فارسی شاعری خوبصورت فارسی اشعار مع اردو ترجمہ

محمد وارث نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 7, 2008

  1. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    دینی روایات میں «حضرتِ عُمَر» کی سِتائش میں آیا ہے کہ جِس جا «حضرتِ عُمر» ظاہر ہوتے تھے وہاں سے شَیطان خَوف‌زدہ و ذلیل و خوار ہو کر فرار کر جاتا تھا۔ «مولویِ رومی» اُسی روایت کی جانب اِشارہ کرتے ہوئے ایک بیت میں کہتے ہیں:

    عُمَر آمد، عُمَر آمد، بِبین سرزیر شیطان را
    سحَر آمد، سحَر آمد، بِهِل خوابِ سُباتی را
    (مولانا جلال‌الدین رومی)


    عُمَر آ گئے، عُمَر آ گئے، شَیطان کو سرنِگُوں دیکھو! (دیکھو شَیطان سرنِگُوں ہو گیا!)۔۔۔ سحَر آ گئی، سحَر آ گئی، خوابِ سبُک کو تَرک کر دو [اور بیدار ہو جاؤ]!
    × خوابِ سَبُک = ہلکی نیند
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    تا بِنَگْشایی به قندت روزه‌ام
    تا قیامت روزه دارم روز و شب

    (مولانا جلال‌الدین رومی)
    جب تک تم اپنے قند [جیسے لب] سے میرا روزہ نہ کھولو، میں تا قیامت روز و شب روزہ رکھوں [گا]!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  3. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    ز قندِ یار تا شاخی نخایم
    نمازِ شام روزه کَی گُشایم

    (مولانا جلال‌الدین رومی)
    میں یار کے قند [جیسے لب] سے جب تک اِک ڈلی نہ چباؤں، میں نمازِ مغرب کے وقت روزہ کب کھولتا ہوں/کھولوں گا؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  4. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    رحمی نکند چشمِ خوشِ تو
    بر نوحه و این چشمِ ترِ من

    (مولانا جلال‌الدین رومی)
    [اے یار!] تمہاری چشمِ خُوب میرے نَوحے اور میری اِس چشمِ تر پر ذرا رحم نہیں کرتی۔۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  5. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    تو سرْو و گُلی، من سایهٔ تو
    من کُشتهٔ تو، تو حیدرِ من

    (مولانا جلال‌الدین رومی)
    [اے یار!] تم سرْو و گُل ہو، اور میں تمہارا سایہ ہوں۔۔۔ میں تمہارا مقتول ہوں، اور تم میرے حَیدر ہو۔
     
    آخری تدوین: ‏جولائی 13, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  6. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    شہرِ «دمشق» سے محبّت کے اِظہار میں جنابِ «مولویِ رومی» کی ایک بیت:
    ما عاشق و سرگشته و شَیدایِ دِمَشقیم
    جان‌داده و دل‌بستهٔ سَودایِ دِمَشقیم
    (مولانا جلال‌الدین رومی)

    ہم شہرِ «دمشق» کے عاشق و سرگشتہ و شَیدا ہیں۔۔۔۔ ہم شہرِ «دمشق» کے عشق و جُنون کے جان‌دادہ و دِل‌بستہ ہیں۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  7. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    جنابِ «مولویِ رومی» ایک بیت میں محبوبِ خود سے مُخاطِب ہو کر کہتے ہیں:
    ای شبِ کُفر از مهِ تو روزِ دین
    گشته یزید از دمِ تو بایزید

    (مولانا جلال‌الدین رومی)
    اے کہ تمہارے ماہ [جیسے چہرے کے نُور] سے شبِ کُفر، روزِ دین [میں تبدیل ہو جاتی ہے]۔۔۔۔ [اور اے کہ] تمہارے نفَس سے یزید [بھی] بایزید ہو گیا ہے۔۔۔
    × نفَس = سانس
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  8. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    اسلامی روایات میں ہے کہ اگر «لا حَولَ ولا قُوَّةَ اِلّا بِالله» خوانا جائے تو شیطان اِنسان کے نزد سے دُور ہو جاتا ہے۔ جنابِ «مولویِ رومی» ایک بیت میں اُس روایت کی جانب اشارہ کرتے ہوئے محبوبِ خود کی سِتائش میں کہتے ہیں:
    اگر حلاوتِ لاحَولِ تو به دیو رسد
    فرشته‌خُو شود آن دیو و ماه‌رو گردد

    (مولانا جلال‌الدین رومی)
    [اے محبوب!] اگر تمہارے «لاحَول» کی حلاوت و شیرینی شَیطان تک پہنج جائے تو وہ شَیطان، فرشتہ‌فِطرت اور ماہ‌رُو ہو جائے!
     
    آخری تدوین: ‏جولائی 13, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  9. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    خموش باش که آن کس که بحرِ جانان دید
    نشاید و نتَواند که گِردِ جُو گردد

    (مولانا جلال‌الدین رومی)
    خاموش ہو جاؤ، کیونکہ جس شخص نے بحرِ جاناں دیکھ لیا اُس کو زیب نہیں دیتا اور اُس کے لیے ممکن نہیں ہے کہ وہ نہرِ کُوچَک کے گِرد گُھومے۔
    × کُوچَک = چھوٹا/چھوٹی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  10. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    می‌زن دُهُلی که روزِ عید است
    می‌کن طرَبی که یار آمد

    (مولانا جلال‌الدین رومی)
    [شادمانی کے ساتھ] کوئی دُہُل بجاتے رہو کیونکہ روزِ عید ہے۔۔۔۔ کوئی طرَب کرتے رہو کیونکہ یار آ گیا۔
     
    آخری تدوین: ‏جولائی 14, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  11. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    عید آمد و عید آمد، وان بختِ سعید آمد
    برگیر و دُهُل می‌زن کان ماه پدید آمد

    (مولانا جلال‌الدین رومی)
    عید آ گئی اور عید آ گئی، اور وہ بختِ سعید آ گیا۔۔۔ دُہُل اُٹھاؤ اور بار بار بجاؤ کیونکہ وہ ماہ ظاہر و آشکار ہو گیا۔
     
    آخری تدوین: ‏جولائی 14, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    سالی دو عید کردن کارِ عوام باشد
    ما صوفیانِ جان را هر دم دو عید باید

    (مولانا جلال‌الدین رومی)
    ایک سال میں دو عیدیں کرنا کارِ عوام ہے۔۔۔ ہم صُوفیانِ جان کو ہر لمحہ دو عیدیں لازِم ہیں/چاہییں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  13. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    معلوم ہوا ہے کہ ہماری زبانِ فارسی میں شبِ پانزدہُمِ شعبان یعنی «شبِ برات» کو «شبِ چَک» کہہ کر بھی یاد کیا گیا ہے۔ کیونکہ «برات» کی مانند «چک» بھی فرمان‌نامہ و پروانہ و سنَد کو کہتے تھے، اور یہ باور رہا ہے کہ اِس شب میں جہنّم سے آزادی و رہائی کا پروانہ مِل جاتا ہے۔ «برات» اور «چک» میں تفاوُت صرف یہ تھا کہ اوّل‌الذکر لفظ عرَبی ہے، جبکہ ثانی‌الذکر لفظ فارسی۔

    اِس نام کی مِثال دینے کے لیے عُموماً «رُودَکی سمرقندی» سے منسوب یہ بیت پیش کی جاتی ہے:

    چراغان در شبِ چک آن‌چُنان شد
    که گیتیِ رشکِ هفتُم آسمان شد
    (رودکی سمرقندی)


    «شبِ برات» میں چراغاں اِس قدر [زیادہ] ہوا کہ دُنیا آسمانِ ہفتُم کے لیے باعثِ رشک ہو گئی (یعنی دُنیا پر آسمانِ ہفتُم رشک کرنے لگا)۔
     
    آخری تدوین: ‏جولائی 13, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  14. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    جنابِ «مولوی رومی» کی ایک غزل کے مطلع میں شبِ پانزدہُمِ شعبان موسوم بہ «شبِ برات» کا ذِکر:

    برات آمد برات آمد بِنِه شمعِ براتی را
    خِضر آمد خِضر آمد بِیار آبِ حیاتی را

    (مولانا جلال‌الدین رومی)

    شبِ برات آ گئی، شبِ برات گئی، شمعِ براتی [روشن کر کے] رکھ دو۔۔۔۔ خِضر آ گئے، خِضر آ گئے، آبِ حیات لے آؤ۔۔۔

    × «شمعِ براتی» کا یہ مفہوم نظر آیا ہے کہ یہ اُس شمع و چراغ کو کہتے تھے کہ جو «شبِ برات» میں قبروں کے سِرہانے اور مَحَلّوں میں روشن کیا جاتا تھا۔۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  15. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    فیس‌بُک کے توسُّط سے معلوم ہوا کہ اِثناعشَری شیعیان اِمروز اپنے امامِ ہشتُم حضرتِ «علی رِضا» کا جشنِ میلاد تجلیل کر رہے ہیں۔ اِس روز کی مُناسبت سے جنابِ «محمد فُضولی بغدادی» کی مُندَرِجۂ ذیل فارسی بیت دیکھیے جو اُنہوں نے حضرتِ «علی رِضا» کی سِتائش میں کہی ہے:

    ز اِنتسابِ به اِرتِفاعش، عرب مُوفّق به خطِّ اَوفیٰ
    ز فیضِ طَوفِ حریمِ کُویش، عجم مُشرّف به حجِّ اکبر
    (محمد فُضولی بغدادی)


    اُن کی بُلندیِ [ذات] کے ساتھ اِنتِساب سے «عرب» خطِ کامل‌تر [تک پہنچنے] میں مُوفّق و کام‌یاب [ہوا ہے]۔۔۔ اُن کے کُوچے کی حریم کے طواف کے فَیض سے «عجم» حجِّ اکبر سے مشُرّف [ہوا ہے]۔۔۔۔

    × حضرتِ «علی رِضا» مشہد، خُراسان میں مدفون ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  16. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    عُثمانی-بوسنیائی شاعر «تَوَکُّلی دده بوسنوی» کی دو فارسی ابیات:

    همچو غوّاصانِ مُفلِس از برایِ گوهری
    زحمتِ دریایِ مردُم‌خوار می‌باید کشید
    جَورِ هر نااهل و ناهموار بهرِ او کشَم
    بهرِ یک گُل زحمتِ صد خار می‌باید کشید

    (تَوَکُّلی دده بوسنوی)

    ایک گَوہر [کے حُصول] کے لیے غوّاصانِ مُفلِس کی مانند بحرِ مردُم‌خور کی زحمت اُٹھانا لازم ہے۔۔۔ مَیں ہر نااہل و ناہموار و نامُناسِب [شخص] کا سِتم اُس کی خاطِر تحمُّل کرتا ہوں، [کیونکہ] ایک گُل [کے حُصول] کے لیے صد خاروں کی زحمت اُٹھانا لازم ہے۔۔۔

    × غوّاص = گَوہروں اور مروارِیدوں‌ (موتیوں) وغیرہ کے حُصول کی غرَض سے زیرِ آب غوطہ لگانے والا شخص
     
    آخری تدوین: ‏جولائی 14, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  17. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    عُثمانی-بوسنیائی شاعر «ثابِت علاءالدین بوسنوی» کے ایک تُرکی نعتیہ قصیدے سے چار تُرکی ابیات، جو بہ یک وقت فارسی بھی ہیں:

    امینِ ربِّ عزّت خازنِ گنجینهٔ رحمت

    دلیلِ راهِ دَولت ره‌نمایِ جنّت‌المأویٰ
    رسولِ قادرِ مُطلق شفیعِ اقدم و اسبق
    حبیبِ حضرتِ حق مَحرمِ اسرارِ ما اَوحیٰ
    امامِ صاحب‌الکوثر خطیبِ لامکان‌مِنبر
    امانِ دهشتِ محشر ضمانِ رحمتِ مَولا
    رسولِ مُجتبیٰ احمد نبیِ افضل و امجد
    حبیبِ حق مُحمّد تاج‌دارِ افسرِ طٰهٰ
    (ثابِت علاءالدین بوسنوی)

    وہ امینِ ربِّ عِزّت ہیں، وہ خازنِ گنجینۂ رحمت ہیں۔۔۔ وہ دلیلِ راہِ اقبال‌مندی ہیں، وہ راہ‌نمائے جنّتِ مأویٰ ہیں۔۔۔ وہ قادرِ مُطلَق کے رسول ہیں، وہ مُقدّم‌تروں اور سابِق‌تروں کے شفیع ہیں۔۔۔ وہ حضرتِ حق تعالیٰ کے حبیب ہیں، وہ «ما اَوحیٰ» کے اَسرار کے مَحرَم ہیں۔۔۔ وہ صاحبِ کوثر اِمام ہیں، وہ مِنبرِ لامکان کے خطیب ہیں۔۔۔ وہ امانِ دہشتِ محشر ہیں، وہ ضامنِ رحمتِ خُداوند ہیں۔۔۔ وہ رسولِ برگُزیدہ [اور] احمد ہیں، وہ افضل و امجد نبی ہیں۔۔۔ وہ حبیب حق تعالیٰ [اور] مُحمّد ہیں، وہ تاجِ «طاها» کے تاج‌دار ہیں۔۔۔

    Emîn-i Rabb-i İzzet hâzin-i gencîne-i rahmet
    Delîl-i râh-ı devlet reh-nümây-ı Cennetü’l-Me’vâ
    Resûl-i Kâdir-i mutlak şefî‘-i akdem ü esbak
    Habîb-i Hazret-i Hak mahrem-i esrâr-ı mâ evhâ
    İmâm-ı sâhibü’l-Kevser hatîb-i lâ-mekân-minber
    Emân-ı dehşet-i mahşer zamân-ı rahmet-i Mevlâ
    Resûl-i müctebâ Ahmed Nebiyy-i efdal ü emced
    Habîb-i Hak Muhammed tâcdâr-ı efser-i Tâhâ
     
    آخری تدوین: ‏ستمبر 2, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  18. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    بِیا پهلویِ من بِنْشین به رسم و عادتِ پیشین
    بِجُنبان آن لبِ شیرین که مولانا اغاپو سی
    (مولانا جلال‌الدین رومی)

    [اے یار!] آؤ، [اور اُس] سابِق روِش و عادت کے ساتھ میرے پہلو میں بیٹھو۔۔۔ اُس لبِ شیریں کو حرَکت میں لاؤ [اور مجھ سے کہو] کہ: "مَولانا (ہمارے مَولا)! میں تم سے محبّت کرتا ہوں"۔۔۔
     
    آخری تدوین: ‏جولائی 14, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  19. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,701
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    چو سائل برسرِ آں کُو نہ بہرِ نان می آیم
    چو مُوسیٰ برسرِ طُور از پئے دیدار می گردم


    سیف فرغانی

    میں اُس کوچے میں سوالی اور فقیروں کی طرح روٹی مانگنے نہیں آتا بلکہ اُس کے کوچے میں اُس کے دیدار کے لیے اُسی طرح گھومتا ہوں جیسے مُوسیٰ کوہِ طُور پر دیدار کے لیے جاتے تھے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  20. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    اگر در خاک بِنْهَندم تویی دل‌دار و دل‌بندم
    وگر بر چرخ آرَندم از آن بالا اغاپو سی
    (مولانا جلال‌الدین رومی)

    [اے یار!] اگر مجھ کو خاک میں دفن کر دیں [تو تب بھی] میرے دل‌دار و محبوب تم ہو۔۔۔ اور اگر مجھ کو فلک پر لے آئیں [تو] اُس بالائی و بُلندی سے [بھی] میں تم سے محبّت کرتا ہوں۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2

اس صفحے کی تشہیر