یا سائنسی

سید رافع نے 'سیاست' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 2, 2020

لڑی کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے دستیاب نہیں
  1. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,847
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    آج کی بات کہاں ملا دی۔ جواب نہیں ہے آپ کا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. عبدالقیوم چوہدری

    عبدالقیوم چوہدری محفلین

    مراسلے:
    18,274
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    مجھے آپ کی بات سے رتی بھر بھی اختلاف نہیں ہے۔
    ہوتا دراصل یہ ہے کہ کسی سو، دو سو، چار سو سال پہلے کے قابل احترام و عقیدت کی غلطی نکل آئی یا بحث میں دلائل کا رخ کسی اور طرف مڑ گیا اور اس کے عقیدت مند مان کے نہیں دے رہے یا تاویلیں دے رہے ہیں تو جوابی دلیل والے احباب کسی ایک بریکنگ پوائنٹ پر غلطی سائیڈ پر رکھ کر تضحیک، طنز و تشنیع کا رخ اس محترم شخصیت کی ذات کی طرف کر دیتے ہیں۔ جو انتہائی خطرناک رواج بنتا چلا جا رہا ہے۔ علامات قیامت کی صغری نشانیوں میں سے ایک یہ تھی کہ امت کے بعد میں آنے والے لوگ پہلے والے بزرگوں کو برا بھلا کہا کریں گے۔ بدقسمتی سے ہم آہستہ آہستہ اسکا شکار ہوتے چلے جا رہے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  3. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,209
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    آپ ہی نے مطلق سیاست کی بات کی تھی۔ "سیاست" بے کثافت جلوہ پیدا کر نہیں سکتی۔ اگر آپ آج کی سیاست کی بات کرتے تو ویسی ہی مثال بھی دیتا۔

    کچھ ہو بالادستی برقرار رکھنے کی جدوجہد یعنی سیاست کل بھی بے کثافت جلوہ پیدا میں معاون تھی اور آج بھی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    25,268
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    نه در هرسخن بحث کردن رواست
    خطا بر بزرگان گرفتن خطاست

    اور یہی الٹا بزرگوں پر انگلیاں اٹھوانے کا موجب بن رہے ہیں۔

    احترام میں اس سے، کچھ نہ حرف آئے گا
    ”بھول کو بزرگوں کی، بھول ہی کہا جائے“
    طاہر مدنی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  5. انیس الرحمن

    انیس الرحمن محفلین

    مراسلے:
    8,269
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    موسمیات اور گوگل کے بریلوی انجینئرز نے صرف اعلی حضرت کو صحیح ثابت کرنے کے لیے کھڑے کیے ہیں۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  6. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,847
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    ارے بھائی یہ آپ کے اس دھاگے کے حوالے سے کہا ہے۔ آپ ہی نے کہا کہ اعلیٰ حضرت نے یہ سیاسی کتاب لکھی تھی اور یہ روز روشن کی طرح عیاں ہے کہ اعلیٰ حضرت نے کثیف دلائل کے ساتھ یہ سیاسی کتاب لکھی۔ کہاں اعلیٰ حضرت اور کہاں قرون وسطی کے مسلمان۔ یقیناً اندھی عقیدت اور بے وقوفی کی کوئی حد نہیں۔
    عمل اپنے کافر اٹھا لے گئے
    عقیدت کو ہم سب بچا لے گئے
    آپ کے پاس بہت فضول وقت ہے جو بیکار کے دلائل میں الجھے رہتے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  7. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    22,178
    نیوٹن کے پہلے قانون کے مطابق کائنات کا ہر جسم اپنے inertia پر چلتا ہے۔ اس انیرشیا کی تین اقسام ہیں:
    ۱۔ ساکن: جب تک کسی جسم پر کوئی بیرونی قوت اثر نہ ڈالے وہ ساکن ہی رہتا ہے
    ۲۔ متحرک: جب تک کسی متحرک جسم پر کوئی بیرونی قوت اثر نہ ڈالے اس کی رفتار تبدیل نہیں ہو سکتی
    ۳۔ سمتی: جب تک کسی متحرک جسم پر کوئی بیرونی قوت اثر نہ ڈالے اس کی سمت تبدیل نہیں ہو سکتی

    اس اٹل طبیعیاتی قانون کے مطابق زمین کا گردش کرنا اس پر پائے جانے ہر جسم کو ایک جیسا انیرشیا فراہم کرتا ہے۔ یوں جب سیٹلائٹ یا موسمیاتی غبارے کرہ ارض سے باہر نکل جاتے ہیں اور ہوا کی مزاحمت یعنی فکرشن ان پر اپنا اثر نہیں ڈال سکتی۔ تو یہ زمین کی گردش کے ساتھ جیو اسٹیشنری یعنی ایک جگہ ٹکا ہوا مدار حاصل کر لیتے ہیں:
    [​IMG]
    Newton's Law Of Inertia (Definition, Examples And Lot's More)
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  8. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,209
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    اندھی عقیدت ! میں زمین کو گھما رہا ہوں اور امام احمد رضا اسے ساکن کر رہے ہیں ! بھائی آپکی مصروفیت کا بھی جواب نہیں۔

    میں نے امام احمد رضا رح کے حکمت کے پہلو کو اجاگر کرنے کی کوشش کی اور آپ نے اسے بیوقوفی سے تعبیر کیا۔ آپ نے مطلق سیاست کی بات کی، ظاہر ہے انٹرنیٹ پر آپ کو نہ دیکھ سکتا ہوں نہ براہ راست پوچھ سکتا ہوں تو تحریر کی بنیاد پر ہی جواب لکھوں گا جس کو آپ نے بیکار دلائل میں الجھنا کہا اور اس میں خرچ ہونے والے وقت کو فضول وقت ضایع کرنا کہا۔ حالانکہ آہستہ آہستہ گفتگو کرنا ہی بہتر ہے چاہے اس میں کئی ہفتے لگیں۔ اہم کاموں کو چھوڑ کر گفتگو نہ کریں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  9. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,209
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    نہ قرون وسطی کے مسلمان اب واپس آئیں گے اور نہ ہی ایسا گھٹا ٹوپ اندھیرا ہے کہ جیسا کہ رسول اللہ ﷺ سے قبل تھا۔ اچھی خاصی روشنی ہے۔ اعلی حضرت رح سے بھی کام چل جائے گا۔ ان سے نہ رجوع کریں تب بھی آپکا کام چل جائے گا۔ آپ میں خود ہی سمجھ بوجھ ہے۔ انشاء اللہ آپ سے جنت میں ملاقات ہو گی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  10. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,209
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    اے ایمان والو! ایک قوم دوسری قوم سے ٹھٹھا نہ کرے عجب نہیں کہ وہ ان سے بہتر ہوں اور نہ عورتیں دوسری عورتوں سے ٹھٹھا کریں کچھ بعید نہیں کہ وہ ان سے بہتر ہوں، اور ایک دوسرے کو طعنے نہ دو اور نہ ایک دوسرے کے نام دھرو، فسق کے نام لینے ایمان لانے کے بعد بہت برے ہیں، اور جو باز نہ آئیں سو وہی ظالم ہیں۔ سورہ 49- آیت 11
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  11. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,209
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    اس پر یہی کہوں گا کہ حکمت کس چیز کا نام ہے اس کی بھی خبر ہونی چاہیے۔ چلیں یہ تو سائنسی کتاب ہے۔ آپ بزرگوں کی غلطی کہہ کر معاملہ ختم کر دیں گے۔ لیکن تکفیر تو خالص فقہ کا مسئلہ ہے۔ حسام الحرمین کا معاملہ بھی اسی نوعیت کا ہے جیسا کہ اس کتاب فوز المبین کا ہے۔ کفر کو علمائے اسلام نے ہمیشہ بے حد پابندیوں، حدود و قیود اورضروریات دین کے انکار صریح کا پابند کیا ہوا تھا۔ پھر کیا وجہ ہوئی کہ حسام الحرمین جیسی کتاب لکھنے کی نوبت آئی؟ آپ کو بالآخر امام احمد رضا خان رح کی حکمت سمجھنی پڑے گی۔ جس سے سب تشویش صاف ہو جائے گی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  12. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,209
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    قبل اسکے کہ آپ مجھے اندھی عقیدت کے زندان میں بند کریں کچھ عرض کرنا چاہوں گا۔ آپکے علم میں ہو گا ہی کہ جیسے شعراء کیفیات میں مبتلا ہوتے ہیں ویسے ہی اللہ کے دوست حال سے ممتاز ہوتے ہیں۔ امام احمد رضا خان کا حال جلال پر مبنی تھا۔ آپ جس سہانی گھڑی چمکا طیبہ کا چاند اس دل افروز ساعت پہ لاکھوں سلام ضرور پڑھتے ہوں گے لیکن امام صاحب وَمَكَرُواْ وَمَكَرَ اللّهُ وَاللّهُ خَيْرُ الْمَاكِرِين کے حال سے متمسک تھے۔ ان کے ایک ایک کام اور ایک ایک کتاب سے یہ حال چھلکتا ہے۔ چاہے انکی یہ سائنسی کتاب فوز المبین ہو یا فقہ و تکفیر کی کتاب حسام الحرمین ہو۔ جیسے اگر آپ شاعر کو اسکی کیفیت کو سمجھے بغیر تبصرہ کریں گے تو غلطی کھا جائیں گے ویسے ہی اللہ کے دوست کے حال کو سمجھے بغیر آپ انکے کاموں کی حکمت و سبب صحیح طور پر نہیں سمجھ پائیں گے۔

    آپ مجھ سے زیادہ جانتے ہیں کہ غالب کی ظرافت میں فلسفہ کی کیفیت تلاش کریں گے تو صحیح کیفیت نہ سمجھ پائیں گے۔

    یہ مسائلِ تصّوف یہ ترا بیان غالبؔ
    تجھے ہم ولی سمجھتے ،جو نہ بادہ خوار ہوتا

    اور اگر اقبال کی فلسفیانہ کیفیت کی تعبیر ظرافت کی سمت کریں گے تو مضحکہ خیز بات بن جائے گی۔

    مَیں نہ عارِف، نہ مُجدِّد، نہ محدث،نہ فقیہ
    مجھ کو معلوم نہیں کیا ہے نبوّت کا مقام

    یا پروین شاکر کے پھول اور خوشبو میں تو نہ ہی فلسفہ ملے گا اور نہ ہی ظرافت۔ وہاں تو لطیف جذبات کی کیفیات کا سمندر ہے۔

    وہ تو خوش بو ہے ہواؤں میں بکھر جائے گا
    مسئلہ پھول کا ہے پھول کدھر جائے گا

    بالکل اسی طرح امام صاحب کے کاموں کی تعبیر یہ کرنی چاہیے کہ جو ان سے مکر کرتا وہ اسکو اسی کی زبان میں اس سے زیادہ بڑی چال میں لے آتے۔ یعنی وَمَكَرُواْ وَمَكَرَ اللّهُ وَاللّهُ خَيْرُ الْمَاكِرِين۔ یہ ان برے لوگوں کے فسق کا نتیجہ ہے جو مکر کرتے ہیں کہ ان پر ایک اہل حق کی چال آ پڑتی ہے۔ آپ بے شک آم کا موازنہ سیب سے کریں اور ایک فلسفی محض ارسطو کو اللہ کے دوست سے ملا دیں لیکن یہ بر مبنی عدل کام نہ ہو گا۔ تجزیہ غلط ہو گا اور مایوسی آپ ہی کے اندر بڑھے گی۔ ظاہر ہے کہ آپ کو پورا حق ہے کہ اس دلیل کو یہ کہہ کر رد کر دیں کہ یہ اندھی تقلید اور برصغیر کے ہر مولانا، ہر مولوی، ہر ملا کو معصوم اور غلطی سے ماورا بتلانا ہے۔ لیکن اصل بات یہ ہے کہ یہ ایک نہایت لطیف بات ہے۔ مان لیں تو آپ کا فائدہ نہ مانیں تو آپ کا ہی خسارہ ہے۔

    جہاں تک ممدوح کی جگ ہنسائی کی بات ہے تو آپ ذرا لندن و برلن و واشنگٹن کی کسی محفل میں معراج اور براق کا تذکرہ کر کے دیکھ لیجیے گا اور اپنا حشر بھی ملاحظہ فرمایے گا۔ اس راہ میں جگ ہنسائی کی کوئی وقت نہیں۔ قرآن سے پتہ چلتا ہے کہ آپ ﷺ کو مجنون تک کہا گیا۔ تو میں اور آپ اور امام احمد رضا خان رح اس سے کیونکر بچ سکتے ہیں؟ اصل بات آپ کی نیت ہے۔ آپ کے دل میں کیا ہے۔ صحیح ہے تو کہیں۔

    اہلِ تشیع اس میں چودہ معصومین کا اور اضافہ صحیح کرتے ہیں۔ آپ کو اس پر کوئی اعتراض ہے؟ شاید اہل سنت کی اندھی عقیدت بعض کے آڑے آئے لیکن قرآن کی کل آیات کا بھی تو کوئی عامل ہونا چاہیے؟ اہل سنت کے تمام روحانی سلسلے جناب علی کرم اللہ وجہ سے ہوتے ہوئے رسول اللہ ﷺ تک پہنچتے ہیں۔ معصوم ہونے کا وہ مطلب نہیں جو عوام کے ذہن میں ہوتا ہے۔ آپ یہ حدیث ملاحظہ فرمائیں اور ذہن میں رکھیں کہ رسول اللہ ﷺ معصوم ہیں۔

    آپ صلی الله علیہ وسلم نے اپنا استغفار کا معمول بیان فرمایا:” والله انی لأستغفرالله واتوب إلیہ فی الیوم أکثر من سبعین مرّة․ (الجامع الصحیح للبخاری، کتاب الدعوات، باب استغفار النبی صلی الله علیہ وسلم فی الیوم واللیلة، رقم الحدیث:6307)

    الله کی قسم میں دن میں ستر بار سے زیادہ الله تعالیٰ سے استغفار کرتا ہوں اور توبہ کرتا ہوں۔
     
    آخری تدوین: ‏جون 3, 2020
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  13. زیک

    زیک محفلین

    مراسلے:
    38,502
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Bookworm
    بہترین لڑی ہے۔ کافی کچھ آشکار ہوا۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • متفق متفق × 1
  14. زیک

    زیک محفلین

    مراسلے:
    38,502
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Bookworm
    اگر احمد رضا خان کوپرنیکس کے ہم عصر ہوتے تو بات اور تھی۔ اس کے چار سو برس بعد جب اس موضوع پر اجماع ہو چکا تھا ایسی کتاب لکھنا تو کافی عجیب بات ہے اور ان کے علم کو کافی شک میں ڈالتی ہے خاص طور پر سائنسی میدان میں جبکہ ان کا اور ان کے عقیدتمندوں کا دعوی ہے کہ وہ ہر علم میں یکتا تھے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  15. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    22,178
    بالکل بھی عجیب بات نہیں ہے۔ جب آپ اس بات کی اجازت دیتے ہیں کہ قرآنی آیات سے زمین کا گھومنا ثابت کیا جا سکتا ہے، تو پھر اگر کوئی عالم دین اس کے برعکس انہی قرآنی آیات سے ثابت کر دیتا ہے تو اسے بھی ماننا پڑا گے۔ تب آپ جدید مغربی سائنس کا حوالہ دے کر یہ نہیں کہہ سکتے کہ صحیح وہی ہے جو سائنس کہہ رہی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  16. سید عاطف علی

    سید عاطف علی لائبریرین

    مراسلے:
    9,452
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    مذہبی تحریک ، سیاسی بند ۔ اور زیر عتاب آئے بیچارے اجرام فلک ، وہ بھی سو دلائل کےبوجھ تلے ۔۔۔۔
    اگر چہ اب یہ بحث اتنی اہم نہیں رہی کہ حرکت اور سکون کے معانی یکسر بدل چکے ہیں ۔ لیکن ڈاکٹر اقبال کو اسلامی افکار کی تشکیل نو کی فکر بھی اسی زمانے میں درست لاحق ہوئی تھی ۔ (تین سو سال سے ہیں ہند کے میخانے بند)
    لیکن لگتا ہے ہمیں مزید سو سال اور چاہیئں ۔
    سوال یہ ہے کہ اس کتاب کے دلائل نے اسلام کو کیا دیا اور ایمان کو کیسے بچایا ؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  17. عبدالقیوم چوہدری

    عبدالقیوم چوہدری محفلین

    مراسلے:
    18,274
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    یعنی ایک ایک غلطی کر رہا ہے تو دوسرا دوسری۔ دونوں میں کوئی فرق نہیں رہا۔
     
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  18. عبدالقیوم چوہدری

    عبدالقیوم چوہدری محفلین

    مراسلے:
    18,274
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    سید صاحب، گو حکمت والی بات مکمل ہضم نہیں ہو پارہی اور شاید اس میں بھی زیادہ قصور میرے ناقص انداز فکر و سوچ کا یے، کہ معاملات کو اس پہلو پر کم ہی پرکھا۔ لیکن ایک بات وثوق سے کہوں گا کہ بہت عرصے بعد سوشل میڈیا پر کسی کو انتہائی مدلل گفتگو کرتے پایاہے۔ یقیناً آپ کو اپنا خیال اور فکر خوبصورت انداز میں بیان کرنے کا ہنر آتا ہے۔ ماشاءاللہ۔
     
    • زبردست زبردست × 1
  19. عبدالقیوم چوہدری

    عبدالقیوم چوہدری محفلین

    مراسلے:
    18,274
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    زیک، کیا ہم یہ طے کر چکے کہ اس زمانے میں کوپرنیکس کے نظریات پر ہندوستان میں بھی اجماع ہو چکا تھا! اور یہ کہ ہمارے پاس اس زمانے کے کسی اور ہندوستانی ماہر فلکیات یا ریاضی دان کی اس موضوع پر کوئی علمی رائے موجود ہے ؟
     
    • زبردست زبردست × 1
  20. سید عاطف علی

    سید عاطف علی لائبریرین

    مراسلے:
    9,452
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful

    بر سبیل تذکرہ ۔
    پندرھویں صدی کے کوپرنیکس کا نویں صدی کے البطانی اور تیرھویں صدی کے طوسی علماء سے "استفادہ" ۔
    پروفیسر جارج کہتے ہیں کہ کوپرنیکس کے پاس ان کتب کی اشکال میسر تھیں جس سے اس نے اپنی ذہانت سے نتائج اخذ کیے ۔
    اس مراسلے کو دوستانہ سمجھا جائے کوئی اور مقصد نہیں البطانی ہو یا کوپر نیکس سب اللہ کے بندے تھے بھئی ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
لڑی کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے دستیاب نہیں

اس صفحے کی تشہیر