ذہین افراد کم دوست کیوں بناتے ہیں؟

arifkarim نے 'گپ شپ' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ستمبر 16, 2016

  1. لاریب مرزا

    لاریب مرزا محفلین

    مراسلے:
    5,950
    ہم اس بات سے اتفاق نہیں کرتے کہ ذہین لوگ کم دوست بناتے ہیں۔ ذہانت کے علاوہ اور بھی بہت سے عناصر دوست بنانے میں اثر انداز ہوتے ہیں۔ جیسا کہ لوگوں کی ذاتی پسند، ناپسند، مزاج، ترجیحات اور ماحول وغیرہ
    ہم نے تو ذہین لوگوں کو بہت سوشل بھی دیکھا ہے اور الگ تھلگ، تنہائی پسند بھی.. نہیں معلوم یہ تحقیق کس بنیاد پر کی گئی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • متفق متفق × 2
    • زبردست زبردست × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  2. محمدظہیر

    محمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    2,950
    پہلے تو یہ طے ہونا چاہیے ذہین کہتے کسے ہیں
    چور ماہر چوروں کو ذہین سمجھتے ہیں
    ہمارے یہاں پرائیویٹ جاب کرنے والے سرکاری ملازمین کو ذہین سمجھتے ہیں
    عوام کامیاب سیاست دانوں کو ذہین اور مکار سمجھتے ہیں
    سیاست دان امیر ترین لوگوں کو ذہین سمجھتے ہیں
    اکثر لوگ دین داروں کو ذہین کہتے ہیں
    جاہل پڑھے لکھوں کو ذہین سمجھتے ہیں
    ذہین لوگ ہوتے کون ہیں؟ اور یہ تحقیق کرنے والے آخر ہوتے کون ہیں جو دوسروں کو ذہین یا احمق کا لیبل لگاتے ہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • متفق متفق × 1
  3. نور وجدان

    نور وجدان مدیر

    مراسلے:
    6,441
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Asleep


    یہ جینیس لوگ ہیں جو مووی موویز میں ہیں ۔۔ یہاں موویز سے اندازہ ہوتا ہے ان بیچاروں کا مذاق اڑایا جاتا ہے اور دوست بنا نہیں سکتے ۔۔اس لحاظ سے تحقیق کسی حد تک درست بھی ہے
     
    آخری تدوین: ‏ستمبر 16, 2016
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • متفق متفق × 1
  4. اکمل زیدی

    اکمل زیدی محفلین

    مراسلے:
    4,470
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    میرے مطابق : زہین افراد وہ ہوتے ہیں جن سے معاشرے کو فائدہ پہنچتا ہے ...ذہن میں رہے زہین اور چالاک میں فرق ہے چالاک صرف اپنا فائدہ سوچتا ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  5. شاہد شاہنواز

    شاہد شاہنواز لائبریرین

    مراسلے:
    1,836
    جھنڈا:
    Pakistan
    تحقیقات کی بنیاد مختلف باتوں پر رکھی جاسکتی ہے۔ اگر علم التعلیم کا مطالعہ کیا جائے تو وہ بھی بچوں یا طلبہ کی مختلف قسمیں بیان کرتی ہے۔ مثال کے طور پر:
    کند ذہن: جنہیں سمجھا یا جائے تو آسانی سے بات سمجھ میں نہیں آتی۔ بار بار سمجھانا پڑتا ہے اور ان پر محنت ضروری ہے۔
    اوسط ذہین: وہ جنہیں بات بیان کرنے پر سمجھ میں آجاتی ہے اور بہت کم ایسا ہوتا ہے کہ ایک بات کو دہرانا پڑے۔ وہ کوشش کریں تو یاد بھی کر لیتے ہیں کہ آپ نے انہیں گزشتہ نشستوں میں کیا کیا سمجھایا تھا۔
    ذہین: وہ ہوتے ہیں جو سمجھ بھی لیتے ہیں اور زیادہ کوشش کیے بغیر یاد بھی کرلیتے ہیں۔ دوبارہ سمجھانے کی نوبت نہ ہونے کے برابر آتی ہے جس کی وجہ بھی محض اتنی ہوتی ہے کہ آپ کی آواز ان تک نہ پہنچی ہو یا وہ ان الفاظ سے شناسا نہ ہوں جو آپ نے گفتگو کے دوران استعمال کردئیے۔
    فطین: یہ ذہین سے اوپر کی قسم ہے۔ تخلیقی ذہن رکھنے والے، شاعر، ادیب، افسانہ نگار، مصور اور قلمکار سب اسی قبیل سے تعلق رکھتے ہیں۔ انہیں آپ کچھ نہ بھی سمجھائیے تو ان کے اندر اتنی صلاحیت موجود ہوتی ہے کہ خود ہی نصاب کی کتاب اٹھا کر پڑھنا اور یاد کرلینا ان کے لیے کوئی مشکل کام نہیں۔ امتحان میں پاس ہونا ان کے بائیں ہاتھ کا کھیل ہے لیکن ا ن پر تھوڑی محنت سے یہ انتہائی اہم درجوں تک پہنچ سکتے ہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 5
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  6. اکمل زیدی

    اکمل زیدی محفلین

    مراسلے:
    4,470
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    گانے کے لئے عمر نہیں situation درکار ہوتی ہے ...:D:D
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  7. اکمل زیدی

    اکمل زیدی محفلین

    مراسلے:
    4,470
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    مجھے تو پہلے سے ہی یقین تھا تم دوغلے بندے ہو ....:laugh:
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. اکمل زیدی

    اکمل زیدی محفلین

    مراسلے:
    4,470
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    پھر اس کے بعد ٹھنڈی سی آہ بھر کر کہیں ...اب تو یہ زندگی ہمارے ساتھ کھیل رہی ہے ..... :straightface: ۔ ۔ ۔:D
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. نور وجدان

    نور وجدان مدیر

    مراسلے:
    6,441
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Asleep
    شاہد شاہنواز

    کہا جاتا ہے انسان ایک جیسا ذہن لیے پیدا ہوتا ہے تو دوسری طرف ذہانت میں تفریق چہ جائیکہ ؟آپ کی تعریف کی مطابق شاعر ، افسانہ نگار تو استاد ہوئے ۔۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  10. اکمل زیدی

    اکمل زیدی محفلین

    مراسلے:
    4,470
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    وارث بھائی بچہ تو دیکھیں ....ان پر محنت کی ضرورت نہیں .....:LOL:
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  11. شاہد شاہنواز

    شاہد شاہنواز لائبریرین

    مراسلے:
    1,836
    جھنڈا:
    Pakistan
    اس تحقیق میں شاید کچھ کمی رہ گئی۔ میری رائے میں یہ ذہین نہیں فطین لوگ ہوتے ہیں جنہیں ہم زیادہ تر تنہائی پسند دیکھتے ہیں۔ اس کی وجہ بھی وہی ان کی تخلیقی قوت ہوتی ہے۔ آپ کچھ لکھنا چاہتے ہیں، کوئی شعر کہنا چاہتے ہیں یا دیگر تخلیقی کام کرنا چاہتے ہیں تو اس کے لیے تنہائی ضروری ہے لیکن یہ تنہائی بعض لوگوں کےدوست بنانے کے عمل میں مخل بھی نہیں ہوتی۔ ہر تخلیق کار ایک ہی طرح کا نہیں ہوتا۔ ۔کچھ لوگ تخلیق کار ہونے کے باوجود ایک سے ایک اور بہتر سے بہتر دوست بنانے کے عادی ہوتے ہیں۔ تحقیق دراصل ایک نمونے پر کی جاتی ہے جو عمومی ہوتا ہے لیکن ضروری نہیں کہ وہ درست ہو۔ جو لوگ بھی تحقیق کے شعبے سے وابستہ ہیں اور تحقیق کے عمل سے گزر چکے ہیں، وہ یہ بات خوب جانتے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  12. ذوالقرنین

    ذوالقرنین لائبریرین

    مراسلے:
    4,172
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    میرے خیال سے ذہین لوگوں کو دوسرے لوگ صحیح طرح سے سمجھنے میں غلطی کرتے ہیں۔ اس لیے ان کے احباب کم ہوتے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  13. اکمل زیدی

    اکمل زیدی محفلین

    مراسلے:
    4,470
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    آپ مجھ سے چار مہینے بعد آئے تھے اور مجھ سے پہلے ١٠٠٠ پوسٹنگ کر لیں تھیں ....:LOL:
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  14. شاہد شاہنواز

    شاہد شاہنواز لائبریرین

    مراسلے:
    1,836
    جھنڈا:
    Pakistan
    معذرت کے ساتھ میں یہ بات نہیں مانتا۔ ایک جیسا ذہن تو دو جڑواں بچوں کا بھی نہیں ہوتا چہ جائیکہ ہر انسان کا ایک جیسا ذہن قرار دیا جائے۔ ذہانت میں تفریق نہیں بلکہ درجوں کے اعتبار سے فرق ہوتا ہے۔ درخت سے سیب گرتا ہے تو صرف نیوٹن ہی اس بات کو کیو ں پہچانتا ہے کہ زمین کی کشش کی وجہ سے ایسا ہوا؟ اس کا مطلب ہے کہ اس نے الگ انداز سے سوچا۔ یہی مثال آئن اسٹائن اور دیگر کی ہے۔ ذہانت میں درجوں کے اعتبار سے فرق ہوتا ہے۔ ایک جیسی ذہانت دنیا کے کسی بھی دو بچوں یا افراد میں ممکن نہیں ہے۔ کسی نہ کسی مقام پر پہنچ کر کسی بھی دو افراد کی رائے میں اختلاف ضرور پایا جائے گا۔ شاعر، افسانہ نگار وغیرہ استاد ہوں، یہ ضروری نہیں ہے لیکن یہ تخلیق کار ضرور ہیں جو عام انسانوں سے الگ سوچتے اور لکھتے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • متفق متفق × 1
  15. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    26,360
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    یہاں مثالیں پیش کرنے کی اجازت نہیں ہے. تحقیق کے بعد صرف نتائج بتائے جاتے ہیں.
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  16. نور وجدان

    نور وجدان مدیر

    مراسلے:
    6,441
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Asleep
    یعنی کہ آپ کے بات کی مطابق انسان کے مشاہدے کی قوت یکساں نہیں ہے اور مشاہداتی قوت ہر انسان میں یکساں نہیں کیونکہ بچے کا دماغ تو ہم کہیں کہ اک پروسیسر ہے پلس اس میں ہارڈ ڈسک ہے ، یہ پروسیسینگ تو چلو سیم ہے کیا میموری پاور بھی سیم ہے ؟ اگر سیم نہیں تو کیا ؟ تخلیق کار خود موجد ہوتے ہیں ۔ میں نے اکثر موویز میں دیکھا یا پڑھا بھی ہے کہ ایسے لوگ کتابی علم کو خاطر میں نہیں لاتے نا استاد کی سنتے اور نئے اصول بنا جاتے ہیں ۔۔میں تو خود اس تحقیق میں ہوں

    وہ کون سے عوامل ہیں جن سے مشاہداتی قوت یکساں نہیں ہوتی ؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  17. شاہد شاہنواز

    شاہد شاہنواز لائبریرین

    مراسلے:
    1,836
    جھنڈا:
    Pakistan
    مشاہدہ ایک الگ عمل ہے یعنی آپ نے کیا دیکھا، یہ مشاہدہ ہے۔ کیا نتیجہ اخذ کیا وہ آپ کے ذہن سے تعلق رکھتا ہے۔ یہاں پروسیسر کا کام آگیا یعنی بچے کا دماغ سمجھ لیجئے اور اگر ہم یادداشت کے معاملے کو دیکھیں کہ کس نے کیا یاد رکھا اور کون کیا بھول گیا تو یہاں ہارڈ ڈسک کی بات آئی۔ دیکھنا سب کا ایک جیسا ہے یعنی مشاہدہ ایک ہے لیکن پروسیسنگ الگ الگ ہے۔ میموری پاور الگ ہے۔ تخلیق کار موجد ہو بھی سکتے ہیں لیکن ایسا ضروری بھی نہیں ہے۔ کتابی علم خاطر میں لانا ضروری ہوتا ہے لیکن اس سے اتفاق یا اختلاف ایک الگ بات ہے۔مشاہداتی قوت سے مراد اگر صرف دیکھنا ہے تو وہ محض نظر کی تیزی اور کمزوری سے مشروط ہے لیکن یہاں یہ بحث نہیں ہے۔ شاید آپ نے مشاہداتی قوت سے پروسیسنگ مراد لی ، تو اس میں بہت سے عوامل کارفرما ہوتے ہیں جن کی بنیاد پر پروسیسنگ یا سوجھ بوجھ متاثر ہوتی ہے۔ ایک تو اسے جو دماغ خدا نے عطا کیا ہے وہ منفرد اور سب سے الگ تھلگ ہے۔ اس کے بعد اس نے خود جو محنت کی اور جو مزاج اسے عطا ہوا تھا، اس کی بنیاد پر جو فیصلے کیے ، یہ سب عوامل ہیں اور ان کے علاوہ حالات ہیں، کیفیات اور واقعات ہیں جو زندگی میں رونما ہوتے ہیں اور کسی بھی فرد کی سوچنے سمجھنے کی صلاحیتوں کو متاثر کرتے ہیں۔ یہ بالکل اسی طرح ہے جیسے آپ کوئی میچ کھیل رہے ہیں اور کبھی بارش ہوجاتی ہے، کبھی دھوپ ستاتی ہے تو کبھی کوئی اور عمل۔ ضروری نہیں ہے کہ ہر عمل جو ذہن کو متاثر کرتا ہے وہ ذہن کے اندر واقع ہو، یہ عوامل ذہن کے اندر اور باہر کسی بھی جگہ ہوسکتے ہیں اور ان سے سوجھ بوجھ متاثر ہوتی ہے۔
     
    • زبردست زبردست × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  18. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    یعنی فیس بک یوزرز کے لیے لمحہ فکریہ
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  19. شاہد شاہنواز

    شاہد شاہنواز لائبریرین

    مراسلے:
    1,836
    جھنڈا:
    Pakistan
    بے شک۔ لیکن اس سے یہ ثابت نہیں ہوتا کہ فیس بک صرف بے وقوف ہی استعمال کرتے ہیں۔ عقلمند کم استعمال کرتے ہیں، شاید یہ ثابت ہوتا ہو۔ اس کے علاوہ یہ بات بھی قابل غور ہے کہ فیس بک پر فرینڈ لسٹ میں آپ کے نام کا اندراج آپ کو میرا یا کسی اور کا دوست نہیں بنائے گا۔ دوستی ایک الگ ہی رشتہ ہے جسے سمجھنے کے لیے آپ کا فیس بک یوزر ہونا ضروری بھی نہیں۔
     
    • متفق متفق × 2
    • زبردست زبردست × 1
  20. نور وجدان

    نور وجدان مدیر

    مراسلے:
    6,441
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Asleep

    میرا کہنا تھا کہ انسان کو دو آنکھیں ملیں ، دو کان ، ایک ناک ، ایک دماغ ۔۔۔ دماغ کا سائز کسی کا ایکسٹرا آرڈنری نہیں ہوتا۔۔ ایک دو انچ کا فرق آجاتا ہے اس لیے یہاں پر سب ایک جیسی قوت لیے پیدا ہوئے ہیں ۔۔۔ میرا خیال میں کچھ نہ کچھ غیر معمولی ایسا ضرور ہوتا ہے جو ذہانت کو متاثر کرتا ہے ، میرا خیال ہے یہ قوت متخیلہ ہے ، اور قوت مشاہدہ ہے ۔۔۔یہ ہر دو انسان میں نہیں ہوتی ہیں ۔۔۔ قوت متخیلہ انسانی ذہن میں لیے پیدا ہوا یعنی وہ تمام تصورات ، علوم جو باقی لوگ باہر کی دنیا سے لیتے ہیں فطین اپنے اندر کی دنیا سے لیتا ہے ، اس کی قوت متخیلہ باہر کی دنیا سے اکتساب کرتی مشاہدہ کرتی ہے اور اس اس مشاہدے کی نتیجہ میں تجزیہ پیش کیے دیتے ہیں ۔ اب اس وقت متخیلہ کو سائنس میں کیا کہیں گے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • معلوماتی معلوماتی × 1

اس صفحے کی تشہیر