ہاتھ جوڑے ہیں التجا کے لیے

عاطف ملک نے 'آپ کی شاعری (پابندِ بحور شاعری)' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 28, 2019

  1. عاطف ملک

    عاطف ملک محفلین

    مراسلے:
    1,237
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Innocent
    ہاتھ جوڑے ہیں التجا کے لیے
    مان بھی جاؤ اب خدا کے لیے

    اشک کرتے ہیں حال دل کا بیان
    لفظ ملتے نہیں دعا کے لیے

    حرفِ تسکیں کی بھیک ہے درکار
    ایک مہجور و بے نوا کے لیے

    مہر و الفت سے بڑھ کے کیا ہو گا
    آج انسان کی بقا کے لیے

    لاکھ مجھ پر زمانہ ڈھائے ستم
    ہنس کے سہہ لوں تری رضا کے لیے

    سر ہے در پر ترے جھکانے کو
    اور زباں ہے تری ثنا کے لیے

    کیسے خدشات سے لڑے تھے ہم
    اک تعلق کی ابتدا کے لیے

    اس کو آیا نہ رحم عاطفؔ پر
    لاکھ ہم نے کہا خدا کے لیے

    عاطفؔ ملک
    جولائی ۲۰۱۹​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  2. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    بے شک

    کہا کہنے ڈاکٹر صاحب، واہ
     
  3. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    25,379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بہت عمدہ
     
  4. محمد عدنان اکبری نقیبی

    محمد عدنان اکبری نقیبی لائبریرین

    مراسلے:
    18,768
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    بہت اعلی عمدہ غزل ۔
    سلامت رہیں بھیا۔
     
  5. عاطف ملک

    عاطف ملک محفلین

    مراسلے:
    1,237
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Innocent
    :)
    :redheart:
    بہت بہت شکریہ:)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 2

اس صفحے کی تشہیر