ہندوتوا کابھارت میں نمازفجرکی اذان پرپابندی کا مطالبہ

arifkarim نے 'آج کی خبر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 28, 2014

  1. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    مینگلور(نیوز ڈیسک)انتہاپسندہندوﺅں کابھارت میں نمازفجرکی اذان پرپابندی کامطالبہ کردیا گیاہے۔بھارتی میڈیا کے مطابق انتہا پسند ہندوﺅں نے مینگلور شہر کے ڈپٹی کمشنر کے آفس کے باہر مظاہرہ کیا اور مطالبہ کیا کہ نماز فجرکی اذان کے لئے لاﺅڈ سپیکر کے استعمال پر مستقل پابندی لگائی جائے۔تفصیلات کے مطابق ایک مقامی انتہا پسند تنظیم راشٹریہ ہندﺅ آندولن کے شہر میں مظاہرے ہو رہے ہیں جس میں وہ حکومت سے مطالبہ کر رہے ہیں کہ پورے بھارت میں اذان کے لئے لاﺅڈ سپیکر کے استعمال پر پابندی لگائی جائے۔ مذکورہ تنظیم نے اتوار کی صبح کو بھی مظاہرہ کیا تھا اور اب ایک بار پھر ڈپٹی کمشنر کے دفتر کے باہر مظاہرہ کرتے ہوئے تنظیم کے اہلکاروں نے اپنا مطالبہ دوہرایا۔ تنظیم کے ایک رکن وجے لکشمی نے کہا کہ بھارت میں ہر مذہب کے لوگوں کو آزادی ہے لیکن اس کے ساتھ ساتھ انہیں باقی لوگوں کا بھی خیال رکھنا چاہیے۔ ایک اور ہندو ویوک پائی نے کہا کہ بھارتی سپریم کورٹ نے پہلے ہی عوامی جگہوں پر لاﺅڈ سپیکر کے استعمال پو پابندی لگا رکھی ہے لہذا اب ضروری ہے کہ اس پابندی کا دائرہ کار مساجد تک بھی بڑھایا جائے۔ اس کا کہنا تھا کہ خصوصاً صبح کے وقت جب لاﺅڈ سپیکر پر اذان دی جاتی ہے تو لوگوں کی نیند میں خلل پیدا ہوتا ہے۔اس کا کہنا تھا کہ یہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ لوگوں کے آرام کے لئے ضروری اقدامات کرے۔
    http://www.dailypakistan.com.pk/human-rights/28-May-2014/106932
     
    • معلوماتی معلوماتی × 3
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  2. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    لگے گی آگ تو آئیں گے گھر کئی زد میں
    یہاں پہ صرف ہمارا مکان تھوڑی ہے


    جو آج صاحب مسند ہیں کل نہیں ہوں گے
    کرائے دار ہیں ذاتی مکان تھوڑی ہے


    سبھی کا خون ہے شامل یہاں کی مٹی میں
    کسی کے باپ کا ہندوستان تھوڑی ہے
     
    آخری تدوین: ‏مئی 28, 2014
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  3. محمود احمد غزنوی

    محمود احمد غزنوی محفلین

    مراسلے:
    6,435
    موڈ:
    Torn
    اس مسئلے کا ایک ممکنہ حل یہ بھی ہے کہ مساجد میں اذان دینے کیلئے صرف خوش الحان ، پرسوز اور رقت آمیز آواز والے مؤذن بھرتی کئیے جائیں۔۔۔۔۔ہوسکتا ہے مسئلہ جڑ سے ہی ختم ہوجائے۔۔۔:LOL:
     
    • زبردست زبردست × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  4. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    اور آسان حل یہ ہے کہ لاؤڈ اسپیکر پر آذان دینی بند کر دی جائے۔ جیسا کہ اس سائنسی ایجاد سے قبل ہوتا تھا۔ اسلامی فقہ میں یہ کہیں نہیں لکھا کہ جب تک لاؤڈ اسپیکر میں پورے شہر تک آذان کی گونج سنائی نہ دے اسوقت تک مومنین کی نماز نہیں ہو سکتی :)
     
    • متفق متفق × 1
  5. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    شیطان آذان کی آواز سن کر روتا ہے۔ ان شا اللہ روتا ہی رہے گا۔:)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  6. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    شیطان کے کان بھی ہوتے ہیں؟ :D
     
  7. حسینی

    حسینی محفلین

    مراسلے:
    1,560
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    ہندو انتہا پسند وں نے اب شاید سمجھ لیا ہے کہ پورے ہندوستان پر ان کے "باپ" کی حکومت آگئی ہے۔۔۔ اور جو ان کے دل میں آئے وہ کر سکتے ہیں۔
    اپنے اصلی تیور دکھانے شروع ہو گئے ہیں۔۔۔
    آج سے پہلے تو مطالبہ نہیں کیا۔۔۔ ابھی کرنے کا کیا مطلب ہے؟
    اگر آج فجر کی آذان پر اعتراض ہے تو کل ظہروعصر اور مغرب وعشاء کی آذان پر بھی پابندی کا مطالبہ ہوگا۔
    آذان کا مطلب ہی اعلان ہے۔۔ بانگ ہے۔۔ بلاوا ہے نماز کی طرف۔۔۔ جتنی اونچی آواز میں ہو اچھی ہے۔
     
    • متفق متفق × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    206,148
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    ابھی تو جمعہ جمعہ آٹھ دن بھی نہیں ہوئے مودی سرکار کو برسر اقتدار آئے ہوئے۔
     
    • متفق متفق × 2
  9. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    اعتراض اذان دینے پر نہیں، اسکے اونچا لاؤڈ اسپیکر پر چلانے پہ ہے۔ غیر مسلمین جنکا اسلام سے دور دور تک بھی کوئی واسطہ نہیں کو صبح صبح آذان زبردستی سنانے کا کیا مقصد ہے؟ یہی موضوع یہاں مغربی جمہوری پارلیمان میں کئی بار زیر بحث آیا اور ہر بار انہیں انہی منطقی اور عقلی تقاضوں پر رد کر دیا گیا۔ البتہ اسویڈن کی ایک اسٹیٹ میں ایک مسجد کو صرف جمعہ کی آذان لاؤڈ اسپیکر پر دینے کی اجازت مل چکی ہے۔ اور یہ بھی پانچ منٹ سے زیادہ نہیں:
    http://www.thelocal.se/20130426/47576


    مودی کے بارہ میں تو آپ ہی لوگوں نے بڑا مشہور کیا ہوا تھا کہ بڑا پاکستان دشمن ہے۔ اور وزیر بننے کے پہلے دن ہی نواز شریف سے ملاقاتیں کی اور اس گنجے کی پاکستان دعوت بھی قبول کر لی۔ کیا ایک ہندو انتہاء پسند ایسا ہوتاہے؟ :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  10. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    لمبے لمبے۔ ہر جگہ فساد کروانے کے چکر میں رہتا ہے۔

    اَعُوْذُ باللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  11. ناصر علی مرزا

    ناصر علی مرزا معطل

    مراسلے:
    1,234
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    آپ کی بات بظاہر مناسب معلوم ہوتئ ہے لیکن آپ نے فقہ والی بات کس حوالے سے کہی ہے
     
  12. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    مطلب یہ کہ جب سو سال قبل لاؤڈاسپیکر نہیں آیا تھا، تب کیا آذانیں اور نمازیں نہیں ہوتی تھیں؟ :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  13. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    قوت سماعت کیلئے کان کا لمبا ہونا ضروری نہیں۔ سائنسدانوں نے یہ ثابت کیا ہے کہ ایک چھوٹا سا پروانہ انسانی کان سے کہیں زیادہ سننے کی طاقت رکھتا ہے یعنی 300 کلو ہرٹز تک۔ اسکے مقابلہ میں انسانی قوت سماعت 20کلوہرٹز تک محدود ہے:
    [​IMG]
    http://www.sciencedaily.com/releases/2013/05/130508092830.htm

    کہیں یہ پروانہ شیطان کا بہروپیا نہ ہو؟ اسکے قتال کیلئے ایک اسلامی فتویٰ کی ضرورت ہے :)
     
  14. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    باقی باتیں تو چھوڑیے ، حیرانگی اس بات کی ہے کہ لنک وکی پیڈیا کے علاوہ دیا آپ نے۔یعنی آپ وکی پیڈیا کے علاوہ بھی کسی پر اعتماد کرتے ہیں۔



    پروانے کی بات چھوڑیے ۔ انسان کی بنیاد دیکھ لیجے اور اس کے کارنامے:)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  15. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    206,148
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    کیا کوئی بتا سکتا ہے کہ نریندرا مودی کی تعلیمی قابلیت کیا ہے؟
     
  16. اسد

    اسد محفلین

    مراسلے:
    1,092
    موڈ:
    Busy
    گجرات یونیورسٹی سے پولیٹیکل سائنس میں ماسٹرز ڈگری، 1983 میں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
  17. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    شکل سے تو نکھٹو چائے والا لگتا ہے :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • نا پسندیدہ نا پسندیدہ × 1
  18. S. H. Naqvi

    S. H. Naqvi محفلین

    مراسلے:
    942
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Torn
    شکل سے اندازے نہ لگایا کریں ویسے موصوف کے والد محترم ریلوے اسٹیشن پر چائے بیچتے تھے:)
    شکل کے اندازے سے یاد آیا ایک فکاہی فقرہ کہ کسی کے حلیے سے اسکے امیر غریب ہونے کا اندازہ نہ لگاؤ، ہو سکتا ہے وہ گجر ہو اور پینتیس بھینسوں کا مالک ہو:p
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  19. S. H. Naqvi

    S. H. Naqvi محفلین

    مراسلے:
    942
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Torn
    میں تو یہ سوچ رہا تھا کے مودی کا وزیر اعظم بن جانا کہیں حالات کے کو مجوزہ غزوہ ہند کی طرف تو نہیں دھکیل رہا؟؟:biggrin: کیونکہ مودی کی پالیسز کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہیں اور اس کے اقدامات پر کروڑوں بھارتی مسلمان دم سادھ کر تو نہیں بیٹھیں گے اور پھر حالات گلی محلے کی بغاوت کی طرف چلے جائیں گے۔ ;)
    زید حامد کے حمایتی حاضر ہوں:p
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  20. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    ایسا بیانات وہ لوگ دیتے ہیں جنہیں سیکولر جمہوریت کی الف ب بھی نہیں آتی، جیسے زید حامی لال ٹوپی والا ڈرامے باز! :D
     

اس صفحے کی تشہیر