شیفتہ بدنام اگر ہوں گے تو کیا نام نہ ہو گا ۔ نواب مصطفیٰ خان شیفتہ

فرخ منظور نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 10, 2013

  1. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,826
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    تقلیدِ عدو سے ہمیں ابرام نہ ہو گا
    ہم خاص نہیں اور کرم عام نہ ہو گا
    صیاد کا دل اس سے پگھلنا متعذر
    جو نالہ کہ آتش فگنِ دام نہ ہو گا
    جس سے ہے مجھے ربط وہ ہے کون، کہاں ہے
    الزام کے دینے سے تو الزام نہ ہو گا
    بے داد وہ اور اس پہ وفا یہ کوئی مجھ سا
    مجبور ہوا ہے، دلِ خود کام نہ ہو گا
    وہ غیر کے گھر نغمہ سرا ہوں گے مگر کب
    جب ہم سے کوئی نالہ سرانجام نہ ہو گا
    ہم طالبِ شہرت ہیں، ہمیں ننگ سے کیا کام
    بدنام اگر ہوں گے تو کیا نام نہ ہو گا
    قاصد کو کیا قتل، کبوتر کو کیا ذبح
    لے جائے مرا اب کوئی پیغام، نہ ہو گا
    جب پردہ اٹھا تب ہے عدو دوست کہاں تک
    آزارِ عدو سے مجھے آرام نہ ہو گا
    یاں جیتے ہیں امیدِ شبِ وصل پر اور واں
    ہر صبح توقع ہے کہ تا شام نہ ہو گا
    قاصد ہے عبث منتظرِ وقت، کہاں وقت
    کس وقت انہیں شغلِ مے و جام نہ ہو گا
    دشمن پسِ دشنام بھی ہے طالبِ بوسہ
    محوِ اثرِ لذتِ دشنام نہ ہو گا
    رخصت اے نالہ کہ یاں ٹھہر چکی ہے
    نالہ نہیں جو آفتِ اجرام ، نہ ہو گا
    برق آئینہء فرصتِ گلزار ہے اس پر
    آئینہ نہ دیکھے کوئی گل فام، نہ ہو گا
    اے اہلِ نظر ذرے میں پوشیدہ ہے خورشید
    ایضاح سے حاصل بجز ابہام نہ ہو گا
    اس ناز و تغافل میں ہے قاصد کی خرابی
    بے چارہ کبھی لائقِ انعام نہ ہو گا
    اس بزم کے چلنے میں ہو تم کیوں متردد
    کیا شیفتہ کچھ آپ کا اکرام نہ ہو گا
    (نواب مصطفیٰ خان شیفتہ)
     
    • زبردست زبردست × 11
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. ماروا ضیا

    ماروا ضیا محفلین

    مراسلے:
    166
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    بُہت عمدہ غزل
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. ماروا ضیا

    ماروا ضیا محفلین

    مراسلے:
    166
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    اہلِ زمانہ دیکھتے ہیں عیب ہی کو بس
    کیا فائدہ جو شیفتہ عرضِ ہنر کریں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,826
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    انتخاب پسند فرمانے کا بہت شکریہ ماروا ضیا!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. شیزان

    شیزان لائبریرین

    مراسلے:
    6,469
    موڈ:
    Cool
    زبردست انتخاب جی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,826
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    بہت شکریہ شیزان صاحب!
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  7. عمران اسلم

    عمران اسلم محفلین

    مراسلے:
    213
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    واہ، کمال ،لاجواب ۔
    بہت شکریہ فرخ صاحب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    9,122
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    شکریہ فرخ منظور بھائی ایک پسندیدہ خوبصورت غزل شیئر کرنےپر۔ جزاک اللہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,826
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    بہت نوازش عمران اسلم صاحب!
     
  10. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,826
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    بہت عنایت و محبت خلیل الرحمٰن صاحب!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  11. مانی عباسی

    مانی عباسی محفلین

    مراسلے:
    346
    جھنڈا:
    Pakistan
    ہم طالبِ شہرت ہیں، ہمیں ننگ سے کیا کام
    بدنام اگر ہوں گے تو کیا نام نہ ہو گا
    واہ
     
  12. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,826
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    انتخاب کی پذیرائی کے لیے بہت شکریہ مانی صاحب!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  13. محمد بلال اعظم

    محمد بلال اعظم لائبریرین

    مراسلے:
    10,220
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    ہم طالبِ شہرت ہیں، ہمیں ننگ سے کیا کام
    بدنام اگر ہوں گے تو کیا نام نہ ہو گا
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  14. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,826
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold

    ہم طالبِ شہرت ہیں، ہمیں ننگ سے کیا کام
    بدنام اگر ہوں گے تو کیا نام نہ ہو گا

    مکمل غزل
    تقلیدِ عدو سے ہمیں ابرام نہ ہو گا
    ہم خاص نہیں اور کرم عام نہ ہو گا

    صیاد کا دل اس سے پگھلنا متعذر
    جو نالہ کہ آتش فگنِ دام نہ ہو گا

    جس سے ہے مجھے ربط وہ ہے کون، کہاں ہے
    الزام کے دینے سے تو الزام نہ ہو گا

    بے داد وہ اور اس پہ وفا یہ کوئی مجھ سا
    مجبور ہوا ہے، دلِ خود کام نہ ہو گا

    وہ غیر کے گھر نغمہ سرا ہوں گے مگر کب
    جب ہم سے کوئی نالہ سرانجام نہ ہو گا

    ہم طالبِ شہرت ہیں، ہمیں ننگ سے کیا کام
    بدنام اگر ہوں گے تو کیا نام نہ ہو گا

    قاصد کو کیا قتل، کبوتر کو کیا ذبح
    لے جائے مرا اب کوئی پیغام، نہ ہو گا

    جب پردہ اٹھا تب ہے عدو دوست کہاں تک
    آزارِ عدو سے مجھے آرام نہ ہو گا

    یاں جیتے ہیں امیدِ شبِ وصل پر اور واں
    ہر صبح توقع ہے کہ تا شام نہ ہو گا

    قاصد ہے عبث منتظرِ وقت، کہاں وقت
    کس وقت انہیں شغلِ مے و جام نہ ہو گا

    دشمن پسِ دشنام بھی ہے طالبِ بوسہ
    محوِ اثرِ لذتِ دشنام نہ ہو گا

    رخصت اے نالہ کہ یاں ٹھہر چکی ہے
    نالہ نہیں جو آفتِ اجرام ، نہ ہو گا

    برق آئینہء فرصتِ گلزار ہے اس پر
    آئینہ نہ دیکھے کوئی گل فام، نہ ہو گا

    اے اہلِ نظر ذرے میں پوشیدہ ہے خورشید
    ایضاح سے حاصل بجز ابہام نہ ہو گا

    اس ناز و تغافل میں ہے قاصد کی خرابی
    بے چارہ کبھی لائقِ انعام نہ ہو گا

    اس بزم کے چلنے میں ہو تم کیوں متردد
    کیا شیفتہ کچھ آپ کا اکرام نہ ہو گا

    (نواب مصطفیٰ خان شیفتہ)
     
    • زبردست زبردست × 1
  15. شبیر حسین تاب

    شبیر حسین تاب محفلین

    مراسلے:
    126
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Bookworm
    اے اہلِ نظر ذرے میں پوشیدہ ہے خورشید
    ایضاح سے حاصل بجز ابہام نہ ہو گا
    کیا بات ہے !!!!
    شکریہ جناب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2

اس صفحے کی تشہیر