پولیو ویکسین

سین خے نے 'طب اور صحت' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ستمبر 29, 2019

  1. سین خے

    سین خے محفلین

    مراسلے:
    1,974
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    اس سے پہلے کوئی ثبوت دیا ہے جو اب ثبوت آئے گا! بس یہ بہت اچھا ہوا ہے کہ ان صاحب کی ذہنیت کھل کر سامنے آرہی ہے۔ اگر اب بھی کوئی ان کو سپورٹ کرتا ہے یا ان کی باتوں میں آتا ہے تو ان کے لئے بس عقل درست سمت استعمال کرنے کے لئے دعا ہی کی جا سکتی ہے۔

    ان کے مراسلے ہرگز حذف نہیں ہونے چاہئیں۔ سب کچھ ریکارڈ پر رہنا چاہئے۔
     
    • متفق متفق × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. آصف اثر

    آصف اثر معطل

    مراسلے:
    3,060
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    متفق۔ پولیو مافیا کے حقائق قوم کے سامنے آنے چاہیے۔
     
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 4
  3. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    16,189
    11لاکھ والدین کا بچوں کو پولیو قطرے پلانے سے انکار
    نمائندگان ایکسپریس ایک گھنٹہ پہلے
    [​IMG]
    محکمہ صحت نے پروپیگنڈے سے نمٹنے کے لیے علما،اسکالرزسے تعاون مانگ لیا۔ (فوٹو: فائل)


    پشاور / کوئٹہ: خیبرپختونخوا میں لاکھوں والدین ہی انسدادپولیو مہم میں بڑی رکاوٹ بن گئے ہیں۔

    محکمہ صحت کے اعدادوشمار کے مطابق اب تک صوبے میں79 پولیو کیسز سامنے آچکے ہیں جن میں اس سال کے اختتام تک مزید اضافے کا خدشہ ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ رواں سال صوبے میں10 لاکھ 89 ہزار87 والدین نے اپنے بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے سے انکار کردیا جنھیں رپورٹ کیا گیا ہے۔

    محکمہ صحت کی دستاویزات کے مطابق اپریل میں سب سے زیادہ 6 لاکھ 94 ہزار 984 ویکسین سے انکاری کیسز سامنے آئے۔ اس حوالے سے محکمہ صحت کے اعلی افسر کا کہنا ہے کہ ماشوخیل واقعہ میں بے بنیاد منفی پروپیگنڈے نے پولیو پروگرام کو شدید دھچکا پہنچایا۔

    پولیو ویکسین کے خلاف منفی پروپیگنڈے سے نمٹنے کے لیے محکمہ صحت نے باعث ایک بار پھر علما کرام اور اسکالرز سے تعاون مانگ لیا ہے۔

    مولانا طارق جمیل بھی مہم کے حق میں فتویٰ دے چکے۔متعلقہ علاقوں میں سیاسی رہنماؤں نے اپنے بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلا کر مہم کا آغاز کیا۔
     
    • غمناک غمناک × 1
  4. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    16,189
    پولیو ویکسین کے خلاف منفی پراپگنڈہ کرنے والوں کو بے نقاب کیا جائے۔ قوم کا مستقبل داؤ پر لگا دیا ہے ان لوگوں نے۔
     
    • متفق متفق × 1
  5. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    16,189
    پولیو کے مزید 4 کیسز سامنے آگئے، رواں برس تعداد 115 ہوگئی
    [​IMG]
    سندھ کے علاقے ٹنڈو الہ یار اور سکھر جبکہ خیبر پختونخوا میں ٹانک اور بنوں میں بچوں میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوئی— فوٹو: فائل

    سندھ اور خیبر پختونخوا میں پولیو کے 4 نئے کیسز سامنے آگئے۔

    سندھ کے علاقے ٹنڈو الہ یار اور سکھر جبکہ خیبر پختونخوا میں ٹانک اور بنوں میں بچوں میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوئی۔

    سندھ میں رواں برس پولیو وائرس سے متاثرہ بچوں کی تعداد 19 اور خیبر پختونخوا میں پولیو کیسز کی تعداد 81 ہوگئی ہے۔

    ایمرجنسی آپریشن سینٹر خیبر پختونخوا کے مطابق صوبے میں پولیو کے دو نئے کیسز ضلع ٹانک اور بنوں سے رپورٹ ہوئے ہیں۔

    [​IMG]

    ضلع ٹانک میں 15 ماہ کے بچے اور بنوں میں 17 ماہ کی بچی پولیو سے متاثر ہوئی ہے۔

    متاثرہ بچوں کے فضلوں کے نمونوں سے لیبارٹری ٹیسٹ میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔

    رواں سال کے دوران خیبر پختونخوا میں پولیو کیسز کی تعداد 81 ہوگئی ہے۔

    کوآرڈینیٹر آف ایمرجنسی آپریشن سینٹر عبدالباسط کے مطابق پولیو ویکسین ہر لحاظ سے محفوظ ہے حکومت پولیو کے خاتمے میں پر عزم ہے تاہم والدین اور معاشرے کے تمام طبقات کو حکومت کے ساتھ تعاون کرنا ہوگا۔

    سندھ سے بھی پولیو کے دو نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔ ترجمان ایمرجنسی آپریشن سیل کے مطابق ٹنڈوالہ یار کے 22 ماہ کے بچے اور سکھر کی 7 سالہ بچی میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔

    ترجمان ایمرجنسی آپریشن سیل کے مطابق سندھ میں رواں برس پولیو وائرس سے متاثرہ بچوں کی تعداد 19 ہوگئی۔

    وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے سندھ میں پولیو کے مزید دو کیسز ظاہر ہونے پر گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے۔

    انھوں نے کہا کہ ہم نے پولیو کے خاتمے کیلئے بھرپور اقدامات کئے لیکن نتائج ٹھیک نہیں ملے۔

    ترجمان وزیر اعلیٰ سندھ کے مطابق سید مراد علی شاہ نے ہدایت کی کہ سندھ آنے والے تمام مقامات پر آنے والے خاندانوں کو انسداد پولیو قطرے پلائے جائیں۔

    انھوں نے کہا کہ یہ پولیو کیسز زیادہ تر بلوچستان اور خیبر پختونخوا سے آنے والے خاندانوں سے یہاں پھیلتا ہے۔

    مراد علی شاہ نے کراچی کے علاقے گڈاپ کو خصوصی درجہ دے کر پانی اور نکاسی آب کی اسکیمز شروع کرنے کی ہدایت کی ہے۔

    وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے محکمہ صحت کو پولیو ویکسین کی خصوصی مہم شروع کرنے کی بھی ہدایت کی ہے۔

    سال 2019 میں پاکستان میں پولیو کیسز کی تعداد 115 تک جاپہنچی ہے۔ سب سے زیادہ 81 کیسز کے پی کے، سندھ میں 19، بلوچستان میں 9 اور پنچاب میں 6 کیسز سامنے آئے ہیں۔
     
    • غمناک غمناک × 2
  6. سید عاطف علی

    سید عاطف علی محفلین

    مراسلے:
    7,603
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    بر سبیل تذکرہ !
    میں نے آج پھر ریاض ائیر پورٹ پر یہ وائرس پیے۔
    نہ جانے کیوں آج والے قطرے بہت مرچوں والے محسوس ہوئے ۔ کئی سیکنڈ تک منہ سپائیسی رہا ۔میں نے سوچا کہیں یہ والے زندہ وائرس طاقتور تو نہیں ؟ :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. زیک

    زیک محفلین

    مراسلے:
    37,690
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Amused
    پاکستان سے واپسی پر؟

    دوبارہ کیوں؟ کیا پچھلی دفعہ کا ریکارڈ نہیں رکھتے؟
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • متفق متفق × 1
  8. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    2,827
    ایک دفعہ مجھے اور سب حاجیوں کو زبردستی ciprofloxacin کھلائی گئی تھی جدہ میں حج ٹرمنل پر. یہ سعودی کچھ بھی کر سکتے ہیں
     
    • غمناک غمناک × 1
  9. سید عاطف علی

    سید عاطف علی محفلین

    مراسلے:
    7,603
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    جی ہاں واپسی پر ۔
    سب کو ہی بلا تفریق (چھوٹے بڑے) پلا رہے تھے ۔ ویسے چار ماہ قبل جب اگست میں واپس آیا تھا تو نہیں پلائے تھے ،اتنا تو یاد ہے ۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  10. محمد سعد

    محمد سعد محفلین

    مراسلے:
    2,119
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bored
    غیر ضروری اینٹی بایوٹکس؟ نائیس۔ :eek:
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  11. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    16,189
    ملک کے مختلف علاقوں سے ایک ہی دن میں 6 پولیو کیسز کی تصدیق
    شاہدہ پروین 39 منٹ پہلے
    [​IMG]
    پنجاب ، سندھ اور خیبر پختونخوا سے 2،2 بچوں میں پولیو کیسز کی تصدیق فوٹو: فائل


    پشاور: پنجاب ، خیبر پختونخوا اور سندھ سے ایک ہی دن میں 6 پولیو کیسز کی تصدیق ہوگئی ہے جس کے بعد ملک بھر میں ایک سال کے دوران پولیو کیسز کی تعداد 136 تک پہنچ گئی ہے۔

    خیبرپختونخوا کے ضلع ڈیرہ اسماعیل خان میں 24 ماہ کے بچے اور لکی مروت میں 9ماہ کی بچی میں وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔ دونوں بچوں کے فضلے کے نمونے دسمبر 2019 میں لیبارٹری بھجوائے گئے تھے۔ پولیو ایمرجنسی آپریشن سینٹر خیبر پختونخوا کا کہنا ہے کہ دونوں متاثرہ بچوں کو پولیو کے قطرے نہیں پلائے گئے۔ نئے کیسزسے رواں سال صو بے میں پولیو سے متاثرہ بچوں کی تعداد91 ہوگئی ہے۔

    دوسری جانب پنجاب کے علاقے ڈیرہ غازی خان سے دو اور سندھ کے ضلع جامشورو اور قمبر سے بھی ایک ایک پولیو کیس رپورٹ کیا گیا ہے۔

    پولیو ایمرجنسی آپریشن سینٹر خیبر پختونخوا کے مطابق ملک بھر میں پولیو سے متاثرہ بچوں کی مجموعی تعداد 134 ہوگئی ہے۔2019 کے دوران خیبر پختونخوا میں 91 سندھ میں 24، پنجاب 8 اور بلوچستان سے 11 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔
     
    • غمناک غمناک × 1

اس صفحے کی تشہیر