آپ کے پسندیدہ ملی نغمے

فرقان احمد نے 'بزم سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 2, 2017

  1. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924
    یہ وطن تمہارا ہے، تم ہو پاسباں اس کے
    یہ چمن تمہارا ہے، تم ہو نغمہ خواں اس کے

    اس چمن کے پھولوں پر رنگ و آب تم سے ہے
    اس زمیں کا ہر ذرہ آفتاب تم سے ہے

    یہ فضا تمہاری ہے، بحر و بر تمہارے ہیں
    کہکشاں کے یہ جالے، رہ گزر تمہارے ہیں

    اس زمیں کی مٹی میں خون ہے شہیدوں کا
    ارضِ پاک مرکز ہے قوم کی امیدوں کا

    نظم و ضبط کو اپنا میرِ کارواں جانو
    وقت کے اندھیروں میں اپنا آپ پہچانو

    یہ زمیں مقدس ہے ماں کے پیار کی صورت
    اس چمن میں تم سب ہو برگ و بار کی صورت

    دیکھنا گنوانا مت، دولتِ یقیں لوگو
    یہ وطن امانت ہے اور تم امیں لوگو

    میرِ کارواں ہم تھے، روحِ کارواں تم ہو
    ہم تو صرف عنواں تھے، اصل داستاں تم ہو

    نفرتوں کے دروازے خود پہ بند ہی رکھنا
    اس وطن کے پرچم کو سربلند ہی رکھنا

    یہ وطن تمہارا ہے، تم ہو پاسباں اس کے
    یہ چمن تمہارا ہے، تم ہو نغمہ خواں اس کے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
    • زبردست زبردست × 1
  2. وجی

    وجی لائبریرین

    مراسلے:
    24,634
    موڈ:
    Daring
    وطن کی مٹی گواہ رہنا
    وطن کی مٹی گواہ رہنا ، گواہ رہنا
    وطن کی مٹی گواہ رہنا ، گواہ رہنا
    گواہ رہنا
    وطن کی مٹی عظیم ہے تو ، عظیم تر ہم بنا رہے ہیں
    گواہ رہنا ، وطن کی مٹی گواہ رہنا
    گواہ رہنا
    ترے مغنی کی ہر صدا میں تری ہی خوشبو مہک رہی ہے
    ہر ایک سُر میں ہر ایک لے میں تری محبت چمک رہی ہے
    گواہ رہنا ، وطن کی مٹی گواہ رہنا
    گواہ رہنا
    تری زمیں کے یہ چاند تارے ، ہے جن کی آنکھوں میں پیار تیرا
    صداقتوں کے دیے جلا کر بڑھا رہے ہیں وقار تیرا
    گواہ رہنا ، وطن کی مٹی گواہ رہنا
    گواہ رہنا
    ہر ایک دل میں تری لگن ہے تری ہی جانب ہر ایک نظر ہے
    تری حفاظت کا عزم لے کر ہر ایک اپنے محاذ پر ہے
    گواہ رہنا ، وطن کی مٹی گواہ رہنا
    گواہ رہنا
    وطن کی مٹی گواہ رہنا ، گواہ رہنا
    وطن کی مٹی عظیم ہے تو ، عظیم تر ہم بنا رہے ہیں
    گواہ رہنا ، وطن کی مٹی گواہ رہنا
    گواہ رہنا ، گواہ رہنا​
     
    مدیر کی آخری تدوین: ‏اگست 9, 2017
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
    • زبردست زبردست × 1
  3. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,452
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    ہم تا بہ ابد سعی و تغیر کے ولی ہیں
    ہم مصطفوی، مصطفوی، مصطفوی ہیں
    عالی جی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 7
  4. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924

    ہم تا بہ ابد سعی و تغیر کے ولی ہیں
    ہم مصطفوی، مصطفوی، مصطفوی ہیں
    دین ہمارا دین مکمل استعمار ہے باطل ارذل
    خیر ہے جدوجہدِ مسلسل
    عند اللہ عنداللہ عنداللہ عنداللہ
    اللہ اکبر اللہ اکبر اللہ اکبر اللہ اکبر

    سبحان اللہ سبحان اللہ سبحان اللہ سبحان اللہ یہ وحدت فرقانی
    روحِ اخوت، مظہرِ قوت، مرحمتِ رحمانی
    سب کی زبان پر سب کے دلوں میں اک نعرۂ قرآنی
    اللہ اکبر اللہ اکبر اللہ اکبر اللہ اکبر

    امن کی دعوت کل عالم میں، مسلک عام ہمارا
    دادِ شجاعت دورِ ستم میں یہ بھی کام ہمارا
    حق آئے باطل مٹ جائے یہ پیغام ہمارا
    اللہ اکبر اللہ اکبر اللہ اکبر اللہ اکبر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
    • زبردست زبردست × 3
  5. ام اویس

    ام اویس محفلین

    مراسلے:
    1,753
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
  6. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924
    آؤ بچو، سیر کرائیں تم کو پاکستان کی
    جس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد! پاکستان زندہ باد!

    آؤ بچو، سیر کرائیں تم کو پاکستان کی
    جس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد! پاکستان زندہ باد

    دیکھو یہ ہے سندھ یہاں ظالم داہر کا ٹولہ تھا
    یہیں محمد بن قاسم، 'اللہ اکبر' بولا تھا
    ٹوٹی ہوئی تلواروں میں کیا بجلی تھی، کیا شعلہ تھا
    گنتی کے کچھ غازی تھے، لاکھوں کا لشکر ڈولا تھا
    یہاں کے ذرے ذرے میں اب دولت ہے ایمان کی
    جس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد! پاکستان زندہ باد
    پاکستان زندہ باد! پاکستان زندہ باد

    یہ اپنا پنجاب سجا ہے بڑے بڑے دریاؤں سے
    جگا دیا اقبال نے اس کو آزادی کے نعروں سے
    اس کے جوانوں نے کھیلا ہے اپنے خون کے دھاروں سے
    دشمن تھرا جاتے ہیں اب بھی ان کی للکاروں سے
    دور دور تک دھاک جمی ہے یہاں کے شیر جوان کی
    جس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد! پاکستان زندہ باد
    پاکستان زندہ باد! پاکستان زندہ باد

    یہ علاقہ سرحد کا ہے سب کی نرالی شان یہاں
    بندوقوں کی چھاؤں میں بچے ہوتے ہیں جوان یہاں
    ٹھوکر میں زلزلے یہاں ہیں، مٹھی میں طوفان یہاں
    سر پہ کفن باندھے پھرتا ہے دیکھو ہر اک پٹھان یہاں
    قوم کہے تو ابھی لگا دیں بازی یہ سب جان کی
    جس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد! پاکستان زندہ باد!
    پاکستان زندہ باد! پاکستان زندہ باد!

    ایک طرف خیبر دیکھو، سرحد کی شان بڑھاتا ہے
    شیرِ خدا کی قوت کا افسانہ یہ دہراتا ہے
    ایک طرف کشمیر ہمیں جنت کی یاد دلاتا ہے
    یہ راوی اور اٹک کا پانی امرت کو شرماتا ہے
    پیارے شہیدوں کا صدقہ ہے دولت پاکستان کی
    جس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد! پاکستان زندہ باد
    آؤ بچو، سیر کرائیں تم کو پاکستان کی
    جس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد! پاکستان زندہ باد!
     
    مدیر کی آخری تدوین: ‏اگست 9, 2017
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  7. نبیل

    نبیل محفلین

    مراسلے:
    16,624
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Depressed
    کیا ان ملی نغموں کی ویڈیو یا آڈیو دستیاب نہیں ہے؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  8. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924
    جی ہاں! دستیاب ہے بلکہ کافی آسانی سے دستیاب ہے۔ تاہم، بول وغیرہ کم کم ہی پڑھنے کو ملتے ہیں۔ سوچا، اس طرح ان بچوں اور بڑوں کے لیے آسانی ہو جائے گی جو لیریکس وغیرہ تلاش کرتے ہیں۔ :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  9. نبیل

    نبیل محفلین

    مراسلے:
    16,624
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Depressed
    جی میرا کہنے کا صرف یہ مقصد تھا کہ اگر لیرکس کے ساتھ اگر یوٹیوب ویڈیو کا ربط بھی فراہم کر دیا جائے تو بہتر رہے گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • متفق متفق × 2
  10. ام اویس

    ام اویس محفلین

    مراسلے:
    1,753
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    آؤ بچو سیر کرائیں تم کو پاکستان کی
    جس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد ۔۔۔ پاکستان زندہ باد

    دیکھو یہ ہے سندھ یہاں ظالم داہر کا ٹولہ تھا
    یہیں محمد بن قاسم الله اکبر بولا تھا
    ٹوٹی ہوئی تلواروں میں کیا بجلی تھی کیا شعلہ تھا
    گنتی کے کچھ غازی تھے لاکھوں کا لشکر ڈولا تھا
    یہاں کے ذرے ذرے میں اب دولت ہے ایمان کی
    جس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد ۔۔۔ پاکستان زندہ باد

    یہ اپنا پنجاب سجا ہے بڑے بڑے درباروں سے
    جگا دیا اقبال نے اس کو قربانی کے نعروں سے
    اس کے جوانوں نے کھیلا ہے اپنے خون کے دھاروں سے
    دشمن تھرّا جاتے ہیں اب بھی ان کی للکاروں سے
    دور دور تک دھاک جمی ہے اس کے شیر جوان کی
    جس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد ۔۔۔ پاکستان زندہ باد

    یہ علاقہ سرحد کا ہے سب کی نرالی شان یہاں
    بندوقوں کی چھاؤں میں بچے ہوتے ہیں جوان یہاں
    ٹھوکر میں زلزلے یہاں ہیں، مٹی میں طوفان یہاں
    سر پہ کفن باندھے پھرتا ہے دیکھو ہر اک پٹھان یہاں
    قوم کہے تو ابھی لگا دیں بازی یہ سب جان کی
    اس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد ۔۔۔ پاکستان زندہ باد

    ایک طرف خیبر دیکھو سرحد کی شان بڑھاتا ہے
    شیرِ خدا کی قوت کا افسانہ یہ دہراتا ہے
    ایک طرف کشمیر ہمیں جنت کی یاد دلاتا ہے
    یہ راوی اور اٹک کا پانی امرِت کو شرماتا ہے
    پیارے شہیدوں کا صدقہ ہے دولت پاکستان کی
    اس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد ۔۔۔ پاکستان زندہ باد

    آؤ بچو سیر کرائیں تم کو پاکستان کی
    جس کی خاطر ہم نے دی قربانی لاکھوں جان کی
    پاکستان زندہ باد ۔۔۔ پاکستان زندہ باد​
     
    مدیر کی آخری تدوین: ‏اگست 9, 2017
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
    • زبردست زبردست × 1
  11. یوسف سلطان

    یوسف سلطان محفلین

    مراسلے:
    3,617
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh

    یوں دی ہمیں آزادی کہ دنیا ہوئی حیران
    اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان
    اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان
    تیرا احسان ہے تیرا احسان

    ہر سمت مسلمانوں پہ چھائی تھی تباہی
    ملک اپنا تھا اورغیروں کے ہاتھوں میں تھی شاہی
    ایسے میں اُٹھا دینِ محمد کا سپاہی
    اور نعرہ تکبیر سے دی تُو نے گواہی
    اسلام کا جھنڈا لیے آیا سرِ میدان
    اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان
    تیرا احسان ہے تیرا احسان

    دیکھا تھا جو اقبال نے اک خواب سہانا
    اُس خواب کو اک روز حقیقت ہے بنانا
    یہ سوچا جو تُو نے تو ہنسا تجھ پہ زمانہ
    ہر چال سے چاہا تجھے دشمن نے ہرانا
    مارا وہ تو نے داؤ کہ دشمن بھی گئے مان
    اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان
    تیرا احسان ہے تیرا احسان

    لڑنے کا دشمنوں سے عجب ڈھنگ نکالا
    نہ توپ نہ بندوق نہ تلوار نہ بھالا
    سچائی کے انمول اصولوں کو سنبھالا
    پنہاں تیرے پیغام میں جادو تھا نرالا
    ایمان والے چل پڑے سُن کر تیرا فرمان
    اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان
    تیرا احسان ہے تیرا احسان

    پنجاب سے بنگال سے جوان چل پڑے
    سندھی،بلوچی،سرحدی پٹھان چل پڑے
    گھر بار چھوڑ بے سرو سامان چل پڑے
    ساتھ اپنے مہاجر لیے قرآن چل پڑے
    اور قائد ملت بھی چلے ہونے کو قربان
    اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان
    تیرا احسان ہے تیرا احسان

