تنِ نحیف سے انبوہ جبر ہار گیا (زہرا نگاہ)

غدیر زھرا نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 8, 2016

  1. غدیر زھرا

    غدیر زھرا لائبریرین

    مراسلے:
    3,150
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Devilish
    اب آنسوؤں کے دھندلکے میں روشنی دیکھو
    ہجومِ مرگ سے آوازِ زندگی کو سنو
    سنو کہ تشنہ دہن مالکِ سبیل ہوئے
    سنو کہ خاک بسر وارثِ فصیل ہوئے
    ردائے چاک نے دستارِ شہ کو تار کیا
    تنِ نحیف سے انبوہ جبر ہار گیا
    سنو کہ حرص و ہوس، قہر و زہر کا ریلا
    غبار و خار و خش و خاک ہی نے تھام لیا
    سیاہیاں ہی مقدر ہوں جن نگاہوں کا
    خدا بچائے ان آنکھوں کی شعلہ باری سے
    ڈرو کہ زرد رخاں، نیم جاں و خستہ تناں
    ہزار بار مرے اور لاکھ بار جیے!
    وہ لوگ جن کو میسر نہ آئے مرہمِ وقت!
    وہ لوگ تلخئ تقدیر بانٹ لیتے ہیں
    وہ ہاتھ جن پہ ہو نفرت کا زنگ صدیوں سے
    وہ ہاتھ لوہے کی دیوار کاٹ دیتے ہیں

    (زہرا نگاہ)​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 3
  2. سلمان امین

    سلمان امین محفلین

    مراسلے:
    27
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    کہیں کہیں پہ ایسا لگ رہا ہے کہ جیسے آپ حاملانِ کربلا علیھم سلام کو خراجِ تحسین پیش کر رہی ہیں۔
    جزاک اللہ خیر۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,665
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm

    وہ لوگ جن کو میسّر نہ آئے مرہمِ وقت!
    وہ لوگ تلخیِ تقدیر بانٹ لیتے ہیں

    وہ ہاتھ جن پہ ہو نفرت کا زنگ صدیوں سے
    وہ ہاتھ لوہے کی دیوار کاٹ دیتے ہیں


    کیا کہنے !
    :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  4. غدیر زھرا

    غدیر زھرا لائبریرین

    مراسلے:
    3,150
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Devilish
    جہاں کہیں بھی حق کی فتح اور باطل کی شکست کی بات ہو گی کربلا والوں کی یاد تو آئے گی :) جزاک اللہ سر :)
     
  5. غدیر زھرا

    غدیر زھرا لائبریرین

    مراسلے:
    3,150
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Devilish
    بہت شکریہ سر :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر