حسرت موہانی نگاہِ یار جسے آشنائے راز کرے ۔ حسرت موہانی

فرخ منظور نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ستمبر 1, 2011

  1. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,661
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    نگاہِ یار جسے آشنائے راز کرے
    وہ اپنی خوبیِ قسمت پہ کیوں نہ ناز کرے

    دلوں کو فکرِ دو عالم سے کر دیا آزاد
    ترے جنوں کا خدا سلسلہ دراز کرے

    خرد کا نام جنوں پڑ گیا، جنوں کا خرد
    جو چاہے آپ کا حسنِ کرشمہ ساز کرے

    ترے ستم سے میں خوش ہوں کہ غالباً یوں بھی
    مجھے وہ شاملِ اربابِ امتیاز کرے

    غمِ جہاں سے جسے ہو فراغ کی خواہش
    وہ ان کے دردِ محبت سے ساز باز کرے

    امیدوار ہیں ہر سمت عاشقوں کے گروہ
    تری نگاہ کو اللہ دل نواز کرے

    ترے کرم کا سزاوار تو نہیں حسرت
    اب آگے تیری خوشی ہے جو سرفراز کرے

    (حسرت موہانی)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  2. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,371
    بہت خوب جناب!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,661
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    نگاہِ یار جسے آشنائے راز کرے
    وہ اپنی خوبیِ قسمت پہ کیوں نہ ناز کرے

    دلوں کو فکرِ دو عالم سے کر دیا آزاد
    ترے جنوں کا خدا سلسلہ دراز کرے

    خرد کا نام جنوں پڑ گیا، جنوں کا خرد
    جو چاہے آپ کا حسنِ کرشمہ ساز کرے


    ترے ستم سے میں خوش ہوں کہ غالباً یوں بھی
    مجھے وہ شاملِ اربابِ امتیاز کرے

    غمِ جہاں سے جسے ہو فراغ کی خواہش
    وہ ان کے دردِ محبت سے ساز باز کرے

    امیدوار ہیں ہر سمت عاشقوں کے گروہ
    تری نگاہ کو اللہ دل نواز کرے

    ترے کرم کا سزاوار تو نہیں حسرتؔ
    اب آگے تیری خوشی ہے جو سرفراز کرے

    (حسرتؔ موہانی)
     

اس صفحے کی تشہیر