یوسف ظفر اور مسائلِ تصوف

الف نظامی نے 'جہان نثر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏دسمبر 16, 2017

  1. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    15,605
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    ایک اور موقع پر حریم ادب میں حاضر ہوا تو یوسف ظفر رونق افروز تھے۔ مختلف مسائل تصوف پر گفتگو ہو رہی تھی۔ یوسف ظفر بات بات پر کشف المحجوب کا حوالہ دے رہے تھے اور مجھے یوں لگ رہا تھا کہ پوری کتاب ہی انہیں حفظ ہے۔ یوسف ظفر اور مسائل تصوف! عجب سا لگا۔
    میری حیرت پر انہوں نے خود ہی گرہ کشائی کرتے ہوئے فرمایا کہ میرے والد صوفیء باصفا تھے اور ایک مردِ خدا کے دست گرفتہ۔ میں چھوٹا سا تھا کہ میری انگلی پکڑ کر وہ ان کی مجلس میں لے جایا کرتے تھے۔ تبرکات میں سے آپ کا پس خوردہ مجھے بھی ملتا رہتا تھا۔ میں سمجھتا ہوں کہ یہ اسی رزقِ حلال کا اثر ہے جو بالآخر مجھے راہ پر لے آیا اور یہ اسی کا فیض ہے کہ میری زبان پر آج داس کیپیٹل کی جگہ کشف المحجوب کی باتیں جاری ہیں۔
    تخمِ سعادت موسموں کے مناسب وقت اور آب و ہوا کا انتظار کرتا ہے اور پھر برگ و بار لاتا ہے۔
    ماخذ:
    لذتِ آشنائی (ملاقاتیں اور باتیں) از نذر صابری
     
    آخری تدوین: ‏اگست 22, 2018
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  2. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    15,605
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    12,358
    جھنڈا:
    Pakistan
    اہل اللہ کی صحبت کا سب سے زبردست فائدہ یہ ہے کہ آدمی گمراہ نہیں ہوتا...
    یعنی خاتمہ ایمان پر ہوتا ہے!!!
     
    • زبردست زبردست × 1
  4. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    15,605
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    یہ سب نقوش ہیں باطل یہ سب فنون ہیں خام
    اگر جبیں کو محمد ﷺ کا نقشِ پا نہ ملا
    (نذر صابری)
    [​IMG]
     
  5. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,124
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    مجھ پر تو یہ اثر کا یہ فرق محفل کے دہریوں سے بات کر کے اور نیک لوگوں کی باتیں سن کر محسوس ہوا۔ کہتے ہیں جہلا سے گفتگو سے ایمان ضایع ہوتا ہے۔

    صحبت صالح ترا صالح کند
    صحبت طالع ترا طالع کند

    ( ترجمہ) شیخ سعدی علیہ الرحمہ فرماتے ہیں نیک صالحین کی سنگت انسان کو بھی نیک بنادیتی ہے اوربرے بندے کی صحبت بندے کو برا بنادیتی ہے.
     
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 2
    • نا پسندیدہ نا پسندیدہ × 2
  6. سید عاطف علی

    سید عاطف علی محفلین

    مراسلے:
    9,041
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    صحبت طالح ترا طالح کند
     
  7. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,124
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    مجھے فارسی کی تھوڑی بھی شد بد نہیں۔ جو سمجھتا ہوں کسی کے اردو ترجمے سے ہی سمجھ پاتا ہوں۔

    مجھے تو شعر کافی جگہ طالع ہی کے لفظ کے ساتھ ملا۔ لنک

    ویسے پہلا طالع طالح ہونا چاہیے جبکہ دوسرا طالع معنی کے اعتبار سے۔ واللہ اعلم و رسول اعلم۔
     
  8. سید عاطف علی

    سید عاطف علی محفلین

    مراسلے:
    9,041
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    طالح کا مطلب ہے خطاکار۔یہ عربی لفظ ہے
    معروف شعر میں بھی دوسرے مصرع میں دونوں جگہ طالح ہی ہے ۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • متفق متفق × 1
  9. فہد مقصود

    فہد مقصود محفلین

    مراسلے:
    213
    علی بن عثمان الہجویری المعروف بہ داتا گنج بخش لاہوری وحدت الوجود کے عقیدے کو بیان کرتے ہوئے رقم طراز ہیں:
    حضرت ابراہیم علیہ السلام نے جب سورج اور چاند کو اپنا رب کہا وہ اس لئے کہا کہ نبی ہونے کی حیثیت سے آپ وحدت الوجود کے قائل تھے لہٰذا ہر چیز میں ان کو خدا نظر آیا۔
    شرح کشف المحجوب، صفحہ 884

    صوفی علی ہجویری صاحب دوسری جگہ اسی وحدت الوجود کے عقیدے کی ترجمانی کرتے ہوئے بیان کرتے ہیں :
    : کائنات کا وجود ہی نہیں ہے۔ ہرچیز وجود حق میں شامل ہے۔چناچہ حضرت سیدنا عبدالقادر جیلانی قدس سرہ کو بارگاہ رب العزت کی طرف سے کچھ الہامات ہوئے۔ان میں سے ایک الہام یہ ہے
    من ارد العبادۃ بعد الوصل
    (جس نے وصل کے بعد عبادت کی کافر ہوا)
    اس کا مطلب یہ ہے کہ چونکہ وحدت الوجود حقیقت ہے جب انسان ذات حق میں فنا ہو جاتا ہے یعنی مقام فنا فی اللہ پر پہنچ جاتا ہے تو کس کی عبادت کرے۔لہٰذا جب وہ عبادت کرتا ہے تو وہ وحدت الوجود سے منحرف ہوکر عبادت کرتا ہے اس انحراف کو کفر کا نام دیا گیا ہے۔ کفر کے لفظی معنی بھی چھپانے کے ہیں مطلب یہ کہ چونکہ وحدت الوجود حقیقت ہے۔جب بھی سالک مقام فنا (وحدت الوجود)سے واپس آکر اپنی مفروضہ دوئی میں آتا ہے اور عبادت کرتا ہے تو اس کا عبادت کرنا گویا حق بات کو چھپانے کے مترادف ہوتا ہے۔اور حق بات چھپانا کفر ہے۔ اس کفر کو کفر حقیقی کہا جاتا ہے۔
    شرح کشف المحجوب، صفحہ 885

    ننگے صوفیاء بھی اہل حق میں شمار ہوتے ہیں چنانچہ علی ہجویری صاحب لکھتے ہیں :
    بعض بزرگان ایسے بھی ہوئے ہیں جو لباس کی پرواہ نہیں کرتے۔اور جو کچھ خداوند تعالیٰ دیتا ہے پہن لیتے ہیں خواہ وہ قبا (شاہ لباس) ہو یا عبا (درویشی لباس) اور اگر حق تعالیٰ ان کو ننگے تن رکھتے ہیں ۔تو وہ ننگے تن رہتے ہیں اور میں علی بن عثمان الجلابی بھی اسی روش کو پسند کرتا ہوں۔اور سفر کی حالت میں ،میں نے اسی پر عمل کیا ہے،
    شرح کشف المحجوب، صفحہ 254

    ترک دنیا کے صوفیانہ عقیدے کے بارے لکھتے ہیں :
    جاننا چاہیے کہ طریق ملامت کو پہلے پہل شیخ ابوحمدون قصار علیہ رحمہ نے رائج کیا اور اس بارے میں آپ کے اقوال لطیف ہیں۔آپ فرماتے ہیں کہ
    الملامتہ ترک السلامتہ
    (ملامت کا اختیار کرنا سلامتی کا ترک کرنا ہے)
    اور جو شخص جان بوجھ کر سلامتی ترک کرتا ہے وہ آفات کو دعوت دیتا ہے اور اسے آرام و راحت سے ہاتھ دھونا پڑتا ہے اور طلب جاہ و مال اور خلق خدا سے نا امید ہونا پڑتا ہے اور دنیا سے بیزار ہونا پڑتا ہے اور جس قدر آدمی دنیا سے بیزار ہوتا ہے حق تعالیٰ سے اسی قدر اس کا تعلق مضبوط ہوتا ہے۔
    شرح کشف المحجوب،صفحہ 277

    واجد بخش سیال شارح کشف المحجوب لکھتے ہیں: اس لئے بعض اولیاء کرام کمال صدق و خلوص کی بنا پر عمداً ایسے کام کرتے ہیں جن سے خلق میں بدنام ہوجائیں۔اگرچہ بظاہر ان کے یہ کام خلاف شرع نظر آتے ہیں در حقیقت وہ خلاف شرع نہیں ہوتے ۔(شرح کشف المحجوب، صفحہ 274)

    اپنے نفس کو ذلت میں مبتلا کرنے کے صوفیانہ نظریہ کے بارے لکھتے ہیں :
    حضرت ابراہیم بن ادھم علیہ رحمہ سے کسی نے پوچھا کہ آپ کی مراد کب پوری ہوئی؟ آپ نے فرمایا کہ دو موقعوں پر میرے دل کی مراد پوری ہوئی ۔ایک اس وقت جب میں کشتی میں سوار تھا اور سب لوگ مجھے حقیر جان کر مجھ سے ٹھٹھا مخول کررہے تھے کیونکہ میرے کپڑے پھٹے پرانے اور سر کے بال پراگندہ تھے ۔کشتی میں ایک مسخرہ بھی تھا جو ہروقت آکر میرے بال نوچتا تھا حتی کہ جب اس کو پیشاب کی ضرورت ہوئی تو اس نے اٹھ کر مجھ پر پیشاب کردیا۔اس وقت(ذلت نفس کی وجہ سے)مجھے اس قدر خوشی ہوئی کہ کبھی نصیب نہیں ہوئی....
    شرح کشف المحجوب، صفحہ 282
    مذہبی عقائد اور نظریات
     
    • زبردست زبردست × 1
  10. فہد مقصود

    فہد مقصود محفلین

    مراسلے:
    213
    آپ جن شرکاء محفل کو دہریہ کہہ رہے ہیں کیا یہ خود کو دہریہ کہتے ہیں؟؟؟ یا اگر آپ فرما رہے ہیں تو کن بنیادوں پر دہریہ کہہ رہے ہیں؟؟؟
     
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
    • نا پسندیدہ نا پسندیدہ × 1
  11. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,540
    کون ہے محفل کا دہریہ؟ مولانا طارق جمیل کی طرح آپ سے بھی تقاضا ہے کہ اس کا نام بتائیں یا اپنے اس بیان سے سب کے سامنے معافی مانگے۔
     
    • متفق متفق × 2
  12. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,124
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    ظاہر ہے دہریہ ہونا عیب ہے۔ حماقت کی نشانی ہے۔ تو براہ راست دبے لفظوں میں ہی دل کی زباں پر آپاتی ہے۔

    لیکن اللہ نے کسی کے سینے میں دو دل نہیں رکھے، سو جو شخص معاملات کو اللہ اور اسکے رسولﷺ کے طرف لوٹانے سے محروم ہو اس سے اسکی دہریت کا پتہ چلتا ہے۔
     
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
    • نا پسندیدہ نا پسندیدہ × 1
  13. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,124
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    دہریہ ہونا عیب کی بات ہے۔ آپ کیوں جاننا چاہتے ہیں کسی کے عیب؟ مولانا طارق تو درباری عالم ہیں، آئیں سنت رسول ﷺ کی بات کریں۔
     
    • نا پسندیدہ نا پسندیدہ × 2
  14. فہد مقصود

    فہد مقصود محفلین

    مراسلے:
    213
    پہلے تو میں آپ سے یہ جاننا چاہوں گا کہ دہریہ ہوتا کون ہے؟؟؟ دو سطری تعریف بیان کریں۔ براہ مہربانی ایسا گوم مول جواب نہ دیجئے گا کہ زبان سے یہ ظاہر ہو گیا یا وہ فلاں بات دل میں تھی یا وہ ڈھمکا نشانی تھی وغیرہ وغیرہ، یہ سب نہ ہو۔

    کم سے کم الفاظ استعمال کرتے ہوئے دو سطروں میں بیان کریں کہ ایک دہریہ کا کیا عقیدہ ہوتا ہے؟؟؟
     
    • متفق متفق × 1
    • نا پسندیدہ نا پسندیدہ × 1
  15. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,540
    اگر دہریہ ہونا عیب ہوتا تو اللہ تعالیٰ ہر انسان کو مومن پیدا کرتا۔ لیکن ایسا نہیں ہے۔ اللہ تعالیٰ نے ہر انسان کو دین و مذہب کے چناؤ کا مکمل اختیار دے کر زمین پر بھیجا ہے۔
     
  16. فہد مقصود

    فہد مقصود محفلین

    مراسلے:
    213
    دہریہ کی تعریف کہاں ہے؟؟؟
     
    • متفق متفق × 1
  17. فہد مقصود

    فہد مقصود محفلین

    مراسلے:
    213
    شرکاء محفل دیکھ لیں کہ یہاں کیا ہوا ہے!!!!!!
    اعلانیہ اپنے گمراہ کن عقائد کا پرچار کیا جاتا ہے اور مسلمانوں کو دہریہ کہا جاتا ہے اور جب ان سے سوال کرو تو یہ غائب ہو جاتے ہیں!!!!!! یہی ہے مذہب کے نام پر دھوکہ بازی کی سب سے بڑی نشانی!!!!!
    ایسے افراد سے ہوشیار رہیں!!!!!! خدا کا حق سب سے پہلا حق ہے!!!!! جو کوئی بھی قرآن اور حدیث کی واضح تعلیمات کے خلاف بات کرے اسے مسترد کر دیں!!!! کیا قیامت کے دن یہ آئیں گے آپ کی طرف سے جواب دینے؟؟؟؟؟ وقت آگیا ہے مذہب کے نام پر بیوقوف بنانے والوں کا احتساب ہو!!!! اپنی ذمہ داریوں کو پہچانیے!!!! خود قرآن اور حدیث کا علم حاصل کریں!!!!! اور مذہب میں بدعنوانی کرنے والوں کو منہ توڑ جواب دیں!!!!!
     
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر