1. اردو محفل سالگرہ پانزدہم

    اردو محفل کی یوم تاسیس کی پندرہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

عرفان صدیقی غزل-- خانۂ درد ترے خاک بسر آگئے ہیں -- عرفان صدیقی، بھارت

مغزل نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 13, 2010

  1. مغزل

    مغزل محفلین

    مراسلے:
    17,597
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    غزل

    خانۂ درد ترے خاک بسر آگئے ہیں
    اب تو پہچان کہ ہم شام کو گھرآگئے ہیں

    جان و دل کب کے گئے ناقہ سواروں کی طرف
    یہ بدن گرد اڑانے کو کدھر آگئے ہیں

    رات دن سوچتے رہتے ہیں یہ زندانی ٔ ہجر
    اس نے چاہا ہے تو دیوار میں در آگئے ہیں

    اس کے ہاتھوں میں ہے شاخِ تعلق کی بہار
    چھو لیا ہے تو نئے برگ و ثمر آگئے ہیں

    ہم نے دیکھا ہی تھا دنیا کو ابھی اس کے بغیر
    لیجئے بیچ میں پھر دیدۂ تر آگئے ہیں

    اتنا آسان نہیں فیصلۂ ترکِ سفر
    پھر مری راہ میں دوچار شجر آگئے ہیں

    نیند کے شہرِ طلسمات میں دیکھیں کیا ہے
    جاگتے میں تو بہت خواب نظر آگئے ہیں

    عرفان صدیقی، بھارت
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
  2. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    34,632
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    شکریہ محمود
    لیکن کہیں کچھ غلطی ہے
    اس کے ہاتھوں میں ہے شاخِ تعلق کی بہار
    شاید یوں ہو۔
    اس کے ہاتھوں میں ہے اک شاخِ تعلق کی بہار
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  3. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    خوبصورت انتخاب پر آپ کا شکریہ!
     
  4. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,150
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    واقعی خوبصورت غزل ہے۔

    بہت شکریہ مغل صاحب شیئر کرنے کیلیے۔
     

اس صفحے کی تشہیر