عزیز حامد مدنی کا ایک شعر

منہاج علی نے 'آپ کی تحریریں' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 27, 2021

  1. منہاج علی

    منہاج علی محفلین

    مراسلے:
    127
    جب آئی ساعتِ بے تاب تیری بے لباسی کی
    تو آئینے میں جتنے زاویے تھے رہ گئے جل کر
    (عزیز حامد مدنی)

    پہلے تو ساعتِ بے تاب کی داد دیجیے۔ یعنی محبوب کی بے لباسی کا انتظار وقت کو بھی ہے۔ وقت بھی بے تاب ہے کہ اسے محبوب کی بے لباسی کی ایک ساعت ہونا نصیب ہوگا۔

    آئینے میں انگنت زاویے ہوتے ہیں، سب زاویے جل گئے۔ یعنی، آئینے کے کسی زاویے میں اتنی طاقت ہی نہیں ہے کہ اس منظر کا عکس اپنے اندر اتار سکے۔

    محبوب کے بدن کو آئینے سے بھی تعبیر کِیا جاتا ہے۔ سو یہ بھی ممکن ہے کہ محبوب کے آئینۂ بدن کا سامنا آئینہ نہ کر سکا ہو۔

    ایک اور لطف اس معنیٰ میں بھی ہے کہ ہماری شاعری کی روایت میں عاشق کو معشوق کا آئینہ گردانا جاتا ہے۔

    روز مرہ میں کسی فعل کے ساتھ جب رہ جانا استعمال ہو تو اس سے فاعل کا ساکت ہوجانا یا بے بس ہوجانا یا یوں کہیے تو اور بہتر کہ یہ ایک ہی فعل بس میں تھا، مراد لیا جاتا ہے۔۔ مثلاً
    میرؔ کل صحبت میں اس کی حرف سر کر رہ گیا
    پیش جاتے کچھ نہ دیکھی چشم تر کر رہ گیا
    اب اس مصرعے کو پھر سے پڑھیے تو مزید لطف آئے گا۔ ’’تو آئینے میں جتنے زاویے تھے رہ گئے جل کر‘‘۔

    منہاج علی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  2. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    3,427
    کیا زبردست شعر چنا ہے تشریح کے لئے
    داد قبول فرمائیے
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. Ali Baba

    Ali Baba محفلین

    مراسلے:
    217
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    آپ جس طرح کی تشریح کررہے ہیں وہ محبوب کو "بے لباس" کر کے نہیں بلکہ اس کے "بے حجاب" ہونے سے ہوتی ہے۔ فرق سمجھیے۔

    مزید یہ کہ آپ "زاویوں" کو بہت ہلکا لے گئے ہیں، شاعر نے اپنے محبوب کو بے لباس کروایا ہی انہی زاویوں کو دکھانے کے لیے ہے جن سے آئینے کے اپنے زوایے بھی جل کر رہ گئے ہیں!
     
    آخری تدوین: ‏مارچ 29, 2021
  4. نیرنگ خیال

    نیرنگ خیال لائبریرین

    مراسلے:
    18,632
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    • پر مزاح پر مزاح × 5
  5. سید عاطف علی

    سید عاطف علی لائبریرین

    مراسلے:
    11,800
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    خموشی گفتگو بے زبانی ہے زباں میری۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
  6. محمّد احسن سمیع :راحل:

    محمّد احسن سمیع :راحل: محفلین

    مراسلے:
    1,891
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    حضور پہلے یہ واضح کیجیے کہ ڈی پی والی تصویر آپ ہی کی ہے یا کسی اور کی؟ :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  7. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    3,427
    تو میرے لگائے شہد پر خوب رونق لگی ہوئی ہے
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  8. سید عاطف علی

    سید عاطف علی لائبریرین

    مراسلے:
    11,800
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    اب تک تو مذاہب اور سیاسیات کی لڑیاں مقفل ہوتی آئی تھیں ۔ لگتا ہے اب شعر و ادب کی لڑیاں بھی مقفل ہو نے کی روایت کی داغ بیل ڈالنے اور بیج بونے کا سہرا پنے سر لینا چاہ رہے ہیں ۔ نین بھیا آپ کے نین شرارت کر رہے ہیں اور آپ کے دل کا بدنام ہونے کا امکان بڑھتا جارہا ہے ۔ :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 5
  9. نیرنگ خیال

    نیرنگ خیال لائبریرین

    مراسلے:
    18,632
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    نہ ان لڑیوں کے مقفل کرنے ہونے میں اپنا کوئی حصہ تھا نہ ادھر ہی ایسا کوئی ارادہ ہے۔ معاملہ چونکہ شعر فہمی اور تشریح کا تھا تو میں نے سوچا اساتذہ سے رائے لینے میں مضائقہ نہیں۔ نظیر کے انداز میں منظر کشی کی تمنا ہے اور نہ صادقین جیسی مصوری کی۔۔۔ بس ایسے کوئی فراز کی زبان میں ہی سمجھا دے کہ ہاں "درودیوار مگر گھر کے دیکھتے ہیں" وغیرہ وغیرہ۔۔۔ تو بھی صلہ پائے۔۔۔۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
  10. ظہیراحمدظہیر

    ظہیراحمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    3,746
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    ذوالقرنین! دنیا میں ہر طرح کی سوچ ، ہرطرح کے لوگ ، ہر قسم کے شاعر اور ہر قسم کی شاعری ملتی ہے ۔ انتخاب کرنا آپ کے اپنے ذوق پر ہے ۔
    دیکھا جائے تو زندگی قدم قدم پر کئی متنوع چیزوں میں سے کسی ایک کو منتخب کرنے کا نام ہے ۔ کس سے ملنا ہے ، کس سے دور رہنا ہے ، کہاں بیٹھناہے ، کہاں سے اٹھ جانا ہے ، کیا پڑھنا ہے ، کیا دیکھنا ہے ، کیا سننا ہے، کیا بولنا ہے یہ سب چھوٹے چھوٹے کام اور چھوٹے چھوٹے فیصلے معلوم ہوتے ہیں لیکن ان چھوٹے فیصلوں کے مجموعے کا نام ہی زندگی ہے اور یہی فیصلے کسی شخصیت کو اس کا رنگ دیتے ہیں ۔ سو ان باتوں کو چھوٹا نہیں سمجھنا چاہئے ۔
    کہ مزا آگیا ہوگا۔ ہور کرو مینوں ٹیگ!
     
    • زبردست زبردست × 4
  11. نیرنگ خیال

    نیرنگ خیال لائبریرین

    مراسلے:
    18,632
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    کتنے ہی عرصہ سے میں اسی سوچ میں گم تھا کہ آخر زندگی میں یہ چھوٹے چھوٹے فیصلے ہیں ہی کیوں۔ کیا پڑھنا ہے اور کیوں پڑھنا ہے۔ کہاں بیٹھنا ہے اور کیوں بیٹھنا ہے۔ کہاں سے اٹھ جانا ہے یا اٹھا دیے جانا ہے۔ کیا سننا ہے اور کیوں سننا ہے۔ بظاہر یہ سب چھوٹے چھوٹے کام اور فیصلے معلوم نہیں ہوتے تھے بلکہ ایسے وقت کا تقاضا سمجھ کر میں کرتا آ رہا تھاکہ آج آپ نے میری نیم وا آنکھوں کو مکمل کھول دیا کہ بھئی یہی تو زندگی ہے۔ اور کیا کوئی باہر سے آکر تھیلی زندگی کی تھما جائے گا۔ میاں اس پل کو نعمت سمجھو اور اس لمحے کو اس سوچ میں مت ضائع کرو کہ کل کلاں ان کی بنیاد پر تم سے لوگ کچھ نہیں پوچھیں گے۔ تمہاری شخصیت جو بنی ہے اللہ توبہ لوگ ویسے ہی تم سے نہیں پوچھیں گے۔ جب یہ باتیں آپ نے سمجھائیں تو میں کہنے پر مجبور ہوگیا کہ کوئی چھوٹا نہیں زندگی فیصلانے میں۔۔۔۔
    سدھر ہی گیا تھا کہ آپ کی سرگوشی پڑھ لی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر