مضطر و بے کس و لاچار رہا کرتے ہیں

عاطف ملک نے 'آپ کی شاعری (پابندِ بحور شاعری)' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ستمبر 16, 2020

  1. عاطف ملک

    عاطف ملک محفلین

    مراسلے:
    1,351
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Innocent
    ایک اور کاوش محترم اساتذہ کرام اور محفلین کی خدمت میں پیش ہے۔اپنی رائے سے ضرور آگاہ کیجیے گا۔

    مضطر و بے کس و لاچار رہا کرتے ہیں
    تیری چوکھٹ سے جو بے زار رہا کرتے ہیں

    اک نظر لطف کی، اے میرے مسیحا اس سمت
    اس طرف آپ کے بیمار رہا کرتے ہیں

    وہ تو معصوم ہی رہتے ہیں ستم کر کے بھی
    ہم گلہ کر کے گنہ گار رہا کرتے ہیں

    اس بھرے شہر میں اک تُو ہی مرا اپنا ہے
    اور تو سب یہاں اغیار رہا کرتے ہیں

    کر نہ بیٹھے کوئی کم ظرف وفا کا دعویٰ
    مرحلے عشق کے دشوار رہا کرتے ہیں

    دل کے لٹنے کا ہو یا گردشِ دوراں کا غم
    رُخ پہ دونوں کے ہی آثار رہا کرتے ہیں

    میں انہیں نیند کنارے پہ ملا کرتا ہوں
    وہ مرے خواب کے اُس پار رہا کرتے ہیں

    جس گھڑی چاہے بلا لے ہمیں اپنے در پر
    ہم تو ہر لحظہ ہی تیار رہا کرتے ہیں

    اس لیے کہتے ہیں سب لوگ انہیں خوش گفتار
    ان کے لب پر مرے اشعار رہا کرتے ہیں

    جن پہ ہوتی ہے نظر اس کے کرم کی عاطفؔ
    وہی اشجار ثمر بار رہا کرتے ہیں

    عاطفؔ ملک
    ستمبر ۲۰۲۰
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  2. احمد محمد

    احمد محمد محفلین

    مراسلے:
    486
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    واہ۔ واہ۔ سبحان اللّٰہ۔

    کیا ہی خوبصورت خیالات فرماتے ہیں آپ۔ اللّٰہ تعالٰی آپ کے علم و مرتبہ میں برکت عطا فرمائیں۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. عاطف ملک

    عاطف ملک محفلین

    مراسلے:
    1,351
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Innocent
    آمین۔
    بہت بہت شکریہ جناب۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  4. ظہیراحمدظہیر

    ظہیراحمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    3,746
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    بہت خوب! اچھی غزل ہے عاطف بھائی !
     
  5. عاطف ملک

    عاطف ملک محفلین

    مراسلے:
    1,351
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Innocent
    حوصلہ افزائی کے لیے بہت شکریہ محترمی:)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر