1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $453.00
    اعلان ختم کریں

محمد فضولی بغدادی کے چند تُرکی اشعار

حسان خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 9, 2017

  1. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    جنابِ «فُضولی» کے نعتیہ قصیدے «سو قصیده‌سی» کی بیتِ ہشتُم:

    غم گۆنۆ ائتمه دلِ بیماردان تیغین دِریغ
    خَیردیر وئرمه‌ک قارانقو گئجه‌ده بیماره سو

    (محمد فضولی بغدادی)
    بہ روزِ غم، دلِ بیمار سے اپنی تیغ کو دریغ مت رکھو!۔۔۔ تاریک شب میں بیمار کو آب دینا [کارِ] خیر ہے۔

    تشریح:
    «تیغ» مِژگان (اور نِگاہ) کا اِستِعارہ ہے۔ شاعر اپنے یار سے درمندانہ خواہش کر رہا ہے کہ وہ خود کی نِگاہ کو اُس کے دلِ بیمار سے دریغ مت رکھے۔ اور قصیدے کی بیتِ چہارُم کی مانند اِس بیت میں بھی ایک قدیم طِبّی باور پر اِستِناد کیا گیا ہے: بیماری شب کے وقت شِدّت پکڑتی ہے، پس شبِ تاریک میں بیمار کو آب دینا اور اُس کی تیمارداری کرنا کارِ ثواب ہے۔ لیکن اِس کے باوجود، جیسا کہ بیتِ چہارم میں اشارہ گُذرا ہے، زخمی کو زیادہ آب دینا اُس کے لیے زِیاں‌آور اور مُہلِک ہے۔ دونوں حالتوں کو مدِّ نظر رکھا جائے، تو تیغ (نِگاہ) کو آب سے تشبیہ دی گئی ہے۔ نگاہِ معشوق اگرچہ آرام‌بخش و شادمانی‌بخش ہے۔ لیکن یہ عاشق کو فرطِ ہَیجانِ دیدار سے ہلاک کر دیتی ہے، کیونکہ «عاشقا‌ں کُشتگانِ معشوق ہیں»۔ «بیمار کو آب دینا کارِ ثواب ہونا» صنعتِ تشبیہِ تمثیل کا ایک نمونہ ہے۔ «روزِ غم» اور «شبِ تاریک»، «دلِ بیمار» اور «بیمار»، «تیغ» اور «آب»، جُفتوں (جوڑیوں) کے لِحاظ سے ایک دوسرے کے ساتھ ارتباط رکھتے ہیں، اور اِس ارتباط سے صنعتِ لفّ و نشر وجود میں آئی ہے۔ ضِمناً، «روز» اور «شب» صنعتِ تضاد یا طِباق کے استعمال کے ذریعے سے ایک باہمی مُتَناقِض رابطے میں ایک دوسرے کے مُقابِل موجود ہیں۔
    شاعر پیغمبر (ص) سے روزِ قیامت، کہ «یوم التغابُن» (روزِ زیاں و خسارہ و پشیمانی و افسوس) ہے، کے لیے شفاعت کی خواہش کر رہا ہے۔

    (شارح: علی‌اصغر شعردوست)
    (مترجم: حسّان خان)


    جمہوریۂ آذربائجان کے لاطینی رسم الخط میں:
    Qəm günü etmə dili-bimardən tiğin diriğ,
    Xeyrdir vermək qaranqu gecədə bimarə su.


    تُرکیہ کے لاطینی رسم الخط میں:
    Ġam güni itme dil-i bîmârdan tîġuñ dirîġ
    Ḫayrdur virmek ḳaranġu gicede bîmâre su
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    شهیدِ عشق اۏلوپ فیضِ بقا کسْب ائیله‌مه‌ک خۏش‌دور
    نه حاصل بی‌وفا دهرۆڭ حیاتِ مُستَعارېن‌دان
    (محمد فضولی بغدادی)

    شہیدِ عشق ہو کر فَیضِ بقا کسْب کرنا [کارِ] خُوب ہے۔۔۔ بے وفا دُنیا کی حیاتِ مُستَعار (حیاتِ قرضی) سے کیا [فائدہ و] حاصل؟

    Şehîd-i 'ışḳ olup feyż-i beḳâ kesb eylemek ḫoşdur
    Ne ḥâṣıl bî-vefâ dehrüñ ḥayât-ı müste'ârından
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    ای قېلان‌لار آرزویِ آبِ کوثر دم‌به‌دم
    تشنه دُنیادان گئده‌ن آلِ رسولی یاد ائدین
    ماجرایِ کربلا ذِکرین قېلېن شام و سحَر
    طبْعینیز اۏل ذِکرِ رِقّت‌بخش‌له مُعتاد ائدین

    (محمد فضولی بغدادی)
    اے ہمیشہ آبِ کوثر کی آرزو کرنے والو!۔۔۔۔ دُنیا سے تشنہ جانے والے آلِ رسول کو یاد کیجیے۔۔۔ شام و سحَر ماجرائے کربلا کا ذِکر کیجیے۔۔۔ [اور] اپنی طبیعتوں کو اُس ذِکرِ رِقّت‌بخش کا عادی کیجیے۔

    Еy qılanlar arizuyi-abi-Kövsər dəmbədəm,
    Təşnə dünyadan gеdən Ali-Rəsuli yad еdin.
    Macərayi-Kərbəla zikrin qılın şamü səhər,
    Təb’iniz оl zikri-riqqətbəxşlə mö’tad еdin.


    × مصرعِ چہارم کا یہ متن بھی نظر آیا ہے:
    طبْعینیز اۏل ذِکرِ رفعت‌بخش‌له مُعتاد ائدین
    ترجمہ: اپنی طبیعتوں کو اُس ذِکرِ رِفعت‌بخش کا عادی کیجیے۔

    × مأخوذ از: حدیقةُ السُعَداء
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    بنۆم حالۆم نه بیلسۆن اۏلمایان مِحنت گرفتارې
    بلا آزُرده‌سی، غُربت پریشانې، غم افگارې

    (محمد فضولی بغدادی)
    جو شخص گرفتارِ رنج نہ ہو، آزُردۂ بلا نہ ہو، پریشانِ غریب‌الوطنی نہ ہو، مجروحِ غم نہ ہو، وہ میرا حال کیا جانے؟

    Bənüm halüm nə bilsün оlmayan mihnət giriftarı,
    Bəla azürdəsi, qürbət pərişanı, qəm əfgarı.


    مأخوذ از: حدیقة السُعَداء
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  5. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    رمَضان آیې گره‌ک آچېلا جنّت قاپوسې
    نه روا کیم اۏلا مَی‌خانه قاپوسې باغلو

    (محمد فضولی بغدادی)
    ماہِ رمَضان میں [تو] لازم ہے کہ جنّت کا در کُھل جائے۔۔۔ [بس پھر] کیسے روا و مُناسب ہے کہ مَیخانے کا در بند ہو جائے؟

    Ramazân ayı gerek açıla cennet kapusı
    Ne revâ kim ola mey-hâne kapusı baġlu
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  6. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    قانېمې ایچمه‌ک دیله‌ر اۏل لعلِ مَی‌گون بو گئجه
    روزه توتموش غالِبا، اِفطار ایچۆن ایسته‌ر حلال
    (محمد فضولی بغدادی)

    [معشوق کا] وہ [لبِ] لعلِ مَیگوں اِس شب میرا خون پینا چاہتا ہے۔۔۔ معلوم ہوتا ہے کہ غالباً اُس نے روزہ رکھا ہے اور اِفطار کے لیے [کوئی] حلال [چیز] چاہ رہا ہے۔
    (معشوق کے لیے عاشق کا خُون حلال ہوتا ہے۔)

    Qanımı içmək dilər ol lə’li-meygun bu gecə,
    Ruzə tutmuş qaliba, iftar içün istər həlal.
     
    آخری تدوین: ‏مئی 11, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  7. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    بس که ضَعفِ روزه‌دن هر گۆن تاپار تغییرِ حال
    اۏلاجاق‌دور عید ایچۆن ماهِ تماموم بیر هِلال
    (محمد فضولی بغدادی)

    کمزوریِ روزہ سے [میرے محبوب] کا حال روز بہ روز اِس قدر زیادہ تغئیر پا رہا ہے کہ [عید آتے آتے] میرا ماہِ تمام [جیسا محبوب] عید کے لیے ایک ہلالِ [لاغر و باریک میں تبدیل] ہو جائے گا۔

    (ماہِ تمام روز بہ روز کم ہوتا رہتا ہے اور نِہایتاً ماہِ رمَضان کے اختتام پر باریک و لاغر ہِلال کی حالت میں آ جاتا ہے۔ عید بھی ہِلال کی رُؤیت سے تحقُّق پذیر ہوتی ہے۔)

    Bes ki ża'f-ı rûzeden her gün tapar taġyîr-i ḥâl
    Olacaḳdur 'îd içün mâh-ı tamâmum bir hilâl
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  8. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    شمعِ رُخساروڭ اۏدې قېلدې منی آتش‌پرست
    چاکِ سینه‌م‌دن تماشا ائیله آتش‌گاهوما
    (محمد فضولی بغدادی)

    تمہاری شمعِ رُخسار کی آتش نے مجھ کو آتش‌پرست کر دیا [ہے]۔۔۔ میرے چاکِ سینہ سے میری آتش‌گاہ کا نظارہ و تماشا کرو۔

    Şem'-i ruḫsâruñ odı ḳıldı meni âteş-perest
    Çâk-i sînemden temâşâ eyle âteşgâhuma
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    سو ویرۆر هر صُبح‌دم گؤز یاشې تیغِ آهوما
    کیم تؤکه‌م قانېن سِپِهرۆڭ سالسا مِهرین ماهوما

    (محمد فضولی بغدادی)
    [میرے] اشکِ چشم ہر صُبح میری تیغِ آہ کو آب دیتے (یعنی تیز کرتے) ہیں تاکہ اگر آسمان میرے ماہ [جیسے محبوب] کی جانب اپنا خورشید ڈالے تو میں آسمان کا خُون بہا دوں۔

    × فارسی میں «مِهر» کا معنی «خورشید» بھی ہے، اور «محبّت» بھی۔

    Su virür her ṣubḥ-dem göz yaşı tîġ-ı âhuma
    Kim tökem ḳanın sipihrüñ ṣalsa mihrin mâhuma
     
    آخری تدوین: ‏مئی 19, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  10. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    سید ذیشان بھائی، شاعر سے غیر مُتّفق ہونے کا کوئی خاص سبب؟ :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  11. سید ذیشان

    سید ذیشان محفلین

    مراسلے:
    6,757
    موڈ:
    Asleep
    Xc
    بھائی موبائل پر سکرال کرتے ہوئے غلطی سے بٹن دب گیا ہوگا۔ بہت معذرت۔ آج دوسری دفعہ ایسا ہو رہا ہے۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  12. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    شطرنج میں اگرچہ «پِیادے» کو «شاہ» پر مکانی و زمانی برتری حاصل ہوتی ہے، کیونکہ وہ شاہ سے ایک خانہ مُقدّم‌تر ہوتا ہے اور شاہ سے پہلے بازی میں پیادہ باری چلتا ہے۔ لیکن، اِس کے باوجود، شاہ مرتبے کے لحاظ سے پیادے سے افضل ہی رہتا ہے اور پیادے کا مکانی و زمانی تقدُّم شاہ کی عظمت و بُزُرگی میں کمی نہیں لاتا۔ حالا (اب) اِس توضیح کی روشنی میں جنابِ «محمد فُضولی بغدادی» کی مندرجۂ ذیل تُرکی بیت دیکھیے جس میں اُنہوں نے شاہ و پیادہ کے درمیان کی مذکورہ مُناسبت پر قیاس کرتے ہوئے خود کو «مجنون» سے برتر و عالی‌تر بتایا ہے:

    ماڭا زمان ایله مجنون مُقدّم اۏلسا نۏلا
    اۏیون‌دا شاه برابر دئگۆل پیاده ایله

    (محمد فضولی بغدادی)

    اگر زمانی لحاظ سے «مجنون» مجھ پر مُقدّم ہو تو کیا ہوا؟۔۔۔ بازیِ [شطرنج] میں شاہ پِیادے کے ساتھ برابر نہیں [ہوتا] ہے۔

    Maña zamân ile Mecnûn muḳaddem olsa no'la
    Oyunda şâh berâber degül piyâde ile


    سلام ہو «محمد فُضولی بغدادی» اور اُن کے خامۂ سِحرساز و گوہرنِثار پر!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  13. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    «حضرتِ علی» کی سِتائش میں جنابِ «محمد فُضولی بغدادی» کی ایک تُرکی بیت:
    سایهٔ لُطف و کرم گر سالسا خاکِ تیره‌یه
    جِرمِ خاکِ تیره رشکِ رَوضهٔ رِضوان اۏلور

    (محمد فضولی بغدادی)
    اگر وہ خاکِ تِیرہ و تاریک پر سایۂ لُطف و کرم ڈال دیں تو خاکِ تِیرہ و تاریک کا جِسم، رشکِ باغِ رِضواں ہو جائے [گا]۔
    × رِضوان = دربانِ جنّت کا نام

    Sâye-i luṭf ü kerem ger ṣalsa ḫâk-i tîreye
    Cirm-i ḫâk-i tîre reşk-i ravża-i Rıḍvân olur
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  14. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    یا رب اسیرِ دامِ بلا و مُصیبتم
    مُستَغرقِ تلاطُمِ بحرِ ضلالتم
    برقِ گُناه یاقدې بِنایِ وُجودومې
    رحم ائت که ذِلّت ایله طلب‌کارِ رحمتم

    (محمد فضولی بغدادی)
    یا رب! میں اسیرِ دامِ بلا و مُصیبت ہوں۔۔۔ مَیں غرقِ تلاطُمِ بحرِ گُمراہی ہوں۔۔۔ برقِ گُناہ نے میرے وُجود کی بِنا (عمارت) کو جلا دیا۔۔۔ رحم کرو کہ میں ذِلّت کے ساتھ طلب‌کارِ رحمت ہوں۔

    جمہوریۂ آذربائجان کے لاطینی رسم‌الخط میں:
    Ya Rəb, əsiri-dami-bəlavü müsibətəm,
    Müstəğrəqi-təlatümi-bəhri-zəlalətəm.
    Bərqi-günah yaхdı binayi-vücudimi,
    Rəhm еt ki, zillət ilə tələbkari-rəhmətəm.


    تُرکیہ کے لاطینی رسم‌الخط میں:
    Yâ rab esîr-i dâm-ı belâ vü musîbetem
    Mustagrak-ı telâtum-ı bahr-ı dalâletem
    Berk-ı günâh yakdı binâ-yı vücûdumı
    Rahm it ki zillet ile talebkâr-ı rahmetem


    مأخوذ از: حدیقةالسُعَداء
     
    آخری تدوین: ‏مئی 27, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  15. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    دهر بیر بازاردېر هر کیم متاعېن عرض ائده‌ر
    اهلِ دُنیا سیم و زر اهلِ هُنر فضل و کمال
    (محمد فضولی بغدادی)

    دُنیا ایک بازار ہے [کہ جس میں] ہر شخص اپنی متاع کی نُمائش کرتا اور پیش کرتا ہے: اہلِ دُنیا سِیم و زر [جبکہ] اہلِ ہُنر فضل و کمال۔

    Dehr bir bâzârdır her kim metâ'ın 'arz eder
    Ehl-i dünyâ sîm ü zer ehl-i hüner fazl ü kemâl
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  16. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    مثنویِ «لیلیٰ و مجنون» میں جنابِ «فُضولی» مجنون کی آوارگی و مردُم‌بیزاری کا حال بیان کرتے ہوئے ایک جا لِکھتے ہیں کہ:
    اۏلمېش‌دې بشردن ائیله بیزار
    کیم اؤز عکسین سانوردې اغیار
    (محمد فضولی بغدادی)

    وہ [نَوعِ] بشَر سے اِس طرح بیزار ہو گیا تھا کہ وہ خود کے عکس کو [بھی] اغیار تصوُّر کرتا تھا۔

    Olmışdı beşerden eyle bîzâr
    Kim öz aksin sanurdı ağyâr
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  17. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    جنابِ «فُضولی» کی مثنوی «لیلیٰ و مجنون» میں «لیلیٰ» شمع سے مُخاطِب ہو کر کہتی ہے:
    سن گئجه همین یانارسه‌ن ای زار
    من گئجه و گۆندۆزه‌م گرفتار

    (محمد فضولی بغدادی)
    اے زار! تم فقط شب کے وقت جلتی ہو۔۔۔ [جبکہ] میں شب و روز گرفتارِ [آتشِ عشق] ہوں۔

    Sen gece hemîn yanarsen ey zâr
    Men gece vü gündüzem giriftâr
     
    آخری تدوین: ‏جون 21, 2019
  18. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    مثنویِ «لیلیٰ و مجنون» سے ایک بیت:
    گر قتلۆمه دوست چکسه شمشیر
    یۏخ من‌ده رِضادان اؤزگه تدبیر

    (محمد فضولی بغدادی)
    اگر محبوب میرے قتل کے لیے شمشیر کھینچے تو میرے پاس رِضامندی کے بجُز [کوئی] چارہ و تدبیر نہیں ہے۔
    (یعنی میں محبوب کے بدست قتل ہونے پر راضی ہوں۔)

    Ger katlüme dûst çekse şemşîr
    Yoh mende rızâdan özge tedbîr
     
  19. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    ای فُضولی هر نیجه منع ائیله‌سه ناصح سنی
    باخما آنوڭ قَولینه بیر چهرهٔ زیبایا باخ

    (محمد فضولی بغدادی)
    اے «فُضولی»! ناصِح [خواہ] جس قدر بھی تم کو منع کرے، تم اُس کے قَول کی طرف مت نِگاہ (توجُّہ) کرو [بلکہ] کسی چہرۂ زیبا کی جانب نِگاہ کرو۔

    İy Fużûlî her nice men' eylese nâṣiḥ seni
    Baḫma anuñ ḳavline bir çihre-i zîbâya baḫ
     
    آخری تدوین: ‏جون 10, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  20. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,368
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    یۏخ فُضولی خبرۆم مُطلَق اؤزۆم‌دن بس کیم
    والِهِ نقشِ خیالِ رُخِ دل‌دار اۏلوبه‌م

    (محمد فضولی بغدادی)
    اے فُضولی! میں چہرۂ دل‌دار کے خیال کے نقش کا اِتنا زیادہ والِہ و شیفتہ ہو گیا ہوں کہ مجھ کو خود کی خبر بِالکُل نہیں ہے۔

    Yoh Fuzûlî haberüm mutlak özümden bes kim
    Vâlih-i nakş-ı hayâl-i ruh-i dildâr olubem
     
    آخری تدوین: ‏جون 20, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر