لیاقت علی عاصم غزل ۔ ہجر ہجرت سے سوا ہو گیا گھر آتے ہی ۔ لیاقت علی عاصمؔ

محمداحمد نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 10, 2018

  1. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    21,907
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    غزل

    ہجر ہجرت سے سوا ہو گیا گھر آتے ہی
    میں تو خود سے بھی جُدا ہو گیا گھر آتے ہی

    ایسے سوئے ہیں کہ مرتا بھی نہ ہوگا کوئی
    جاگتے رہنا بلا ہو گیا گھر آتے ہی

    میں گنہگارِ سفر تھا مجھے کیا نیند آتی
    میں تو مصروفِ دعا ہو گیا گھر آتے ہی

    میں نے سوچا تھا کہ گھر جا کے منالوں گا اسے
    دل تو کچھ اور خفا ہو گیا گھر آتے ہی

    ایک دستک کا بڑا قرض تھا مجھ پر عاصمؔ
    اور وہ قرض ادا ہو گیا گھر آتے ہی

    لیاقت علی عاصمؔ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 2
  2. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    7,963
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
  3. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    24,131
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بہت خوب۔
    شراکت کا شکریہ
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  4. عبید انصاری

    عبید انصاری محفلین

    مراسلے:
    2,461
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    لا جواب!
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  5. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    21,907
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    بہت شکریہ!
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  6. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,113
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    واہ احمد بھائی خوبصورت شراکت
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  7. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    21,907
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    بہت شکریہ فرحان بھائی!
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر