1. اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں فراخدلانہ تعاون پر احباب کا بے حد شکریہ نیز ہدف کی تکمیل پر مبارکباد۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    $500.00
    اعلان ختم کریں

داغ کس نے کہا کہ داغِ وفا دار مر گیا

فرحان محمد خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 30, 2017

  1. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,095
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    کس نے کہا کہ داغِ وفا دار مر گیا
    وہ ہاتھ مل کے کہتے ہیں کیا یار مر گیا

    دامِ بلائے عشق کی وہ کشمکش رہی
    ایک اک پھڑک پھڑک کے گرفتار مر گیا

    آنکھیں کھلی ہوئیں ہیں پسِ مرگ اس لئے
    جانے کوئی کہ طالبِ دیدار مر گیا

    جس سے کیا ہے آپ نے اقرار جی گیا
    جس نے سنا ہے آپ سے انکار مر گیا

    کس بیکسی سے داغ نے افسوس جان دی
    پڑھ کر ترے فراق کے اشعار مر گیا​
    داغ دہلوی
     
    آخری تدوین: ‏جولائی 30, 2017
    • زبردست زبردست × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    24,012
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اس مصرع میں کچھ کمی سی ہے
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • متفق متفق × 1
  3. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,095
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    آنکھیں کھلی ہوئیں ہیں پسِ مرگ اس لئے
    سر اب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  4. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    24,012
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اب درست ہے۔ :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  5. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    7,573
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    مصرع یوں ہونا چاہیے

    آنکھیں کھلی ہوئی ہیں پسِ مرگ اس لیے​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1

اس صفحے کی تشہیر