1. اردو محفل سالگرہ شانزدہم

    اردو محفل کی سولہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

احمدی اقلیت اور ہمارے علما کا رویہ

جاسم محمد نے 'اسلام اور عصر حاضر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 16, 2020

  1. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,979
    ناروے کے آئین و قانون میں تمام شہری برابر ہیں۔ کسی کو کسی پر فوقیت حاصل نہیں۔ ناروے کی ریاست و حکومت کے مسلمان، مسیحی، ملحد سب برابر کے شہری ہیں۔ اگر مسلمانوں کو اپنے مذہب کی آزادی ہے تو ملحدین اور دہریوں کو بھی کسی مذہب پر نہ چلنے کی آزادی ہے۔ کیا آپ یہی آزادی کسی مسلم اکثریت ملک میں دے سکتے ہیں؟
     
    • زبردست زبردست × 1
  2. محمد سعد

    محمد سعد محفلین

    مراسلے:
    2,902
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bored
    اویس حیدر کیا یہ درست کہہ رہے ہیں؟
     
    • زبردست زبردست × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,979
    کونسی اسلامی حکومت؟ جو طالبان، داعش نے قائم کی تھی یا حالیہ ایران میں اسلامی انقلاب کے بعد سے قائم ہے؟ کیا ایسی اسلامی حکومتوں کو کہیں سے بھی مثالی کہا جا سکتا ہے؟
     
  4. اویس حیدر

    اویس حیدر محفلین

    مراسلے:
    61
    چونکہ مسیلمہ کذاب ریاست مدینہ کے قیام کے بہت بعد میں آیا۔ لہذا وہ چیز قانون میں شام ہو ہی کس طرح سکتی تھی جو موجود ہی نہ تھی؟

    آپ درست فرما رہے ہیں۔ قادیانی، مسیلمہ کذاب کا نیا ورژن ہیں جو اس دور میں پیدا ہوئے (اٹھارہویں صدی کے آواخر میں) جب اسلام غالب نہیں بلکہ مغلوب ہوچکا تھا۔ لہذا ان کا فوری علاج ممکن نہیں تھا کیونکہ ان کی جنم بھومی پر اسلامی حکومت ختم ہوئے زمانہ گزر چکا تھا اور برٹش راج تھا۔

    رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے تو اس کو سمجھایا ہی تھا جب وہ مدینہ آیا تھا۔ اس نے شرط رکھی تھی کہ ٹھیک ہے مان جاتا ہوں مگر آپ کے بعد خلافت مجھے ملنی چاہئے اور یہ بات رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے نہیں مانی تھی بلکہ کہا تھا کہ تو وہی کذاب ہے جس کی مجھے خوب میں بشارت ہوچکی۔ تائب ہو جا ورنہ ہلاک ہوگا۔ (تقریباً تمام احادیث کی کتابوں میں اس ہی طرح درج ہے) صحیح مسلم 1935 بخاری 3620۔

    مزید برآں، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی دنیاوی زندگی کے آخری دور میں اس نے سر اٹھایا جب لشکر اسلام کفار کی سرکوبی میں مصروف تھا۔ اور مسیلمہ ہی کی طرح دوسرے بھی کئی کذاب تھے ان سب کا قلعہ قمع وصال رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد ہوا۔ ان میں سے چند ایک کے نام گنوا دیں اور یہ بھی بتادیں کہ کتنوں نے علم بغاوت بلند کیا تھا۔ اور کتنے صرف مدعی نبوت تھے؟
     
    • غمناک غمناک × 1
  5. اویس حیدر

    اویس حیدر محفلین

    مراسلے:
    61
    اسلامی حکومت سے مراد خلافت کو لیا جائے۔ خلافت راشدہ۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  6. اویس حیدر

    اویس حیدر محفلین

    مراسلے:
    61
    اسلامی حکومت جو اللہ کے رسول اور ان کے صحابہ نے قائم کی تھی
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  7. اویس حیدر

    اویس حیدر محفلین

    مراسلے:
    61
    جی نہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  8. اویس حیدر

    اویس حیدر محفلین

    مراسلے:
    61
    ٹھیک ہے
     
    • متفق متفق × 1
  9. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,979
    اس حدیث سے ہی ثابت ہو جاتا ہے کہ مسیلمہ کذاب کا دعوت نبوت کے پیچھے اصل ہدف کیا تھا۔ نبوت کا دعویٰ کرکے وہ اپنی متبادل خلافت قائم کرنا چاہتا تھا جو خلافت راشدہ سے بغاوت کے مترادف تھا۔ اسی لئے اسے قتل کیا گیا۔ اگر محض دعوت نبوت پر قتل بنتا تو اس کا حکم رسول اللہ اپنی زندگی میں خود بھی دے سکتے تھے۔ لیکن آپﷺ نے ایسا کچھ بھی نہیں کیا۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  10. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,979
    یہ اسلام کی تعلیم نہیں کہ جو نبوت کا دعویٰ کرے اسے اور اس کے ماننے والوں کو فی الفور قتل کر دو۔ کسی بھی انسان کے قتل سے پہلے اللہ تعالیٰ نے بہت سخط شرائط رکھ دی ہیں۔ ایک جھوٹا نبی تو خدا سے براہ راست ٹکر لیتا ہے اور اس سے نبٹنے کیلئے اللہ کافی ہے۔ انسان کا یہ کام نہیں کہ اسے جھوٹا قرار دے کر قتل کر دے ماسوائے اس کے وہ زمین میں بغاوت یا فساد پر اکسا رہا ہو۔
     
  11. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,979
    اہل تشیع جو عالم اسلام کا ایک بڑا حصہ ہیں اور کسی خلافت کو نہیں مانتے کے بارہ میں پھر کیا حکم ہے؟
     
  12. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,979
    نہایت افسوس کے ساتھ اِس وقت نہ تو اللہ کا رسول ہمارے درمیان موجود ہے اور نہ ہی آپﷺ کے صحابہ کرام۔ اس لئے اُس زمانہ کی مثالی اسلامی حکومت اب دوبارہ کبھی نہیں بن سکتی جب تک اسے بنانے والے پھر سے ہمارے درمیان واپس نہیں آجاتے۔ کیا آجکل کے مسلمانوں کا اسوہ حسنہ اور اعمال صالحہ قرون اولیٰ کے صحابہ کرام جیسے ہیں جو یہ ایک مثالی خلافت دوبارہ قائم کر پائیں گے؟
     
    آخری تدوین: ‏اپریل 12, 2020
  13. محمد سعد

    محمد سعد محفلین

    مراسلے:
    2,902
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bored
    ایک اور اہم فرق یہ بھی ہے کہ مسیلمہ اور کے ساتھی دانستہ اسلامی خلافت کے خلاف ایک بغاوت کا حصہ بنے تھے۔ اس کے مقابلے میں ان لوگوں کی صورت حال مختلف ہے جن کو ایک مذہب ایک ایسے خاندان میں پیدا ہو جانے کی وجہ سے ورثے میں ملا جس میں پیدا کرنے سے پہلے خدا نے ان سے کوئی ان کی پسند نہیں پوچھی تھی۔ وہاں کا حکم یہاں لاگو کرنے کے پیچھے وحشی پن اور بے جا نفرت کے سوا اور کوئی وجہ نہیں ہے۔ لیکن چونکہ اس وحشت کا مظاہرہ اسلام کے نام پر کیا جاتا ہے تو سب چلتا ہے۔
     
    • زبردست زبردست × 1
  14. محمد سعد

    محمد سعد محفلین

    مراسلے:
    2,902
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bored
    پھر کچھ وضاحت درکار ہو گی اس سوال کے متعلق کہ وہ کون سی وجوہات ہیں جن کی بنا پر ہندووں کا مسلمانوں کے ساتھ ایسا سلوک کرنا دور دور تک درست نہیں ہو گا۔
     
    • متفق متفق × 1
  15. فہد مقصود

    فہد مقصود محفلین

    مراسلے:
    396
    آپ کافی معلومات رکھنے والے صاحب معلوم ہوتے ہیں۔ آپ سے ایک سوال ہے کہ اگر علماء کرام کا کسی ایسے مکتبہ فکر سے تعلق ہو جس کے عقائد اور قادیانیت کے عقائد میں مماثلت پائی جاتی ہو تو کیا کیا جانا چاہئے؟؟؟
    ذرا یہ دیکھئے
    کفریہ عقائد
     
    • زبردست زبردست × 1
  16. جا ن

    جا ن محفلین

    مراسلے:
    307
    برادرم! کیسے پتہ چلے گا وہ اسلامی حکومت تھی؟ کیا آپ ثابت کر سکتے ہیں کہ وہ اسلامی حکومت تھی؟ اگر واقعی وہ اسلامی حکومت تھی اس حکومت کے خد و خال کیا تھے؟ ادارے کیا تھے؟ ظاہر ہے اگر حکومت تھی تو پورا انتظامی ڈھانچہ ہو گا، وہ ڈھانچہ کیا تھا؟ خلیفہ چننے کا طریقہ کار کیا تھا اور کہاں سے اخذ کیا گیا تھا؟ کیا وہ حکومت خود حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنی حیاتِ مبارکہ میں بنا کر دے گئے تھے؟ میں منتظر ہوں یہ جاننے کے لیے کہ آیا آخر اسلامی حکومت کسے کہتے ہیں!
     
    آخری تدوین: ‏اپریل 15, 2020
    • زبردست زبردست × 3
  17. جا ن

    جا ن محفلین

    مراسلے:
    307
    اس میں مکمل کے معنی کی وضاحت درکار ہے؟ وہ پورا ماڈیول آپ یہاں پیش کر سکتے ہیں؟ یاد رہے یہ ماڈیول اسلام کا ہی ہو اور کسی خاص شخصیت کی توجیحات یا تاویلات نہ ہوں۔
    مجھے تو یہ ہی سمجھ نہیں آ رہی کہ آخر اسلامی ریاست ہوتی کیا ہے۔ پہلے یہ تو واضح ہو پھر آگے بحث ہو سکتی ہے۔ جہاں تک اسلام کا بول بولا ہے وہ اتنا ہے کہ لوگ جن کے پیچھے نماز پڑھنے کو تیار ہیں انہی کو ووٹ دینے کو تیار نہیں، یہ تو خالصتاً مخالف بات ہو گئی!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  18. فاروق سرور خان

    فاروق سرور خان محفلین

    مراسلے:
    3,202
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Breezy
    اویس،

    جو لوگ ، قرآن حکیم کے احکامات کا صاف انکار کرتے ہیں۔ ان کے ساتھ کیا کیا جائے؟ اتفاق سے آپ ایسے لوگوں کے مددگار ہیں جو قرآن حکیم کے احکامات کا صاف انکار کرتے ہیں۔ خیا ایک ثبوت سے کام چلے گا؟ یا ٓآپ کو زیادہ درکار ہوں گے؟
     
    مدیر کی آخری تدوین: ‏اپریل 15, 2020
    • زبردست زبردست × 1
  19. فاروق سرور خان

    فاروق سرور خان محفلین

    مراسلے:
    3,202
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Breezy
    یہ ملک کہہ رہا ہے کہ اے مفتیاں ملک
    جو بچ گیا ہے اب اسے ملبہ بنائیے
    سادہ دلوں کو خوف دلائیں عذاب کا
    پھر اس خوف کو کات کے چندہ بنائیے
    آخر وبا کا وقت ہی سیزن کا وقت ہے
    مرتے ہوؤں کی آس کو دھندہ بنائیے
    خطرے میں دین کب ہے؟ دکانیں ہیں آپ کی
    مل جل کے کاروبار کو اثھا بنائیے
     
    • زبردست زبردست × 2
  20. فاروق سرور خان

    فاروق سرور خان محفلین

    مراسلے:
    3,202
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Breezy
    برادر محترم، آپ کا سوال گو کہ کسی اور سے ہے ، لیکن چونکہ میں اس موضوع پر لکھتا رہا ہوں اس لئے آپ میرے دستخط میں قرآن کیا کہتا ہے کے حوالے پڑھ لیجئے۔ اس میں مالی معاملات کے علاوہ بہت سارے معاملات پر روشنی ڈالی گئی ہے اور کوئی بھی دھاگہ زیادہ لمبا نہیں ہے۔

    میں مالی معاملات، معاشیات کے ڈھانچے اور سود پر انشاء اللہ تعالی اس میں اضافہ کروں گا۔ کوشش کیجئے کہ آیات اور ان میں پیش کردہ نظریات پر توجہ دیجئے، میرے خیالات کو کم اہمیت دیجئے۔ دونوں اپنی اپنی جگہ واضح ہیں۔

    میں نبی اکرم محمد صلعم کو آخری نبی مانتا ہوں اور ان کے بعد کسی بھی نبی یا رسول نہیں مانتا۔ لیکن یہ حقیقت ہے کہ پاکستان میں اقلیتوں کے ساتھ بہت ہی برا سلوک ہوتا ہے۔ اس میں ھندو، میمن، آغا خانی، یہودی، عیسائی سر فہرست ہیں۔ ان کی تو پھر بھی عزت ہے یا نوکریوں میں کوٹہ ہے لیکن قادیانیوں کی کوئی قیمت ہی نہیں۔ قادیانیوں پر بسم اللہ الرحمن الرحیم لکھنے پر مقدمے قائم ہوئے ہیں کہ وہ کافر ہیں اور اس جرم کی سزا موت ہے۔ ایک ویب سائیٹ پر میں کوئی 3 ہزار ایسے مقدمات دیکھ چکا ہوں۔ استحصال ایک بہت ہی بھیانک بیماری ہے جو معاشرے کو کھوکھلا کر دیتی ہے۔ بنگالیوں کے خلاف جو چرکے مغربی پاکستان نے لگائے اس کے نتیجے کے ہم سب گواہ ہیں۔ دوسری طرف آپ بنگالیوں سے پوچھیں تو ان کے پاس بڑھا چڑھا کر ظلم و ستم کی داستانیں ہیں۔ پاکستان کی لیڈر شپ کو رائے عامہ اقلیتوں کے حق میں ہموار کرنی چاہئیے نا کہ ان سے دشمنی؟

    اقلیتوں کا استحصال ایک ٹکنگ ٹائم بم ہے، جو سارے پاکستان کو لے بیٹھے گا۔ پاکستان پہلے ہی ایک غریب ملک ہے، یہ اور بھی پریشان کن ہو جائے گا۔
     
    آخری تدوین: ‏اپریل 16, 2020
    • زبردست زبردست × 3

اس صفحے کی تشہیر