1. اردو محفل سالگرہ شانزدہم

    اردو محفل کی سولہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

پشتو اشعار مع اردو ترجمہ

ربیع م نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 17, 2017

  1. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    «عبدالرّحمان بابا» کی ایک بَیت میں «مجنون» و «لَیلیٰ» کا ذِکر:

    خوار مجنون چې سر په پښو د لیلیٰ کېښود
    سرفراز شو په عرب و په عجم کې
    (عبدالرّحمان بابا)


    پست و حقیر «مجنون» نے جب «لیلیٰ» کے قدموں پر اپنا سر رکھ دیا تو وہ عرب و عجم میں سرفراز ہو گیا۔۔۔ (یعنی عرب و عجم میں «مجنون» کی عظَمت و اِحتِرام کا سبب یہ ہے کہ اُس کا سر اپنی معشوقہ «لَیلیٰ» کے قدموں میں تھا۔)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    نور وګړي واړه همګي د دنیا کار کا
    زه همېشه غرق په انتظار یم ستا د مخ
    (عبدالرّحمان بابا)


    دیگر تمام مردُم کُلِّیَتاً کارِ دُنیا میں مشغول رہتے ہیں۔۔۔ لیکن، اے یار، مَیں ہمیشہ تمہارے چہرے کے اِنتِظار میں غرق ہوں۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    نه له کوره چېرته ځمه نه سفر کړم
    بې سفره مې غوڅېږي لار د عمر
    (عبدالرّحمان بابا)


    نہ تو میں گھر سے کہیں جاتا ہوں، اور نہ سفر کرتا ہوں۔۔۔ لیکن کِسی سفر کے بغیر ہی میری عُمر و زِندگانی کی راہ کٹتی (طَے ہوتی) جا رہی ہے۔۔۔ (یعنی اگرچہ مَیں کُل زندگی حالتِ حضَر میں اپنے گھر میں بیٹھا رہوں اور کہیں نہ جاؤں، تو تب بھی میری عُمر و زِندگانی کی راہ طَے ہو کر ایک روز بِالآخِر اِختِتام کو پُہنچ جائے گی۔)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    غیرې مینې دې په زړه باندې انبار کړې
    په کعبه کې ننه باسې بتان ولې؟
    (عبدالرّحمان بابا)


    [اے اِنسان!] تم نے [یارِ حقیقی کی بجائے] غَیروں کی محبّتوں کو اپنے دِل پر انبار کر لِیا ہے۔۔۔ کعبے میں تم بُتوں کو کِس لیے داخِل کرتے ہو؟۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    هغه زړه به له طوفانه په امان وي
    چې کښتۍ غوندې د خلکو باربردار شي
    (عبدالرّحمان بابا)


    جو دِل کشتی کی مانند دیگر مردُم کا بوجھ اُٹھانے لگے، یعنی غم‌خوار و مِہربان ہو جائے، وہ دِل طُوفان سے امان میں رہے گا!۔۔۔ (مِہربان اِنسان کے دِلِ غم‌خوار کو ایک باربردار کشتی سے تشبیہ دی گئی ہے کیونکہ جس طرح باربردار کشتی مردُم کی متاع اور مال و اسباب کا بار اُٹھاتی ہے، اُسی طرح اِنسانِ مُشفِق و غم‌خوار بھی دیگر مردُم کے غموں اور دُشواریوں کا بار اُٹھا کر غمگین و مشقّت‌کشیدہ اشخاص کے دِل کا بار ہلکا کرتا اور اُن کی دُشواریوں کو آسان کرتا ہے، اور شاعر کی جانبِ سے یہ نوید دی گئی ہے کہ اُس طرح کے اِنسان کا دِلِ مِہربان خود بھی اُس باربرداری اور نیکی و غم‌گُساری کے اجر کے طور پر ناگہانی طُوفانوں اور بلاؤں سے محفوظ رہے گا۔)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    زه حیران د ستا د وروځو په تور خال یم
    کافر څشکل سجده کا په محراب کې
    (عبدالرّحمان بابا)


    [اے یار!] مَیں تمہارے ابروؤں کے سِیاہ خال پر حَیران ہوں، کہ [آخِر کوئی] کافِر کیسے مِحراب میں سجدہ کر رہا ہے؟۔۔۔ (خال = تِل)

    (فارسی شعری روایت میں ابروؤں کو خمیدہ ہونے کے باعث مِحراب کے ساتھ مُشابِہ ٹھہرایا جاتا تھا، اور سِیاہ رنگ کو کُفر اور کافِروں کے ساتھ نِسبت دی جاتی تھی، لہٰذا یار کے سِیاہ خال کو کافر پُکارا گیا ہے، اور چونکہ وہ سِیاہ خال یار کے ابروؤں پر مَوجود ہے، اِس لیے عبدالرّحمان بابا حیرت ظاہر کر رہے ہیں کہ کافر کیسے محراب میں موجود ہے اور وہاں سجدہ کیسے کر رہا ہے۔)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    چې د مۍ و د طرب په خوند خبر شه
    فراموش کړه صوفي نفل د اِشراق
    (عبدالرّحمان بابا)


    صُوفی جب شراب و طرَب کے مزے سے مُطَّلِع ہوا تو اُس نے اِشراق کے نوافِل فراموش کر دیے۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    چې لذت یې د سرو شونډو وي موندلی
    نوره مینه د شرابو په جام نه کا
    (عبدالرّحمان بابا)


    جو شخص یار کے سُرخ لبوں کی لذّت پا چُکا ہو، وہ پھر جامِ شراب کو مزید محبوب نہیں رکھتا۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    عاشقي ده خدای له اوره پېدا کړې
    چې په اور کې یې وطن وي څه به خوب کا
    (عبدالرّحمان بابا)

    عاشِقی کو خُدا نے آتش سے خَلق کِیا ہے۔۔۔ پس جِس شخص کا مَسکَن آتش میں ہو وہ آخِر کیسے کبھی سوئے گا؟۔۔۔ (یعنی آتشِ عشق کے پہلو میں رہنے والے عاشِق کو آخِر کیسے کبھی آسودگی و راحت مُیَسّر ہو سکتی ہے؟)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  10. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    په پیرۍ کې د ځوانۍ خیال دی هسې
    لکه څوک چې د باغ سیر په خزان کا
    (عبدالرّحمان بابا)


    پِیری (بُڑھاپے) کے زمانے میں جوانی کا تصوُّر کرنا اور اُس کو یاد کرنا ایسا ہے کہ گویا کوئی شخص باغ کی سَیر خَزاں کے مَوسِم میں کرے۔۔۔ [​IMG]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  11. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    د اوبو تږی هم خوب کولی نه شي
    څوک چې تږی د دیدن وي څه به خوب کا
    (عبدالرّحمان بابا)


    جو شخص آب کا تشنہ ہو وہ بھی ہرگِز سو نہیں پاتا۔۔۔ تو پس جو شخص تشنۂ دیدار ہو وہ آخِر کیسے کبھی سوئے گا؟۔۔۔ (یعنی تشنگیِ آب کی اذِیّت و رنج کے باعث لب‌تشنہ شخص کو نیند نہیں آ پاتی۔ پس یہ بدیہی کہ ہے چونکہ تشنَگیِ دیدار تشنَگیِ آب سے کئی درَجے زیادہ مُوذی و آزاردِہَندہ چیز ہے، لہٰذا کِسی تشنۂ دیدارِ یار شخص کا راحت و آرام و آسودگی کے ساتھ کِسی لمحہ آغوشِ خواب میں چلا جانا قطعاً مُحال ہے۔)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    په شرابو کې خوند نشته د شکرو
    د یار شونډې هم شراب دي هم شکر
    (عبدالرّحمان بابا)

    شراب میں شَکَر کا مزہ نہیں ہوتا (یعنی شراب تلخ ہوتی ہے)۔۔۔ [لیکن] یار کے لب [مزے کے لِحاظ سے] شراب بھی ہیں، اور شَکَر بھی۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  13. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    له هجرانه بله سخته بلا نشته
    خدای دې نه کاندي زخمي په دا نشتر څوک
    (عبدالرّحمان بابا)

    ہِجران سے سخت‌تر بلا دیگر کوئی نہیں ہے۔۔۔ خُدا کِسی شخص کو اِس نِشتَر سے زخمی مت کرے!۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  14. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    زړه مې هسې ستا په زلفو پسې ورک شو
    لکه غوټه د چا پرېوځي په تورتم کې
    (عبدالرّحمان بابا)


    اے معشوق! تمہاری سِیاہ زُلفوں کے پیچھے میرا دِل اُس طرح گُم ہو گیا کہ جیسے کِسی شخص کا چھوٹا تُکمہ (بٹن) کامِل تاریکی کے اندر گِر جائے اور گُم ہو جائے۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  15. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    هر سړی په یوې چارې خدای مشغول کړ
    زه مشغول کړم خدای د ترکو په ثنا
    (عبدالرّحمان بابا)


    خُدا نے ہر شخص کو کِسی کام میں مشغول کیا۔۔۔ [اور] مجھ کو خُدا نے دِلبَرانِ زیبا کی مدح و سِتائش میں مشغول کِیا۔۔۔ (یعنی جِس طرح خُدا نے ہر اِنسان کے مُقَدَّر میں کوئی کار یا کوئی پیشہ لِکھ دیا ہے جِس میں وہ تا حیات مشغول و سرگرم رہتا ہے، اُسی طرح خُدا نے میری تقدیر میں یہ کام لِکھا ہے اور میرا پیشہ و کار یہ بنایا ہے کہ مَیں حَسِین و جمیل دِلبَران و محبوبان کی سِتائش کرتا رہوں۔)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  16. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    ډېر عمر مې تېر کړ بېهوده په زمانه
    نور دې زما سر وي او د ترکو آستانه
    (عبدالرّحمان بابا)


    میں نے اپنی عُمر اور اپنے اَوقات کا ایک بہت بڑا حِصّہ فُضول میں ضائع گُذار دِیا۔۔۔ اب اِس کے بعد سے میرا سر ہونا چاہیے، اور خُوب‌صورت و نازَنِین دِلبَروں کا آستان۔۔۔ (یعنی میری بےمَصرَف، بےفائدہ اور عبث ضائع‌شُدہ عُمر کی تلافی اِس طرح ہونی چاہیے کہ اب سے میرا سر ہمیشہ دِلبَرانِ زیبا کے آستان پر پڑا رہے۔)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  17. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    هغه یار چې ښایسته دی تر آفتابه
    مخ به کله را څرګند کا له نقابه
    بېلتانه په زړه زهیر کړم بې حسابه
    یو سبب وکړې مُسَبِّبُ الاسبابه
    چې زما ملاقات وشي له احبابه
    (عبدالرّحمان بابا)


    وہ یار کہ جو خورشید سے زیادہ زیبا ہے۔۔۔ وہ اپنا چہرہ نِقاب سے نِکال کر میری جانِب کب آشکار کرے گا؟۔۔۔ فِراق نے میرے دِل کو بےحد لاغر و ناتواں کر دیا۔۔۔ اے خُدائے مُسَبِّبُ الاَسباب! کوئی سبب کرو کہ اپنے محبوب و احباب سے مُجھ مہجور کی مُلاقات ہو جائے۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  18. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    ضد دي اور او اوبه بې د یار له شونډو
    چې هم اور دي هم اوبه دي د کوثر
    (عبدالرّحمان بابا)


    آتش و آب ایک دوسرے کی ضِد ہیں، اور دونوں چیزیں بہ یک وقت ایک ہی جگہ پائی نہیں جاتیں، لیکن میرے یار کے لب اِستِثنائی ہیں اور اُن میں دونوں چیزیں بہ یک وقت و بہ یک جا مَوجود ہیں، کیونکہ وہ لب‌ہا آتشِ سوزَندہ بھی ہیں، اور آبِ کَوثر بھی۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  19. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    عاقبت به د اجل په مِقراض غوڅ شي
    پېوسته به مُدام نه وي تار د عمر
    (عبدالرّحمان بابا)


    عُمر کا دهاگا دائماً ثابِت و اُستُوار نہیں رہے گا، بلکہ بِالآخِر اجل کی قینچی سے مُنقَطِع ہو جائے گا۔۔۔ (عُمْر و زِندگانی کو ایک ضعیف و نااُستُوار و بےثبات دھاگے سے تشبیہ دی گئی ہے، اور یاددِہانی کی گئی ہے کہ یہ دھاگا ہمیشہ پائدار اور جُڑا ہوا نہیں رہے گا، بلکہ عاقِبتِ کار ایک روز اجَل کی قینچی اُس دھاگے کو کاٹ دے گی۔)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  20. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,932
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    هغه زړه به له طوفانه په امان وي
    چې کښتۍ غوندې د خلکو باربردار شي
    (عبدالرّحمان بابا)


    جو دِل کشتی کی مانند دیگر مردُم کا بوجھ اُٹھانے لگے، یعنی غم‌خوار و مِہربان ہو جائے، وہ دِل طُوفان سے امان میں رہے گا!۔۔۔ (مِہربان اِنسان کے دِلِ غم‌خوار کو ایک باربردار کشتی سے تشبیہ دی گئی ہے کیونکہ جس طرح باربردار کشتی مردُم کی متاع اور مال و اسباب کا بار اُٹھاتی ہے، اُسی طرح اِنسانِ مُشفِق و غم‌خوار بھی دیگر مردُم کے غموں اور دُشواریوں کا بار اُٹھا کر غمگین و مشقّت‌کشیدہ اشخاص کے دِل کا بار ہلکا کرتا اور اُن کی دُشواریوں کو آسان کرتا ہے، اور شاعر کی جانبِ سے یہ نوید دی گئی ہے کہ اُس طرح کے اِنسان کا دِلِ مِہربان خود بھی اُس باربرداری اور نیکی و غم‌گُساری کے اجر کے طور پر ناگہانی طُوفانوں اور بلاؤں سے محفوظ رہے گا۔)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر