کریں گے بات نہ اس کی یہ ہم نے ٹھانی ہے

عاطف ملک نے 'آپ کی شاعری (پابندِ بحور شاعری)' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 28, 2019

  1. عاطف ملک

    عاطف ملک محفلین

    مراسلے:
    1,241
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Innocent
    کریں گے بات نہ اس کی یہ ہم نے ٹھانی ہے
    ہمارے دل نے مگر کب ہماری مانی ہے

    نہ آرزو ہے کسی نفع کی، نہ خوفِ زیاں
    یہ زندگانی بھی کیا خاک زندگانی ہے

    اسی کی یاد، اسی کا خیال، اسی کا ذکر
    ہمارے پاس تو بس ایک ہی کہانی ہے

    مرے تڑپنے کا گر آپ اڑا رہے ہیں مذاق
    تو جان لیں یہ گھڑی آپ پر بھی آنی ہے

    کتابِ عشق کی مانند ہے تری صورت
    پہ دیکھنے کا یہ انداز امتحانی ہے

    وہ التجاؤں کا تیری جواب دے کیونکر
    سنی ہیں اس نے یہی اس کی مہربانی ہے

    کوئی بھی لمحہ نہ خالی ہو یاد سے اس کی
    یہی ہے رِیت محبت کی جو نبھانی ہے

    عاطفؔ ملک
    جولائی ۲۰۱۹​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  2. محمد عدنان اکبری نقیبی

    محمد عدنان اکبری نقیبی لائبریرین

    مراسلے:
    18,770
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    بہت اعلی ۔
    لاجواب غزل۔
     
  3. انس معین

    انس معین محفلین

    مراسلے:
    325
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    واہ
     
  4. عاطف ملک

    عاطف ملک محفلین

    مراسلے:
    1,241
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Innocent
    نوازش:)
    آداب
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر