1. اردو محفل سالگرہ شانزدہم

    اردو محفل کی سولہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

احمدی اقلیت اور ہمارے علما کا رویہ

جاسم محمد نے 'اسلام اور عصر حاضر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 16, 2020

  1. نوید خان

    نوید خان محفلین

    مراسلے:
    155
    مجھے تو محسوس ہوتا ہے آپ کو ان کی بات سمجھ نہیں آئی!
    اگر کسی نبوت کے دعویدار سے دلیل نہیں مانگی جائے گی تو عام عوام کی اکثریت یہی تصور کرے گی کہ اس کا دعویٰ درست ہے!
    میرے نزدیک تو صرف نبوت کا دعویدار ہی نہیں بلکہ قران پاک کے ایک ایک حرف سے حدیث کی ہر ایک بات پہ سوال اٹھایا جا سکتا ہے اور اس سے آپ کے ایمان پہ ذرا بھی فرق نہیں پڑنا چاہیے اور اگر پڑتا ہے تو اس کا مطلب آپ کا ایمان بھی دیگر مذاہب پہ ایمان لانے والوں سے زیادہ قابلِ قدر نہیں ہے!
     
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  2. وجی

    وجی لائبریرین

    مراسلے:
    26,003
    موڈ:
    Daring
    انکو یہ بات نہیں سمجھ آئے گی۔

    دلیل مانگنا دراصل سمجھدار لوگوں کا کام ہوتا ہے
    یا پھر ان لوگوں کا جن کے پاس علم ہو۔
    جن کے پاس علم نہیں وہ دلیل کا کیا کرنگے۔

    اور ہم جیسے کم علموں کے لیئے دعویدار پر سوال وجواب اور جواب کو پھرکھنے پر تفصیل کسی بڑے علم سے کم نہیں۔
     
    • زبردست زبردست × 1
  3. نوید خان

    نوید خان محفلین

    مراسلے:
    155
    تو پھر آپ کس بنیاد پہ یہ دعویٰ کریں گے کہ جو راستہ آپ نے چنا ہے وہی صحیح ہے جب آپ راستے کی صحت پہ کم علمی کی بنیاد پہ اپنا عذر پیش کریں گے؟
     
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  4. آورکزئی

    آورکزئی محفلین

    مراسلے:
    1,999
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    دائرہ اسلام سے خارج کرنے والا کون۔۔؟؟
    احادیث کی روشنی میں تفصیل تفصیل سے بتائیں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  5. آورکزئی

    آورکزئی محفلین

    مراسلے:
    1,999
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    دلیل کس بات کا مانگے گے؟ کہ ثابت کرو کہ تم واقعی نبی ہو؟؟
     
    • متفق متفق × 1
  6. آورکزئی

    آورکزئی محفلین

    مراسلے:
    1,999
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    "جو شخص کسی جھوٹے مدعی نبوت (نبوت کا دعویٰ کرنے والا) سے دلیل طلب کرے وہ بھی دائرہ اسلام سے خارج ہے"۔
    کیونکہ دلیل طلب کرکے اس نے اجرائے نبوت (نبوت جاری ہے) کے امکان کا عقیدہ رکھا (اور یہی کفر ہے)
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • متفق متفق × 1
  7. آورکزئی

    آورکزئی محفلین

    مراسلے:
    1,999
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    عقیدہ ختم نبوت اسلام کا وہ بنیادی عقیدہ ہے جس میں معمولی سا شبہ بھی قابل برداشت نہیں' حضرت امام ابوحنیفہ کا قول ہے کہ:

    "جو شخص کسی جھوٹے مدعی نبوت (نبوت کا دعویٰ کرنے والا) سے دلیل طلب کرے وہ بھی دائرہ اسلام سے خارج ہے"۔
    کیونکہ دلیل طلب کرکے اس نے اجرائے نبوت (نبوت جاری ہے) کے امکان کا عقیدہ رکھا (اور یہی کفر ہے)

    اسلام کی بنیاد :

    اسلام کی بنیاد توحید ، رسالت اور آخرت کے علاوہ جس بنیادی عقیدہ پر ہے ' وہ ہے "عقیدہ ختم نبوت" حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر نبوت اور رسالت کا سلسلہ ختم کر دیا گیا۔ آپ سلسلہ نبوت کی آخری کڑی ہیں۔ آپ کے بعد کسی شخص کو اس منصب پر فائز نہیں کیا جائے گا۔

    ختم نبوت اسلام کی جان ہے :

    یہ عقیدہ اسلام کی جان ہے ' ساری شریعت اور سارے دین کا مدار اسی عقیدہ پر ہے' قرآن کریم کی یک سو سے زائد آیات اور آنحضرت کی سینکڑوں احادیث اس عقیدہ پر گواہ ہیں۔ اھل بیت ، تمام صحابہ کرام تابعین عظام، تبع تابعین، ائمہ مجتہدین اور چودہ صدیوں کے مفسرین ' محدثین ' متکلمین ' علماء اور صوفیاء (اللہ ان سب پر رحمت کرے) کا اس پر اجماع ہے۔ چنانچہ قرآن کریم میں ہے:

    "ماکان محمد ابا احد من رجالکم ولکن رسول الله وخاتم النبیین" ۔ (الاحزاب:۴۰)

    ترجمہ:"حضرت محمد ا تمہارے مردوں میں سے کسی کے باپ نہیں' لیکن اللہ کے رسول اور نبیوں کو ختم کرنے والے آخری نبی ہیں"۔

    تمام مفسرین کا اس پر اتفاق ہے کہ "خاتم النبیین" کے معنیٰ ہیں کہ:

    آپ آخری نبی ہیں' آپ کے بعد کسی کو "منصب نبوت" پر فائز نہیں کیا جائے گا۔ عقیدہ ختم نبوت جس طرح قرآن کریم کی نصوص قطعیہ سے ثابت ہے' اسی طرح حضور کی احادیث متواترہ سے بھی ثابت ہے۔ چند احادیث ملاحظہ ہوں:

    ۱- میں خاتم النبیین ہوں' میرے بعد کسی قسم کا نبی نہیں۔ (ابوداؤد ج:۲' ص:۲۲۸)

    ۲- مجھے تمام مخلوق کی طرف مبعوث کیا گیا اور مجھ پر نبیوں کا سلسلہ ختم کردیا گیا۔ (مشکوٰة:۵۱۲)

    ۳- رسالت ونبوت ختم ہوچکی ہے پس میرے بعد نہ کوئی رسول ہے اور نہ نبی۔ (ترمذی'ج:۲'ص:۵۱)

    ۴- میں آخری نبی ہوں اور تم آخری امت ہو۔ (ابن ماجہ:۲۹۷)

    ۵- میرے بعد کوئی نبی نہیں اور تمہارے بعد کوئی امت نہیں۔ (مجمع الزوائد'ج:۳ ص:۲۷۳)

    ان ارشادات نبوی میں اس امرکی تصریح فرمائی گئی ہے کہ آپ آخری نبی اور رسول ہیں' آپ کے بعد کسی کو اس عہدہ پر فائز نہیں کیا جائے گا' آپ سے پہلے جتنے انبیاء علیہم السلام تشریف لائے' ان میں سے ہر نبی نے اپنے بعد آنے والے نبی کی بشارت دی اور گذشتہ انبیاء کی تصدیق کی۔ آپ نے گزشتہ انبیاء کی تصدیق تو فرمائی مگر کسی نئے آنے والے نبی کی بشارت نہیں دی۔ بلکہ فرمایا:

    ۱- قیامت اس وقت تک قائم نہیں ہوگی جب تک کہ ۳۰ کے لگ بھک دجال اور کذاب پیدا نہ ہوں' جن میں سے ہرایک یہ دعویٰ کرے گا کہ وہ اللہ کا رسول ہے۔

    0- قریب ہے کہ میری امت میں ۳۰ جھوٹے پیدا ہوں' ہرایک یہی کہے گا کہ میں نبی ہوں' حالانکہ میں خاتم النبیین ہوں' میرے بعد کوئی نبی نہیں۔

    ان دو ارشادات میں حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ایسے "مدعیان نبوت" (نبوت کا دعویٰ کرنے والے) کے لئے دجال اور کذاب کا لفظ استعمال فرمایا' جس کا معنیٰ ہے کہ: وہ لوگ شدید دھوکے باز اور بہت زیادہ جھوٹ بولنے والے ہوں گے' اپنے آپ کو مسلمان ظاہر کرکے مسلمانوں کو اپنے دامن فریب میں پھنسائیں گے' لہذا امت کو خبردار کردیا گیا کہ وہ ایسے عیار و مکار مدعیان نبوت اور ان کے ماننے والوں سے دور رہیں۔ آپ کی اس پیشنگوئی کے مطابق ۱۴۰۰ سو سالہ دورمیں بہت سے کذاب اور دجال مدعیان نبوت کھڑے ہوئے جن کا حشر تاریخ اسلام سے واقفیت رکھنے والے خوب جانتے ہیں۔ماضی قریب میں "قادیانی دجال" (مرزا غلام احمد قادیانی) نے بھی نبوت کا جھوٹا دعویٰ کیا تھا' خدا نے اس کو ذلیل کیا۔ اس لئے یہ "ختم نبوت" امت محمدیہ کے لئے اللہ تعالیٰ کی طرف سے عظیم رحمت اور نعمت ہے' اس کی پاسداری اور شکر پوری امت محمدیہ پر واجب ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  8. نوید خان

    نوید خان محفلین

    مراسلے:
    155
    یہ حدیث ہے؟ کسی کا قول ہے؟ یا پھر قران کے الفاظ؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  9. نوید خان

    نوید خان محفلین

    مراسلے:
    155
    احادیث قران کی تشریح ہیں اگر قران اس پہ اپنا فیصلہ صادر کرے گا تو اس فیصلے کے حق میں احادیث سے رجوع کیا جائے گا نہ کہ احادیث کو قران پہ فضیلت دی جائے گی کیونکہ کسی کو دائرہ اسلام میں لانے یا نکالنے کا حق صرف اور صرف اللہ کریم کا ہے!
    کیا آپ یہ ثابت کر سکتے ہیں کہ احادیث کی اتھینٹیسیٹی قران کے متوازی ہے؟
     
    • زبردست زبردست × 1
  10. نوید خان

    نوید خان محفلین

    مراسلے:
    155
    تو اس کا مطلب پہلا قول ابو حنیفہ صاحب سے منسوب ہے، یہ نہ تو قران کے الفاظ ہیں اور نہ ہی حضور کی کوئی حدیث (جو آپ نے نیچے دی ہیں) اس پہ دلالت کرتی ہے کہ نبی کا دعویٰ کرنے والے سے دلیل طلب کرنا کفر ہے!
    پہلا نقطہ تو یہ ہے کہ مجھ پر کہیں بھی قران میں یہ فرض نہیں کیا گیا کہ میں ابو حنیفہ صاحب کی تقلید اختیار کروں یا وہی راستہ صحیح ہو گا جس پہ ابو حنیفہ صاحب ہوں گے!
    دوسرا نقطہ یہ ہے نبوت کے دعویدار سے دلیل طلب کرنا انسان کی نیت پہ منحصر ہے یعنی اگر کوئی شخص نبوت کے دعویدار سے دلیل طلب کرے تو لازمی نہیں ہے کہ اس کا صرف وہی پہلو ہے جو ابو حنیفہ نے بیان کیا ہے!
    یہ بھی تو ممکن ہے کہ نبوت کے دعویدار سے دلیل طلب کرنے والے کی نیت یہ ہو کہ وہ اسے سب کے سامنے ایکسپوز کرے کہ وہ جھوٹا نبی ہے۔ ظاہر ہے اگر وہ جھوٹا نبی ہے تو اس کے پاس اپنے وزن میں کہنے کے لیے جھوٹی باتیں ہی ہونگی!
    اس لیے ابو حنیفہ صاحب کو نہ تو ہم خدا کا درجہ دے سکتے ہیں اور نہ ان کے الفاظ کو قران کا درجہ۔ موجودہ دور میں جب علم کی اتنی گرہیں کھلنے کے باوجود ہر ہر حدیث اور قران کا حرف حرف ریکارڈ پہ ہونے کے باوجود ہمارے دیسی علماء کی حالت ہمارے سامنے ہے تو آپ تصور کریں کہ ان سے پہلے علماء کی جنہیں ہم نے نعوذ باللہ خدا کے قریب قریب پہنچا دیا ہے۔ ان میں اللہ نے کسی بھی انسان کو کسی کی تقلید کا پابند نہیں کیا!
     
    • زبردست زبردست × 1
  11. محمد سعد

    محمد سعد محفلین

    مراسلے:
    2,902
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bored
    حیرت ہے کہ اس بات کا امکان بھی کبھی آپ کے یا آپ کے جید علماء کے ذہن میں نہیں آیا کہ دلیل طلب کرنے کا مقصد لوگوں پر یہ حقیقت ظاہر کرنا بھی ہو سکتا ہے کہ اس کے پاس درحقیقت دلیل ہے ہی نہیں؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  12. dxbgraphics

    dxbgraphics محفلین

    مراسلے:
    5,388
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    جب اللہ نے قرآن کی سورۃ احزاب میں ختم نبوت کا اعلان کر دیا تو پھر دلیل مانگنے والا اس آیت سے انکار کا مرتکب ہوگا۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  13. dxbgraphics

    dxbgraphics محفلین

    مراسلے:
    5,388
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    جناب والا سورۃ احزاب میں اللہ تعالیٰ نے خود ختم نبوت کا اعلان کر دیا اب دلیل مانگنے والے کے لئے قرآن کی آیت کافی نہیں؟
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  14. dxbgraphics

    dxbgraphics محفلین

    مراسلے:
    5,388
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    سمجھدار تو تب ہونگے جب قرآن پر یقین رکھیں گے۔ اور جب قرآن پر یقین رکھیں گے تو سورۃ احزاب آیت 40 میں خاتم النبیین کا اعلان ہوچکا اور اب واضح حکم کے باوجود دلیل مانگنے والا سمجھدار نہیں بلکہ جاہل کہلائے گا۔ قانونی تقاضے پورے کرنے کے لئے قادیانی مرزا ناصر کو 13 دن قومی اسمبلی میں دیئے گئے تھے اور مرزا قادیانی کی اپنی ہی کتابوں سے ان کا کفر ثابت ہوگیا تھا۔ جب دلیل کی بنیاد پر 295 بی کا قانون بن چکا تو اب دلیل کی حمایت کرنے کا کوئی فائدہ نہیں
     
    مدیر کی آخری تدوین: ‏دسمبر 21, 2020
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  15. dxbgraphics

    dxbgraphics محفلین

    مراسلے:
    5,388
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    قرآن میں واضح اعلان کے بعد قادیانی کافروں (آئین پاکستان کے تحت) سے دلیل مانگنا صرف لوگوں کو دکھلانے کے لئے بے وقوفی کی انتہا ہوگی۔ 1973 میں دلائل پہلے دن ہی ختم ہوگئے تھے پھر بھی 13 دن انتظار کیا گیا اور دفاع کا پورا پورا موقع دیا گیا تھا مرزا ناصر کو
     
    مدیر کی آخری تدوین: ‏دسمبر 21, 2020
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  16. نوید خان

    نوید خان محفلین

    مراسلے:
    155
    اس میں دو باتیں ہیں۔
    پہلی یہ کہ قران کہاں پہ دلیل مانگنے سے منع کرتا ہے یا دلیل مانگنے والے کو کافر قرار دیتا ہے؟ بلکہ قران تو اس بات پہ اکساتا ہے کہ اپنی عقل کے دریچے کھولو نہ کہ تقدس کی چادر میں خود کو لپیٹ کر ایمان لاؤ۔ قران کی آیت کافی نہیں جیسے جذباتی اور تقدس میں لپٹے الفاظ استعمال ہی کرنے ہوتے تو خود خدا ہی یہ بات کہہ دیتا، آپ خدا سے زیادہ سمجھدار تو نہیں؟
    دوسری بات یہ کہ اگر یہی آپ کی دلیل ہے تو پھر باقی مذاہب اور اپنی کتابوں کو پوجنے والے خود کو کیسے غلط کہیں گے۔ وہ بھی یہی کہتے ہیں کہ ہماری کتاب نے یا بزرگقں نے جو کہہ دیا سو کہہ دیا بات ختم ہو گئی۔ اس دلیل کے اعتبار سے تو سارے ہی اپنی اپنی جگہ صحیح ہیں!
    میں الحمدللہ جذباتی اور حادثاتی مسلمان نہیں، اللہ نے عقل دی ہے تو میں اس کو استعمال کرنے کی پوری کوشش کرتا ہوں!
     
    آخری تدوین: ‏دسمبر 2, 2020
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  17. نوید خان

    نوید خان محفلین

    مراسلے:
    155
    اگر قران پہ ایمان لانے اور جاہل کہلانے کی یہی دلیل ہے تو پھر ہر وہ شخص جاہل ہے جو اس کے اپنے مذہب سے باہر ہے۔ اس رو سے عیسائیوں کے نزدیک عیسائیوں کے علاوہ باقی سارے جاہل ہو گئے، یہودیوں کے نزدیک یہودیوں کے علاوہ باقی سارے جاہل ہو گئے؛ الغرض ہر مذہب کے پیروکاروں کے نزدیک دیگر مذاہب والے جاہل ہو گئے۔ الحمدللہ ایسا ایمانی معیار آپ کو ہی مبارک ہو!
    دوسری بات یہ کہ موضوع صرف اتنا زیر بحث تھا کہ آیا واقعی نبوت کے دعویدار سے دلیل طلب کرنے والا خود کافر ہے۔ اس سے قطعی یہ پہلو نہیں نکلتا کہ اس پہ بحث کرنے والا قادیانیوں کا حامی ہے یا نہیں یا مرزا کو کافر مانتا ہے یا نہیں۔ خود سے دوسروں کے اوپر اپنے "ایمانی معیار" کو تھونپنے کے کلچر سے باہر نکل آئیے!
     
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  18. وجی

    وجی لائبریرین

    مراسلے:
    26,003
    موڈ:
    Daring
    اگر کسی کی تعلیم کرنی ہے تو آپ کیا کرینگے؟؟۔ یا پھر آپ کی اسلامی تعلیم میں صرف قتل ہی لکھا ہے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  19. وجی

    وجی لائبریرین

    مراسلے:
    26,003
    موڈ:
    Daring
    آپ مخالف کو قتل ہی کرنا چاہتے ہیں ؟؟یا پھر اسکی تعلیم کرنا چاہتے ہیں؟؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  20. وجی

    وجی لائبریرین

    مراسلے:
    26,003
    موڈ:
    Daring
    کسی کو تعلیم دینا صحیح ہے پہلے قتل کرنے سےیا غلط؟؟
     
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر