کم عمری کی شادی پر پابندی کا بل سینیٹ سے منظور، جماعت اسلامی اور جے یو آئی کا احتجاج

جاسم محمد نے 'آج کی خبر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 29, 2019

لڑی کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے دستیاب نہیں
  1. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,528
    جھنڈا:
    Pakistan
    یعنی اللہ تعالیٰ کے احکامات معاشرتی بگاڑ لاتے ہیں (معاذ اللہ)۔۔۔
    اور ناپاکی کی پیدوار سدھار لاتے ہیں؟؟
     
  2. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,528
    جھنڈا:
    Pakistan
    وسیع تناظر میں دیکھا جائے تو کسی چھوٹ کو مقید نہیں کرنا چاہیے!!!
     
  3. محمد عدنان اکبری نقیبی

    محمد عدنان اکبری نقیبی لائبریرین

    مراسلے:
    18,768
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    مارکیٹ ۔ :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  4. عبدالقیوم چوہدری

    عبدالقیوم چوہدری محفلین

    مراسلے:
    18,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed

    [​IMG]

    [​IMG]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  5. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,528
    جھنڈا:
    Pakistan
    ہمارا نام لے کر آپ نے مارکیٹ میں لام کیوں لگایا؟؟؟
     
  6. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,183
    ایسا کم کم ہی ہوتا ہے اور یہ ایک استثنائی مثال ہے۔ تاہم، آپ کے سوال کے جواب میں عرض ہے کہ جی ہاں! اُن کی شادی ہو سکتی ہے۔ شریعت کے معاملات انسان نے طے نہیں کرنے ہوتے ہیں اور براہ مہربانی استثنائی مثالوں کو عام حالات پر منطبق کرنا ترک کر دیں۔ ایسی شادیوں کی شرح کیا ہے؟ اگر کہیں ایسا تواتر سے ہو رہا ہو تو آپ کو اس کے پیچھے عام طور پر، اسلام کی دی گئی اجازت نہیں ملے گی، بلکہ کوئی قبیح معاشرتی رسم ملے گی، جس کا خاتمہ ضروری ہے، یعنی کہ اس قبیح رسم کا۔ اسلام میں ایسا نہیں ہے کہ آپ نے صرف عمر دیکھ کر اور بلوغت کا معاملہ دیکھ کر شادی کر دینا ہوتی ہے؛ اور بھی بہت سے معاملات دیکھے جاتے ہیں۔ آپ ایک استثنائی مثال سامنے لاتے ہیں اور جزو کو کُل پر منطبق کر دیتے ہیں۔ یہاں یہ معاملہ درپیش ہے کہ لڑکیوں اور لڑکوں کی شادیاں تاخیر سے ہو رہی ہیں اور آپ ہیں کہ ۔۔۔! :)
     
    آخری تدوین: ‏مئی 2, 2019
    • متفق متفق × 5
  7. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    23,855
    اس قانون کے اطلاق کیلئے جرائم پیشہ ہونا ضروری نہیں۔ باہم رضا مندی کی عمر سے کم میں کوئی بھی جنسی تعلق قائم بہرحال قانونا جرم ہے۔ بیشک دونوں فریقین اس کے لئے رضامند ہی کیوں نہ ہوں۔ قانون اس کی پرواہ نہیں کرتا۔ خاص طور پر بالغ اور کم سن کے مابین تعلقات پر سب سے سخت سزا ملتی ہے۔ مغرب میں آپ قانون سے یہ کہہ کر جان نہیں چھڑا سکتے کہ کم سن جنسی طور پر بالغ ہے اور اسلامی نکاح میں ہے۔ اس لئے اس کے ساتھ جنسی تعلق جائز قرار دیا جائے۔
     
  8. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,528
    جھنڈا:
    Pakistan
    ظاہر ہے مغرب میں وہاں کے قانون چلیں گے اسلامی کیوں؟؟؟
    لیکن آپ وہاں کی یہاں چلانے کی کوشش نہ کریں۔۔۔
    ان کو ان کی بدحالی میں بد مست رہنے دیں۔۔۔
    اور ہمیں اپنے حال میں مست!!!
     
  9. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    23,855
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  10. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,183
    رپورٹ میں 18 برس کی عمر کا تذکرہ ہے اور کم از کم عمر کا کوئی تذکرہ ہی نہ ہے۔ یعنی کہ اس 21 فیصد میں وہ لڑکیاں بھی شامل ہیں جن کی عمریں سولہ اور سترہ سال ہوں گی ۔۔۔! :) تو پھر، استثنائی مثال ہی بنے گی نہ یہ کہ ایسی لڑکیاں کتنے فیصد رہ جائیں گی جن کی شادی سولہ برس سے بھی کم عمر میں ہوتی ہیں ۔۔۔! :) یعنی کہ، شاید ایک دو فیصد ہی ایسی شادیاں رہ جا ئیں گی ۔۔۔ جن میں دلہن کی عمر سولہ برس سے کم ہو گی ۔۔۔! کیونکہ ہمارے ہاں بعض گھرانوں میں عام طور پر سولہ تا اٹھارہ برس کی عمر میں لڑکی کی شادی کر دینے کا رجحان پایا جاتا ہے ۔۔۔! جو کچھ ایسی بھی کم عمر نہیں ہوتی ہے ۔۔۔!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  11. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,528
    جھنڈا:
    Pakistan
    اگر کر بھی رہے ہیں تو آپ کو باہر بیٹھے کیا پریشانی؟؟؟
    پہلے اپنے گھر کے سارے مسائل نبیڑ لیں پھر دوسروں کی فکر کریں۔۔۔
    اگر وہ اجازت دیں تو!!!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  12. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    23,855
    امریکہ کی بہت سی ریاستوں اور یورپ کے بہت سے ممالک میں باہم رضامندی کی کم سے کم عمر ۱۵ سال ہے۔ یوں ۱۵ سے ۱۸ سال کی عمر میں اس قسم کے تعلقات عام ہیں۔
     
  13. عبدالقیوم چوہدری

    عبدالقیوم چوہدری محفلین

    مراسلے:
    18,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    جی آ، جی آ۔:applause:
    چلیں، اب 15 تک آ ہی گئے ہیں تو کیا یہ 15 والا قانون صحیح ہے ؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  14. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,183
    جی ہاں! یہاں آپ کو 15 سے 18 برس قابل قبول معلوم ہو رہے ہیں تو شادی کے وقت اتنی عمر کے ہونے میں کیا قباحت ہے؟
     
    • متفق متفق × 3
  15. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,528
    جھنڈا:
    Pakistan
    پھر آپ کو اٹھارہ پر کیا اعتراض ہے۔۔۔
    ویسے بھی یاد رکھیں ہم اللہ کو ماننے والے ہیں، اللہ کی ماننے والے ہیں۔۔۔
    ہمارے اور ہمارے خدا کے بیچ میں اڑنگا لگانے والے نہ بنیں۔۔۔
    خدا کی مرضی کے آگے ہم بندوں کی کسی بات کو خاطر میں نہیں لاسکتے۔۔۔
    اپنے قوانین کا ٹوکرا اپنے ہی پاس رکھیں۔۔۔
    ہمارے تو وہ جوتے کی نوک پر!!!
     
    • متفق متفق × 1
  16. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,528
    جھنڈا:
    Pakistan
    اجی حضرات یہ بے پیندے کے لوگ ہیں۔۔۔
    بھلا خدا جتنی فراست ان میں کہاں سے آئے گی!!!
     
  17. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,183
    ارے بھیا! اب یہ ڈانٹ ڈپٹ تو بند کریں ۔۔۔! :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  18. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,528
    جھنڈا:
    Pakistan
    ان پر کون سا اثر ہونا ہے۔۔۔
    ہماری تھوڑی سی بھڑاس نکل جائے گی۔۔۔
    کیا آپ ہمیں اظہارِ آزادیِ رائے کا حق نہ دیں گے؟؟؟
    :sad2::sad2::sad2:
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  19. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    23,855
    متفق۔ جنسی بلوغت کے بعد شادی کی جا سکتی ہے۔ یہ عمر لڑکیوں میں ۹ سال اور لڑکوں میں ۱۲ سال ہو سکتی ہے۔ چونکہ یہاں مذہب نے کم سنی کی شادی پر کوئی قدغن نہیں لگائی ہے اسی لئے اس کی روک تھام کیلئے قانون سازی کی گئی ہے۔
     
  20. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,528
    جھنڈا:
    Pakistan
    کیوں؟؟؟
     
لڑی کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے دستیاب نہیں

اس صفحے کی تشہیر