ابن انشا جب دہر کے غم سے اماں نہ ملی، ہم لوگوں نے عشق ایجاد کیا

شمشاد نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 22, 2008

  1. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    205,224
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    جب دہر کے غم سے اماں نہ ملی، ہم لوگوں نے عشق ایجاد کیا
    کبھی شہر بتاں میں خراب پھرے، کبھی دشتِ جنوں آباد کیا

    کبھی بستیاں بن، کبھی کوہ و دمن، رہا کتنے دنوں یہی جی کا چلن
    جہاں حسن ملا وہاں بیٹھ رہے، جہاں پیار ملا وہاں صاد کیا

    شبِ ماہ میں جب بھی یہ درد اٹھا، کبھی بیت کہے (لکھی چاند نگر)
    کبھی کوہ سے جا سر پھوڑ مرے، کبھی قیس کو جا استاد کیا

    یہی عشق بالآخر روگ بنا، کہ ہے چاہ کے ساتھ بجوگ بنا
    جسے بننا تھا عیش وہ سوگ بنا، بڑا من کے نگر میں فساد کیا

    اب قربت و صحبت یار کہاں، لب و عارض و زلف و کنار کہاں
    اب اپنا بھی میر سا عالم ہے، ٹُک دیکھ لیا جی شاد کیا
    شیر محمد خان (ابن انشا)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  2. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,857
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    بہت شکریہ شمشاد صاحب - آپ تو پسندیدہ کلام میں کچھ پوسٹ نہیں کرتے لیکن بہت خوبصورت کلام پوسٹ کیا ہے - :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    22,411
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed

    اب قربت و صحبت یار کہاں، لب و عارض و زلف و کنار کہاں
    اب اپنا بھی میر سا عالم ہے، ٹُک دیکھ لیا جی شاد کیا

    واہ، بہت اعلٰی
     
  4. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,564
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    شکریہ شمشاد صاحب، خوبصورت غزل شیئر کرنے کیلیئے، لا جواب۔
     
  5. سارہ خان

    سارہ خان محفلین

    مراسلے:
    15,819
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    جب دہر کے غم سے اماں نہ ملی

    جب دہر کے غم سے اماں نہ ملی، ہم لوگوں نے عشق ایجاد کیا
    کبھی شہرِ بتاں میں خراب پھرے، کبھی دشتِ جنوں آباد کیا۔۔

    کبھی بستیاں بن، کبھی کوہ و دمن،رہا کتنے دنوں یہی جی کا چلن
    جہاں حُسن ملا وہاں بیٹھ گئے، جہاں پیار ملا وہاں صاد کیا۔۔

    شبِ ماہ میں جب بھی یہ درد اٹھا، کبھی بیت کہے ، لکھی چاندنگر
    کبھی کوہ سے جاسر پھوڑ مرے، کبھی قیس کو جا استاد کیا۔۔

    یہی عشق بالآخر روگ بنا، کہ ہے چاہ کے ساتھ بجگ بنا
    جسے بننا تھا عیش وہ سوگ بنا، بڑا مَن کے نگر میں فساد کیا۔۔

    اب قربت و صحبتِ یار کہاں، اب و عارض و زلف و کنار کہاں
    اب اپنا بھی میر سا عالم ہے، ٹک دیکھ لیا جی شاد کیا۔۔

    (ابنِ انشاء)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  6. ایم اے راجا

    ایم اے راجا محفلین

    مراسلے:
    3,230
    جھنڈا:
    Pakistan
    بہت خوب، شکریہ، سارہ جی۔
     
  7. سارہ خان

    سارہ خان محفلین

    مراسلے:
    15,819
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    اوو یہ غزل تو شمشاد بھائی نے پوسٹ کی ہوئی ہے پہلے ہی ۔۔:(
    شمشاد بھائی آپ اس کو ڈیلیٹ کر دینا ۔۔ مجھے نہیں پتا تھا پہلے سے پوسٹ ہے ۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. محمد ندیم

    محمد ندیم محفلین

    مراسلے:
    13
    سارہ خان آپ نے ابن انشا کا بہت اچھا کلام لکھا۔
     
  9. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    205,224
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    یہ غزل پہلے بھی پوسٹ ہو چکی ہے اس لیے اس دھاگے کو مقفل کر رہا ہوں۔
     

اس صفحے کی تشہیر