    نقشہ بدل کے رکھ دیا اس ملک کا تُو نے
    سایہ تھا محمد کا،علی کا تیرے سَر پہ
    دنیا سے کہا تو نے کوئی ہم سے نہ الجھے
    لکھا ہے اس زمیں پہ شہیدوں نے لہو سے
    آزاد ہیں آزاد رہیں گے یہ مسلمان
    اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان
    تیرا احسان ہے تیرا احسان

    ہے آج تک ہمیں وہ قیامت کی گھڑی یاد
    میت پہ تیری چیخ کے ہم نے جو کی فریاد
    بولی یہ تیری روح نہ سمجھو اسے بیداد
    اسلام زندہ ہوتا ہے ہر کربلا کے بعد
    اسلام زندہ ہوتا ہے ہر کربلا کے بعد
    گر وقت پڑے مُلک پہ ہو جائیے قربان
    اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان
    تیرا احسان ہے تیرا احسان

    (فیاض ہاشمی)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 8
    • زبردست زبردست × 1
  12. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924
    چلو یہ سوچیں ہم آج مل کے
    جو اس زمیں سے کیا تھا ہم نے
    وہ عہد کیا ہم نبھارہے ہیں

    گئی رتوں کے ہر ایک پل کا
    دلوں سے اپنے حساب مانگیں
    دیا ہے کیا اس وطن کو ہم نے
    یہ آج خود سے جواب مانگیں
    وطن کی راہوں میں ہم وفا کے
    گلاب کتنے کھلارہے ہیں

    ہر ایک دشمن کی سازشوں سے
    یہ دیس ہم کو بچانا ہوگا
    محبتوں کو فروغ دے کر
    شعورِ ملت جگانا ہوگا
    یہ کون ہیں جو ہمیں میں رہ کر
    ہمارے گھر کو جلارہے ہیں

    چلو یہ سوچیں ہم آج مل کے
    جو اس زمیں سے کیا تھا ہم نے
    وہ عہد کیا ہم نبھارہے ہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  13. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924
    یہ دیس ہمارا ہے

    یہ دیس ہمارا ہے ، اسے ہم نے سنوارا ہے
    یہ دیس ہمارا ہے ، اسے ہم نے سنوارا ہے
    اس کا اک اک ذرہ ہمیں جان سے پیارا ہے
    یہ دیس یہ دیس۔۔
    یہ دیس ہمارا ہے ، اسے ہم نے سنوارا ہے

    مزدور بھی ہم اس کے ، دہقان بھی ہم اس کے
    اللہ کی رضا سے ہیں ، نگہبان بھی ہم اس کے
    رنگ اس کو دیے ہم نے ، رنگ اس کو دیے ہم نے
    اسے ہم نے نکھارا ہے
    یہ دیس یہ دیس
    یہ دیس ہمارا ہے ، اسے ہم نے سنوارا ہے

    شاہین بھی ہم اس کے جوان بھی ہم اس کے
    بہتے ہوئے پانی پر نگہبان بھی ہم اس کے
    اٹھا لو ذرا پرچم
    پھر اس نے پکارا ہے
    یہ دیس یہ دیس
    یہ دیس ہمارا ہے ، اسے ہم نے سنوارا ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  14. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924
    زمیں کی گود رنگ سے امنگ سے بھری رہے
    زمیں کی گود رنگ سے امنگ سے بھری رہے
    خدا کرے
    خدا کرے
    خدا کرے ۔۔۔!!!
    خدا کرے ۔۔۔!!!
    خدا کرے سدا ہری بھری رہے
    زمیں کی گود رنگ سے امنگ سے بھری رہے

    دلوں میں کوئی خواب تھا بسا ہوا
    نظر میں اک گلاب تھا چھپا ہوا
    عجب بہار میں کھلا وہ پھول مہتاب کا
    یہ سادگی یہ تازگی یہ چاندنی
    خدا کرے
    خدا کرے
    خدا کرے ۔۔۔!!!
    خدا کرے ۔۔۔!!!
    زمیں کی گود رنگ سے امنگ سے بھری رہے

    خدائے مہربان کی یہ نشانیاں
    رواں دواں یہ رنگ رنگ بدلیاں
    وہ بدلیوں کی اوٹ سے پکارتی ہیں کہکہشاں
    یہ بدلیاں یہ آسماں یہ کہکہشاں
    خدا کرے
    خدا کرے
    خدا کرے یہ بدلیں یہ آسماں یہ کہکہشاں رہے

    زمیں کی گود رنگ سے امنگ سے بھری رہے
    خدا کرے
    خدا کرے
    خدا کرے ۔۔۔!!!
    خدا کرے ۔۔۔!!!
    زمیں کی گود رنگ سے امنگ سے بھری رہے

    خدا کرے ۔۔۔!!!
    خدا کرے ۔۔۔!!!
    خدا کرے سدا زمیں کی گود رنگ سے امنگ سے بھری رہے
    زمیں کی گود رنگ سے امنگ سے بھری رہے
    زمیں کی گود رنگ سے امنگ سے بھری رہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  15. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924
    اے نگارِ وطن تُو سلامت رہے

    اے نگارِ وطن تُو سلامت رہے

    مانگ تیری ستاروں سے بھر دیں گے ہم
    تو سلامت رہے
    تو سلامت رہے
    اے نگارِ وطن تو سلامت رہے


    ہو سکی تیرے رخ پر نہ قرباں اگر

    اور کس کام آئے گی یہ زندگی
    اپنے خوں سے بڑھاتے رہیں گے سدا
    تیرے گل رنگ چہرے کی تابندگی
    جب تجھے روشنی کی ضرورت پڑی
    اپنی محفل کے شمس و قمر دیں گے ہم
    تو سلامت رہے
    تو سلامت رہے
    اے نگارِ وطن تو سلامت رہے


    سبز پرچم تیرا چاند تارے تیرے

    تیری بزمِ نگاری کے عنوان ہیں
    تیری گلیاں، تیرے شہر، تیرے چمن
    تیرے ہونٹوں کی جنبش پہ قربان ہیں
    جب بھی تیری نظر کا اشارہ ملا
    تحفَہِ نفسِ جاں پیش کر دیں گے ہم
    تو سلامت رہے
    تو سلامت رہے
    تُو سلامت رہے!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  16. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924
    خدا کرے کہ مری ارض پاک پر اترے
    وہ فصلِ گل جسے اندیشۂ زوال نہ ہو

    یہاں جو پھول کھلے وہ کِھلا رہے برسوں
    یہاں خزاں کو گزرنے کی بھی مجال نہ ہو

    یہاں جو سبزہ اُگے وہ ہمیشہ سبز رہے
    اور ایسا سبز کہ جس کی کوئی مثال نہ ہو

    گھنی گھٹائیں یہاں ایسی بارشیں برسائیں
    کہ پتھروں کو بھی روئیدگی محال نہ ہو

    خدا کرے نہ کبھی خم سرِ وقارِ وطن
    اور اس کے حسن کو تشویشِ ماہ و سال نہ ہو

    ہر ایک فرد ہو تہذیب و فن کا اوجِ کمال
    کوئی ملول نہ ہو کوئی خستہ حال نہ ہو

    خدا کرے کہ مرے اک بھی ہم وطن کے لیے
    حیات جرم نہ ہو زندگی وبال نہ ہو
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 2
  17. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924
    تیرا پاکستان ہے یہ میرا پاکستان ہے
    اس پہ دل قربان اس پہ جان بھی قربان ہے

    اسکی بنیادوں میں ہے تیرا لہو میرا لہو
    اس سے تیری آبرو ہے اس سے میری آبرو
    اس سے تیرا نام ہے اس سے میری پہچان ہے
    اس پہ دل قربان اس پہ جان بھی قربان ہے

    اک دیار نور و نکہت وادی مہران ہے
    نور آنکھوں کا میری خاک بلوچستان ہے
    دل ہے سرحد کی زمیں پنجاب جسم و جان ہے
    اس پہ دل قربان اس پہ جان بھی قربان ہے

    یہ میرے قائد کی جیتی جاگتی تصویر ہے
    شاعر مشرق کےخوابوں کی حسیں تعبیر ہے
    یہ وطن پیارا وطن سرمایہ ایمان ہے
    اس پہ دل قربان اس پہ جان بھی قربان ہے

    تیرا پاکستان ہے یہ میرا پاکستان ہے
    اس پہ دل قربان اس پہ جان بھی قربان ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  18. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924
    ہو تیرا کرم مولا

    ہو تیرا کرم مولا
    ہو تیرا کرم مولا

    آئے یہاں خوشحالی کی بہار
    کتنے برس سے ہے یہ انتظار
    پاکستان جو تو نے ہے دیا
    اس کو زمیں پر جنت دے بنا
    مولا
    ہو تیرا کرم مولا

    امن و محبت کے دن دے دے
    ہم نے ہے لمبی رات گزاری
    محنت سے ہے عظمت ساری
    مانے گی اب قوم ہماری
    تجھ پہ ہے اے وطن
    جان و دل
    جان و دل بھی فدا
    پاکستان کو جنت دے بنا
    ہو تیرا کرم مولا
    مولا

    اپنے وطن سے پیار نبھاتے
    سارے دن بیتیں گے ہمارے
    کوئی کسی کا حق نا مارے
    جینے دیں اور جی لیں سارے
    تجھ پہ ہے اے وطن
    جان و دل
    جان و دل بھی فدا
    پاکستان کو جنت دے بنا
    ہو تیرا کرم مولا
    مولا ۔

    آئے یہاں خوشحالی کی بہار
    کتنے برس سے ہے یہ انتظار
    پاکستان جو تو نے ہے دیا
    اس کو زمیں پر جنت دے بنا
    مولا
    ہو تیرا کرم مولا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  19. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924
    یہ وطن تمہارا ہے ، تم ہو پاسباں اس کے
    یہ چمن تمہارا ہے ، تم ہو نغمہ خواں اس کے

    اس چمن کے پھولوں پر رنگ و آب تم سے ہے
    اس زمیں کا ہر ذرہ ، آفتاب تم سے ہے
    یہ فضا تمہاری ہے ، بحرو بر تمہارے ہیں
    کہکشاں کے یہ جادے رہگذر تمہارے ہیں
    اس زمیں کی مٹی میں خون ہے شہیدوں کا
    ارض پاک مرکز ہے قوم کی امیدوں کا
    نظم و ضبط کو اپنا میر کارواں جانو
    وقت کے اندھیروں میں اپنا آپ پہچانو
    یہ زمیں مقدس ہے ماں کے پیار کی صورت
    اس چمن میں تم سب ہو برگ و بار کی صورت
    دیکھنا گنوانا مت دولت یقیں لوگو
    یہ وطن امانت ہے اور تم امیں لوگو
    میر کارواں ہم تھے، روح کارواں تم ہو
    ہم تو صرف عنواں تھے ، اصل داستاں تم ہو
    نفرتوں کے دروازے خود پہ بند ہی رکھنا
    اس وطن کے پرچم کو سربلند ہی رکھنا
    یہ وطن تمہارا ہے ، تم ہو پاسباں اس کے
    یہ چمن تمہارا ہے تم ہو نغمہ خواں اس کے

    یہ وطن ہمارا ہے
    ہم ہیں پاسباں اس کے
    یہ وطن ہمارا ہے
    ہم ہیں نغمہ خواں اس کے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  20. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,924
    اے پاک وطن ۔۔۔۔۔ اے پاک وطن
    تیرا دن موتی تری رات نگیں
    اے پاک وطن ۔۔۔۔۔ اے پاک وطن
    تیرا دن موتی تیری رات نگیں

    تو روشن آنکھ کے تل میں ہے
    تیری روح میں ہے میرے دل میں ہے
    میرے روئے سحر میرے محو نظر
    میری نظم فلک میری ماہ جبیں
    ترا دن موتی تیری رات نگیں
    تیرا دن موتی تیری رات نگیں
    اے پاک وطن ۔۔۔۔۔ اے پاک وطن
    تیرا دن موتی تیری رات نگیں

    یہ دھوپ جلے اجلے چہرے
    سب تیرے ماتھے کے سہرے
    یہ اہل نظر، یہ اہل یقین
    اے پاک وطن ۔۔۔۔۔ اے پاک وطن
    تیرا دن موتی تیری رات نگیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر