شاعری سیکھیں (انیسویں قسط) اصطلاحات

محمد اسامہ سَرسَری نے 'بزم سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 15, 2014

  1. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    تمام قسطیں یہاں ملاحظہ فرمائیں۔

    انیسویں قسط:
    محترم قارئین! ماشاء اللہ آپ نے شاعری سیکھنے کے لیے اب تک کئی سارے اسباق پڑھ لیے، ان کی مشقیں بھی کرلیں، قافیے کی بھی خوب مشق کی، وزن بھی درست کرتے رہے، کلام کو موزوں بھی کرتے رہے، بحریں بھی پڑھتے اور یاد کرتے رہے، بحروں کے مطابق کچھ نظمیں بھی لکھ چکے۔ ماشاء اللہ لاقوۃ الا باللہ۔ بلاشبہ یہ سب اللہ کی نعمت اور توفیق سے ہوا ہے۔

    مناسب معلوم ہوتا ہے کہ اب علم عروض میں استعمال ہونے والی مشہور مشہور اصطلاحات کی الفبائی ترتیب پر آسان اور جامع انداز میں تعریفات پیش کردی جائیں، ان میں سے بعض تعریفات کو مثالوں سے بھی واضح کیا گیا ہے۔

    آزاد نظم:وہ کلام جس میں ایک رکن کی پابندی کی جائے، اس میں ارکان کی تعداد شاعر کی مرضی پر منحصر ہوتی ہے، نیز قافیے کی پابندی بھی ضروری نہیں ہوگی، البتہ ایسا کلام جس میں کسی رکن کو ملحوظ نہ رکھا جائے وہ نثر ہے، اسے آزاد نظم کہنا ٹھیک نہیں۔

    ابتدا:بحر کے چار ارکان میں سے پہلا رکن۔اسے ’’صدر‘‘ بھی کہتے ہیں۔

    اِخفاء: اگر کسی صحیح ساکن حرف کے بعد متحرک الف آجائے تو الف کو گرا کر اس کی حرکت پچھلے حرف کو دینا اخفا کہلاتا ہے۔جیسے ’’کار آمد‘‘ کو فاعلاتن بھی باندھ سکتے ہیں اور مفعولن بھی۔

    ایطا: ایک ہی قافیے کو لفظاً و معناً ایک شعر کے دونوں مصرعوں میں لانا۔

    ایطائے جلی: قافیے کو لفظاً و معناً مکرر لانا جیسے: دکان دار کا قافیہ دل دار۔

    ایطائے خفی: قافیوں میں وہ تکرارجس کی طرف ذہن فوراً منتقل نہ ہو، جیسے: آب کا قافیہ گلاب۔

    بحر: شعر کے وزن کو کہتے ہیں۔

    تخییل/تخیل:وہ قوت جس کے ذریعے نظر نہ آنے والی اشیا یا وہ اشیا جو حواس کی کمی کی وجہ سے محسوس نہیں کی جاتیں، انھیں خود محسوس کیا جائے یا دوسروں کو کروایا جائے۔

    ترصیع: دونوں مصرعوں کے تمام الفاظ یا اکثر الفاظ بالترتیب ہم وزن لانا، جیسے:
    نام تیرا ہے زندگی میری
    کام میرا ہے بندگی تیری

    تسکینِ اوسط: مسلسل تین متحرک حروف میں سے بیچ والے حرف کو ساکن کرنا۔

    تقطیع: شعر کے اجزا کو بحر کے اوزان پر وزن کرنا۔

    حرفِ روی:قافیے کا سب سے آخری بار بار آنے والا اصلی حرف، جیسے شام اور نام کا میم۔

    حرکت: زبر ، زیر اور پیش میں سے ہر ایک کو حرکت کہتے ہیں۔

    حسن مطلع: غزل یا قصیدے کا دوسرا مطلع۔

    حشوِ اول: بحر کے چار ارکان میں سے دوسرا رکن۔

    حشوِ ثانی: بحر کے چار ارکان میں سے تیسرا رکن۔

    حمد: وہ نظم جس میں اللہ تعالیٰ کا ذکر کیا جائے۔

    دائرہ: وہ گول خط جس میں تہ بہ تہ اوزان لکھے جائیں۔

    دیوان: کسی شاعر کی نظموں کا مجموعہ۔

    ذو بحرین: وہ نظم یا شعر یا مصرع جو دو بحروں میں ہو۔

    رباعی: وہ چار مصرعے جو اوزانِ مخصوصہ پر ہوں، رباعی میں پہلے دوسرے اور چوتھے مصرعے کا ہم قافیہ ہونا ضروری ہے، رباعی کے چوبیس اوزان ہیں، کسی بھی رباعی میں ان چوبیس میں سے کوئی بھی چار اوزان جمع کیے جاسکتے ہیں، جو چار مصرعے ان چوبیس اوزان کے مطابق نہ ہوں ان کو رباعی نہیں بل کہ قطعہ کہنا چاہیے۔

    ردیف: وہ تمام حروف اور الفاظ جو شعر میں حرفِ روی کے بعد بار بار آتے ہیں۔

    رکن: بحر کا ایک حصہ،ارکان کل آٹھ ہیں: 1فَعُوْلُنْ 2فَاعِلُنْ 3مَفَاعِیْلُن 4فَاعِلاتُن 5مُسْتَفْعِلُن 6مُتَفَاعِلُن 7مَفْعُوْلات 8مُفَاعِلَتُن۔

    زحاف: بحروں کے ارکان میں کوئی حرف کم یا زیادہ کرنا۔

    زمین: ردیف ، قافیہ اور بحر کا تعین۔

    ساکن: وہ حرف جس پر زبر، زیر اور پیش نہ ہو، بلکہ سکون ہو۔

    سببِ خفیف: ہجائے بلند کا پرانا نام۔

    سببِ ثقیل: وہ دو حروف جو دونوں متحرک ہوں۔

    سقم: شعر میں کوئی ایسی چیز جو قواعدِ شعر و عروض کے خلاف ہو۔

    شعر: وہ کلام جس میں وزن اور قافیے کو ملحوظ رکھا گیا ہو۔

    صدر/ابتدا: بحر کے چار ارکان میں سے پہلا رکن۔

    عرض/ضرب: بحر کے چار ارکان میں سے آخری رکن۔

    عروض: وہ علم جس میں کسی شعر کا وزن معلوم کیا جاتا ہے یا کسی شعر کو وزن میں رکھنے کی رہنمائی لی جاتی ہے۔

    غزل: وہ نظم جس میں ہر شعر میں ایک مکمل مضمون ہو، غزل میں عام طور پر عشق و محبت کا ذکر ہوتا ہے، اور اس کا پہلا شعر مطلع اور آخری شعر مقطع ہوتا ہے۔

    قافیہ: شعر کے آخر میں آنے والے ہم آواز الفاظ کو قوافی کہا جاتا ہے، تمام قوافی میں حرف روی ایک ہونا ضروری ہے، جیسے علمی کے قوافی ہیں: قلمی، نرمی اور گرمی۔ ان سب میں حرف روی ’’م‘‘ ہے، لہٰذا ’’قلبی‘‘ ، ’’سختی‘‘ اور ’’سردی‘‘ جیسے الفاظ ’’علمی‘‘ کے قوافی نہیں بن سکتے کیوں کہ ان میں حرف روی ’’م‘‘ نہیں ہے۔

    قطعہ: وہ نظم جس میں کوئی ایک چیز بیان کی جائے، اس میں مطلع نہیں ہوتا اور کم سے کم دو شعر ہوتے ہیں۔

    کلیات: ایک ہی شخص کی تمام منظومات یا تصنیفات کا مجموعہ۔

    متحرک: وہ حرف جس پر زبر، زیر یا پیش ہو۔

    مثنوی: وہ نظم جس میں کوئی مسلسل بات بیان کی اجائے، اس میں ہر شعر کا قافیہ جدا لیکن ہر شعر کے دونوں مصرعے ہم قافیہ

    محاکات: کسی چیز یا کسی حالت کو اس انداز سے بیان کرنا کہ سننے یا پڑھنے والے کے دماغ میں اس چیز یا حالت کی عمدہ سے عمدہ تصویر آجائے۔

    مصرع: شعر کا آدھا حصہ۔

    مطلع: غزل یا قصیدے کا پہلا شعر جس میں دونوں مصرعے مقفّٰی ہوں۔

    معرّا: وہ نظم جو قافیہ اور تعدادِ ارکان کی قید سے آزاد ہو۔اسے ’’آزاد نظم‘‘ بھی کہتے ہیں، مگر ہوتی یہ بھی موزوں ہی ہے، اگر وزن کا بھی خیال نہ رکھا جائے تو اسے ’’آزاد نظم‘‘ یا ’’نظمِ معرّا‘‘ کہنے کے بجائے ’’نثر‘‘ کہنا چاہیے۔

    مقطع: غزل یا قصیدے کا آخری شعر جس میں شاعر اپنا نام یا تخلص بھی بیان کرتا ہے۔

    مقفّٰی: وہ کلام جس میں قافیہ ہو۔

    نظم: وہ کلام جو وزن کے مطابق ہو۔

    نعت: وہ نظم جس میں نبی کریم حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کا تذکرہ کیا جائے۔

    وتد: تین حروف۔

    وتد مجموع:وہ تین حروف جن کے پہلے دو حروف متحرک اور تیسرا ساکن ہو۔جیسے: سَفَر، قَلَم،شَجَر۔

    وتد مفروق: وہ تین حروف جن کا پہلا اور تیسرا حرف متحرک اور دوسرا ساکن ہو۔ جیسے: ’’عالَمی‘‘ میں ’’عَالَ‘‘

    وتد مقرون: وہ تین حروف جن کا پہلا متحرک اور دوسرا اور تیسرا ساکن ہو۔ جیسے: ’’قول، عام، سیب‘‘

    وزن: شعر کے دونوں مصرعوں کا حروف اور حرکات و سکنات کی تعداد اور ترتیب میں یکساں ہونا۔

    ہجائے بلند: وہ دو حروف جن میں سے پہلا متحرک اور دوسرا ساکن ہو۔اسے ’’سبب خفیف‘‘ بھی کہتے ہیں۔

    ہجائے کوتاہ: وہ ساکن جس سے پہلا حرف ساکن ہو یا وہ متحرک جس کے بعد والا حرف متحرک ہو۔

    الحمدللہ بندۂ ناچیز کی کتاب "آؤ ، شاعری سیکھیں" کتابی شکل میں شائع ہوگئی ہے۔

    اگلی قسط
     
    آخری تدوین: ‏فروری 5, 2015
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  2. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    واہ! اسامہ بھائی یہ تو بہت اچھا کیا تمام اصطلاحات جمع فرما دیں ، بندہ جو بھول جائے ایک نظر میں دیکھ سکتا ہے ۔ تلاش کرنے کی محنت سے چھٹی مل گئی۔

    یہاں بھی پابندی کرنی ہے تو آزادی کہا ہے پھر؟ پھر تو یہ بھی "پابند" نظم ہوئی نا؟

    کسی آزاد نظم نظم کی مثال دیجیے جو کسی رکن کی پابند ہو تا کہ بات اچھی طرح ذہن نشین ہو جائے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    پسند فرمانے کا بہت شکریہ۔
    جزاکم اللہ خیرا۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  4. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    تلاش کرکے دکھاتا ہوں ، صبر۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  5. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    استاد محترم جناب محمد یعقوب آسی صاحب کی نظم ہے، اس میں ایک رکن ہے "مفاعیلن" شروع سے آخر تک اس رکن کی پابندی کی گئی ہے۔
    البتہ اتنی گنجائش ہوتی ہے کہ ایک جملے کے آخر میں "مفا" اور "عیلن" دوسرے جملے کے شروع میں۔

    یہ وقتِ صبحِ کاذب ہے
    یہ مشرق کی طرف جو چھا گئی ہے
    وہ ردائے نور جھوٹی ہے
    ابھی پھر تیرگی ہو گی!
    وہ راتوں کا مسافر
    دیر گزری، جانبِ مغرب رواں تھا
    رات کا افسوں جواں تھا
    میں نے دیکھا تھا
    وہ بے منزل کا راہی
    جو تھکن سے چور لگتا تھا
    وہ جس کے ہر قدم سے
    اک نقاہت سی ہویدا تھی
    کماں تھی یا کمر تھی اُس تھکے ہارے مسافر کی
    جو مانگے کی شعائیں اس نے پہنی تھیں
    وہ خود بھی مر رہی تھیں
    اور جگنو مر چکے تھے
    ہاں!
    ابھی تو موت بام و در پہ چھائی ہے
    ابھی اولادِ آدم شب گرفتہ ہے
    وہ ہنستی بولتی گلیاں
    گھروں میں شور بچوں کا، وہ بے ہنگام ہنگامے
    سبھی! اس بے کراں شب کے سمندر میں
    کسی کالی بلا کے سِحرِ بے درماں میں جکڑے ہیں
    ابھی تو رات ہونی ہے!

    مگر، مایوس کیا ہونا!
    کہ وقتِ صبحِ کاذب تو
    نقیبِ صبحِ صادق ہے!
    ابھی گو رات ہونی ہے
    مگر یہ رات کے آخر کا افسوں ہے
    طلسمِ تیرگی کی آخری گھڑیاں
    کسی کالی بلا کی موت کی ہچکی
    کہ جس کے ساتھ
    اس کے سارے جادو ٹوٹ جائیں گے
    نوائے جاں فزا ’’اللہ اکبر‘‘ کی
    زمیں کو، آسماں کو
    روشنی سے ایسے بھر دے گی
    کہ چڑیاں چہچہائیں گی
    شگوفے مسکرائیں گے
    سنو!
    جو رات کی اس آخری ساعت میں
    جاگے اور سو جائے
    اُسے
    صبحِ مبیں کی اوّلیں ساعت سے
    محرومی کا
    ایسا زخم آئے گا
    کبھی جو بھر نہ پائے گا!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  6. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,229
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    تو کیا اس کے ساتھ شاعری کی تمام اقساط مکمل ہو گئیں؟
     
  7. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    استاد جی!
    یہ سلسلہ ماہنامہ ذوق و شوق میں شائع ہورہا تھا ، مدیر صاحب نے کہا تھا کہ مئی 2014 تک اس سلسلے کو چلانا ہے، اس لیے مئی میں یہ آخری قسط کے طور پر شائع ہوئی تھی، مگر میرا ارادہ اسے اپنے طور پر مزید آگے چلانے کا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  8. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    یہ تمام اصطلاحات ایک صفحے میں ملاحظہ فرمائیے:
    [​IMG]
     
    آخری تدوین: ‏جون 17, 2014
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. سید عاطف علی

    سید عاطف علی لائبریرین

    مراسلے:
    10,329
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    رباعی کی تعریف میں دوسرے مصرعے کے ساتھ نا انصافی ہو گئی ہے۔ غالباًاس کا قافیے کا حق چھین لیا گیا ہے۔:)
     
  10. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    بجا فرمایا ، مراسلہ نمبر 9 میں تصحیح شدہ ہے ، اس میں بھی تدوین کردیتا ہوں۔ :) جزاک اللہ خیرا۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  11. سید عاطف علی

    سید عاطف علی لائبریرین

    مراسلے:
    10,329
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    یہ تمام اسباق یقیناً انتہائی عرق ریزی سے تیا کیے گئے ہیں اور ہم جیسے مبتدیوں کے لیے خصوصاً بہت قابل قدر ہیں ۔۔جزاک اللہ:thumbsup2:
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    عاطف بھائی! کیوں مذاق اڑا رہے ہیں ، آپ جیسے ادیب ابن ادیب لوگوں کی رہنمائی میں تو یہ اسباق تیار کیے گئے ہیں۔ :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  13. امجد علی شاکر

    امجد علی شاکر محفلین

    مراسلے:
    1
    اسلام و علیکم
    محترم خاکسار آپکی اس محنت کو سراہتا ہے
    کہ آپ نے دل جمعی اور محنت سے اس کام کو سر انجام دیا
     

اس صفحے کی تشہیر