اسے اپنے کل ہی کی فکر تھی وہ جو میرا واقفِ حال تھا

دوست نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 12, 2006

  1. دوست

    دوست محفلین

    مراسلے:
    13,080
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Fine
    احمد ندیم قاسمی کی یہ غزل مجھے بہت پسند ہے۔
    -------------------------------------------------------------------------------------------------------
    اسے اپنے کل ہی کی فکر تھی وہ جو میرا واقفِ حال تھا
    وہ جو اسکی صبحِ عروج تھی وہ میرا وقتِ زوال تھا
    میرا درد کیسے وہ جانتا میری بات کیسے وہ مانتا
    وہ تو خود فنا کے ساتھ میں تھا اسے روکنا بھی محال تھا
    وہ جو اسکے سامنے آگیا روشنی میں نہا گیا
    عجب اسکی ہیبتِ حسن تھی عجب اسکا رنگِ جمال تھا
    دمِ واپسی اسے کیا ہوا نہ وہ روشنی نہ وہ تازگی
    وہ ستارہ کیسے بکھر گیا وہ جو اپنی آپ مثال تھا
    وہ ملا تو صدیوں بعد بھی میرے لب پہ کوئی گلا نہ تھا
    اسے میری چپ نے رُلا دیا جسے گفتگو میں کمال تھا
    میرے ساتھ لگ کے وہ رودیا اور صرف اتنا ہی کہہ سکا
    جسے جانتا تھا میں زندگی وہ تو صرف وہم و خیال تھا

    --------------------------------------------------------------------------------------------------------
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  2. امیداورمحبت

    امیداورمحبت محفلین

    مراسلے:
    3,074
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    بہت پسندیدہ سی غزل ہے یہ میری بھی۔

    اسے میری چپ نے رلا دیا ،جسے گفتگو میں کمال تھا


    جہاں تک میرا خیال ہے یہ احمد ندیم قاسمی کی غزل نہیں ۔
     
  3. دوست

    دوست محفلین

    مراسلے:
    13,080
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Fine
    شاید آپ درست ہوں۔
    غلطی کی صورت میں معذرت خواہ ہوں۔
     
  4. فرذوق احمد

    فرذوق احمد محفلین

    مراسلے:
    2,617
    بہت اچھی غزل ہے
    ویسے احمد ندیم قاسمی صاحب بھی بہت مشکل لکھتے ہے کوئی شعر ہی سمجھ میں آتا ہے ورنہ تو اوپر سے ہی گزر جاتے ہیں

    اچھا دوست بھائی آپ نے احمد فراز کی کتاب دردِآشوب مجھے امید ہے پڑھی ہو گی
    اگر پرھی ہے تو اس میں ایک نظم ہے

    ممدوح

    اگر کسی روز آپ یہ لکھ دے تو نوازش ہو گی کیونکہ مجھے یہ بہت پسند ہے
     
  5. دوست

    دوست محفلین

    مراسلے:
    13,080
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Fine
    بھائی پڑھا تو سب کو ہے مگر یاد نہیں۔دیکھوں گا اس نظم کو اگر وقت ملا تو ضرور مہیا کرنے کی کوشش کروں گا۔
     
  6. ماہا عطا

    ماہا عطا محفلین

    مراسلے:
    2,138
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Where
    بہت اچھی غزل ہے۔۔۔لیکن شاعر زاہد فخری ہیں
     
    • متفق متفق × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  7. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,867
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    کلامِ شاعر بہ زبانِ شاعر ۔ زاہد فخری
     
    • زبردست زبردست × 1
  8. ابو حارث نعیم الرحمٰن

    ابو حارث نعیم الرحمٰن محفلین

    مراسلے:
    1
    یہ غزل زاہد فخری کی ہے۔
     
  9. حبیب صادق

    حبیب صادق محفلین

    مراسلے:
    32
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    عمدہ انتخاب
     
  10. سحر کائنات

    سحر کائنات محفلین

    مراسلے:
    113
    میں نے پہلامصرع یوں پڑھا ہے

    اسے اپنے فردا کی فکر تھی
     
  11. سحر کائنات

    سحر کائنات محفلین

    مراسلے:
    113
    درست فرمایا
     

اس صفحے کی تشہیر