1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $413.00
    اعلان ختم کریں

غوری سلطنت سے نریندر مودی تک

رباب واسطی نے 'تاریخ کا مطالعہ' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 8, 2019

  1. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    24,999
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    ویسے ہی جیسے یہاں کے باقی مسلمان! :)

    انتہائی قدیم تاریخ اور کچھ مستند ملنا مشکل ہے۔ دو کہانیاں تو ہمیں علم ہی ہیں۔ ایک مسلمان مؤرخین کی، ایک بعد میں مشہور ہونے والی 'لبرل' نکتہ نظر کی۔ تیسری بھی ہے، اہلِ تشیع حضرات کی، ان کا کہنا ہے کہ شیعہ اور سادات بنی امیہ کے مظالم سے بھاگ کر سندھ اور برصغیر میں چلے آئے تھے سو اموی جرنیلوں نے ان کا یہاں تعاقب کیا۔ (یہ کہانی عام طور پر کم مشہور ہے لیکن اس کے بھی کچھ شواہد موجود ہیں)۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  2. میم الف

    میم الف محفلین

    مراسلے:
    157
    ہندو کہتے ہیں مسلمان ظالم ہیں۔
    مسلمان کہتے ہیں ہندو ظالم ہیں۔
    اِس کا مطلب ہے دونوں ظالم ہیں۔
     
    • متفق متفق × 1
  3. عرفان سعید

    عرفان سعید محفلین

    مراسلے:
    5,445
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Psychedelic
    کیا کہہ دیا ظالما!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 4
  4. عرفان سعید

    عرفان سعید محفلین

    مراسلے:
    5,445
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Psychedelic
    یہ کیا ہے؟
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  5. جان

    جان محفلین

    مراسلے:
    1,676
    کٹر مسلمانوں کا نقطہ نظر:
    ہندو ظالم ہیں، مسلمان مظلوم ہیں۔
    کٹر ہندوؤں کا نقطہ نظر:
    مسلمان ظالم تھے، ہندو مظلوم تھے۔
    نتیجہ:
    شاید اسی کا نام "محبت" ہے شیفتہ
    دونوں طرف ہے آگ برابر لگی ہوئی
     
    • پر مزاح پر مزاح × 4
  6. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    24,999
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    یہ وہ جن کے نزدیک راجہ داہر ہیرو ہے اور محمد بن قاسم بیرونی حملہ آور اور غاصب۔ :)
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. جان

    جان محفلین

    مراسلے:
    1,676
    کوکا کولا پلائیں، شاید آگ ٹھنڈی ہو جائے!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  8. عرفان سعید

    عرفان سعید محفلین

    مراسلے:
    5,445
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Psychedelic
    بہت شکریہ!
    اپنا نقطہ نظر آپ پھر بھی گول کر گئے :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    2,610
    وہ شاید تیسرا ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  10. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    2,610
    سندھ میں اسلام امام حسن کے پوتے اور دیگر بزرگوں نے محبت کے ذریعے پھیلایا جسے ملیامیٹ محمد بن قاسم کے انکل نے اپنے بھتیجے کے ذریعے کیا اور پھر اسے بھی مروا دیا
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  11. عرفان سعید

    عرفان سعید محفلین

    مراسلے:
    5,445
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Psychedelic
    یہ تیسرا نقطہ نظر میرے علم میں بالکل نہیں تھا۔ آج معلومات میں اضافہ ہوا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  12. عرفان سعید

    عرفان سعید محفلین

    مراسلے:
    5,445
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Psychedelic
    لڑی سے غیر متعلقہ سوال پر پیشگی معذرت کے ساتھ
    بات ہندوؤں اور مسلمانوں کی چل رہی ہے تو ِخیال آیا کہ اس فورم پر کوئی ہندو محفلین ہیں؟
    ہندووں میں اردو لکھنے پڑھنے کا عمومی تناسب کیا ہے؟
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  13. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    24,999
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    بتا تو دیا تھا عرفان صاحب، پہلی پوسٹ میں۔ ویسے میرا مقصد صرف مطالعہ ہوتا ہے نہ کہ اپنی رائے کام کرنا۔ :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  14. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    24,999
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    یہاں تو شاید کوئی نہیں ہے۔ لیکن فیس بُک پر کافی ہندو ہیں جو بہت عمدہ اردو لکھتے پڑھتے ہیں اور شاعری بھی کرتے ہیں۔ میری فرینڈ لسٹ میں تین چار ہندو صاحبان ایسے بھی ہیں جو فارسی کی وجہ سے ہیں، وہ نہ صرف فارسی سمجھتے ہیں بلکہ ایک آدھ تو فارسی میں شاعری بھی کرتے ہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  15. عرفان سعید

    عرفان سعید محفلین

    مراسلے:
    5,445
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Psychedelic
    بہت بہتر جناب! میں آپ کے الفاظ کو دوسرا رنگ ہی دے بیٹھا۔
    بس آئندہ سے اپنی رائے کے لیے مطالعہ آپ کا مستعار لے لیا کریں گے
    :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 2
  16. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    24,999
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    دو ہزار سال قبل مسیح سے موجودہ دور تک۔ ہندوستان کی تاریخ کچھ منٹوں میں نقشے کی مدد سے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  17. عثمان

    عثمان محفلین

    مراسلے:
    9,667
    موڈ:
    Cheerful
    برطانوی راج کا موازنہ دیگر سے کیجیے۔ :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  18. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,614
    تاریخ کی کتاب کو جہاں سے کھولیے گا، ظلم کا ہی باب نکلے گا؛ استثنائی صورتیں تو خیر ہوتی ہی ہیں۔ طاقت اور اختیار کے نشے میں دُھت ہو کر جو مظالم ڈھائے گئے، اُن کا دفاع کرنا بھی ظلم ہے۔ ہم کم از کم یہ بھلائی تو کر سکتے ہیں کہ مظلوموں کی طرف داری کریں چاہے اُن کا تعلق کسی مذہب یا گروہ سے ہو۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • متفق متفق × 1
  19. آصف اثر

    آصف اثر محفلین

    مراسلے:
    2,688
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    دیکھیں اس پر پہلے بھی محترم عبدالقیوم چوہدری بھائی سے گفتگو ہوئی تھی۔ نادر شاہ نے جو مظالم ڈھائے تھے اس کا ذمہ شریعت کا نہیں بلکہ نادر شاہ کا ہے۔ اس کا محمود غزنوی سے کوئی تعلق نہیں۔ دوسری بات نوٹ کرنے کی یہ ہے کہ ہم اس طرح کے مباحثوں میں ایرانی بادشاہوں اور سلاطین کے مظالم پر بحث بیشتر اوقات نہیں دیکھتے، کیوں کہ ایرانیوں کے حوالے سے ہلاکو خان سے لے کر ہندوؤں اور انگریزوں تک کے دلوں میں نرم گوشہ پایا جاتا ہے جس کی وجہ ایرانیوں کی اسلام دشمن قوتوں کی خدمات ہیں۔ لہذا نادر شاہ اور اس کے مظالم کو ایک طرف رکھ کر آپ یقینا اس کی بجا مذمت کرسکتے ہیں۔

    یہ بات تو طے ہے کہ شریعت میں شرکیات اور خلاف اسلام رسومات و عمارات کی کوئی جگہ نہیں۔ اگر مسلمان سلاطین یا حکمران انہیں ختم نہ بھی کریں تو غیرمسلم آکر اِن کو ختم کرسکتے ہیں لیکن اس کے لیے دو باتیں ذہن میں ہونی چاہیے۔
    کوئی بھی مسلمان ان شرکیہ عمارات کا دفاع نہیں کرے گا، البتہ مدفون شخصیت (اگر موجود ہیں)، کی حفاظت اپنے پرایوں سب پر واجب ہے۔
    جو شرکیہ مقامات کا دفاع کرے گا وہ اللہ کے ہاں بھی شہید نہیں، تو مسلمانوں کو کیا تکلیف ہوسکتی ہے۔
    یہاں مزید ایک بات ذہن نشین رہنی چاہیے کہ مسلمان تو بتوں کو اپنے عقائد کی وجہ سے ناجائز سمجھتے ہیں، لیکن جو غیرمسلم دشمن اِن شرکیہ مقامات کو گرائے کیا وہ خود بھی شرک سے پاک ہے؟ اگر واقعی تو بسم اللہ، اگر نہیں تو اس کے لیے اس طرح کرنا مذہباً نہیں بلکہ ذاتی خواہش کے طور پر ایسا کرنا جائز نہیں، کیوں کہ بڑا مشرک چھوٹے مشرک کو کبھی مورد الزام یا سزاوار نہیں ٹھہرا سکتا۔

    مسلمان مؤرخین کی تاریخ سب سے زیادہ اور مستند تر ہے، جب کہ مذہب بیزار طبقے کی جانب سے جو یک طرفہ چیخ و پکار انگریزوں کے آمد کے بعد شروع ہوئی ہے، وہ مبہم ہے۔ ثبوت ہم محمود غزنوی کے ذیل میں دیکھ چکے ہیں۔
    جہاں تک محمد بن قاسم کا تعلق ہے تو اس کا سب سے آسان حل یہ معلوم کرنا ہے کہ کیا اس وقت سندھ میں واقعی ہندو راجاؤں کی حکومت تھی یا نہیں، اگر تھی تو کیا وہ اپنی قوم سے بھی انصاف کررہے تھے یا نہیں، اگر ہاں تو کیا وہ مسلمان قافلوں پر ڈاکہ زنی کرتے تھے یا نہیں، اگر نہیں تو ثبوت پیش کیے جائے، اگر اس پر بھی کوئی ثبوت نہیں پیش کیے جاسکتے تو پھر آخر میں جاکر اس پر بحث ہوگی کیا محمد بن قاسم نے واقعی کوئی ظلم کیا تھا؟
    یہ بہت آسان ہے میری جان۔ ظلم کا صحیح علم بوقت حکمرانی ہوتا ہے، بوقتِ جنگ نہیں۔ اگر محمد بن قاسم سے لے کر آخری مغل حکمران تک ظلم کا ثبوت پیش کرسکتے ہیں تو یقینا یہ بہت بڑا احسان ہوگا ہندؤوں پر۔ کمر کس لیجیے۔

    اس طرح دعووں کے بجائے شواہد اور ثبوت کے ساتھ بات کی جائے تو بہتر ہوگا۔ امام حسن رضی اللہ تعالیٰ عنہ اور اُن کے پوتوں کی جانب سے اگر اسلام پھیلا ہے تو اس پر سب سے زیادہ خوشی مسلمانوں ہی کو ہے لیکن ساتھ میں محمد بن قاسم رحمہ اللہ کا تڑکا ڈالنے کے لیے کچھ مواد بھی چاہیے ہوتا ہے۔
     
    آخری تدوین: ‏اگست 10, 2019
    • زبردست زبردست × 2
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  20. جان

    جان محفلین

    مراسلے:
    1,676
    ہم نے وہ بیان کیا ہے جو دونوں طرف کا نقطہ نظر ہے۔ اب کیا بہت آسان ہے اور کیا مشکل ہے، کس نے ثبوت پیش کرنے ہیں اور کون کس کی جان ہے، اس کا ہمارے مراسلے سے کوئی تعلق نہیں۔ لہذا آپ کا مراسلہ ہمارے مراسلے کے جواب میں بالکل ارریلیونٹ ہے۔ اس سارے معاملے میں ہمارا نقطہ نظر صرف اتنا ہے کسی سے نسلی یا مذہبی تعلق کی بنا پر اس کے غلط کاموں اور ظلم کا جواز ڈھونڈنا خود اسلام کی تعلیمات کی توہین ہے۔ محض مسلمان ہونا ہمیں اس بات کی گارنٹی نہیں دیتا کہ ہمارا ہر عمل ہی درست ہو گا اس لیے ان کی تاویل یا جواز ڈھونڈا جائے یا غیر مسلم کا ہر عمل ہی غلط ہو گا اس لیے اس پر ہمہ وقت تنقید کی جائے۔ اس کا دارومدار یقیناً نیتوں پر ہے۔
     
    آخری تدوین: ‏اگست 10, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر