پندرہویں سالگرہ برصغیر کی معدوم ہوتی اشیاء

سید عمران نے 'محفل کی سالگرہ' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 21, 2020

  1. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,432
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    ہم دو چوٹیاں ہی کہتے ہیں۔ مینڈھیاں بہت چھوٹی چھوٹی ہوتی ہیں۔ اور وہ جتنی مرضی بنا لو۔ عام طور پہ پٹھانیاں بناتی ہیں۔ اور ہمارے ہاسٹل میں افریقہ سے آئی لڑکیاں بناتی تھیں۔ میں اپنی بیٹی کی بہت سی مینڈھیاں گوندھا کرتی تھی اور ان میں رنگ برنگ ربن یا پونیاں وغیرہ ڈالا کرتی۔ بچیاں بہت پیاری لگتی ہیں مینڈھیاں بنا کر۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  2. سید عاطف علی

    سید عاطف علی لائبریرین

    مراسلے:
    10,290
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    میں بھی پراندا تو بچپن سے سنتا آیا ہوں لیکن شاید اردو بولنے والوں سے اس دور میں کبھی نہیں سنا ۔ شاید پنجابی لوگ بولا کرتے تھے ۔ میرے خیال میں تو یہ لفظ پنجابی ہی کا ہے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  3. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,432
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    میری سمجھ کے مطابق پنجابی میں پراندہ دھاگے سے بنے تین لڑیوں والے ہوتے ہیں۔ گت کہ جس کے گ پہ پیش ہے، چٹیا کی جگہ بولا جاتا ہے۔ گت/چٹیا اصل بالوں کی بنتی ہے اور اگر بالوں میں پراندہ ڈال کے گوندھا جائے تو مکمل صورت کو بھی پراندہ کہا جاتا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  4. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,432
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  5. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,601
    جھنڈا:
    Pakistan
    کٹورا۔۔۔
    پیالہ نما شے کو کٹورا کہتے ہیں۔۔۔
    بعض لوگوں کا لڑنا ہے کہ نہیں کٹورا نما شے کو پیالہ کہتے ہیں۔۔۔
    خیر ان لڑاکا لوگوں کے منہ نہ لگتے ہوئے ہم آگے بڑھتے ہیں اور کٹورے کے منہ لگتے ہیں۔۔۔
    بچپن سے پہیلی سنتے آرہے ہیں کٹورے پہ کٹورا بیٹا باپ سے بھی گورا۔۔۔
    بڑے ہوکر یہ بھی پتا چلا کہ پاکستان کے علاقہ دِیر میں ہوش اڑادینے والی حسین و جمیل کٹورا جھیل بھی موجود ہے۔۔۔
    لیکن سائز، ڈیزائن اور رنگ و روپ کے لحاظ سے کٹورے کا ان دونوں سے کچھ لینا دینا نہیں۔۔۔
    کٹورا اسٹیل کا بھی ہوتا تھا اور المونیم کا بھی جبکہ بعض گھرانوں میں چاندی کا بھی مستعمل تھا۔۔۔
    کٹورے کی بیرونی سطح پر ابھرے ہوئے نقش و نگار بنے ہوتے تھے۔۔۔
    بعض منچلے بعض منچلیوں کو کٹورے کی رے کے بغیر بھی پکارتے تھے۔۔۔
    فی الحال ایسے لوگ ہمارے زیر بحث نہیں۔۔۔
    کٹورا صرف پانی یا شربت پینے کے لیے استعمال ہوتا تھا جبکہ پیالہ ایک کثیر المقاصد آلہ ہے جس پر سیر حاصل گفتگو ہوسکتی ہے۔۔۔
    کٹورا بھر کر پانی پینا ہر کس و ناکس کے بس کی بات نہیں تھی۔۔۔
    یہ کارنامہ انجام دینا صرف گرانڈیل جواں مردوں کا کام تھا۔۔۔
    جبکہ چوں چوں کا مربہ جیسے لوگ ایک کٹورے میں کئی نمٹ جاتے تھے۔۔۔
    حاملینِ کٹورا اس عجوبۂ روزگار کی تصویر عنایت فرما سکتے ہیں!!!
    [​IMG]
     
    آخری تدوین: ‏اگست 18, 2020
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  6. سید عاطف علی

    سید عاطف علی لائبریرین

    مراسلے:
    10,290
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    یہ وہی کٹورا تو نہیں جس کے اوپر ایک اور کٹورا رکھا جاتا ہے تو وہ بیٹے کو باپ سے بھی گورا کرنے کی صلاحیت پا لیتا ہے ۔ اگر ایسا ہو تو دنیا کے ان تمام سانولے باپوں کو جو گورا ہونے کی آرزو رکھتے ہوں یہ کٹورا جام جمشید سے بھی بڑھ کر ہو گا ۔ البتہ یہ حیرت بدستور باقی رہتی ہے کہ زبان کے محاورے میں بیچاری کٹوری اس خاصے کی صلاحیت سے بہرہ ور کیوں نہیں کہ ماں کو بھی یہی موقع فراہم کرکے اس کو ممکنہ آرزو کے حصول سے محروم نہ رکھتی ۔
    کیا زبان پر یہ ستم بھی "میل ڈومینیٹد سوسائٹی" کا کیا دھرا ہے ؟
     
    آخری تدوین: ‏اگست 18, 2020
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,601
    جھنڈا:
    Pakistan
    آخر الزماں ہے صاحب۔۔۔
    فیمیل ڈومینیٹڈ سوسائٹی بننے کا وقت بھی قریب آرہا ہے جب ایک مرد کے مقابلے میں پچاس عورتیں ہوں گی!!!
     
    • غمناک غمناک × 1
  8. سید شہزاد ناصر

    سید شہزاد ناصر محفلین

    مراسلے:
    9,495
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    مکئی کی ہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. سید شہزاد ناصر

    سید شہزاد ناصر محفلین

    مراسلے:
    9,495
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    کبھی گاؤں میں نانی کے ہاتھ کی بنی ہوئی کھایا کرتے تھے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  10. لاريب اخلاص

    لاريب اخلاص محفلین

    مراسلے:
    22,296
    ہم بھی چوٹیاں کہتے ہیں بچپن سے بڑے ہونے تک امی جان بہت لاڈ سے میری دو چوٹیاں بناتی تھیں!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  11. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,432
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    میری امی جی بھی میری دو چوٹیاں بناتی تھیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • دوستانہ دوستانہ × 2
  12. آورکزئی

    آورکزئی محفلین

    مراسلے:
    1,645
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    اور اب ۔۔۔؟؟؟
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  13. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,432
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    اب اپنی بیٹی کی بناتی ہوں۔:)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  14. آورکزئی

    آورکزئی محفلین

    مراسلے:
    1,645
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    :laugh1::laugh1:
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  15. آورکزئی

    آورکزئی محفلین

    مراسلے:
    1,645
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    ڈیوا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    [​IMG]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  16. ظہیراحمدظہیر

    ظہیراحمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    3,342
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    آپ بالکل ٹھیک کہتی ہیں ۔ میں نے جو مثال دی اس سے اشکال پیدا ہوگیا ۔ کہنا یہی چاہتا تھا کہ بچیوں کی چھوٹی چھوٹی گندھی ہوئی چوٹیوں کو مینڈھیاں کہتے ہیں ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  17. ظہیراحمدظہیر

    ظہیراحمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    3,342
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    یعنی دیوا یا دیا ۔ دیئے یا چراغ کی کئی شکلیں ہوتی ہیں ۔ روایتی طور پر چراغ یا دیا مٹی کی ایک چھوٹی سی پیالی ہوا کرتی تھی کہ جس کے ایک طرف چونچ سی نکلی ہوتی ہے ۔ دیئے کی بتی اسی چونچ نما کنارے پر جل رہی ہوتی ہے اور اسے دیئے کی لو کہتے ہیں ۔ چھوٹے دیئے کو دیپ بھی کہا جاتا ہے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  18. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    205,149
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    چرخہ میرا رنگلا، وچ سونے دیاں میخاں
    وے میں تینوں یاد کراں جد چرخے ول ویکھاں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر