احمدی اقلیت اور ہمارے علما کا رویہ

جاسم محمد نے 'اسلام اور عصر حاضر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 16, 2020

  1. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,262
    نشتر میڈیکل کالج کے لڑکوں نے قادیانیوں کے شہر چناب نگر سے گزرتے وقت پہلے ریلوے اسٹیشن پر گالم گلوچ کی تھی۔ اور واپسی پر قادیانی جوانوں نے ان کی ٹھکائی کی تھی۔ معلوم نہیں اس تصادم میں بغاوت کا عنصر کہاں سے آگیا؟ کیا پاکستان میں دو گروپوں کے درمیان تصادم پہلی بار ہوا ہے؟
     
  2. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,262
    آج اگر اکثریت کہہ دے کہ بریلوی، اہل حدیث، وہابی، دیوبندی، اہل تشیع وغیرہ دائرہ اسلام سے خارج ہیں تو ریاست یہ بات تسلیم کر لے گی؟
     
  3. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,262
    ایسا کچھ بھی نہیں ہے۔ اگر ہے تو انہی کی مذہبی کتب میں سے دکھائیں۔
     
  4. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,262
    اس کی یہ تشریح آپ نے اپنی مرضی سے خود کی ہے۔ اُس پیشگوئی میں حضرت محمدﷺ کا نام نہیں لیا گیا۔ نہ ہی ان کا ملک یا قبیلہ بتایا گیا ہے۔
     
  5. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,262
    عدالت میں چلا یا پارلیمان میں؟
     
  6. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,096
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    آپ اللہ سے کٹ پتلی خلیفہ کی امید رکھتے تھے؟ :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  7. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,096
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    اول تو یہ اطلاعات ہیں کہ انہوں نے مرزا کو نبی کہلوانے کی کوشش کی اور ناکامی پر کٹائی کی۔ اس اطلاع کی تصدیق میں اب تک نہیں کی صرف سنا ہے کہ عدالتی بیان میں طالب علموں نے ایسا کہا۔

    خیر یہ چھوڑ بھی دیں تو برصغیر کے ہر طرف کے علماء سے مرزا کے حواریوں کا مرزا کے نبی ہونے پر کورٹ کٹہری چل ہی رہا تھا۔ احمد شاہ کاشمیری نے جا کر ایک مقدمے کی خو وکالت کی وہ تو آپ کو یاد ہی ہو گا۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  8. اویس حیدر

    اویس حیدر محفلین

    مراسلے:
    61
    اچھا سلسلہ شروع کیا ہے، بے حد معلوماتی بھی ہے۔ عمیر احمد کی اس تحریر میں جو پیغام ہے وہ اچھا ہے کہ ہم اقلیتوں کو ان کے حقوق دیں، ارے بھئی بھولے بادشاہ!! قادیانیوں کواقلیتوں والی سے بڑھ کر سہولتیں دے رکھی ہیں اور وہ آئینی طور پر غیر مسلم اقلیتوں میں سے ایک ہیں یعنی آئین پاکستان کے مطابق یہودی، عیسائی، پارسی، ہندو، قادیانی/مرزائی/احمدی غرض تمام غیر مسلم اقلیتیں ایک برابر ہیں اور وہ بطور غیر مسلم اقلیت اس ملک کے شہری ہیں اور غیر مسلم اقلیت کے طور پر ہی ووٹ بھی دے سکتے ہیں۔ یہاں کی جامعات میں تعلیم حاصل کرسکتے ہیں کسی بھی شعبہ ہائے زندگی میں خدمات سر انجام دےسکتے ہیں حتیٰ کے افواج پاکستان میں بھی۔

    پہلے پیراگراف کی آخری سطور ہیں کہ:

    _ہم ایک ایسے نبی کے ماننے والے ہیں جو کہ قیامت تک کے لئے رحمت العالمین بنا کر بھیجے گئے ہیں، لیکن اس کے مقابلے میں ہمارا رویہ مشرکین مکہ سے بھی بدتر نظر آتا ہے۔_

    اس پر شدید ترین اعتراض کیا جاسکتا ہے۔ مشرکینِ مکہ نے ہجرت پر مجبور کیا۔ شعب ابی طالب کی تنگ و دشوار گھاٹی میں تین سال تک محصور رکھا۔ سوشل بائکاٹ کئے رکھا۔ بھوک سے بلکتے رُلتے بچوں اور عورتوں کی چیخ و پکار پر ہنستے رہے۔ مشرکینِ مکہ نے جنگیں لڑیں مسلمانوں سے۔ بھلا ان مشرکین کا ہم سے موازنہ چہ معنی دارد؟؟؟ اس کے برعکس قادیانیوں کے کاروبار کتنے پھلتے پھولتے ہیں پاکستان میں؟ قادیانی مصنوعات:
    شیزان، پنجاب آئل لمیٹڈ، او سی ایس کورئیر ، یونی ورسل اسٹیبلائزرز، شاہنواز فلور ملز۔ یقیناً ان کے علاؤہ بھی ہوں گی۔
    لیکن یہاں پر قادیانی، دیگر غیر مسلم اقلیتوں کی طرح ووٹ کا حق استعمال کرنے سے گریز کرتے ہیں اور کہتے ہیں کہ ہمیں پہلے "مسلمان" مان لو، اسلام کا ایک فرقہ مان لو۔ یہ مسلمان مان لو والی ایک الگ بحث ہے جو کہ علماء کرام کا شعبہ ہے نا کہ میرا اور آپ کا لہذا ہم واپس موضوع کی طرف ہی رجوع کرتے ہیں۔


    اطلاعاً عرض ہے کہ مسیلمہ کذاب بھی وہی طریقہ استعمال کرتا تھا جو مرزا غلام احمد قادیانی نے کئے، مسیلمہ کی دعوت (کہ میں محمد صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ شریک بنی بنایا گیا ہوں) سن کر آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اس کو کذاب قرار دیا۔
    یہ آپ صلی اللّٰہ علیہ وسلم کی زندگی کے آخری ایام میں ہوا، آپ صلی اللہ علیہ وسلم اس کی سرکوبی کے لیے لشکر روانہ کرنا چاہتے تھے جو بعد ازاں سیدنا حضرت ابو بکر صدیق رضی اللہ عنہ نے سر انجام دیا۔
    دیکھئے صحیح بخآری 3620/3621/4375

    قادیانیوں/احمدیوں/مرزائیوں کو جان لینا چاہئے مملکت خدادا پاکستان میں جمہوری نظام ہے نہ کہ اسلامی (خلافت) اگر اسلامی نظام رائج ہوتا تو ______ آپ کے خلاف وہی کرنے کا حکم ہے جو مسیلمہ کذاب کے خلاف کیا گیا تھا۔
    کہنے کا مقصد یہ کہ عمیر صاحب جس کو کدورتیں اور بے سروپا کہہ رہے ہیں یہ ہمارے علماء نے نہیں بلکہ سرور کونین صلی اللّٰہ علیہ وآلہ وسلم کا حکم ہے۔ یہ صدیق اکبر رضی اللہ عنہ کی سنت ہے ۔۔۔!!!!!

    باقی پیراگراف جن کا اقتباس نہیں لیا وہ بھی بیش تر کم علمی منہ بولتا ثبوت ہیں۔ عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت میں کہیں کوئی گالی سے بات کرنا نہیں سکھاتا۔ معلوم پڑتا ہے کہ موصوف (عمیر صاحب) سوشل میڈیا پر پائے جانے والے لوگوں کی بات کر رہے ہیں یا غالباً تحریک لبیک کے سربراہ کی، بہرحال ان کے پاس اس کام کے لئے شاید کوئی دلیل ہو، میں کچھ کہنے سے قاصر ہوں۔


    علماء کرام نے قرآن و سنت کے دلائل ہی تو دئیے تھے بھولے بادشاہ جب ان کو غیر مسلم اقلیت قرار دیا گیا۔ علماء تو آج بھی موجود ہیں البتہ یہ دور انٹرنیٹ کا ہے اور مجھ جیسے کم عقلوں کے ہاتھ میں بھی کمپیوٹر ہے تو اگر کوئی خودساختہ عالم دین گالی گلوچ کرے تو بھلا اس کو عالم دین مان لیں؟
    البتہ غلام احمد قادیانی خود اپنی کتابوں میں جو لکھتے رہے ہیں وہ تو قادیانیت کی تبلیغ تھی ناں؟ کیا میں وہ الفاظ لکھوں؟ نہیں وہ لڑی میں شامل کافی جوابات میں موجود ہیں۔

    جی بالکل ٹھیک ہے۔
    یہ بتادیں کہ عاجز عمیر احمد ہے یا جاسم محمد ؟
     
    آخری تدوین: ‏اپریل 12, 2020
    • غمناک غمناک × 1
  9. محمد سعد

    محمد سعد محفلین

    مراسلے:
    2,720
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bored
    یہاں پہلے ایسے صاحبان گزر چکے ہیں جن کے خیال میں آج کے دور میں پائے جانے والے قادیانی کو بھی محض ورثے میں ملنے والے مذہب کی بنیاد پر قتل کر دینا چاہیے۔ کیا آپ کا بھی یہی خیال ہے؟
     
    • زبردست زبردست × 1
  10. اویس حیدر

    اویس حیدر محفلین

    مراسلے:
    61
    سعد صاحب، میرا خیال ہے کہ آپ کا اعتراض یہیں تک ہے جتنا آپ نے اقتباس لیا۔۔

    جواب یہ ہے کہ "نہیں میرا ایسا کوئی خیال نہیں ہے، یہ علماء کا اور ریاست کا کام ہے، فرد واحد خواہ وہ میں ہوں یا کوئی اور، ایسا کوئی فیصلہ کرنے کا اہل نہیں ہے۔"

    جس پیراگراف کا آپ نے اقتباس لیا، اس کا پس منظر صدیق اکبر رضی اللہ عنہ کے دور میں ہونے والا جہاد ہے جو مسیلمہ کذاب کے خلاف ہوا۔ اور اس کذاب کی تعلیمات کا مرزائی تعلیمات سے مماثلت۔

    گزر چکے ہیں سے مراد؟ کیا ان کی رکنیت معطل کردی گئی یا کوئی پابندی؟
     
    • غمناک غمناک × 1
  11. محمد سعد

    محمد سعد محفلین

    مراسلے:
    2,720
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bored
    اگر علماء اور ریاست ایسا کام کریں تو کیا وہ درست ہو گا؟
     
    • زبردست زبردست × 1
  12. اویس حیدر

    اویس حیدر محفلین

    مراسلے:
    61
    معذرت سعد صاحب۔ اس کا جواب دینے کے لیے میں "نا اہل" سمجھا جاؤں۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • غمناک غمناک × 1
  13. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,262
    ایک طرف آپ ان قوموں کو برا بھلا کہتے ہیں جنہوں نے نبیوں کا انکار کیا ، ان کا قتال کیا۔ دوسری طرف نبوت کے دعویٰ کرنے والوں کو کذاب قرار دے کر قتل کرنے کے لئے لشکر بھیج دینے والوں کو عین حق پر سمجھتے ہیں۔ آخر آپ کا مدعا کیا ہے؟ سچے اور جھوٹے نبی میں فرق کون کرے گا؟ کیا یہ کام ریاست و حکومت کا ہے کہ کسی مدعی نبوت کو جھوٹا قرار دے کر پورے ملک کے آئین میں ترامیم کر دے؟ اور اس کے ماننے والوں کے خلاف قانونی چارہ جوئی کرے؟
     
  14. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,184
    معذرت سے کام نہ چلے گا۔ اپنے کہے اور نہ کہے ہوئے بھی کا جواب دیجیے۔ :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  15. ذوالقرنین رضا اسیر

    ذوالقرنین رضا اسیر محفلین

    مراسلے:
    27
    موڈ:
    Breezy
    یہ منکرین ختم نبوت ہیں

    جو کہ کافر ہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  16. ذوالقرنین رضا اسیر

    ذوالقرنین رضا اسیر محفلین

    مراسلے:
    27
    موڈ:
    Breezy
    اسلامی حکومت کا فرض بنتا ہے
     
    • غمناک غمناک × 1
  17. اویس حیدر

    اویس حیدر محفلین

    مراسلے:
    61
    غالباً مجھ سے مخاطب ہیں آپ؟ یہودیوں پر اللہ نے لعنت کی تو بھلا اس میں کوئی دو رائے؟

    مسیلمہ کذاب کے خلاف جہاد کرنے والے کون تھے؟ اس کا ارادہ کس نے فرمایا اور عمل درآمد کس نے کیا۔۔۔؟ حضورِ والا آپ کا اعتراض کس پر ہے زرہ کھل کر فرمائیے۔
    1400 سال قبل قرآن میں جو فیصلہ آچکا ہے وہی رائج الوقت ہے۔ الحمدللہ۔ اس پر میری یا آپ کی رائے چہ پدی چہ پدی کا شوربہ سمجھی جائے گی۔
    ہم ایک جمہوری ملک کے آئین کی بات کر رہے ہیں کیونکہ اسلامی جمہوریہ ہے تو ظاہری سی بات ہے کہ اسلامی تعلیمات کا اثرورسوخ ہوگا تو ہی اسلامی جمہوریہ کہلائے گی ، وگرنہ بھارت بھی جمہوریہ ہے ۔
    آئینی راستہ اختیار کر کے اسلام کی تعلیمات کا نفاذ کیا گیا 1974 میں۔ البتہ علماء شروع ہی سے (مرزا قادیانی)
    مدعی نبوت کو کذاب مانتے تھے۔

    وضاحت مطلوب؟

    ذاتی نوعیت کا سوال۔ آپ کی طبیعت پر گراں نہ گزرے تو جواب عنایت فرمادیجئے۔
     
    • غمناک غمناک × 1
  18. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,262
    اگر بھارت کی ہندو انتہا پسند حکومت آج محض اپنی عدد برتری کی بنیاد پربھارتی آئین میں مسلم اقلیت کو دوسرے درجہ کا شہری قرار دے دے۔اور ان کے ساتھ امتیازی سلوک ، ظلم و زیادتی کو قانونی تحفظ فراہم کر دے۔ تو کیا ان مسلم مخالف اقدامات کو آپ صرف اس لئے جائز تسلیم کرلیں گے کہ ایسا کرنا ہندو حکومت کا فرض ہے؟
     
  19. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,262
    کیا یہ اسلامی تعلیمات ہیں کہ ریاست و حکومت اس بات کا فیصلہ کرے کہ کونسا نبی جھوٹا اور کونسا سچا ہے؟ یا ریاست و حکومت کا کام ان مذہبی تنازعات میں فریق بنے بغیر اپنے تمام شہریوں کے ساتھ برابری کا سلوک کرنا ہے۔
     
  20. اویس حیدر

    اویس حیدر محفلین

    مراسلے:
    61
    آپ نے باقی باتیں نظر انداز کی ہیں یا ان سے متفق ہیں؟
    بہرحال وہ آپ کی مرضی پر منحصر ہے۔

    بہرحال:

    جب کوئی "نیا نبی" آنا ہی نہیں۔ تو پھر یہ سوال چہ معنی دار؟؟؟

    دیگر غیر مسلموں اور مرتدین میں فرق ہے ۔ اور زندیق اس کے بھی آگے ہیں۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1

اس صفحے کی تشہیر