آپ لوگ جانتے ہیں پردیس کیا بلا ہے کسی اذیت کا نام ہے

صلال یوسف نے 'آپ کی تحریریں' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 6, 2013

  1. صلال یوسف

    صلال یوسف محفلین

    مراسلے:
    91

    آپ لوگ جانتے ہیں پردیس کیا بلا ہے کسی اذیت کا نام ہے پردیس ، یہ صرف وہی جان سکتا ہے جو یہ سزا بھگت رہا ہوتا ہے، ایسی عجیب سی تنہائی کا عالم کے بیشمار لوگوں کے ہوتے ہوئے بھی اکیلاپن ہو
    ہے ناں عجیب سزا، مگر حالات اور انسانی ضروریات کی وجہ سے
    بندہ یہ سزا قبول کرتا ہے
    ہمارے ملک کے موجودہ حالات ؟ہمارے معاشرے کی فرسودہ رسمیں، ہماری زندگی میں ایسے موڑ پیدا کردیتے ہیں کہ اکثر نا چاہتے ہوئے بھی انسان اپنے لئے اس راہ کو منتخب کرلیتا ہے، اب یہ بھی ٹھیک سے نہیں پتا کہ یہ فیصلہ انسان کا اپنا ہوتا ہے یا قدرت کرواتی ہے یہ فیصلہ، انسان تو شاید بڑی باتیں کرتے ہوئے یہی کہتا ہے کہ میں نے ایسا فیصلہ کر لیا اور دیکھومیں آج کدھر ہوں۔۔۔۔۔۔۔۔کیا اتنی ہمت ہے انسان میں کہ خود سے فیصلہ کرسکے؟ ارے ہوتا وہی ہے جو میرا ربا سوہنا کرتا ہے، بندہ معصوم اور خوش فہمی کا مارا ہوا یہ سمجھ بیٹھتا ہے کہ نہیں نہیں یہ میں ہوں جو کر رہا ہوں۔۔۔۔
    پردیس.......آنا مشکل نہیں ، بلکہ بہت مشکل ہے، پہلے تو جو رستے کی دشواریاں ہیں اپنی جگہ........مگر جواصل بات ،کہ کچھ ریال، کچھ دینار، کچھ ڈالر کمانے کے لئے اپنے معصوم بچوں سے جدائی قبول کرنا،اُن کی زندگی کے وہ دن جو پلٹ کرنہیں آتے وہ کھو دینا۔۔۔۔۔۔۔۔اُن کی ہنسی ، اُن کی ضرورت کے وقت اُن کے پاس ہونے کی طلب، اُن کی بیماری میں اُن کو لے کر بھاگنا اور پریشان ہونا، اُن کے چھوٹے چھوٹے جھگڑے نمٹانا، کبھی پنسل لے کر آنا اور کبھی کتاب و کاپی پر کور کرنا الغرض ایسے بہت سارے معصوم کام.....جو نہ کرسکے اور اُن لمحات کے عوض کچھ دینار و ریال لے لئے تاکہ اُنہی کی کامیاب زندگی کے لئے بندبست کیاجاسکے.... !یہ پردیس ہے
    کبھی بیماری میں خود پڑے رہنا، تنہا اور کوئی نہ ہو ساتھ دینے والا، کمرے کی گھٹی فضا، سگریٹ کا دھواں اور بدبو، بکھری چیزیں، میلاکمبل، پھٹا ہوا پردہ، بکھری سوچیں، یہ سب کیا ہے، پردیس میں رہنے کا بونس ہے شاید، اور یہی بندہ جب وقت کی مار کھا کر اور اپنی حصے کی بیگار کاٹ کر واپس لوٹتا ہے، تو حقیقت میں کچھ بھی اس کا نہیں ہوتا اُدھر......دیمک کی طرح لمحے سب چاٹ چکے ہوتے ہیں، معاشرے میں ان فِٹ کردار، سنکی کھانستا ہوا بڈھا وجود....! یہ ہے پردیس شاید۔۔۔۔۔
    شاید بہت کچھ لکھ دینا باقی ہے مگر ضروری تو نہیں ہر بات لکھی ہی جائے ، یا یوں کہیں ضروری تو نہیں انسان میں اتنی ہمت ہو کہ وہ سب لکھ سکے، تلخیاں بھگتنا ایک بات ہے، تحریر کرنا ایک بات ہے، تحریر کرتے دماغ کی ایل سی ڈی پر جو فلم چلتی ہے ناں ، بڑی بُری ہوتی ہے۔
    اللہ سب کو اپنی امان میں رکھے اور خوشیاں دے، اور سب بہن بیٹیوں کو اپنی حفاظت میں رکھے امین

    تحریر: ابوحمزہ
     
    • زبردست زبردست × 5
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • متفق متفق × 1
  2. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    200,069
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    صلال بھائی بہت اچھا لکھا ہے گو کہ بہت مختصر لکھا ہے۔

    پردیس کے دکھ پردیسی ہی سمجھ سکتا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. صلال یوسف

    صلال یوسف محفلین

    مراسلے:
    91
    شمشاد بھائی مختصر،اصل میں لکھا جاتا ہی نہیں اس ٹوپک پر، بہت تلخی بھر جاتی ہے لفظ نشتر لگتے ہیں ایسے میں، یہ بھی پتا نہیں کیسے لکھا گیا
    دعائیں
     
  4. نایاب

    نایاب لائبریرین

    مراسلے:
    13,422
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Goofy
    میٹھی جیل ہے بابا یہ پردیس ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    کیا کیا دکھ سنائیں ۔۔۔۔۔ ؟
    بہت خوب ابوحمزہ بھائی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. الشفاء

    الشفاء محفلین

    مراسلے:
    2,711
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    بہت خوب لکھا ہے بھائی۔۔۔

    میری امی کہتی ہیں۔

    انکھیوں اوڈھر منہ پئے ھڈدن۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. سید شہزاد ناصر

    سید شہزاد ناصر محفلین

    مراسلے:
    9,398
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    بہت خوب لکھا بھائی
    ایک بہت ہی تلخ حقیقت
    ہم اپنے بچوں کی زندگی بنانے کے لئے یہ چھوٹی چھوٹی خوشیاں کھو دیتے ہیں
    اکیلا پن کیا ہوتا ہے
    وہ ہی جان سکتا ہے جس پر گزرتی ہے
    اللہ آپ کو شاد و آباد رکھے آمین
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  7. مہ جبین

    مہ جبین محفلین

    مراسلے:
    6,246
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    یقیناً تنہائی کا عذاب سہنا آسان نہیں شاید لوہے کے چنے چبانے جیسا۔۔۔۔۔
    اپنوں سے ہزاروں میل دور رہنا بہت مشکل ہے ان کے لئے جو اپنے خاندان سے بہت محبت کرتے ہیں
    صحیح کہا بھائی ابوحمزہ ۔۔۔۔کچھ باتیں بیان کرنا اتنا سہل بھی نہیں ہوتا
    اس دکھ کو پردیس میں اپنوں سے دور رہنے والے ہی جان سکتے ہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. محمد ارشد میر

    محمد ارشد میر محفلین

    مراسلے:
    1

    کیا خوب لکھا ہے جناب
    اور وہ لکھا ہے یعنی پردیسی کے دل میں اتر کر الفاظ لائے ہو آپ۔
    ماشااللہ
     
  9. شمشاد خان

    شمشاد خان محفلین

    مراسلے:
    1,807
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بھئی واہ، یہ لڑی سات سال کے بعد زندہ ہوئی ہے۔
    ویسے کیا خوب لکھا ہے۔
     
  10. عامر جٹ

    عامر جٹ محفلین

    مراسلے:
    3
    ایک میٹھی جیل ہے پردیس____!!
     
  11. لاريب اخلاص

    لاريب اخلاص محفلین

    مراسلے:
    12,654
    پردیس کا دکھ پردیسی ہی جانے!
    جو رخصت تو دعاؤں میں ہوا پر اس کے لوٹ آنے تک نہ چھاؤں رہی نہ چھت!
     
  12. ظفری

    ظفری محفلین

    مراسلے:
    11,549
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Question
    پہروں اپنے دل سے لپٹ کر چپکے چپکے روئے ظفر
    اس انجانے شہر میں ہم کو جب بھی وطن کی یاد آئی
     

اس صفحے کی تشہیر