1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $453.00
    اعلان ختم کریں

کم عمری کی شادی پر پابندی کا بل سینیٹ سے منظور، جماعت اسلامی اور جے یو آئی کا احتجاج

جاسم محمد نے 'آج کی خبر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 29, 2019

لڑی کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے دستیاب نہیں
  1. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    کم عمری کی شادی پر پابندی کا بل سینیٹ سے منظور، جماعت اسلامی اور جے یو آئی کا احتجاج
    [​IMG]
    18 سال سے کم عمر لڑکی یا لڑکے کی شادی کرانے والے والدین کو 2 لاکھ روپے جرمانہ، 3 سال تک قید ہوگی، بل کا متن، بل شریعت کے منافی ہے، مولانا عبدالغفور حیدری— فوٹو: فائل
    سینیٹ نے کم عمری کی شادی پر پابندی کا بل کثرت رائے سے منظور کر لیا جس کے تحت 18 سال سے کم عمر بچوں کی شادی کرنے والے کو 2 لاکھ روپے جرمانہ اور 3 سال قید کی سزا ہو گی۔

    پیپلز پارٹی کی سینیٹر شیری رحمان کی جانب سے پیش کیے گئے اس بل کے مطابق 18 سال سے کم عمر لڑکی یا لڑکے کی شادی کرانے والے والدین کو 2 لاکھ روپے جرمانہ اور 3 سال تک قابل توسیع قید کی سزا دی جائے گی۔

    نکاح یا دیگر ایسی رسومات ادا کرنے والے کو 3 سال قید بامشقت اور 2 لاکھ روپے جرمانہ ہوگا، عدالت اطلاع ملنے پر ایسی شادی روکنے کیلئے حکم امتناع جاری کرسکتی ہے،عدالتی حکم نامے کی خلاف ورزی کرنے والے کو ایک سال تک سزا اور ایک لاکھ روپے جرمانہ ہوگا۔

    اس موقع پر سینیٹر فاروق ایچ نائیک نے کہا کہ پاکستان کے قوانین میں بچے کی بلوغت کی عمر 18 سال ہے، یہ بل کم عمری کی شادی کی ممانعت نہیں کرتا، اسے قابل تعزیر بناتا ہے۔

    سینیٹر مشاہد اللہ خان نے کہا کہ آج سے 14 سو پہلے یہ قوانین بنے تھے، اب حالات مختلف ہو چکے ہیں، اُس وقت شاید بلوغت کا ایسا مسئلہ نہیں تھا، ایسے موقع پر اجتہاد کا سہارا لینا چاہیے۔

    دوسری جانب مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ یہ بل قرآن و حدیث اور شریعت کے منافی ہے، شریعت میں نکاح کی عمر صرف بلوغت ہے۔

    وزیر مملکت علی محمد خان نے کہا کہ بہتر ہے اس بل کو اسلامی نظریاتی کونسل کے پاس بھیج دیا جائے۔

    سینٹر رضا ربانی نے کہا کہ انہوں نے بطور چیئرمین سینیٹ ایک ایسا ہی بل اسلامی نظریاتی کونسل کو بھیجا تھا، آج تک انہی کے پاس ہے۔

    اس کے بعد سینیٹ نے بل کو کثرت رائے سے منظور کر لیا۔ جماعت اسلامی اور جمعیت علماء اسلام (ف) کے سینیٹرز نے چیئرمین سینیٹ کے ڈائس کے سامنے احتجاج کیا اور پھر ایوان سے واک آؤٹ کرگئے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  2. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    اسلام میں بلوغت کی عمر کیا متعین کی گئی ہے؟
     
  3. آصف اثر

    آصف اثر محفلین

    مراسلے:
    2,922
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    یہ کوئی پوچھنے کی بات ہے؟
     
  4. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,737
    اسلامی نظریاتی کونسل کو اس حوالے سے اپنا موقف واضح کرنا چاہیے ۔۔۔!
     
    • متفق متفق × 1
  5. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    طبی سائنس کے مطابق لڑکوں میں بلوغت کی عمومی عمر 12 سے 16 سال جبکہ لڑکیوں میں 9 سے 14 سال ہے۔
    اگر اسلام اس عمر میں نکاح کی اجازت دیتا ہے تو یہ بچوں کے حقوق کے خلاف ہے۔ نیا قانون یہ مسئلہ حل کر دیتا ہے۔
     
  6. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    ماضی میں اسلامی نظریاتی کونسل کا موقف بھی سامنے آ چکا ہے۔ اور وہ یہی تھا کہ اسلام میں نکاح کی کم سے کم عمر متعین نہیں کی گئی ہے۔ نکاح کی عمر وہی ہے جو بلوغت کی عمر ہے۔
    ‘Marriage age’ laws un-Islamic: CII - Newspaper - DAWN.COM
    Laws prohibiting underage marriage not Islamic: Council of Islamic Ideology
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  7. آصف اثر

    آصف اثر محفلین

    مراسلے:
    2,922
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  8. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    جن ممالک میں نکاح کی عمر کی حد متعین نہیں وہاں ایسے جوڑے پائے جاتے ہیں۔
    [​IMG]
    یہ تصویر مسلم ملک یمن کی ہے۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  9. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,778
    جھنڈا:
    Pakistan
    نکاح کےلیے تو عمر متعین کی جانی ضروری ہے۔۔۔
    اور زنا کے لیے؟؟؟
     
  10. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    زنا پہلے ہی قانونا جرم ہے ہر عمر کیلئے۔
     
  11. ابن جمال

    ابن جمال محفلین

    مراسلے:
    392
    میرا خیال ہے کہ سید عمران صاحب کی مراد گرل فرینڈ سے ہے، کہ گرل فرینڈ بنانے کیلئے عمر کی تحدید کیاہے اورجس کو گرل فرینڈ بنایاجارہاہے،کیااس کی عمر کی بھی کوئی تحدید ہے۔
    ویسے جب سے میں نے پاکستان میں غیرمسلم رکن قومی اسمبلی کی جانب سے شراب پرپابندی کی تحریک اورقومی اسمبلی کے مسلم ممبران کی جانب سے اس میں آناکانی دیکھی ہے، پاکستان میں اسلام کی صورت اورسیرت اچھی طرح مجھ پر واضح ہوگئی ہے۔یہ بعینہ وہی صورت ہے جس میں ایک خاتون برقعہ اوڑھ کر برے کام کرتی ہے،وہی کام پاکستانی اسمبلی اپنی پیشانی پر کلمہ لکھ کر اور قانون میں یہ تحریر کرکے کہ اسلام کے خلاف کوئی قانون نہیں بنے گا، ہربرائی کو جواز بخشتی ہے۔
     
  12. عباس اعوان

    عباس اعوان محفلین

    مراسلے:
    2,192
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Amused
    بہت سی امریکی ریاستوں کاقانون 18 سال سےکم عمر بچوں کی شادی کی اجازت دیتا ہے۔
     
    • غمناک غمناک × 1
  13. ابن جمال

    ابن جمال محفلین

    مراسلے:
    392
    کم عمری میں شادی کرنی نہ فرض وواجب ہے،نہ سنت ومستحب لیکن جائز ہے، اس جواز کو قانون بناکر روکنا شریعت میں کسی جائز امر کو ناجائز قراردینے جیساہے،جس چیز کو اللہ اوراس کے رسول نے جواز بخشاہو،کوئی قانون بناکر اس کو ناجائز بتائے،یہ بڑی جسارت کی بات ہے۔
     
    • متفق متفق × 4
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  14. جان

    جان محفلین

    مراسلے:
    1,754
    موڈ:
    Dead
    اس کا ماخذ کیا ہے؟
     
  15. ابن جمال

    ابن جمال محفلین

    مراسلے:
    392
    ماخذ عدم منع ہے،جس چیز کو قرآن وحدیث ،صحابہ کے اقوال اورمجتہدین کی آراء میں منع نہیں کیاگیاہے، وہ جائز ہے۔
     
    • متفق متفق × 2
  16. ابو ہاشم

    ابو ہاشم محفلین

    مراسلے:
    731
  17. جان

    جان محفلین

    مراسلے:
    1,754
    موڈ:
    Dead
    اس اصول کا ماخذ کیا ہے؟
     
  18. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    گرل فرینڈ بنانے کا مقصد جنسی تعلق قائم کرنا نہیں محض رومانس کرنا ہوتا ہے۔ رومانس کیلئے عمر کی کوئی قید نہیں ہے۔ یہی وجہ ہے کہ مغرب میں 18 سال سے کم عمر کے بچےرومانس کی غرض سے گرل فرینڈ، بوائے فرینڈ رکھ سکتے ہیں۔ لیکن جنسی تعلق قائم کرنے کیلئے نکاح کی عمر تک پہنچنا لازمی ہوتا ہے۔
     
    • غیر متفق غیر متفق × 1
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  19. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    جس ملک کے پارلیمانی لاجز سے شراب کی بوتلیں عام ملتی ہوں اس کے اراکین اسمبلی کیا خاک شراب کے خلاف قوانین بنائیں گے :)
     
    • متفق متفق × 1
  20. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    انسانی حقوق کے آفاقی منشور کا آرٹیکل 16 پڑھ لیں:

    Article 16.
    (1) Men and women of full age, without any limitation due to race, nationality or religion, have the right to marry and to found a family. They are entitled to equal rights as to marriage, during marriage and at its dissolution.
    (2) Marriage shall be entered into only with the free and full consent of the intending spouses.
    (3) The family is the natural and fundamental group unit of society and is entitled to protection by society and the State.

    Universal Declaration of Human Rights
     
لڑی کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے دستیاب نہیں

اس صفحے کی تشہیر