جو میں جانتی بچھڑت ہیں سئیاں

الف نظامی نے 'ویڈیوز (غیر سیاسی و غیر مذہبی)' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 6, 2020

  1. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    14,840
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
     
    • زبردست زبردست × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  2. سید عاطف علی

    سید عاطف علی محفلین

    مراسلے:
    7,796
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    جو میں جانتی بچھڑت ہیں سئیاں
    گھنگھٹا میں آگ لگا دیتی
    __________
    دلی دیس سہامنوں
    سو جہاں بسے دلدار
    خسروں باھو دیس پر
    سو تن من دیجئے وار

    جو میں جانتی بچھڑت ہیں سئیاں
    گھونگھٹا میں آگ لگا دیتی
    تن وارتی ،من تو وے سیاں
    توہے چرنن سیس نواں دیتی

    ندی کنارے میں کھڑی
    اور پانی جھلمل ہووئے
    میں میلی، اور پی اجلا

    موری ہار سنگھار کی رات گئی
    پیہوں سنگ امنگ موری آج گئی
    گھر آئے نہ مورے سانوریا
    میں تو تن من ان پہ لٹا دیتی۔

    موہے پریت کی ریت نہ بھائی سکھی
    میں تو بن کے دلہن پچھتائی سکھی
    ہوتی نہ اگر دنیا کی شرم
    توہے بھیج کے پتیاں بلا لیتی۔

    جو میں جانتی بچھڑت ہیں سئیاں
    گھونگھٹا میں آگ لگا دیتی۔
    Tarz E shukhan طرزِ سُخن ۔ فیس بک ۔
     
    • زبردست زبردست × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    14,840
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    بہت شکریہ سید عاطف علی صاحب!
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  4. فاخر افتخاررحمانی

    فاخر افتخاررحمانی محفلین

    مراسلے:
    128
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ’’موری ہار سنگھار کی رات گئی
    پیہوں سنگ امنگ موری آج گئی

    گھر آئے نہ مورے سانوریا
    میں تو تن من ان پہ لٹا دیتی‘‘
    :in-love::in-love::in-love::in-love:
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  5. فاخر افتخاررحمانی

    فاخر افتخاررحمانی محفلین

    مراسلے:
    128
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    پاکستان میں نصرت فتح علی خان کے بعد فرید ایاز جیسے فن کار ہیں جنہیں صوفیانہ کلام کے حوالے سے جانا جاتا ہے، جس طرح نصرت فتح علی خان نے پاکستان کی نمائندگی ہر پلیٹ فارم پر کیا اسی طرح موجودہ وقت میں فرید ایاز کر رہے ہیں۔ ان کی گائی ہوئی امیرخسرو کی فارسی ’’خبرم رسیدہ امشب کہ نگار خواہی آمد‘‘ کو اتنی بار سنا ہوں کہ خود مجھے معلوم نہیں۔ جب سسٹم پر کام کررہا ہوتا ہوں تو نصرت فتح علی خان یا پھر فرید ایاز سخن سرا ہوتے ہیں۔مولوی حیدر کی ایک غزل ’’از حسن ملیحِ خود شورِ بہ جہاں کردی ‘‘ بھی ایک مرتبہ سنا تھا ، اچھا پڑھا ہے۔ نصرت فتح علی خان کی گائی اور بوعلی قلندر کی لکھی ایک فارسی غزل ’’اگر بینم شبِ ناگاہ من آن سلطان خوباں را ‘‘ نے کمال ہی کردیا ، عروض ڈاٹ کام پر اس کی بحر تلاش کرکے اسی زمین میں اردو زدہ ایک غزل بھی لکھ دی ۔
     
    • زبردست زبردست × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر