اصلاح فرمائے براہِ کرم

محمد اظہر نذیر نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 2, 2010

  1. محمد اظہر نذیر

    محمد اظہر نذیر محفلین

    مراسلے:
    1,818
    جھنڈا:
    Qatar
    موڈ:
    Angelic
    ایک غزل لکھنے کی جسارت پھر کی ہے
    212-1222-1222-1222
    از راہِ کرم راہ نمائی کیجیے

    جو ہم بھی نہیں کر پائے وہ تم کرو تو کہیں
    جو گھاؤ تم نے لگائے انہیں بھرو تو کہیں

    یہ جسمیں ہمیں ڈالا ہے وہ امتحانِ چاہت ہے
    مشکل کسی ایسی میں رب کرے تم پڑو تو کہیں

    ڈر تو یہ ہے کہ میرے ایک ہی شناسا ہو تم
    تمہارے دوست کئی پھر تم ڈرو تو کہیں

    سبھی نے موردِ الزام ہمیں کو ٹھہرایا
    یہی تہمت سرِ محفل جو تم رکھو تو کہیں

    مریں گے کہنا ہی آساں ہے یوں مگر اظہر جی
    وصالِ یار کی خاطر اگر جو تم مرو تو کہیں

    والسلام
    اظہر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  2. مغزل

    مغزل محفلین

    مراسلے:
    17,597
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    شکریہ ، اظہر صاحب، اچھی کوشش ہے ، ماشا اللہ، کچھ فرصت سے حاضر ہوتا ہوں ۔ میری گزارش ہے کہ وارث صاحب اور بابا جانی ( الف عین ) کرم فرمائیں، یہ منصب انہیں کا ہے ۔ آپ اپنے طور پر بھی اساتذہ کرام ( مذکورہ) سے رابطہ کیجے ۔ ویسے جو حکم میں اپنی سی رائے سے آپ کو آگاہ کردیتا ہوں ۔والسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  3. محمد اظہر نذیر

    محمد اظہر نذیر محفلین

    مراسلے:
    1,818
    جھنڈا:
    Qatar
    موڈ:
    Angelic
    حکم نہیں از راہِ کرم التجا کہیے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  4. مغزل

    مغزل محفلین

    مراسلے:
    17,597
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    شکریہ میرے دوست، آپ کی وضاحت سر آنکھوں پر مگر میرے لیے کسی بھی تخلیق کا صرف کہنا بھی حکم کا درجہ رکھتا ہے ۔ آپ محسوس مت کیجے گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  5. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,001
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    بھئی یہ بائنری نظام تو میری سمجھ سے باہر ہے۔ ویسے کچھ مصرع بحر میں ہیں
    جیسے
    جو گھاؤ تم نے لگائے انہیں بھرو تو کہیں
    مفاعلن فعلاتن مفاعلن فعلن میں درست ہے۔ اسی کو بنیاد بنا کر دوسرے مصرعوں کو بھی پابندِ بحر کیا جا سکتا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  6. محمد اظہر نذیر

    محمد اظہر نذیر محفلین

    مراسلے:
    1,818
    جھنڈا:
    Qatar
    موڈ:
    Angelic
    استادِ محترم،
    آپ کیا نظام تجویز فرمائے گا تقطیع کے لئے
    اور مزید درخواست ہے کہ اگر ممکن ہو تو مفاعلن فعلاتن مفاعلن فعلن میں مصرح کی تقسیم فرما کر مثال سے وضاحت فرما دیجئے
    ممنونِ احسان
    اظہر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  7. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,001
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    جو گھاؤ تم۔۔۔ مفاعلن
    نِ لگائے۔فعِ لاتن
    انہیں بھرو۔ مفاعلن
    تُ کہیں۔ فعلن
    یہی مطلب ہے تمہارا؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  8. محمد اظہر نذیر

    محمد اظہر نذیر محفلین

    مراسلے:
    1,818
    جھنڈا:
    Qatar
    موڈ:
    Angelic
    جی جناب
    لیکن آپ جب تقطیع کرتے ہیں تو کیا آوازیں لمبی اور چھوٹی سے کرتے ہیں؟
    شکریہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. مغزل

    مغزل محفلین

    مراسلے:
    17,597
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    حق بہ حق دار رسید، شکریہ بابا جانی ، ۔۔اظہر بھیا، خوش نصیب ہیں آپ کہ بابا جانی اپنی مصروفیات میں سے وقت نکال کر یہاں تشریف لائیں ہیں،
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  10. محمد اظہر نذیر

    محمد اظہر نذیر محفلین

    مراسلے:
    1,818
    جھنڈا:
    Qatar
    موڈ:
    Angelic
    یہ ہماری خوش بختی ہے جناب کہ استادِ محترم نے بنفسِ نفیس ہماری اصلاح فرمائی
    یہ اور بات کہ شاگردِ کند زہن ہل ممزید کا طالب ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  11. مغزل

    مغزل محفلین

    مراسلے:
    17,597
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    ایک بات کہ ’’ ھل من مزید ‘‘ کا جملہ جہنم نے ادا کرنا ہے۔ آپ کیوں حق تلفی کرتے ہیں۔ :grin:
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  12. محمد اظہر نذیر

    محمد اظہر نذیر محفلین

    مراسلے:
    1,818
    جھنڈا:
    Qatar
    موڈ:
    Angelic
    مفاعلن فع لا تن مفاعلن فعلن

    جو یم بھی کر نا پائے وہ تم کرو تو کہیں
    جو گھاؤ تم نے لگائے انہیں بھرو تو کہیں

    یہ جس میں ہم ہیں وہ امتحانِ چاہت ہے
    ایسی کسی مشکل میں رب کرے پڑو تو کہیں

    یہ ڈر ہم کو ہے کہ تم ایک ہی شناسا ہو
    تمہارے دوست کئی ہیں اگر ڈرو تو کہیں

    سبھی نے موردِ الزام ہمیں کو ٹھہرایا تھا
    ہہی تہمت سرِ محفل جو تم رکھو تو کہیں

    مریں گے کہنا تو آساں ہے مگر اظہر
    وصالِ یار کی خاطر اگر مرو تو کہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  13. محمد اظہر نذیر

    محمد اظہر نذیر محفلین

    مراسلے:
    1,818
    جھنڈا:
    Qatar
    موڈ:
    Angelic
    معزرت قبول کیجیے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  14. محمد اظہر نذیر

    محمد اظہر نذیر محفلین

    مراسلے:
    1,818
    جھنڈا:
    Qatar
    موڈ:
    Angelic
    بڑی کوشش کی ہے پر ھاتھ پڑ نہیں رھا جانے کیوں
    ذرا دیکھیے تو؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  15. مغزل

    مغزل محفلین

    مراسلے:
    17,597
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    یہ بحرِ مجتث ہے ، ہمارے قابو میں نہیں آتی ۔۔ آپ کا ہاتھ نہ پڑنا تو خیر ، وجہ یہ ہوسکتی ہے کہ ہاتھ ہلکا رکھا آپ نے ، ۔۔ ویسے اب بابا جانی آگئے ہیں، عجلت نہ کیجے ، فراغت پاتے ہی وہ تشریف لے آئیں گے ،۔۔آپ جب تک کوشش بھی کیجے اور دیگر احباب کا کلام بھی پڑھ لیا کیجے ، اس سے بھی مہمیز ملتی ہے ، یہا ں ، الف عین ، نوید صادق،محمد وارث، فاتح الدین بشیر سینئر شعرا ئے کرام ہیں ، نئی نسل کے لوگوں میں ، فرزانہ نیناں، محمد احمد، زہرہ علوی ، قابلِ قدر نام ہیں‌ ، دیگر احباب کے نام ذہنی ناآمادگی کی وجہ کر لکھ نہیں پارہا ، آپ پہلے انہیں پڑھ لیجے اور رائے دیجے ، اس طرح آپ کی جھجھک بھی ختم ہوگی اور نئے نئے ذائقے بھی پڑھنے کو ملیں‌گے ، پسندیدہ کلام کی لڑی میں تو ایک جہانِ سخن آباد ہے ، فرداً فرداً پڑھ لیا کیجے ، والسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  16. محمد اظہر نذیر

    محمد اظہر نذیر محفلین

    مراسلے:
    1,818
    جھنڈا:
    Qatar
    موڈ:
    Angelic
    جی ضرور انشا اللہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  17. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,001
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ہاں اب یہ اصلاح کے قابل ہے کہ اس پر کچھ دماغ خرچ کیا جائے، پہلے تو میں اس کی ضرورت بھی محسوس نہیں کرتا تھا۔ اب کچھ مصرعے تو واقعی درست وزن میں ہیں۔ اب ایک ایک کر کے۔۔

    جو یم بھی کر نا پائے وہ تم کرو تو کہیں
    جو گھاؤ تم نے لگائے انہیں بھرو تو کہیں

    شاید ٹائپو ہے، ’جو تم بھی کر‘ لکھنا چاہا ہوگا۔۔ لیکن یہ مصرع بحر سے خارج ہے، ان صورتوں میں درست ہو سکتا ہے۔
    جو تم بھی کر نہ سکے ہو، وہ تم کرو تو کہیں/ جو تم بھی کر نہیں پائے ہو، وہ کرو تو کہیں۔۔۔ لیکن تب بھی شعر کا مفہوم فی بطنِ شاعر لگتا ہے۔

    یہ جس میں ہم ہیں وہ امتحانِ چاہت ہے
    ایسی کسی مشکل میں رب کرے پڑو تو کہیں

    کئی باتیں یہاں۔ پہلی بات قافیہ۔۔۔ قافیہ جو تم نے رکھا ہے، وہ زیادہ تر کرو، بھرو، ڈرو‘ ہے۔ اس میں ’پڑو‘ کہاں سے آ گیا؟ اسی طرح ’رکھو‘ قافیہ بھی غلط ہے۔ مطلع میں جو قوافی ہوں گے، غزل ان قوافی کے پیمانے پر ہی ناپی جائے گی۔
    دوسری بات۔۔ اضافت، (یعنی ’زیر‘ کا استعمال ّامتحانِ چاہت‘ میں) محض فارسی النسل الفاظ میں جائز مانی جاتی ہے۔ ایک لفظ ہندی اور ایک لفظ فارسی یا عربی ہو، یہ غلط ہے۔ اس حساب سے چاہت کا امتحان تو ہو سکتا ہے۔ امتحانَ چاہت نہیں۔ ہاں۔ ’امتحانِ الفت‘ ممکن ہے۔
    بحر میں تو لایا جا سکتا ہے اس کو لیکن پہلے قوافی کو درست کر لیا جائے۔

    یہ ڈر ہم کو ہے کہ تم ایک ہی شناسا ہو
    تمہارے دوست کئی ہیں اگر ڈرو تو کہیں
    دوسرا مصرع وزن میں ہے لیکن پہلا مصرع نہیں، اس طرح بحر میں لایا جا سکتا ہے:
    یہ ڈر ہے ہم کوکہ تم ایک ہی شناسا ہو/ یہ ڈر ہے ہم کوکہ تم ایک ہی شناسا ہو/ ہمیں یہ ڈر ہے کہ تم۔۔۔۔ معنی اس وقت نہیں دیکھ رہا ہوں، ورنہ ہر مصرع پر سوالیہ نشان لگ سکتا ہے۔

    سبھی نے موردِ الزام ہمیں کو ٹھہرایا تھا
    ہہی تہمت سرِ محفل جو تم رکھو تو کہیں

    یہ وہی قافئے کی غلطی ہے پھر ۔ پہلا مصرع البتہ یوں وزن میں لایا جا سکتا ہے۔
    سبھی نے موردِ الزام ہم کو ٹھہرایا
    یہ تہمتیں سرِ محفل جو تم دھرو تو کہیں
    میں قافیہ بھی درست ہو سکتا ہے اور وزن بھی۔ لیکن مفہوم کے بارے میں تم فیصلہ کرو کہ درست ہو سکتے ہیں یا نہیں۔

    مریں گے کہنا تو آساں ہے مگر اظہر
    وصالِ یار کی خاطر اگر مرو تو کہیں
    مکمل بحر میں ہو سکتا ہے اگر نون غنہ نہ ہو، معلنہ ہو۔
    مریں گے کہنا تو آسان ہے مگر اظہر
    وصالِ یار کی خاطر اگر مرو تو کہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  18. محمد اظہر نذیر

    محمد اظہر نذیر محفلین

    مراسلے:
    1,818
    جھنڈا:
    Qatar
    موڈ:
    Angelic
    مفاعلن فع لا تن مفاعلن فعلن

    مسیحائی میری جاں وہ تم کرو تو کہیں
    جو گھاؤ تم نے لگائے انہیں بھرو تو کہیں

    یہ جس میں ہم ہیں وہ امتحانِ الفت ہے
    ایسی کسی مشکل میں رب کرے گھرو تو کہیں

    یہ ڈر ہے ہم کو کہ تم ایک ہی شناسا ہو
    تمہارے دوست کئی ہیں اگر ڈرو تو کہیں

    سبھی نے موردِ الزام ہم کو ٹھہرایا
    ہہی تہمتیں سرِ محفل جو تم دھروتو کہیں

    مریں گے کہنا تو آسان ہے مگر اظہر
    وصالِ یار کی خاطر اگر مرو تو کہیں​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  19. محمد اظہر نذیر

    محمد اظہر نذیر محفلین

    مراسلے:
    1,818
    جھنڈا:
    Qatar
    موڈ:
    Angelic
    استادِ محترم،
    نالائق شاگرد کے ساتھ کچھ زیادہ مہنت کرنے پڑتی ہے جس کے لئے معزرت قبول کیجیے
    اب دیکھیے شائد کسی قابل بن جائے
    والسلام
    اظہر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  20. مغزل

    مغزل محفلین

    مراسلے:
    17,597
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    شکریہ بابا جانی ، ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر