پسندیدہ اقتباسات

ساقی۔ نے 'اردو ادب' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 8, 2014

  1. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    آپ کوئی کتاب پڑھ رہے ہوں اور کوئی پیرا گراف دل کو چھو جائے تو شیئر کرنا مت بھولیئے






    سمندر سب کے لیے ایک جیسا ہی ہوتا ہے لیکن کچھ لوگ اس میں سے موتی تلاش کر لیتے ہیں ، کچھ مچھلیاں پکڑ لیتے ہیں اور کچھ کو سمندر سے کھارے پانی کے سوا کچھ بھی نہیں ملتا ۔
    بادل سے برسنے والا پانی ایک جیسا ہی ہوتا ہے ۔
    زرحیز زمین اسی پانی سے سبزہ اگا لیتی ہے ،
    صحرا کی ریت اس پانی سے اپنی پیاس بجھاتی ہے اور وہی پانی چکنے پتھروں کو محض چھو کر گزر جاتا ہے ۔
    اللہ کی رحمت ہر دل کے لیے ایک جیسی ہے
    اب یہ ھم پر ہے کہ ہم پر اسکا کتنا رنگ چڑھتا ہے۔
    " اور اللہ کا رنگ سب رنگوں سے بہتر ہے "

    پیا رنگ کالا سے اقتباس
     
    • زبردست زبردست × 6
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • متفق متفق × 1
  2. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    205,049
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    پیا رنگ کالا کا خوبصورت اقتباس۔
    شریک محفل کرنے کا شکریہ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • دوستانہ دوستانہ × 2
  3. عبد الرحمن

    عبد الرحمن لائبریرین

    مراسلے:
    1,983
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    بہت خوب صورت اقتباس۔
    جزاکم اللہ خیرا!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  4. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    ہم کمزور لوگ ہیں جو ہماری دوستی اللہ کے ساتھ ہو نہیں سکتی۔ جب میں کوئی ایسی بات محسوس کرتا ہوں یا سُنتا ہوں تو پھر اپنے "بابوں" کے پاس بھاگتا ہوں_ میں نے اپنے بابا جی سے کہا کہ جی ! میں اللہ کا دوست بننا چاہتا ہوں۔ اس کا کوئی ذریعہ چاہتا ہوں۔ اُس تک پہنچنا چاہتا ہوں۔ یعنی میں اللہ والے لوگوں کی بات نہیں کرتا۔ ایک ایسی دوستی چاہتا ہوں، جیسے میری آپ کی اپنے اپنے دوستوں کے ساتھ ہے،تو اُنہوں نے کہا "اپنی شکل دیکھ اور اپنی حیثیت پہچان، تو کس طرح سے اُس کے پاس جا سکتا ہے، اُس کے دربار تک رسائی حاصل کر سکتا ہے اور اُس کے گھر میں داخل ہو سکتا ہے، یہ نا ممکن ہے۔" میں نے کہا، جی! میں پھر کیا کروں؟ کوئی ایسا طریقہ تو ہونا چاہئے کہ میں اُس کے پاس جا سکوں؟ بابا جی نے کہا، اس کا آسان طریقہ یہی ہے کہ خود نہیں جاتے اللہ کو آواز دیتے ہیں کہ "اے اللہ! تو آجا میرے گھر میں" کیونکہ اللہ تو کہیں بھی جاسکتا ہے، بندے کا جانا مشکل ہے۔ بابا جی نے کہا کہ جب تم اُس کو بُلاؤ گے تو وہ ضرور آئے گا۔ اتنے سال زندگی گزر جانے کے بعد میں نے سوچا کہ واقعی میں نے کبھی اُسے بلایا ہی نہیں، کبھی اس بات کی زحمت ہی نہیں کی۔ میری زندگی ایسے ہی رہی ہے، جیسے بڑی دیر کے بعد کالج کے زمانے کا ایک کلاس فیلو مل جائےبازار میں تو پھر ہم کہتے ہیں کہ بڑا اچھا ہوا آپ مل گئے۔ کبھی آنا۔ اب وہ کہاں آئے، کیسےآئے اس بےچارے کو تو پتا ہی نہیں۔

    اشفاق احمد
    زاویہ دوم سے اقتباس
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  5. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    اس بارے میں بھی ایک دھاگہ کبھی کھول چکا ہوں :)
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  6. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    شاید ایس ایس جیفرسن کی ایک کتاب، دی ہڈن ٹریژر کا ایک اقتباس، جس کا مفہوم یہ بنتا ہے کہۙ:

     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    اس موضو ع کو اپنے والے دھاگے میں مدغم کر دیجئے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    چلنے دیجئے۔ وہ دھاگہ تو ویسے بھی کافی پہلے دب چکا ہے :)
     
  9. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    آپ جانتے ہیں کہ ننھے سے بیج میں کتنی معمولی طاقت ہوتی ہے۔لیکن وہ گھٹن کے لمحے گذار کر زمین کا سینہ چیرنے میں بالآخر کامیاب ہو ہی جاتا ہے ۔ اور بوجھ برداشت کرنے کے بعد اس میں اتنی طاقت آجاتی ہے کہ وہ کرہ ارض کو پھاڑ کر باہر آجاتا ہے ۔

    جو ہم مشکل پڑنے پر " بھیں بھیں " رونا شروع کر دیتے ہیں تو یہ بڑی ندامت کی بات ہے ۔ ایک ننھا بیج اگر گھٹن اور سختیوں کا مقابلہ کر سکتا ہے تو ہمیں جان کے لالے کیوں پڑ جاتے ہیں ۔

    (اشفاق احمد زاویہ 3 ۔ صفحہ 166)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
  10. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    زندگی میں انسان کو ایک عادت ضرور سیکھ لینی چاہیے۔جو چیز ہاتھ سے نکل جائے اسے بھول جانے کی عادت۔یہ عادت بہت سی تکلیفوں سے بچا لیتی ہے۔(امر بیل از عمیرہ احمد)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  11. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    تو نہیں، تیرا غم، تیری جستجو بھی نہیں :)
     
    • متفق متفق × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. نوشاب

    نوشاب محفلین

    مراسلے:
    754
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Happy
    وقت کا دباؤ بڑا شدید ہے، لیکن میں سمجھتا ہوں کہ برداشت کے ساتھہ حالات ضرور بدل جائیں گے،
    بس ذرا سا اندر ہی اندر مُسکرانے کی ضرورت ہے- یہ ایک راز ہے جو سکولوں، یونیورسٹیوں
    اور دیگر اداروں میں نہیں سکھایا جاتا-



    مسکرانا سیکھنا چاہیئے اور اپنی زندگی کو اتنا"چیڑا“ (سخت) نہ بنا لیں کہ ہر وقت دانت ہی بھینچتے رہیں-


    اشفاق احمد
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  13. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    کون کہتا ہے، انسان نےاس جدید دور میں میزائل، بم اور ڈرون ایجاد کر کے تباہی پھیلائی ہے- جتنا گہرا گھاؤ انسان کی زبان کسی انسان کے دل میں لگا سکتی ہے، اس کی کاٹ اور زخم کا مقابلہ، یہ نئے دور کے ہتھیار کسی صورت نہیں کر سکتے. کبھی کبھی میں سوچتا کہ ایٹم بم کے موجد کو شاید زبان کے زہر کا ٹھیک طرح سے ادراک نہیں ہوگا، ورنہ اسے دنیا برباد کرنے کے لئے اتنی محنت نہ کرنا پڑتی-”

    پری زاد از ہاشم ندیم
     
    • زبردست زبردست × 2
    • متفق متفق × 2
  14. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    باباجی کہتے ہیں پتر درد وہ ہوتا ہے جو ہمیں دوسروں کو تکلیف میں دیکھ کر ہوورنہ اپنا درد تو جانوروں کو بھی محسوس ہوتا ہے

    اشفاق احمد
     
    • زبردست زبردست × 2
    • متفق متفق × 2
  15. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    ایک مرتبہ اشفاق احمد اور ان کی اہلیہ بانو قدسیہ میں بحث چھڑ گئی کہ “محبوب ” کی تعریف کیا ہے۔ دونوں کافی دیر تک بحث کرتے رہے یہاں تک کہ رات ہوگئی اور وہ کسی نتیجے پر نہیں پہنچ پائے۔ چنانچہ دونوں نے فیصلہ کیا کہ اپنے استاد کے پاس چلتے ہیں اور ان سے دریافت کرتے ہیں۔ وہ جب استاد کے پاس پہنچے تو وہ کھانا پکا رہے تھے۔ دونوں نے ان سے دریافت کیا :” حضرت یہ بتائیے کہ محبوب کسے کہتے ہیں”۔ استاد نے فرمایا:
    “محبوب وہ ہے جس کا (بظاہر ) ناٹھیک بھی ٹھیک لگے”۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  16. ماہی احمد

    ماہی احمد لائبریرین

    مراسلے:
    12,984
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Happy
    اقتباسات تو بہت اچھے لگتے ہیں پر انہیں لکھے کون اب۔ :)
     
  17. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    میں لکھ دیتا ہوں فی صفحہ ۳۵ روپے کے حساب سے۔۔آج کل مندہ ہے اس لیے کم ریٹ دیئے ہیں ۔ جلدی فائدہ اٹھا لیں
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
  18. ماہی احمد

    ماہی احمد لائبریرین

    مراسلے:
    12,984
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Happy
    اللہ ہے، یہاں تو سب میری پاکٹ پر ہی نظریں رکھے بیٹھے ہیں اففف۔۔۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  19. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    مولانا وحید الدین سلیم کے مضمون سے انتحاب
    [​IMG]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  20. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    اماں کو میری بات ٹھیک سے سمجھ آگئی.
    اس نے اپنا چہرہ میری طرف کئے بغیر نئی روٹی بیلتے ہوئے پوچھا

    " تو اپنی کتابوں میں کیا پیش کرے گا؟"

    میں نے تڑپ کر کہا

    " میں سچ لکھوں گا اماں اور سچ کا پرچار کروں گا.
    لوگ سچ کہنے سے ڈرتے ہیں اور سچ سننے سے گھبراتے ہیں.
    میں انھیں سچ سناؤں گا اور سچ کی تلقین کروں گا۔۔۔۔۔۔۔

    میری ماں فکر مند سی ہو گئی.
    اس نے بڑی دردمندی سے مجھے غور سے دیکھا
    اور کوئیلوں پر پڑی ہوئی روٹی کی پرواہ نہ کرتے ہوئے کہا :
    " اگر تو نے سچ بولنا ہے تو اپنے بارے میں بولنا '
    دوسرے لوگوں کی بابت سچ بول کر ان کی زندگی عذاب میں نہ ڈال دینا.
    ایسا فعل جھوٹ سے بھی برا ہوتا ہے۔۔۔۔۔۔!!

    اشفاق احمد
     
    • زبردست زبردست × 6
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر